PDA

View Full Version : قربانی اور ایثار ۔۔ عورت



بےباک
07-11-2015, 02:36 AM
قربانی اور ایثار کا دوسرا نام عورت ھے !
ﻋﻮﺭﺕ ﺳﺐ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﺍﭨﮭﮯ , ﺳﺤﺮﯼ ﺑﻨﺎئے، ﺳﺐ ﺳﮯ ﺁﺧﺮ ﻣﯿﮟ کھائے ، ﭘﮭﺮ ﺭﻭﺯﮦ ﺭﮐﮭﮯ, ﺩﻭﭘﮩﺮ ﻣﯿﮟ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﭘﮑﺎئے، ﭘﮭﺮ ﭼﺎﺭ ﺑﺠﮯ ﺳﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﺍﻭﺭ ﺳﺴﺮﺍﻝ يا گھر والوں ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺍﻓﻄﺎﺭﯼ اور کھانا ﺑﻨﺎﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺟﺖ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ،
ﭘﮑﻮﮌﮮ ,ﺩﮨﯽ ﺑﮭﻠﮯ , ﭼﮭﻮﻟﮯ ﺍﻭﺭ ﻧﺟﺎﻧﮯ ﮐﯿﺎ ﮐﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺑﮭﯽ ﯾﮩﯽ ﺩﮬﮍﮐﺎ ﮐﮧ ﭘﺘﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺷﻮﮨﺮ , ﺑﺎﭖ ﯾﺎ ﺳﺴﺮ ﮐﻮ ﭘﺴﻨﺪ ﺁﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﯾﺎ ﻧﮩﯿﮟ , ﺷﻮﮨﺮ ﮐﺎ ﻏﺼﮧ ﺍﻓﻄﺎﺭﯼ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﺑﺮﺩﺍﺷﺖ ﮐﺮﮮ ﭘﮭﺮ ﺍﺫﺍﻥ ﮐﮯ ﻭﻗﺖ ﺗﮏ ﭘﮑﻮﮌﮮ تلتی ﺭﮨﮯ ﮐﮧ ﻣﯿﺎﮞ ﮐﻮ ﺑﺎﺳﯽ ﭘﮑﻮﮌﮮ ﭘﺴﻨﺪ ﻧﮩﯿﮟ،
ﺳﺐ ﺭﻭﺯﮦ ﮐﮭﻮﻝ ﻟﯿﮟ ﺗﻮ ﻭﮦ ﭼﭙﮑﮯ ﺳﮯ ﺁﮐﺮ ﺭﻭﺯﮦ ﮐﮭﻮﻝ ﻟﯿﺘﯽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺗﻤﺎﻡ ﮔﮭﺮ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﻮ ﭘﻮﺭﯼ ﺍﻓﻄﺎﺭﯼ ﮐﮭﻼﻧﮯ ﺍﻭﺭ ﺷﺮﺑﺖ ﭘﻼﻧﮯ ﮐﯽ ﺧﺎﻃﺮﻣﺪﺍﺭﺍﺕ ﮐﺮﺗﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﮯ ,ﺍﻭﺭ ﮐﻮﺋﯽ ﺍﻓﻄﺎﺭﯼ ﺍﯾﺴﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﯽ ﺟﺲ ﻣﯿﮟ ﮐﻮﺋﯽ ﺍﺳﮑﯽ ﺗﻌﺮﯾﻒ ﮐﺮ ﺩﮮ ﺑﻠﮑﮧ ﭘﮑﻮﮌﻭﮞ ﺍﻭﺭ ﺷﺮﺑﺖ ﻣﯿﮟ ﺗﻮ ﮨﻤﯿﺸﮧ ﺷﮑﺎﯾﺖ ﮨﯽ ﻣﻠﺘﯽ ﮨﮯ ، اسکے بعد کھانا اور پھر چاۓ ۔ سب اس کی ذمہ داری۔
ﭘﮭﺮ ﯾﮧ ﻋﻮﺭﺕ ﺗﻤﺎﻡ ﺩﺳﺘﺮﺧﻮﺍﮞ ﺳﻤﯿﭧ ﮐﺮ ﺳﺎﺭﮮ ﮔﮭﺮ ﮐﺎ ﮐﺎﻡ ﺧﺘﻢ ﮐﺮﮐﮯ ﺁﺩﮬﯽ ﺭﺍﺕ کو فارغ ہوﺗﯽ ﮨﮯ ۔ ابھی تراويح بھی پڑھنی ہے۔ ﺍﻭ ﮨﺎﮞ ﺍﺳﮯ ﺻﺒﺢ دو ﺑﺠﮯ ﺍﭨﮭﻨﺎ ﺑﮭﯽ ﺗﻮ ﮨﮯ, ﺍﻻﺭﻡ ﯾﺎﺩ ﺳﮯ لگانا ﮨﻮﮔﺎ ﻭﺭﻧﮧ ﺍﮔﺮ ﺁﻧﮑﮫ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﮭﻠﯽ ﺍﻭﺭ ﮔﮭﺮ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﺑﻐﯿﺮ ﺳﺤﺮﯼ ﮐﺎ ﺭﻭﺯﮦ ﮨﻮ ﮔﯿﺎ ﺗﻮ ﺳﺎﺭﺍ ﺩﻥ ﺍﺳﮯ ﮔﮭﺮﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﻏﺼﮧ ﺑﺮﺩﺍﺷﺖ ﮐﺮﻧﺎ ﮨﻮﮔﺎ۔
ﮔﮭﺮ ﮐﯽ ﺧﻮﺍﺗﯿﻦ , ﺟﻮ ﺑﮭﯽ ﺭﺷﺘﮧ ﮨﮯ ﻣﺎﮞ, ﺑﮩﻦ, ﺑﯿﻮﯼ ﯾﺎ ﺑﯿﭩﯽ ﺍﻥ کی قدر کریں ، ان ﮐﺎ ﺑﮭﯽ ﺭﻣﻀﺎﻥ ﻣﯿﮟ ﺧﯿﺎﻝ ﺭﮐﮭﯿﮟ ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﻭﮦ ﺑﮭﯽ ﺍٓﭖ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﺍﻧﺴﺎﻥ ﮨﯿﮟ! اگر ہو سکے تو ان کا ہاتھ بٹائيں ، آور اگر آپ کو روزہ زيادہ ہی لگ رہا ہے تو کم ازکم ميٹھے لہجے ميں بات ہی کر ليجيے ۔ ان کے ليے اس سے بڑا کوئی اعزاز نہيں ہو گا کہ ان کو ان کے ہونے کا احساس دلايا جاۓ اور ان کی قدر کی جاۓ۔