PDA

View Full Version : اَن گنت لوگ ، اَن گنت چہرے



گلاب خان
12-21-2010, 04:00 PM
اَن گنت لوگ ، اَن گنت چہرے

زندگی کس جہت میں لے جائیں

اجنبیت کا ہر طرف ہے غبار

دور تک ہے کثافتوں کی قطار

بغض و مکر و فریب کے سائے

ہر قدم پر ہیں پاؤں پھیلائے

اجنبی گھاؤ کس کو دکھلائیں

نا شناسی کے رنگ ہیں گہرے

ہم بھی کس کائنات میں آئے

کیسی ٹھنڈی حیات میں آئے

آس بھی سرد پڑ گئی ہے یہاں

زیست سے زیست لڑ گئی ہے یہاں

کوئی قاتل نظر نہیں آتا

دور تک چیختا ہے سناٹا

٭٭٭

تانیہ
12-21-2010, 04:14 PM
بہت خوب

این اے ناصر
03-31-2012, 01:35 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ