PDA

View Full Version : پی آئی اے کا طیارہ حویلیاں کے قریب حادثے کا شکار



سید انور محمود
12-07-2016, 06:14 PM
پی آئی اے کا طیارہ حویلیاں کے قریب حادثے کا شکار
1926


چترال سے اسلام آباد آنے والا پی آئی اے کا طیارہ حویلیاں کے قریب حادثے کا شکار ہوگیا، طیارے کا اسلام آباد پہنچنے سے کچھ دیر قبل کنٹرول ٹاور کے ریڈار سے رابطہ منقطع ہوااور وہ ریڈار سے غائب ہوگیا۔

پی آئی اے کی فلائٹ نمبر پی کے 661اے ٹی آر 42طیارہ ہے جس میںعملے کے ارکان سمیت 47افراد سوار تھے، جو ساڑھے 4بجے حادثے کا شکار ہوا۔

طیارہ حویلیاں آرڈیننس فیکٹری کے قریب پہاڑی علاقے میںگرکر تباہ ہوا ، طیارہ گرنے کے مقام سے دھواں اٹھ رہا ہے جو دور دور تک دیکھا جارہا ہے، حادثے کی جگہ پر امدادی ٹیمیں روانہ کردی گئی ہیں، پہاڑی علاقہ ہونے کی وجہ سے مذکورہ مقام پر پہنچنے میں دشواری کا سامنا ہوسکتا ہے۔

جہاز کےکیپٹن صالح جنجوعہ تھے جبکہ دیگر عملے میں کو پائلٹ احمد جنجوعہ اور ٹرینی پائلٹ آل اکرم،ایئر ہوسٹس صدف فاروق اور عاصمہ عادل سوار شامل تھیں۔

حویلیاں کے قریب طیارہ خراب ہونے کے حوالے سے جہاز کے کیپٹن نے مے ڈے کال دی ،جس کے بعد طیارہ حادثے کا شکار ہو گیا۔

واضح رہے کہ مے ڈے کال کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ پرواز انتہائی خطرے میں ہے، اس کال کو انتہائی درجے کی ایمرجنسی سمجھا جاتا ہے اور یہ تصور کیا جاتا ہے کہ طیارے پر کیپٹن کا کنٹرول ختم ہوگیا ہے۔

سول ایوی ایشن کے مطابق طیارہ 3بج کر 50منٹ پہ چترال سے اڑا تھا جسے 4بج کر 45منٹ پر اسلام آباد پہنچنا تھا، آرمی کی امدادی ٹیمیں بھی حادثے کی جگہ روانہ ہوگئی ہیں۔

بعض اطلاعات کے مطابق طیارے میں معروف نعت خواں جنید جمشیدبھی سوارتھے، جنید جمشید دعوت و تبلیغ کے سلسلے میں چترال میں موجود تھے،جنید جمشید کے بھائی نے بھی ان کی طیارے میں موجودگی کی تصدیق کرتے ہو ئے کہا کہ جنید جمشید کے ساتھ ان کی اہلیہ بھی طیارے میں موجود تھیں،انہیں اسی پرواز کے ذریعے اسلام آباد پہنچنا تھا، ان کا نام مسافروں کی لسٹ میں شامل ہے اور ان کی سیٹ نمبر 27سی تھا۔

پی آئی اے نے حادثے کے حوالے سے معلومات کیلئے ہیلپ لائن قائم کر دی ہے جس کے نمبر 02199044890، 02199044376،02199044394 ہیں۔