PDA

View Full Version : غزل



بزم اردو
11-17-2010, 03:25 PM
ہاں تم کو اجازت ہے آنکھیں میری نم رکھنا
دشوار تمہیں ہو گا پانی پہ قدم رکھنا
ٹھکرانا ہی اگر ٹہرا ٹھکرائیں گے ہم خود سے
توہینِ محبت ہے پتھر کو صنم رکھنا
ناطہ ہی تو ٹوٹا ہے سانسیں تو نہیں ٹوٹیں
بس ایک تعلق تم امیدِ وفا رکھنا
ایسے کسی جذبے کی تکمیل نہیں ہوتی
نیت میں دغا رکھنا ہونٹوں پہ قسم رکھنا
:heart:

علی عمران
11-17-2010, 05:35 PM
بہت خوب بزمِ اردو.......... اچھی شئیرنگ ہے....شکریہ

گلاب خان
11-19-2010, 09:54 PM
خوب ، ماشاء اللہ اچھی ابتدا ہے ،

تانیہ
11-19-2010, 10:09 PM
ابھی سورج نہیں ڈوبا، ذرا سی شام ہونے دو
میں خود ہی لوٹ جاؤں گا، مجھے ناکام ہونے دو
مجھے بدنام کرنے کے بہانے ڈھونڈتے ہو کیوں؟
میں خود ہو جاؤں گا بدنام، پہلے نام ہونے دو
ابھی مجھ کو نہیں کرنا ہے اعترافِ شکست
میں سب تسلیم کر لوں گا، یہ چرچا عام ہونے دو
میری ہستی نہیں انمول، پھر بھی بِک نہیں سکتا
وفائیں بیچ لینا، پر ذرا نیلام ہونے دو
نئے آغاز میں ہی حوصلہ کیوں توڑ بیٹھے ہو
جیت لو گے تم سب کچھ، ذرا انجام ہونے دو

این اے ناصر
03-31-2012, 12:44 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ