PDA

View Full Version : شاعری



گلاب خان
01-26-2011, 08:23 PM
جگہ جی لگانے کی دنیا نہیں ہے
یہ عبرت کی جا ہے تماشا نہیں ہے
جہاں میں کہیں شور ماتم بپا ہے کہیں فکر و فاقہ سے آہ وبکا ہے
کہیں شکوہ جورو مکرو دغا ہے غرض ہر طرف سے یہی بس صدا ہے
جگہ جی لگانے کی دنیا نہیں ہے
یہ عبرت کی جا ہے تماشا نہیں ہے

گلاب خان
01-26-2011, 08:28 PM
[color=#0000CD]یارب ! دلِ مُسلمِ ہند کو وہ زندہ تمنّا دے
جو قلب کو گرمادے، جو روح کو تڑپا دے

پھر وادئ ایودھیا کے ہر ذرّے کو چمکا دے
پھر شوقِ تماشا دے، پھر ذوقِ تقاضا دے

محرومِ تماشا کو، پھر دیدہ بینا دے
دیکھا ہے جو کچھ میں نے ، اوروں کو بھی دکھلا دے

اس دور کی ظلمت میں، ہر قلبِ پریشاں کو
وہ داغِ محبت دے جو چاند کو شرما دے

رفعت میں مقاصد ہو، بے باک صداقت ہو
سینوں میں اُجالا کر ، دل صورتِ مینا دے

احساس عنایت کر آثارِ مصیبت کا
امروز کی شورش میں، اندیشہ فردا دے