PDA

View Full Version : ہر بیماری کے لئے شفاء ۔ سناء



بےباک
08-15-2016, 09:16 AM
ارشاد رسول اللہ علیہ وسلم اور سناء
حضرت عبدا للہ بن ام حرام رضی اللہ تعالیٰ عنہ‘ سے روایت ہے کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو ارشاد فرماتے ہوئے سنا کہ
بس سناء او زیرہ کو استعمال کرو اس لئے کہ ان دونوں میں بجز سام کے ہر بیماری کے لئے شفا ء ہے ۔عرض کیا گیا کہ حضور سام کیا ہے؟ آپ ا نے فرمایا موت۔
( سنن ابن ماجہ ۔طب نبوی ااز حافظ ابن القیم ۔ص108)
سنا ء کے فائدے
سنا ء کو عربی اور فارسی میں سناء مکی اور انگریزی میں senna کہتے ہیں۔ یہ ہر خلط کی مسہل ہے۔ دماغ کا تنقیہ کرتی ہے ۔کمر درد ،عرق النساء ،جوڑوں کے درد اور نوبتی بخاروں میں فائدہ دیتی ہے ۔پیٹ کے کیڑوں کی قاتل ہے ۔ ( کتا ب المفردات ۔ص292)
بیماریوں کی ماں قبض
اگر اجابت بوقت معمولہ نہ آئے ۔یعنی کبھی دوسرے تیسرے روز آیا کرے ۔یا اوقات میں تبدیلی نہ ہو لیکن مقدار میں کم آئے گویا اجابت با فراغت نہ ہو تو ان دونوں صورتوں کو قبض ہی کہا جائے گا ۔آج کل بے شمار لوگ اس مرض میں مبتلا ہیں ۔مگر بے پرواہی کرتے ہیں اسی وجہ سے انہیں طرح طرح کی بیماریاں چمٹی رہتی ہیں۔
کیونکہ قبض بقول اطبافی الواقع ام الامراض یعنی بیماریوں کی ماں ہے۔ اس کی وجہ سے درد سر ،نزلہ، زکام ،نظرکی کمزوری، دل کی گھبراہٹ ،بے چینی ،بھوک کی کمی، بواسیر وغیرہ امراض پیداہوتے ہیں ۔اس لئے ہمیں لازم ہے کہ اس مرض کو معمولی نہ خیال کرتے ہوئے اس کا علاج کریں ۔
چائے کا زیادہ استعمال ،سگڑیٹ یا حقہ نوشی ، افیون کھانا ،دماغی محنت کی زیادتی ،گھی دودھ کا استعمال نہ کرنے کی وجہ سے انتڑیاں خشک ہو کر قبض کا باعث بنتی ہیں ۔
رفع حاجت کے وقت زیادہ دیر لگتی ہے اور پھر بمشکل خشک سا پاخانہ خارج ہوتا ہے اوربعض مواقع پر اجابت خون آلودہوتی ہے یہ سب قبض کی علامات ہیں ۔( کنز المجربات ۔ج۱۔ص125)
سنا ء کی سب سے بڑی خوبی یہ ہے کہ باوجود مسہل ہونے کے مقوی قلب ہے ۔وسواس سوداوی خصوصیت سے زائل کرتی ہے ۔عضلات کو چست بنا دیتی ہے ۔بالوں کو گرنے سے بچاتی ہے ۔جوں سے حفاظت کرتی ہے ۔پرانے درد سر کو ختم کرتی ہے ۔خارش ،دانے اور مرگی کے لئے نافع ہے ۔ ( طب نبوی ا ۔ص109)
خمیرہ ملین برائے قبض کشائی
گل سرخ ایک پاؤ،سناء مکی ایک پاؤ،ایک سیر پانی میں رات بھر بھگو رکھیں صبح کو آگ پر یہاں تک جو ش دیں کہ ڈیڑھ پاؤ پانی رہ جائے تو اتا ر لیں اور چھان کر پانی میں ڈیڑھ سیر مصری شامل کرکے خمیرہ تیار کرلیں اور محفوظ رکھیں ۔ایک تولہ سے دو تولہ تک قبض کے لئے کھلائیں ۔
( کنز المجربات۔ج۳۔ص657)
معجون سناء برائے دائمی قبض اور درد قولنج کے لئے
سفوف سناء مکی،مویز منقیٰ اور روغن بادام سب چھ چھ ماشہ ،گل قند چھ تولہ ،مغز بادام ایک تولہ سفوف سنا ء کو روغن بادام میں چرب کریں اور مغز بادام اور مویز منقیٰ شامل کر کے گل قند ملادیں ۔چھ ماشہ گرم دودھ کے ساتھ لیں ،مجرب ہے۔ ( کنز المجربات۔ج۳۔ص657)
نوٹ : یاد رکھیں کہ قبض کشائی کی تمام ادویات را ت کو سوتے وقت نیم گرم دودھ سے استعمال کریں اور پھر دوا کھانے کے بعد ہر گز کچھ اور نہ کھائیں ۔
محافظ جوانی
حکیم محمد عبداللہ ؒ لکھتے ہیں کہ یہ نسخہ میرے ایک دوست محترم جناب حکیم محمد اکرم سرانی نے عطا فرمایا اور انھوں نے اپنے ایک دوست کا ذکر ان الفاظ میں بیان کیا کہ میرے ایک دوست جنھوں نے اپنی عمر سو سال سے متجاوز بیان کی انھیں دیکھا تو ماشاء اللہ اس عمر میں بھی ایک تندرست جوان کی طرح سرخ وسفید تھے اور ابھی تک بدن پر کوئی جھری وغیرہ نظر نہیں آتی تھی ۔میں نے ان سے دریافت کیا کہ آپ بتا سکتے ہیں کہ آپ کی صحت اور جوان رہنے کاراز کیا ہے؟ ۔
انھوں نے فرمایاکہ مجھے تقریباً نصف صدی پیشتر جناب مجدد طب مسیح الملک حکیم اجمل خان مرحوم نے ایک نسخہ عطا فرمایاتھا جسے میں با قاعدگی سے استعمال کرتا چلا آرہاہوں اور یہ بفضلہ تعالیٰ اسی کانتیجہ ہے کہ میری صحت قابل رشک ہے۔ اور وہ نسخہ درج ذیل ہے۔
سفوف سناء مدبر ،سفوف گل سرخ بہاری اور شہد خالص چھوٹی مکھی مساوی الوزن ۔ تمام ادویات کو خوب کھرل کرلیں اور گولیاں بمقدار جنگلی بیر بنا کر سایہ میں خشک کر لیں اور کھلے منہ کی شیشی میں بحفاظت رکھیں ۔ اور اللہ کانام لے کر ایک ایک گولی صبح وشام ہمراہ تازہ پانی لیں ۔ صبح نہار منہ پہلے منہ کو اچھی طرح مسواک سے صاف کریں اور پھر گولی کھائیں ۔ہر مہینے میں بیس بائیس روز استعمال کرکے سات آٹھ دن ناغہ کر دیا کریں ۔ پیٹ کی تما م بیماریاں ، قبل از وقت بالوں کا سفید ہونا اوردل کی گھبراہٹ وغیرہ جملہ امراض کے لئے مفید ہیں ۔
نوٹ ۔ سناء مدبر کے معنی ہیں کہ اس ڈنڈیاں،پھلیاں اورریشے نکال لیں ۔
سناء کا ایک آسان نسخہ
سو(100) گرام سناء کا سفوف بنا کر اس میں گلو کوز 100 گرام والا ایک ڈبہ ملا لیں اور محفوظ کرلیں ۔روانہ رات کو ایک گرام پانی یا دودھ سے لیں ۔تمام امراض کے لئے اکسیر ہے۔
۲۔۔۔سو (100) گرام سناء میں ایک کلو پانی ڈالیں اور ساری رات بھگو کر رکھیں صبح کو ابالیں یہاں تک کہ سو گرام پانی رہ جائے تو چھان کر حسب ضرورت مصری ملالیں اور ایک چمچ رات کو لیں جملہ امراض معدہ میں اکسیرہے