PDA

View Full Version : متفرق شاعری



صفحات : [1] 2

  1. غزل
  2. رویا ہوں تیری یاد
  3. میری پسند
  4. میری پسند
  5. میری پسند
  6. مذاخیہ شاعری
  7. ہم تجھ سے کس ہوس کی فلک! جستجو کریں
  8. وہ جو تیرے فقیر ہوتے ہیں
  9. آشوب
  10. زرا ہنس لو
  11. ہنسنا منع نھی
  12. ہو ہو
  13. ھاھا
  14. ٹاٹا
  15. ہے آپ کے ہونٹوں پر جو مسکان وغيرہ
  16. (انور مسعود
  17. بیماری کا نام
  18. کڑي اميرا دي منڈا غريب دا
  19. مرغا مرغيوں ميں بڑا مشہور ہوا ہے
  20. وہ شخص جو پيسے سے محبت نہيں کرتا
  21. کيا خبر تھي انقلاب آسماں ہوجائے گا
  22. دل ميں ٹھنڈک آگئي ٹھنڈا مرا من ہوگيا
  23. خدا حافظ مسلمانوں کا اکبر مجھے تو ان کي خوشحالي سے ہے ياس
  24. چپکے چپکے تنہا تنہا
  25. شکنجے ٹوٹ گئے
  26. دستور
  27. بھیک نہ مانگو
  28. حکمرانوں
  29. خدا ہی جانتا ہے
  30. پاکستان کے چاہنے والو
  31. تین سوالوں کا ایک جواب
  32. پھریوں ہوا
  33. شہداء کربلا کی یاد
  34. نام شہید کربلا
  35. فنی غزل
  36. تیرا ککھ نہ رہے
  37. مذاخیہ شاعری
  38. " ادبی ڈکیتی "
  39. " سوتن نامہ "
  40. دل تو چاہتا ہے. سلیم ناصر
  41. انسان کو غم کھا جاتا ہے ،
  42. مومن کی صفات ، علامہ محمد اقبال
  43. ماڈرن عاشق اور محبوبہ
  44. غزل
  45. غزل
  46. اَن گنت لوگ ، اَن گنت چہرے
  47. مضائقہ نہیں کوئی جو پھل ہی کاٹ دیا
  48. دلدل تھی زندگی کی سو دھنستا چلا گیا
  49. تم نے اچھا ہی کیا مجھ کو جو پوچھا بھی نہیں
  50. اے دوست مجھے اپنے خیالوں کی روانی دے جا
  51. مسدسِ حالی
  52. ہے آپ کے ہونٹوں پر جو مسکان وغيرہ
  53. انہی خوش گمانیوں میں کہیں جاں سے بھی نہ جاؤ
  54. ڈھونڈوگے اگر ملکوں ملکوں
  55. تم اگر یوں ہی نظریں ملاتے رہے
  56. سحر کے ساتھ ہی سورج کا ہمرکاب ہوا
  57. دنیا کا کچھ برا بھی تماشا نہیں رہا
  58. پسِ مرگ میرے مزار پر جو دیا کسی نے جلا دیا
  59. مجھ سا جہان میں نادان بھی نہ ہو
  60. قہر ہے موت ہے قضا ہے عشق
  61. پنی تنہائی مرے نام پہ آباد کرے
  62. گلاب ہاتھ میں ہو ، آنکھ میں ستارہ ہو
  63. وہی پرند کہ کل گوشہ گیر ایسا تھا
  64. اب کیسی پردہ داری ، خبر عام ہو چکی
  65. میرے چھوٹے سے گھر کو یہ کس کی نظر، اے خُدا! لگ گئی
  66. دُکھ نوشتہ ہے تو آندھی کو لکھا ! آہستہ
  67. منظر ہے وہی ٹھٹک رہی ہوں
  68. دن ٹھہر جائے ، مگر رات کٹے
  69. اب کون سے موسم سے کوئی آس لگائے
  70. کیسے چھوڑیں اُسے تنہائی پر
  71. دل و نگاہ پہ کس طور کے عذاب اُترے
  72. ہم نے ہی لوٹنے کا ارادہ نہیں کیا
  73. سمندروں کے اُدھر سے کوئی صدا آئی
  74. رقص میں رات ہے بدن کی طرح
  75. کمالِ ضبط کو خود بھی تو آزماؤں گی
  76. اب آئے چارہ ساز کہ جب زہر کِھل چُکا
  77. کیسی بے چہرہ رُتیں آئیں وطن میں اب کے
  78. نم ہیں پلکیں تری اے موجِ ہَوا، رات کے ساتھ
  79. دھنک دھنک مری پوروں کے خواب کر دے گا
  80. یارب! مرے سکوت کو نغمہ سرائی دے
  81. کیا ضروری ہے
  82. یونہی تنہا تنہا نہ خاک اُڑا، مری جان میرے قریب آ
  83. مجھے سارے رنج قبول ہیں
  84. یہ حسیں لوگ ہیں, تو ان کی مروت پہ نہ جا
  85. جسے آنسوؤں سے مٹائیں ہم
  86. ہی نہیں کہ فقط ہم ہی اضطراب میں ہیں
  87. تجھے بھلا کے جیوں ایسی بددعا بھی نہ دے
  88. تھی جس سے روشنی ، وہ دیا بھی نہیں رہا
  89. پھول تھے رنگ تھے لمحوں کی صباحت ہم تھے
  90. معلوم نہ تھا ہم کو ستائے گا بہت وہ
  91. ملیں پھر آکے اسی موڑ پر دعا کرنا
  92. میں کسے سنا رہا ہوں یہ غزل محبتوں کی
  93. میں جانتا تھا ایسا بھی اک دور آئے گا
  94. تمہیں جب کبھی ملیں فرصتیں
  95. کبھی تو نے خود بھی سوچا
  96. تجھ سے بچھڑ کر آنکھوں کو نم کس لئے کریں
  97. یا رب غمِ ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا
  98. جتنی دعائیں آتی تھیں
  99. ہم سے کیا پوچھتے ہو ہجر میں کیا کرتے ہیں
  100. اپنے احساس سے چھو کر مجھے صندل کردو
  101. ہم جان فدا کرتے ، گر وعدہ وفا ہوتا
  102. وہ جو ہم میں تُم میں قرار تھا
  103. اثر اس کو ذرا نہیں ہوتا
  104. تیرے خیال سے لو دے اُٹھی ہے تنہائی
  105. پھر شامِ وصالِ یار آئی
  106. نصیب عشق دلِ بےقرار بھی تو نہیں
  107. صدائے رفتگاں پھر دل سے گزری
  108. نازِ بیگانگی میں کیا کچھ تھا
  109. ترے ملنے کو بے کل ہو گۓ ہیں
  110. گرفتہ دل ہیں بہت آج تیرے دیوانے
  111. عشق میں جیت ہوئی یا مات
  112. کیا دن مجھے عشق نے دکھائے
  113. ہوتی ہے تیرے نام سے وحشت کبھی کبھی
  114. کسی کلی نے بھی دیکھا نہ آنکھ بھر کے مجھے
  115. سفرِ منزلِ شب یاد نہیں
  116. وہ دلنواز ہے لیکن نظر شناس نہیں
  117. سرِ مقتل بھی صدا دی ہم نے
  118. یاد آتا ہے روز و شب کوئی
  119. دل دھڑکنے کا سبب یاد آیا
  120. دل میں اک لہر سی اٹھی ہے ابھی
  121. نئے کپڑے بدل کر جاؤں کہاں
  122. اداسیوں کا مداوا نہ کر سکے تو بھی
  123. رنگ برسات نے بھرے کچھ تو
  124. بے چین بہت پھرنا گھبرائے ہوئے رہنا
  125. قرار ہجر میں اس کے شراب
  126. لازم نہیں کہ اس کو بھی میرا خیال ہو
  127. یہ کیسا نشہ ہے
  128. اُن سے نین ملا کے دیکھو
  129. وہ دل کی باتیں زمانے بھر کو یہ یوں سناتا ، مجھے بتاتا
  130. لازم تھا کہ دیکھو مرا رستہ کوئی دِن اور
  131. دل سے تری نگاہ جگر تک اتر گئی
  132. اٹھا اک دن بگولا سا جو کچھ میں جوشِ وحشت میں
  133. درد ہو دل میں تو دوا کیجے
  134. اے تازہ واردانِ بساطِ ہوائے دل
  135. وہی قصے ہیں وہی بات پرانی اپنی
  136. شکل اس کی تھی دلبروں جيسی
  137. ہر ايک زخم کا چہرہ گلاب جيسا ہے
  138. چاہت کا رنگ تھا نہ وفا کي لکير تھي
  139. آہٹ سي ہوئي تھي نہ کوئي برگ ہلا تھا
  140. لہرائے سدا آنکھ میں پیارے تیرا آنچل
  141. تو نے نفرت سے جو دیکھا تو مجھے یاد آیا
  142. آجا کہ ابھی ضبط کا موسم نہیں گزرا
  143. چاہیے دنیا سے ہٹ کر سوچنا
  144. وہ دل کا برا نہ بے وفا تھا
  145. میں نے اس طور سے چاہا تجھے اکثر جاناں
  146. ہم جو پہنچے سر مقتل تو یہ منظر دیکھا
  147. اُجڑے ہُوئے لوگوں سے گریزاں نہ ہُوا کر
  148. منسوب تھے جو لوگ میری زندگی کے ساتھ
  149. جر کی پہلی شام کے سائے دور افق تک چھائے تھے
  150. پہلے تو اپنے دل کی رضا جان جائیے
  151. وہ دل ہی کیا جو ترے ملنے کی دعا نہ کرے
  152. میری زندگی تو فراق ہے، وہ ازل سے دل میں مکیں سہی
  153. حالات کے قدموں پہ قلندر نہیں گرتا
  154. یہ معجزہ بھی محبت کبھی دکھائے مجھے
  155. بول، کہ لب آزاد ہیں تیرے
  156. ہمتِ التجا نہیں باقی
  157. بے دم ہوئے بیمار، دوا کیوں*نہیں*دیتے
  158. دونوں جہاں تیری محبت میں ہار کے
  159. اٹھا اک دن بگولا سا جو کچھ میں جوشِ وحشت میں
  160. انہی خوش گمانیوں میں کہیں جاں سے بھی نہ جاؤ
  161. اِس کا سوچا بھی نہ تھا اب کے جو تنہا گزری
  162. کس قدر آگ برستی ہے یہاں
  163. سراپا عشق ہوں میں اب بکھر جاؤں تو بہتر ہے
  164. کٹھن ہے راہ گزر تھوڑي دور ساتھ چلو
  165. اب کے تجدیدِ وفا کا نہیں امکاں جاناں
  166. سنا ہے لوگ اُسے آنكھ بھر كے دیكھتے ہیں
  167. وہ عجیب صبحِ بہار تھی
  168. جو حرفِ حق تھا وہی جا بجا کہا سو کہا
  169. برسوں کے بعد ديکھا اک شخص دلرُبا سا
  170. کب یاروں کو تسلیم نہیں ، کب کوئی عدو انکاری ہے
  171. ان چراغوں کو تو جلنا ہے ہوا جیسی ہو
  172. میں مر مٹا تو وہ سمجھا یہ انتہا تھی مری
  173. کل پرسش احوال کی جو یار نے میرے
  174. گُل ترا رنگ چرا لائے ہیں گلزاروں میں
  175. خدا کرے کہ مری ارض پاک پر اترے
  176. جب ترا حکم ملا ترک محبّت کر دی
  177. بول، کہ لب آزاد ہیں تیرے
  178. سب مایا ہے
  179. یہ باتیں جھوٹی باتیں ہیں، یہ لوگوں نے پھیلائی ہیں
  180. حال دل جس نے سنا گریہ کیا
  181. کل چودھویں کی رات تھی، شب بھر رہا چرچا تیرا
  182. انشا جی اٹھو اب کوچ کرو، اس شہر ميں جی کو لگانا کيا
  183. فرض کرو ہم اہلِ وفا ہوں، فرض کرو دیوانے ہوں
  184. ہم گُھوم چکے بَستی بَن میں
  185. بہت پہلے سے ان قدموں کی آہٹ جان لیتے ہیں
  186. وہ باتیں تری وہ فسانے ترے
  187. وہ جو تیرے فقیر ہوتے ہیں
  188. خالی ابھی جام میں کچھ سوچ رہا ہوں
  189. اس راز کو اک مرد فرنگي نے کيا فاش
  190. حکمت مشرق و مغرب نے سکھايا ہے مجھے
  191. فتوي ہے شيخ کا يہ زمانہ قلم کا ہے
  192. موت ہے اک سخت تر جس کا غلامي ہے نام
  193. ضمير مغرب ہے تاجرانہ، ضمير مشرق ہے راہبانہ
  194. نشاں يہي ہے زمانے ميں زندہ قوموں کا
  195. رندوں کو بھي معلوم ہيں صوفي کے کمالات
  196. رباعیات
  197. آتي ہے دم صبح صدا عرش بريں سے
  198. وہ مستِ ناز جو گلشن میں آ نکلتی ہے
  199. دور حاضر ہے حقیقت میں وہی عہد قدیم
  200. ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں
  201. نکل کر خانقاہوں سے ادا کر رسمِ شبیری
  202. نہ آتے ہمیں اس میں تکرار کیا تھی
  203. کیا کہوں اپنے چمن سے میں جدا کیونکر ہوا
  204. ظاہر کی آنکھ سے نہ تماشا کرے کوئی
  205. بے قراری سی بے قراری ہے
  206. تم حقیقت نہیں ہو حسرت ہو
  207. ہونٹوں پہ کبھی ان کے میرا نام ہی آئے
  208. ہرشخص پریشان سا حیراں سا لگے ہے
  209. کیا کہیے کہ اب اس کی صدا تک نہیں آتی
  210. کچھ دن اگر یہی رہا دیوار و در کا رنگ
  211. گزرے ہوئے طویل زمانے کے بعد بھی
  212. آ کے دیکھو تو کبھی تم میری ویرانی میں
  213. کیوں میرے لب پہ وفاؤں کا سوال آ جائے
  214. ٹوٹ جائے نہ بھرم ہونٹ ہلاؤں کیسے
  215. جانے یہ کیسی تیرے ہجر میں ٹھانی دل نے
  216. یوں دل میں تیری یاد اتر آتی ہے جیسے
  217. فاصلے ایسے بھی ہونگے یہ کبھی سوچا نہ تھا
  218. کب سماں تھا بہار سے پہلے
  219. رُودادِ محبّت کیا کہئیے
  220. بُھولی ہوئی صدا ہوں مجھے یاد کیجیے
  221. محفلیں لُٹ گئیں جذبات نے دم توڑ دیا
  222. ایک وعدہ ہے کِسی کا جو وفا ہوتا نہیں
  223. دُکھ درد کی سوغات ہے دُنیا تیری کیا ہے
  224. میرے چمن میں بہاروں کے پُھول مہکیں گے
  225. جب سے دیکھا پَری جمالوں کو
  226. وقت کی عمر کیا بڑی ہو گی
  227. ہے دعا یاد مگر حرفِ دعا یاد نہیں
  228. یہ جو دیوانے سے دو چار نظر آتے ہیں
  229. چراغِ طور جلاؤ! بڑا اندھیرا ہے
  230. اے تغیر زمانہ یہ عجب دل لگی ہے
  231. زخمِ دل پربہار دیکھا ہے
  232. جو عشق میں نے کفر کی پہچان کر دیا
  233. سُن تو سہی جہاں میں ہے تیرا فسانہ کیا
  234. یہ آرزو تھی تجھے گل کے رُوبرو کرتے
  235. ہستی اپنی حباب کی سی ہے
  236. کب تک تو امتحاں میں مجھ سے جدا رہے گا
  237. مجھ کو پوچھا بھی نہ یہ کون ہے غم ناک ہنوز
  238. بے کلی، بے خودی کچھ آج نہیں
  239. فقیرانہ آئے صدا کرچلے
  240. تا بہ مقدور انتظار کیا
  241. تجھ بِن خراب و خستہ زبوں خوار ہو گئے
  242. اب تو گھبرا کے یہ کہتے ہیں کہ مر جائیں گے
  243. لائی حیات آئے قضا لے چلی چلے
  244. پھرتا لیے چمن میں ہے دیوانہ پن مجھے
  245. اک کہانی سبھی نے سنائی مگر ، چاند خاموش تھا
  246. تو نے دیکھا ہے کبھی ایک نظر شام کے بعد
  247. جو اس کے چہرے پہ رنگ حیا ٹھہر جائے
  248. کہا میں نے کہاں ہو تم
  249. لاکھ دوری ہو مگر عہد نبھاتے رہنا
  250. میں یہاں اور تو وہاں جاناں