PDA

View Full Version : درہم برہم محفل دیکھی مئے خانوں کی بات نہ پوچھ کرتے سب تھے ہوش کا دعویٰ دیوانوں کی بات



گلاب خان
01-04-2011, 10:10 PM
درہم برہم محفل دیکھی مئے خانوں کی بات نہ پوچھ
کرتے سب تھے ہوش کا دعویٰ دیوانوں کی بات نہ پوچھ

غم کی دولت اتنی پائی، تنگ ہوئی دل کی انگنائی
اپنے ہی تھے دےنے والے بیگانوں کی بات نہ پوچھ

خود جو جلے اوروں کو جلائے، یہ نہیں ہرگز شمع کا شیوہ
شمع جلی ہے سوز دروں سے پروانوں کی بات نہ پوچھ

ہستی اپنی ایک معمہ جس کی عبارت ٹیڑھی میڑھی
حرف ہیں پھر بھی کھلی حقیقت افسانوں کی بات نہ پوچھ

پیار محبت بھائی چارہ راگ ہوا سب کا بٹوارہ
سب لاشیں ہیں چلتی پھرتی انسانوں کی بات نہ پوچھ

این اے ناصر
03-31-2012, 12:52 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ