PDA

View Full Version : دوستی میں ہم لوگ امید صلہ نہیں کرتے



گلاب خان
01-12-2011, 10:21 PM
دوستی میں ہم لوگ امید صلہ نہیں کرتے
کسی سے دوستی نہ رہے تو گلہ نہیں کرتے

جن لوگوں کے ایک سے زیادہ روپ ہوں
ایسے لوگوں سے ہم کبھی ملا نہیں کرتے

دوستی کے پردے میں جو ہم سے حسد کریں
ان کے لیے چاہت کے پھول کھلا نہیں کرتے

دوستی کی خاطر تو یہ جان بھی نچھاورکر دیں
یار کانٹوں پہ سلا دے تو ہم کبھی ہلا نہیں کرتے

تلوار کے زخم تو بھر جاتے ہیں وقت کے ساتھ اصغر
زباں کے دیے ہوئے زخم کبھی سلا نہیں کرتے

گلاب خان
01-12-2011, 10:22 PM
ہر رشتے کا مقام نہیں ہوتا
دل کے رشتوں کا نام نہیں ہوتا

ڈھونڈا ہے آپ کو دل کی روشنی سے
آپ جیسا دوست کسی کے لیے عام نہیں ہوتا

تانیہ
01-12-2011, 10:38 PM
واہ جی واہ....

علی عمران
01-13-2011, 06:22 PM
بہت خوب گلاب خان............

این اے ناصر
03-31-2012, 12:54 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ

نگار
09-10-2012, 01:36 AM
دوستی کی خاطر تو یہ جان بھی نچھاورکر دیں
یار کانٹوں پہ سلا دے تو ہم کبھی ہلا نہیں کرتے

واہ واہ بہترین شاعری ارسال کرنے پہ آپکا بہت بہت شکریہ

گلاب خان
09-10-2012, 08:42 PM
شکریہ نگار بھای شکریہ سب کا