PDA

View Full Version : گل رنگ موسموں میں جو رنگ حنا چلے لہرائے زلف تیری تو باد صبا چلے



گلاب خان
01-04-2011, 10:20 PM
گل رنگ موسموں میں جو رنگ حنا چلے
لہرائے زلف تیری تو باد صبا چلے

سرخی ہے تیرے لب کی ہر اک لالہ زار میں
دریا کی موج موج میں تیری ادا چلے

تیرے رخِ جمال سے ہے ظلمتوں میں نور
زخموں کے داغ داغ پہ تیری دوا چلے

ہم بیکسوں کو عشق میں ملتا ہے حوصلہ
دشتِ جنوں میں لے کے جو تیری دعا چلے

ان کے ہی نام دار و رسن پر لکھے گئے
جو تیری بزم ِناز میں سب سے جدا چلے

ہم کو غبارِ راہ میں عزم ِسفر دیا
ہر وقت آگے آگے ترے نقش پا چلے

تیرا غرور دل میں سمایا تھا اس قدر
اپنی ادا سے آئے تھے اپنی ادا چلے

شہرِ ستم میں ان کی نرالی ہی شان تھی
جو بے وفا کے سامنے لے کر وفا چلے

توڑا ہے ہم نے بادِ مخالف کا حوصلہ
ہاتھوں میں اپنے ہم بھی جلا کردیا چلے

ہر شاخِ گل پہ رقص میں ڈوبی ہیں تتلیاں
اس باغ میں تو اشک ہماری صدا چلے

گلاب خان
01-04-2011, 10:21 PM
حدودِ وقت کے اندر حصار ِ ذات میںقید
کوئی تو ہے مرے ہر لمحۂ حیات میں قید

نہ فاصلوں کا پتہ ہے نہ وقت کی حد کا!
تو پھر میں کس کے لیے کیوں ہوں کائنات میں قید

نہ کام آتی ہے افکار کی بلندی بھی!
شعور ہوتا ہے جب دل کی واردات میں قید

مجھے بھی جکڑے ہوا تھا تحفظِ ذہنی
رہا وہ شخص بھی خود اپنی احتیاط میں قید

نہ جانے کیوں اسے ہوتی رہی سحر کی تلاش!
رہی تھی صبح کی دیوی جب اس کی رات میں قید

کسی بھی طرح کسی بات کے بہانے ہی
کیا تھا اس نے مجھے اپنی بات بات میں قید

آزاد خان
01-05-2011, 01:43 PM
بھت زبردست ماشا اللہ:::::::::::::::::::::::::::
وہ غلط فھمی تھی کسی سے بھی محبت تھی اسکو
وہ اپنی ذات میں اتنا مصروف تھا
اسے اطراف میں پھیلی محبت ڈھونگ لگتی تھی

بےباک
01-05-2011, 06:40 PM
خوب آزاد خان ،خوب

این اے ناصر
03-31-2012, 12:53 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ