PDA

View Full Version : مجھ سے میرے گھر تلک کے بام و در ناراض ہیں



سیما
08-25-2011, 05:36 AM
اِک زمانے سے بہ وجہِ قحطِ زر، ناراض ہیں
مجھ سے میرے گھر تلک کے بام و در ناراض ہیں

سر کشیدہ ہیں ہوائیں اور کبوتر بدگماں
چاہنے والوں سے سارے نامہ بر،ناراض ہیں

باغ میں جب سے سیاست بادِ صرصر کی چلی
ٹہنیوں سے پیڑ، پیڑوں سے ثمر ناراض ہیں

مسخ کر ڈالے حقائق کور چشموں نے سبھی
کر ہی کیا لیں گے اگر اہلِ نظر ناراض ہیں

رونے دھونے سے فقط رہبر سے اب پائیں گے کیا
کھو کے ماجد ہم اگر سمتِ سفر ناراض ہیں

ماجد صدیقی

پاکستانی
08-25-2011, 11:56 AM
باغ میں جب سے سیاست بادِ صرصر کی چلی
ٹہنیوں سے پیڑ، پیڑوں سے ثمر ناراض ہیں


رونے دھونے سے فقط رہبر سے اب پائیں گے کیا
کھو کے ماجد ہم اگر سمتِ سفر ناراض ہیں


خوب، لاجواب شاعری ہے

این اے ناصر
03-31-2012, 01:14 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ