PDA

View Full Version : عشق کرنے کے بھی آداب ہوا کرتے ہیں



گلاب خان
01-12-2011, 10:17 PM
عشق کرنے کے بھی آداب ہوا کرتے ہیں
جاگتی آنکھوں کے کچھ خواب ہوا کرتے ہیں

ہر کوئی رو کر دکھا دے یہ ضروری تو نہیں
خشک آنکھوں میں بھی سیلاب ہوا کرتے ہیں

کچھ فسانے ہیں جو چہرے پہ لکھے رہتے ہیں
کچھ پس دیدہ خواب ہو ا کرتے ہیں

کچھ تو جینے کی تمنا میں مرے جاتے ہیں
اور کچھ مرنے کو بےتاب ہوا کرتے ہیں

تیرنے والوں پے موقوف نہیں ہے خالد
ڈوبنے والے بھی پایاب ہوا کرتے ہیں

علی عمران
01-13-2011, 06:24 PM
تیرنے والوں پے موقوف نہیں ہے خالد
ڈوبنے والے بھی پایاب ہوا کرتے ہیں

بہت خوب..............

بےباک
01-14-2011, 09:33 AM
بہت ہی شاندار گلاب خان جی ، بہت ہی شاندار شاعری پیش کی

این اے ناصر
03-31-2012, 01:18 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ