PDA

View Full Version : مولانا عبیداللہ سندھی رح کے افکار



سیفی خان
04-29-2011, 10:45 PM
(1) ہم پر ( جو قرآن کریم کو ماننے والے ہیں ) قطعی طور پر لازم ہے کہ ہم تمام اقوام ِ عالم کے سامنے ثابت کردیں کہ انسانیت کے ہاتھ میں قرآن کریم سے زیادہ درست اور صحیح کوئی پروگرام نہیں ۔ پھر ہم پر یہ لازم ہے کہ جو لوگ قرآن کریم پر ایمان لا چکے ہیں ۔ ان کی جماعت کو منظم کیا جائے ۔ خواہ وہ کسی قوم یا نسل سے تعلق رکھتے ہوں۔ ہم ان کی کسی اور حیثیت کی طرف نہ دیکھیں، بجز قرآن کریم پر ایمان لانے کے پس ایسی جماعت ہی مخالفین پر غالب آئے گی ، لیکن ان کا غلبہ انتقامی شکل میں نہیں ہو گا ، بلکہ ہدایت اور ارشاد کے طرق پر ہو گا ۔ جیسا کہ والد اپنی اولاد پر غالب ہوتا ہے ۔ اب اس نظام کے خلاف جو بھی اٹھ کھڑا ہو گا وہ فنا کردینے کے قابل ہوگا۔ (ترجمہ از الہام الرحمٰن)

(2) ظالم بزدل ہوتے ہیں اور لڑائی میں شجاعت کے ساتھ موصوف وہی لوگ ہوتے ہیں جو عادل ہوں اور قتال فی سبیل اللہ صرف عادل ہی کر سکتا ہے(ترجمہ از الہام الرحمٰن)
(3) میرا یہ غیر متزلزل یقین اور عقیدہ ہے کہ اسلام کا مستقبل بڑا روشن اور شاندار ہے ۔ بے شک اسلام پوری قوت اور توانائی کے ساتھ ایک بار پھر ابھرے گا لیکن خارج میں اس کا ڈھانچہ وہ نہیں رہے گا جو اس وقت ہے ( ذاتی ڈائری)

(4) جو امت قرآن کریم کا پروگرام نہیں اپنائے گی ۔ وہ کبھی کامیاب نہیں ہو گی
مسلمان قرآن کی عالمی تنظیمی دعوت کا پروگرام لے کے اٹھے اور پھر وہ اپنی اس تنظیمی دعوت میں کامیاب ہوئے اور یہ صرف پچاس سال کی مدت یعنی واقعی صفین کی تحکیم تک ہوا۔ اب جب کوئی امت اپنی تنظیمی دعوت لے کر اٹھے گی تو وہ کبھی بھی کامیاب نہ ہو گی جب تک قرآن کے پروگرام کو نہ اپنائے



(جاری ہے)

تانیہ
04-30-2011, 12:10 AM
بہت اچھی شیئرنگ ہے
بہت دانشمندانہ
تھینکس