PDA

View Full Version : گوھر کریم نگری



  1. میں حوصلہ کو ڈھونڈتا ہوں حوصلہ مجھے۔۔۔۔۔۔
  2. موسم گُل میں صحن چمن میں زلف کوئی لہرائے تو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
  3. زمیں کے ذروں سے جب آفتاب ابھرتے ہیں۔۔۔۔
  4. درد کا حامل بنا اورعشق کا حاصل بنا۔۔۔۔
  5. فصلِ گُل گلشن میں بہکائی ملی۔۔۔
  6. دکھ، درد، رنج اپنا پرایا سمیٹ لوں۔۔۔۔۔۔
  7. قسمت سے جب کہ شہر تمنا ملا مجھے۔۔۔۔۔
  8. بکھر کے رہ گیا اوراق دل کا شیرازہ۔۔۔۔
  9. جی حضوری کے زمانہ میں بھی خود داری ہے۔۔۔۔
  10. حرص و ہوس کی شمع جلائے ہوئے ہیں لوگ۔۔۔۔
  11. خود نمائی، خود ستائی، خود سری ہے آج کل۔۔۔۔۔۔۔
  12. جن کو نسب تھی صرف خوابوں سے۔۔۔۔۔
  13. جہاں جہاں بھی میرا تجربوں سے رشتہ تھا۔۔۔۔
  14. عقل کے کام پہ جب دل نگراں ہوتا ہے۔۔۔۔
  15. زباں میں نرمی، طبیعت میں سادگی رکھنا۔۔۔۔
  16. جب کوئی چال چل گئے حالات۔۔۔۔۔۔۔
  17. بات دل کی جب کبھی آنکھوں سے سمجھائی گئی۔۔۔
  18. یہ دھواں دل سے اٹھا ہے شاید۔۔۔۔
  19. اجنبی بن جائیے یا سازشی بن جائیے۔۔۔۔
  20. جو نظر شب کی سیاہی میں ضیاء بار لگے۔۔۔۔
  21. اس طرح کوئی دیدہ ور جاگے۔۔۔
  22. سر ہتھیلی پہ لئے اپنا ہنر ہوتا ہے۔۔۔۔
  23. یہ اور بات کہ پڑا کھائیوں میں تھا۔۔۔۔۔
  24. ایک جھلک جلوہ جب دکھایا جاتا ہے۔۔۔۔۔
  25. صلاح عام۔۔۔۔۔
  26. نظم بہ عنوان غزل۔۔۔۔
  27. زندگی۔۔۔۔۔۔
  28. انکی آمد پہ میرے دل کو سنبھلنا ہوگا
  29. غمِ جاناں، غمِ دوراں، غم انساں ہے غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔