PDA

View Full Version : دھند ، بارش ، بادل ( غزل )



زوہا
04-08-2011, 11:45 AM
میں اس سے بھلا کہاں ملی تھی
بس خواب میں خواب دیکھتی تھی

سایہ تھا کوئی کنا ر دریا
اور شام کی ڈوبتی گھڑی تھی

کہرے میں چھپا ہوا تھا جنگل
چڑیا کہیں دور بول رہی تھی

لپٹی ہوئی دھند کی ردا میں
اک زرد گلاب کی کلی تھی

اک سبز غبار تھا فضا میں
بارش کہیں سانس لے رہی تھی

بادل کوئی چھو گیا تھا مجھ کو
چہرے پہ عجیب تازگی تھی

تانیہ
04-08-2011, 04:32 PM
واہ.....

اوشو
04-09-2011, 03:34 AM
واہ زوہا
بہت اعلی
کیا خوب منظر کشی کی ہے.

سقراط
08-13-2011, 02:22 PM
میں نے دیر سے کمنٹس اسلیئے دئیے کہ ہمارے شہر میں دھند بادل بارش اب ہوئے ہیں ھاھاھا اچھی غزل ہے