PDA

View Full Version : کبھی وقت ملے تو آ جاو



این اے ناصر
03-18-2011, 08:58 PM
کبھی وقت ملے تو آ جاو
ہم جھیل کنارے جا بیٹھیں

تم اپنے سُکھ کی بات کرو
ہم اپنے دکھ کی بات کریں

اوران لمحوں کی بات کریں
جو سنگ تمہارے بیت گئے

ہم شہرِخراباں کے باسی
تم چاند ستاروں کی ملکہ

کبھی وقت ملے توآجاو
ہم جھیل کنارےجا بیٹھیں

ان سبزرتوں کے دامن میں
ہم پیار کی خوشبومہکائیں

ان بکھرےمست نظاروں کو
ہم آنکھوں میں تصویر کریں

پتھر پہ گرتے پانی کو
ہم خوابوں سے تعبیرکریں

اُس وقت کےڈوبتےسورج کو
ہم چاہت کی جاگیر کریں

پھراپنے پیار کےجادو سے
ان لمحوں کو زنجیر کریں

کبھی وقت ملے تو آجاو
ہم جھیل کنارے جا بیٹھیں