PDA

View Full Version : دیار حبس میں تازہ ہوا کی امیدیں



عبادت
01-25-2011, 11:45 PM
دیارِ حبس میں تازہ ہَوا کی اُمّیدیں
ہمیں ہیں بے وفا سے پھر وفا کی اُمّیدیں

ہماری فکر ہی سب سے جُدا ہے دُنیا میں
بلا کی دھُوپ میں رکھیں گھٹا کی اُمّیدیں

دیا ہے خُون ہم نے بھی نئی سحر کے لئے
جبھی تو تیرگی میں ہیں ضیا کی اُمّیدیں

کبھی تو پیار سے ہم کو بلائے گا تُو بھی
لگائے بیٹھے ہیں تیری صدا کی اُمّیدیں

ہمارے راہ کی دیوار بن گئے انور
وہ لوگ جن سے تھیں ہم کو دُعا کی اُمّیدیں

سرحدی
01-26-2011, 12:56 PM
بہترین، بہت اچھے اشعار ہیں.....

این اے ناصر
03-31-2012, 12:59 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ