PDA

View Full Version : کربلا میں کربلا ھی تھی



آزاد خان
01-04-2011, 06:06 PM
29۔12۔96کاواقعع ھے سب کو معلوم ھےعراق میں جو ھوا

بس یھ اس دن کے خیالات سے اگاہ ھوں،
میری آنکھوں نے یھ دیکھا کیسا سماں ھے
کربلا میں ھم نے دیکھا کیا کربلا ھے

آسماں پہ نظر آیا دھواں ھی دھواں ھے
اس دھویں کے پیچھےناجانے آسماں کھاں چھپا ھے

چھٹ جاے تاریکی تو دیکھ سکیں انکو
مایں بچے اک ساتھ دم توڑ رھے ھیں
بوڑھے ماں باپ بیٹوں کی لاشوں پہ ماتم کدہ ھیں

ھر سو ذمین پہ خون پانی کی طرح ھے
سنا تھاکبھی جو کربلا یھ کربلا تو ھے

یھ خون کی ہولی جو کھیل رھے ھیں
کیا یھ بھی تیرے پیدا کیے ھوے بندوں میں سے ھیں
کیوں دل ان کے سینوں میں تم نے نھی ڈالے
دل کی جگہ ان کےتونے پتھر ھیں اتارے

ہھاےیھ ماتم کدہ دھرتی پے ھیںاترے
پھچان نھی ان کو کس مٹی پے ھیں اترے
کویی سمجھاے ان بے خبر نادانوں کو
کھ یھ آھوں بھری خونریز دھرتی پے ھیں اترے

فاطمہ کےآل کی پیاسی ھے یھ دھرتی
محمد کے نواسوں کے خون کی پیاسی ھے یھ دھرتی