PDA

View Full Version : اپنی خاک



زوہا
04-09-2011, 12:38 PM
سلا رہا تھا نہ بیدار کر سکا تھا مجھے
وہ جیسے خواب میں محسوس کر رہا تھا مجھے

یہی تھا چاند اور اس کو گواہ ٹھہرا کر
ذرا سا یاد تو کر تو نے کیا کہا تھا مجھے

تمام رات میری خواب گاہ روشن تھی
کسی نے خواب میں ایک پھول دے دیا تھا مجھے

وہ دن بھی آئے کہ خوشبو سے میری آنکھ کھلی
اور ایک رنگ حقیقت میں چھو رہا تھا مجھے

میں اپنی خاک پہ کیسے نہ لوٹ کر آتی
بہت قریب سے پکارتا تھا کوئی مجھے

:heart: :heart: :heart:

این اے ناصر
03-31-2012, 01:01 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ