PDA

View Full Version : جب بھی کھوئی ہوئی



عبادت
05-13-2011, 03:07 AM
:heart:

جب بھی کھوئی ہوئی راہوں پہ چلا کرتے ہیں
رفتگاں گزارے ہوے زمانوں سےصدا کرتےہیں

سہل انگار طبعیت ہے وگرنہ اپنے
پاؤں اٹھ جائیں تو منزل سے ملا کرتے ہیں

ایک اک موڑ پر بیٹھے ہیں گھات لیے
قافلے عشق کے راہوں میں لٹا کرتے ہیں

ہمسے گزارا نہیں اپنا بھی زمانہ اور لوگ
ہم سے کیوں گزارے زمانوں کا گلہ کرتےہیں

رُخ مہتاب ، ہوا اور دھنک کی صورت
حسن والے تو بہانوں سے ملاکرتےہیں

ہم ہی لب بستے پڑے ہیں کسی تاریکی میں
جب کہ پتے بھی گھنی شب میں صدا کرتے ہیں

عبادت
05-15-2011, 02:49 AM
کبھی خود پہ کبھی حالات پہ رونا آیا
بات نکلی تو ہر اک بات پہ رونا آیا

ہم تو سمجھتے تھےکہ ہم بھول گے ہیں ان کو
کیا ہوا یہ آج کس بات پہ رونا آیا

کس لیے جیتے ہیں ہم کس کے لیے جیتے ہیں
بارہا ایسے سولات پہ رونا آیا

کون روتا ہے کسی اور کی خاطر اے دوست
سب کو اپنی ہی کسی بات پہ رونا آیا

تانیہ
05-19-2011, 11:01 AM
واہ واہ
بہت خوب
تھینکس فار شیئرنگ

این اے ناصر
03-31-2012, 01:07 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ