PDA

View Full Version : لفظ"شخص" پر شعر لکھیں



تانیہ
06-27-2011, 02:06 PM
اب آخری سطروں میں کہیں نام ہے اسکا
احباب کی فہرست میں پہلا تھا جو اک شخص

اوشو
06-27-2011, 03:52 PM
اس شہر میں لاکھوں چہرے تھے کب یاد رہا سب بھول گیا
اک شخص کتابوں جیسا تھا ، وہ شخص زبانی یاد ہوا

سیما
07-06-2011, 05:20 PM
دل سوختہ ملے گا تجھے جب کوئی کہیں
شدت سے ایک شخص تجھے یاد آئے گا

پاکستانی
08-23-2011, 01:37 PM
برسوں کے بعد ديکھا اک شخص دلرُبا سا
اب ذہن ميں نہيں ہے پر نام تھا بھلا سا
ابرو کھنچے کھنچے سے آنکھيں جھکی جھکی سی
باتيں رکی رکی سی لہجہ تھکا تھکا سا
الفاظ تھے کہ جگنو آواز کے سفر ميں تھے
بن جائے جنگلوں ميں جس طرح راستہ سا
خوابوں ميں خواب اُسکے يادوں ميں ياد اُسکی
نيندوں ميں گھل گيا ہو جيسے رَتجگا سا
پہلے بھی لوگ آئے کتنے ہی زندگی ميں
وہ ہر طرح سے ليکن اوروں سے تھا جدا سا
اگلی محبتوں نے وہ نا مرادياں ديں
تازہ رفاقتوں سے دل تھا ڈرا ڈرا سا
کچھ يہ کہ مدتوں سے ہم بھی نہيں تھے روئے
کچھ زہر ميں بُجھا تھا احباب کا دلاسا
پھر يوں ہوا کے ساون آنکھوں ميں آ بسے تھے
پھر يوں ہوا کہ جيسے دل بھی تھا آبلہ سا
اب سچ کہيں تو يارو ہم کو خبر نہيں تھی
بن جائے گا قيامت اک واقع ذرا سا
تيور تھے بے رُخی کے انداز دوستی کے
وہ اجنبی تھا ليکن لگتا تھا آشنا سا
ہم دشت تھے کہ دريا ہم زہر تھے کہ امرت
ناحق تھا زعم ہم کو جب وہ نہيں تھا پياسا
ہم نے بھی اُس کو ديکھا کل شام اتفاقا
اپنا بھی حال ہے اب لوگو فراز کا سا


احمد فراز

ایم-ایم
12-18-2011, 06:41 PM
بچھڑا کچھ اس ادا سے کہ رت ہی بدل گئی
اک شخص سارے شہر کو ویران کر گیا

راجہ صاحب
04-24-2012, 09:14 AM
رستہ بدل بدل کے بھی دیکھا مگر وہ شخص
دل میں اُتر کے ساری حدیں پار کر گیا

عبدالرزاق قادری
04-24-2012, 11:55 AM
اک شخص جو مرے دل کے مکان میں نہیں رہا
پھر یوں لگا جیسے کوئی جہاں میں نہیں رہا

شاعر نعیم قیصر

سیما
05-28-2012, 04:44 AM
اک بار لوگ پھر سے دیوانے ہو رہے ہیں
کہتے ہیں وہ دوبارہ معصوم ہو چکا ہے
ہر شخص کہہ رہا ہے میرا اداس چہرہ
اس بے وفا کے غم کا مفہوم ہو چکا ہے

نگار
10-28-2012, 04:20 PM
نئے سفر میں ابھی ایک نقص باقی ہے
جو شخص ساتھ نہیں ، اسکا عکس باقی ہے

تانیہ
10-27-2013, 09:57 PM
کمال کا شخص تھا جس نے زندگی تباہ کر دی
راز کی بات ہے دل اس سے خفا اب بھی نہیں

نگار
07-06-2014, 03:58 AM
مجھ سے پہلے تجھے جس شخص نے چاہا اس نے​

شاید اب بھی تیرا غم دل سے لگا رکھا ہو ​
ایک بے نام سی امید پہ اب بھی شاید ​
اپنے خوابوں کے جزیروں کو سجا رکھا ہو​

saba
07-06-2014, 12:14 PM
آنکھوں کا رنگ،بات کا لہجہ بدل گیا
وہ شخص ایک شام میں کتنا بدل گیا
کچھ دن تو رہا میرا عکس آئینہ میں نقش
پھر یوں ہوا خود میرا چہرہ بدل گیا
کوئی بھی چیز اپنی جگہ پر نہیں رہی
جاتے ہی ایک شخص کہ کیا کیا بدل گیا
شائید وفا کے کھیل سے اُکتا گیا تھا وہ
پاس آکر جو رستہ بدل گیا
اس کو ہو گئی خبر اندر کے موسم کی
اس نو بہارِ ناز کا چہرہ بدل گیا
آنکھوں میں جتنے عکس تھے جگنو سے بن گئے
وہ مُسکرایا اور میری دنیا بدل گیا
اپنی گلی میں،اپنے ہی گھر ڈھونڈ تے ہیں لوگ
امجد! یہ کون شہر کا نقشہ بدل گیا

نگار
07-06-2014, 06:02 PM
مجھے سارے رنج قبول ہیں اُسی ایک شخص کے پیار میں
مری زیست کے کسی موڑ پر جو مجھے ملا تھا بہار میں
وہی اک امید ہے آخری اسی ایک شمع سے روشنی
کوئی اور اس کے سوا نہیں, میری خواہشوں کے دیار میں
وہ یہ جانتے تھے کہ آسمانوں, کے فیصلے ہیں کچھ اور ہی
سو ستارے دیکھ کے ہنس پڑے مجھے تیری بانہوں کے ہار میں

بےباک
08-06-2014, 10:56 AM
یہ شخص اکیلا ہے پر تنہا نہیں لگتا

اوشو
01-02-2015, 10:12 PM
یہ مجھے چین کیوں نہیں پڑتا
ایک ہی شخص تھا جہان میں کیا؟
جون ایلیا

تانیہ
02-12-2015, 03:33 PM
پڑھتا تھا میں نماز سمجھ کر اے رشید
پھر یوں ہوا کہ مجھ سے قضا ہو گیا وہ شخص

رشید قیصرانی