PDA

View Full Version : اے دوست مجھے اپنے خیالوں کی روانی دے جا



گلاب خان
12-21-2010, 04:11 PM
اے دوست مجھے اپنے خیالوں کی روانی دے جا

تو بھر نہ سکے ایسا کوئی زخم نشانی دے جا

جو باعثِ توقیر بھی ہو تیرے لئے میرے لئے

دنیا کو رہے یاد وہ اُلفت کی کہانی دے جا

اغیار بھی راضی رہیں اپنے بھی رہیں خوش تجھ سے

اپنوں کو تو پیغام ہی غیروں کی زبانی دے جا

کھو دیتے ہیں الفاظ معانی کے بغیر اپنا وجود

بے جان میرے لفظ ہیں لفظوں کو معانی دے جا

ثابت یہ ہوا حسن سے ہے قوتِ گفتار فسوں

کہنے لگے لے حسن مگر شعلہ بیانی دے جا

٭٭٭

دیکھا ہے پہلی بار جہانِ خراب میں

عالم فدا ہے دیکھ کے اُس کو شباب میں

مستی سرور و کیف، نشہ اور بے خودی

اُس کی نظر میں ہے جو نہیں ہے شراب میں

گھر سے نکل تو جائیں گے جائیں گے ہم کہاں

اتنا سا ہے سوال تمہاری جناب میں

اے مَہ جبین تم تو تصور سے بھی ہو خوب

دیکھا نہیں حسین کوئی تم سا خواب میں

دنیا کے ذرے ذرے میں جلوہ اُسی کا ہے

بادِ صبا میں ہے تو کبھی وہ گلاب میں

خوشیاں بکھیرتے ہیں مگر غم زدوں میں یہ

ویسے تو چند تار ہیں چنگ و رباب میں

دیکھے کوئی تو صاف ہے آنکھوں کے سامنے

شہزاد زندگی کی حقیقت حباب میں

تانیہ
12-21-2010, 04:13 PM
واہ....

این اے ناصر
03-31-2012, 01:35 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ