PDA

View Full Version : پھانسی سے قبل ویڈیو کا معمہ اب ’حل نہیں ہو گا‘



تانیہ
03-26-2015, 05:47 PM
http://ichef.bbci.co.uk/news/ws/660/amz/worldservice/live/assets/images/2015/03/19/150319161542_saulat_mirza_640x360_bbc_nocredit.jpg
پاکستان کے صوبہ بلوچستان کی مچھ جیل میں پھانسی کے منتظر صولت مرزا کے ایک ویڈیو بیان کی ریکارڈنگ کے بارے میں قائم تحقیقاتی کمیٹی کا نوٹیفیکشن واپس لیا گیا ہے۔مچھ جیل میں صولت مرزا کے ویڈیو بیان کی ریکارڈنگ کی تحقیقات کے لیے کمیٹی کا نوٹیفیکیشن منگل کو جاری کیا گیا تھا۔


اس نوٹیفیکیشن کے مطابق انسپیکٹر جنرل محکمۂ جیل خانہ جات حکومت بلوچستان کی سربراہی میں قائم چار رکنی کمیٹی کو اس بات کی تحقیقات کرنی تھی کہ آیا اس بیان کی ریکارڈنگ مچھ جیل میں ہوئی ہے یا نہیں۔
واضح رہے کہ مچھ جیل کے حکام نے اس ویڈیو بیان کی ریکارڈنگ کے بارے میں یہ موقف اختیار کیا تھا کہ یہ ریکارڈنگ مچھ جیل میں نہیں ہوئی۔ صوبائی محکمۂ داخلہ کے حکام کے مطابق کمیٹی کو ایک ہفتے میں تحقیقات مکمل کر کے اپنی رپورٹ محکمہ داخلہ کو دینی تھی لیکن بدھ کے روز تحقیقاتی کمیٹی کے نوٹیفیکشن کو سرے سے واپس ہی لیا گیا۔
محکمہ داخلہ کے حکام نے نام ظاہر نہ کرنے پر بتایا کہ چونکہ صولت مرزا کے عدالت سے دوبارہ ڈیتھ وارنٹ جاری ہو چکے ہیں اور یکم اپریل کو ان کی پھانسی کی سزا پر عملدرآمد ہونا ہے اس لیے تحقیقاتی کمیٹی کا نوٹیفیکیشن واپس لینے کا فیصلہ کیا گیا۔
اس ویڈیو بیان کی ریکارڈنگ کے حوالے سے حکومت کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔
بعض آئینی اور قانونی ماہرین کے مطابق سزائے موت کے کسی قیدی کا بیان ریکارڈ کر نا غیر قانونی اقدام تھا۔
صولت مرزا کی پھانسی سے چند گھنٹے قبل منظر عام پر آنے والی ویڈیو میں متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین سمیت جماعت کی اہم قیادت پر سنگین الزامات عائد کیے گئے۔


http://ichef.bbci.co.uk/news/ws/625/amz/worldservice/live/assets/images/2015/03/19/150319083003_saulat_mirza_mqm_640x360_youtube_nocr edit.jpg

ان کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم گورنر سندھ عشرت العباد کے ذریعے اپنے حراست میں لیے گئے کارکنوں کو تحفظ دیتی ہے۔
ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین اور تنظیم کے رہنماؤں نے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے انھیں جماعت کو بدنام کرنے کی کوشش قرار دیا۔ الطاف حسین نے اس ویڈیو کے اجرا کے لیے پاکستانی ایجنسیوں کو موردِ الزام ٹھہرایا۔
کراچی کی انسدادِ دہشت گردی کی عدالت نے صولت مرزا پر کراچی الیکٹرک سپلائی کارپوریشن کے مینیجنگ ڈائریکٹر شاہد حامد اُن کے گارڈ اور ڈرائیور کو قتل کرنے کے جرم میں پھانسی کی سزا سنائی گئی تھی۔

بی بی سی اردو (http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2015/03/150325_saulat_mirza_video_inquiry_zz)

سید انور محمود
03-28-2015, 10:26 AM
کیا کہہ سکتے ہیں، بس اتنا ہی کہنا ہے ’جسے پیا چاہے‘ ، یہ پاکستان ہے ، قیام پاکستان کے بعد انصاف صاحب کسی ایسی جگہ ہجرت کرگے کہ آج تک نہ مل سکے۔