PDA

View Full Version : hum hamesha k sair chasham sahi



این اے ناصر
03-18-2011, 08:42 PM
kion tabyat kaheen therti nahi
dosti to udaas kerti nahi

hum hamesha k sair chasham sahi
tujh ko dkhain to aankh bharti nahi

shab-e-hijraan b roz-e-bad ki terha
kat to jati hay per guzarti nahi

ye mohabbat hay, sun zamanay sun
itni aasanyon se merti nahi

jis terha tum guzaartay ho faraz
zindagi is terha guzarti nahi

سقراط
05-09-2011, 12:21 AM
کیوں طبیعت کہیں ٹھہرتی نہیں : احمد فراز


کیوں طبیعت کہیں ٹھہرتی نہیں
دوستی تو اداس کرتی نہیں

ہم ہمیشہ کے سیر چشم سہی
تجھ کو دیکھیں تو آنکھ بھرتی نہیں

شبِ ہجراں بھی روزِ بد کی طرح
کٹ تو جاتی ہے پر گزرتی نہیں

اس کی رحمت کا کیا حساب کریں
بس ہمیں سے حساب کرتی نہیں

یہ محبت ہے ، سن! زمانے سن!
اتنی آسانیوں سے مرتی نہیں

جس طرح تم گزرتے ہو فراز
زندگی اس طرح گزرتی نہیں