PDA

View Full Version : ضمیر جاگ اُٹھا



اذان
08-29-2011, 02:27 AM
ڈاکٹرذوالفقارمرزاکاضمیر جاگ اُٹھا

http://urdulook.info/imagehost/?di=7131456529213

ڈاکٹرذوالفقارمرزاکاوفاقی وزیرداخلہ رحمن ملک کے متعلق کہناتھاکہ پاکستان کو جب بھی نقصان پہنچااسی شخص کی وجہ سے پہنچے گا۔رحمن ملک کے متعلق انہوں نے کہا”وہ اچھے سیاستدان اورایڈمنسٹریٹرہیں البتہ انہیں کہاہے کہ پچاس فیصدسچ بولیں اورپچاس فیصدجھوٹ بولیں توکام چل جائے گا۔ان کے بارے میں مشہورہے کہ اگر وہ سیب کھارہے ہوں اورکوئی فون کر کے پوچھ لے کہ کیاکھایاہے تورحمن ملک کہیں گے کہ کیلا کھارہاہوں”۔
چند روزقبل اپنے دورہ اسلام آبادکے موقع پرصدرآصف علی زرداری سے اپنے استفسارکے متعلق انہوں نے کہاکہ سیاستدان بننے کےلئے مسلسل جھوٹ بولنے اورایکٹنگ کرنے کا کام نہیں کر سکتااس لئے صدرسے کہاہے کہ وہ اسلام آبادمیں کسی ایسی یونیورسٹی سے متعلق اطلاع دیں جہاں جھوٹ بولنا اورایکٹنگ کرناسکھایاجاتاہو۔رحمن ملک کے متعلق انہوں نے یہ بھی کہاکہ پاکستان میں کوئی ایسی چیزنہیں جس کے لئے وہ فکرمند ہوں حتی کہ ان کی فیملی تک لندن میں موجود ہے حتی کہ وہ جہاں سے تعلق رکھنے ہیں وہاں ان کی نائی کی دکان بھی نہیں ہوگی۔
کراچی میں معصوم انسانوں کامسلسل خون بہنے اورٹارگٹ کلرزکوسیاسی پشت پناہی کے سبب کیفرکردارتک نہ پہنچائے جا سکنے کواستعفی کی وجہ قراردینے والے ذوالفقامرزا 2گھنٹے سے زائد جاری رہنے والی نیوز کانفرنس میں مسلمانوں کی مقدس الہامی کتاب قرآن مجید کو اپنے ساتھ لائے تھے۔ان کاکہناتھاکہ اس کی موجودگی میں جو کہوں گا سچ کہوں گا۔
پیپلزپارٹی کے مستعفی رہنماڈاکٹرذالفقارمرزانے اپنا فیصلہ واپس لینے سے انکار کرتے ہوئے کہاکہ اب معصوم لہو کو خاموشی سے بہتے نہیں دیکھ سکتا اس لئے سب خصوصا تاجروں کو دعوت دیتاہوں کہ متحدہ قومی موومنٹ کے ہاتھوں یرغمال بنے رہنے کے سلسلے کو ختم کر دیں۔بیدارہوں اوربہتے لہوکو روکنے میں اپنا کرداراداکریں۔
قیام پاکستان سے قبل قائم ہونے والی کراچی پریس کلب کی عمارت کے تاریخی ابراہیم جلیس ہال میں کی گئی نیوزکانفرنس میں مقامی پرنٹ وانیکٹرانک میڈیاکے علاوہ غیر ملکی میڈیاکے نمائندوں کی بھی بڑی تعداد موجود تھی۔
پاکستان کے نجی ٹیلی ویژن چینل جیوسے وابستہ مقتول صحافی ولی خان بابر کے قتل کی ذمہ داری متحدہ قومی موومنٹ پر ڈالتے ہوئے ڈاکٹرذوالفقارمرزا کاکہناتھا”ولی بابر کے قتل کے بعددن گنے جاتے رہے اورچینل کی جانب سے گانے چلاکرمجھ سے قاتلوں کو سامنے لانے کاکہناجاتارہا،امریکا جانے سے قبل اپنے ایک دوست کو ٹیلی فون کر کے مشترکہ تحقیقاتی رپورٹ ان کے حوالے کی اورانہیں بتایاکہ ایم کیو ایم کے ٹاگٹ کلرزمحمد علی رضوی،محمد شکیل،فیصل محمود،محمدشاہ رخ،طاہرنوید عرف نوید پولکاگرفتارکر لئے ہیں جب کہ لیاقت نامی ایک قاتل مفرورہے جسے جلد پکڑ لیں گے”۔
نیوزکانفرنس کی ابتداء میں قرآن پرحلف اٹھا کر اپنے ہر لفظ کی ذمہ داری قبول کرنے کا اعلان اورسچ بولنے کا اقرارکرنے والے ذوالفقارمرزاکاکہناتھا”ال اف حسین نے گزشتہ برس دورہ لندن کے دوران مجھے کہاتھا کہ امریکہ پاکستان توڑنے کا فیصلہ کر چکا ہے،جس کی مجھے باقاعدہ اطلاع دی گئی ہے۔ایم کیوایم نے یہ فیصلہ کیاہےکہ ان کا ساتھ دیں گے اورپٹھانوں کو مارنے کا سلسلہ نہیں روکیں گے”۔
پیپلزپارٹی کی اتحادی جماعت رہنے کے بعدگزشتہ کچھ عرصہ سے حکومت سے الگ ہوجانے والی ایم کیو ایم کے رہنما کی جانب سے 2001ء میں اس وقت کے برطانوی وزیراعظم ٹونی بلئیرکولکھے گئے ایک خط کا حوالہ دیتے ہوئے ذوالفقارمرزاکاکہناتھا”ال اف حسین نے اپنے خطمیں ٹونی بلئرکویقین دلایاکہ ایم کیو ایم برطانوی موقف کی حمایت کے لئے کراچی میں لاکھوں افرادکی رہلیاں نکال سکتی ہے اس کے بدلے وہ ان کی جماعت کوفوج میں بھرتی جیسےچند دیگرکاموں کے ساتھ پاکستانی خفیہ ادارے انٹرسروسزانٹیلی جنس)آئی ایس آئی)کو کمزورکرنےمیں تعاون کریں وگرنہ پاکستان میں مزید اسامہ بن لادن پیداہوسکتے ہیں”۔
ایم کیو ایم کومرزافوبیاہوجانے کاانکشاف کرتےہوئے مستعفی رہنماکاکہناتھا”باغیرت سندھ کاغیرت مند بیٹاہوں،وزیرداخلہ بن کرمعصوم مائوں کے بے گناہ بیٹوں کومرتااوراہلخانہ کومجبورکرکےپارٹی جھنڈوں میں دفنایاجانانہیں دیکھ سکتا۔گزشتہ چند ماہ میں ایم کیو ایم نے تمام ایشوزبھلاکردن کے اجالے اوررات کی تاریکی میں مرزاکوہی دیکھاہےتاہم میں اپنی باتوں کے سچاہونے کے ثبوت اپنے ساتھ رکھتاہوں”۔
ایک موقع پر نیوزکانفرنس کے دوران گفتگو روک کر پاکستان اورصوبے کی سیاست کا اہم حصہ سمجھے جانے والے ذوالفقارمرزا کاکہناتھا “پیپلزپارٹی کا ادنی کارکن ہوں اپنی ذمہ داری اداکرتے ہوئے بے نظیر بھٹو پر ہونے والے دونوں حملوں کے موقع پر موجود تھا لیکن رحمن ملک نے اپنی ذمہ داری ادا نہیں”۔پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں جاری ٹارگٹ کلنگ کے متعلق انہوں نے کہا”ساڑھے تین برس سے قیادت سے التجا کر رہاہوں کہ بہتے خون کو روکاجائے،کابینہ اجلاس میں قیادت سے گذارش کی کہ پندرہ روزکی مہلت دی جائے ،اگر ٹارگٹ کلنگ نہ رکے توجو چاہے سزادے لیجئے گامگررحمن ملک کے ٹارگٹ کلرزسے ملے ہونے کی وجہ سے اسے کسی نے سنجیدہ نہیں لیا،مجھے خر مغذکہہ کربات کوغیر سنجیدگی میں اڑادیا گیا”۔
پاکستانی قومی اسمبلی کی اسپیکرڈاکٹرفہمیدہ مرزاسے اپنی شادی کو زندگی کا بہترین فیصلہ قرار دینے والے ذوالفقارمرزا کا کہناتھا آج کی نیوزکانفرنس میں ظلم کی زنجیروں میں جکڑے سندھ کے باسیوں کے لئے جامع اورموثرحل تجویز کر رہاہوں۔
متحدہ قومی موومنٹ کے مقتول رکن سندھ اسمبلی رضاحیدرکو اپنا ہم مسلک بھائی قراردیتے ہوئے ذوالفقارمرزاکاکہناتھا”قت کے واقعہ کے اگلے پندرہ منٹ میں گورنر سندھ ڈاکٹرعشرت العباد کو فون کر کے بتاچکاتھاکہ ایک کالعدم تنظیم سے متعلق گرفتارشدگان نے اقرارکررکھاہے کہ رضاحیدر ان کی ہٹ لسٹ پر ہیں جس کے بعد انہیں اضافی گارڈ بھی فراہم کر دی تھی اس کے باوجود کراچی میں سو سے زائد انسانوں کو زندگی سے محروم کردیاگیا۔
نیوزکانفرس کے دوران کئے گئے انکشافات کے متعلق ذوالفقارمرزانے پیپلزپارٹی کی قیادت سے اپیل کی کہ انہیں سچ جان کران پرعمل کیاجائے اس دوران اگرمجھے کچھ ہوجائے تووہی ذمہ دار ہوگاجو عمران فاروق کے قتل سے لے کر کراچی کی سڑک پرنیلی آنکھوں والے پٹھان بچے کے قتل کا ذمہ دارہے۔
ڈاکٹرذوالفقارمرزاکایہ بھی کہناتھاکہ “پانچ بہنوں میں سے تین اردو اسپیکنگ گھرانوں میں بیاہی ہوئی ہیں بحیثیت قوم اردواسپیکنگ کا مخالف نہیں اپنے بیان کو غلط رنگ پہنائے جانے پراسی لئے معذرت چاہی تھی کہ یہ میراذاتی خیال ہے لیکن مورخ کو کسی مشکل سے بچانے کےلئے اس کی تردید نہیں کی۔میں نے پاکستان توڑنے اورسندھ میں نیاصوبہ بنانے کی کوشش کرنے والوں کو بھوکا ننگا قراردیاتھا۔
قومی اسمبلی کی اسپیکراوراپنی اہلیہ ڈاکٹرفہمیدہ مرزاکے استعفی کے متعلق ایک سوال کے جواب میں ذوالفقار مرزا کا کہنا تھا”سیاسی حوالوں سے وہ اپنے فیصلے خود کرتی ہیں،میں نے یہ فیصلہ کرنے سے قبل اپنے87سالہ والد سمیت خیرخواہوں سےمشاورت کی تھی تاہم فہمیدہ مرزایہ فیصلہ کرنے میں آزاد میں”۔
نیوزکانفرنس کے موقع پرصحافیوں کے سوالوں کے جوان دیتے ہوئے ان کاکہناتھاکہ لیاری والوں کوٹارگٹ کلنگ کا ذمہ دارقراردینے والے یہ کیوں نظراندازکرتے ہیں کہ کراچی میں ٹارگٹ کلنگ پہلے شروع ہوئی ہے یا پیپلزامن کمیٹی پہلے بنی ہے۔
سپریم کورٹ کی جانب سے کراچی کی صورتحال پرلئے گئے نوٹس کے حوالے سے انہوں نے کہااگر چیف جسٹس نے عدالت طلب کیا توتمام توثبوت پیش کروں گااورعدالتی معاملات کے حوالے سے بھی ان کے سامنے گذارشات پیش کروں گا۔
ذوالفقارمرزااورایم کیو ایم
ڈاکٹرذوالفقارمرزانے ایم کیو ایم کے سربراہ کو قاتل اوران کی جماعت کو دہشت گردقراردیتے ہوئے کہا کہ کراچی میں قتل عام کے سب احکامات لندن سے آتے ہیں۔خود کوسابق سابق جسٹس سپریم کورٹ ظفرحسین مرزاکے گھر پیداہونے کے بعد بے نظیربھٹواورپیپلزپارٹی کے شریک چئیرمین و صدرمملکت آصف علی زرداری کی پروڈکٹ قراردینے والے ذوالفقارمرزانے متحدہ قومی موومنٹ سمیت پیپلزپارٹی کے متعدد رہنمائوں کے بارے میں میں بھی ریمارکس دئے۔
پاکستان کا اقتصادی حب اورمعاشی شہہ رگ قراردئے جانے والے کراچی کی سابق شہری حکومت کی نائب ناظمہ اورایم کیو ایم کی رہنما کے متعلق اردوزبان کامعروف محاورہ “رضیہ غنڈوں میں پھنس گئی ” دہراتے ہوئے ذوالفقارمرزاکاکہناتھا وہ بہت اچھی اورملنسارخاتون ہیں لیکن غیرملکی سفارتکاروں کو لکھے گئے خطوط میں انہوں نے کراچی کے حالا ت کی خرابی کاذمہ دارمجھے ٹھہرایاجب کہ صدرکومیرا معاون قراردیا۔
متحدہ قومی موومنٹ سے تعلق رکھنے والے ارکان سندھ اسمبلی ڈاکٹرمحمد علی شاہ اورسرداراحمد کوشریف النفس انسان قرادیتے ہوئے ان کاکہناتھاکہ “لندن سے کی جانے والی سمجھ سے بالاترکالزپربھی تالیاں اس لئے بجائی جاتی ہیں کہ انہیں ڈرہوتاہے کہ ان کی بجا دی جائے گی”۔
کراچی سےوابستہ صحافیوں میں مستقبل کےکئی ولی خان بابرنظرآنے کا انکشاف کرتے ہوئے ان کاکہناتھا کہ ایسے صحافیوں سے انہیں ہمدردی ہے جنہیں ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیروپرپیشیاں بھگتانی پڑیں گی۔مگر وہ پریشان نہ ہوں نائن زیرو پرمیڈیاکو ڈیل کرنے والا ایک فردلندن منتقل ہو چکا جب کہ دوسرے کا بھی جلد انتظام ہوجائے گا۔
متحدہ قومی موومنٹ سے تعلق رکھنے والے سندھ کے دوسابق وزرائے داخلہ کے متعلق ذوالفقارمرزانے کہا”ففٹی موٹرسائیکل پرگھومنے والے رولز رائس میں بیٹھ کوخودکو تسکین پہنچاتے ہیں جب کہ دوسرے شاعری کر کے خوش رہتے ہیں۔دونوں وزرائے داخلے کے دورمیں کراچی کے تھانے وزراء کے دفترمیں نیلام ہواکرتے تھے جس کے بدلے ایس ایچ اوزدفاتر سے لے کر وزراء کے گھروں تک کے خرچ چلایاکرتے تھے۔سندھ کے گورنر ہائوس کے سامنے واقع آرٹلری میدان پولیس اسٹیشن کو وزیرداخلہ کے دفتر،گھراورعیاشیوں کا خرچ پوراکرنے کےلئے ذمہ دارقرادئے جانے کا انکشاف کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے رکن کاکہناتھا ایم کیو ایم کے دونوں وزرائے داخلہ کی ڈانس پارٹیوں،ہیروئن کی فراہمی اور دیگر عیاشیوں کے اختیارات یہی پوراکرتے تھے۔اپنے دورمیں پولیس کے لئے کئے گئے اقدامات کا حوالے دیتے ہوئے انہوں نے کہا”اپنی دوروزارت میں ذاتی جیب سمیت دوستوں کی معاونت سے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے اہلکاروں میں ساڑھے تین کروڑ روپے کی رقم نقد انعام کے طورپرتقسیم کی،تنخواہیں اورہرجانے کی رقم کی مقداربڑھائی۔ایم کیو ایم کے سفارشی افراد کو پولیس میں بھرتی کئے جانے سے انکارکیاجس پرالزام لگایاگیاکہ لیاری کے چھ ہزارلوگوں کو پولیس میں بھرتی کروارہاہوں”۔
ذوالفقارمرزاکی انکشافات سے بھرپورپریس کانفرنس کووفاقی وزیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان کی جانب سے ان کی ذاتی رائے قراردینے کے باوجودذولفقارمرزاکاکہناتھ ا”قاتلوں کی بلیک میلنگ کے ہاتھوں مجبورہوکرمیری وزارت تبدیل کی گئی ہے”۔
کراچی اورحیدرآبادمیں متحدہ قومی موومنٹ کو حاصل ہونے والے مینڈیٹ کو دھونس اوردھمکی کانتیجہ قراردیتے ہوئے ذوالفقارمرزاکاکہناتھا کہ ہر سیٹ پرایک لاکھ ووٹ جعلی ڈلوائے جاتے ہیں یہ اصل مینڈیٹ نہیں ہے۔
سٹیزن ہولیس لیاژان کمیٹی کے سربراہ احمد چنائے کی تقرری کو گورنر سندھ کی ایماء پرکی گئی کارروائی قراردیتے ہوئے ان کاکہناتھا”ادارے کے آئین کے مطابق کوئی سیاسی شخص اس کا سربراہ نہیں ہو سکتالیکن ایم کیو ایم کے ذیلی ادارے خدمت خلق فائونڈیشن کی ویب سائٹ پرذمہ دار کے طورپرموجود شخصیت کوسربراہ بنائے جانے کے بعدادارے کا تقدس پامال کیاگیا”۔
ایم کیو ایم کے ذٰیلی ادارے خدمت خلق فائونڈیشن کی ایمبولینسوں میں کراچی کی ٹارگٹ کلنگ میں استعمال ہونے والا اسلحہ اسمگل کرنے،متحدہ قومی موومنٹ کے زخمیوں کواٹھاکر فرارہونے،لاشیں شہرکی سڑکوں پرپھینکنے کےلئے استعمال ہونے کاانکشاف کرتے ہوئے ذوالفقارمرزانے کہا کہ لیاری والوں کوبدنام کرنے والے یہ کیوں نہیں بتاتے کہ بھتہ بابا لاڈلہ لے رہاہے یا وہ جو ان کے نام پر پرچیاں دے کرانہیں بدنام کرنا چاہتے ہیں۔
کراچی کے معروف ترین کاروباری مرکزایم اے جناح روڈپرواقع سابقہ ٹرام سروس ڈپو کےلئے استعمال ہونے والے5ارب روپے مالیت کے پلاٹ کوہتھیانے کی کوششوں کا الزام ایم کیو ایم پرڈالتے ہوئے ذوالفقارمرزانے کہاکہ اس رقم کےذریعے لندن کے کیسینوزمیں عیاشیاں کی جانی تھیں تاہم انہوں نے ایسا نہیں ہونے دیاجس کے بعد شہرمیں ٹارگٹ کلنگ کرکے دبائو پیداکرنے کی کوشش کی گئی تھی۔
پیپلزپارٹی اورایم کیو ایم میں فرق
متحدہ قومی مومنٹ کے رہنما انیس قائم خانی سے ایک جھگڑے کا حوالہ دیتے ہوئے ان کاکہناتھاسندھ کے گورنرنے تلخ کلامی کے اگلے روزمجھے سمجھانے کی کوشش کرتےہوئے کہاکہ”مرزاصاحب گرمی نہ کھایاکریں”سمجھائے جانے پر میں نےگورنر سے اپنی اورانیس قائم خانی کی خاندانی شناخت کے متعلق دریافت کیا جس پرایم کیو ایم کے گورنراپنی پارٹی کے رہنما کی ولدیت تک نہ بتاسکے البتہ میرے والد کو وہ جانتے تھے۔میں نے انہیں جواب دیاکہ یہی فرق ہے آپ کی اورمیری جماعت میں۔
کراچی سے نمائندہ دی نیوزٹرائب کے مطابق 2روزقبل پیپلزپارٹی کی قیادت کی جانب صوبائی گورنر کی تجویزپربیرون ملک سفیربناکربھیجے جانے کی آفرٹھکرانے والےذوالفقارمرزاکی نیوزکانفرس کے موقع پرکراچی پریس کلب کے باہر لیاری سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کی بڑی تعدادموجود تھی۔
نیوزکانفرنس کرتے ہوئےانہوں نے کہا کہ رحمٰن ملک قاتلوں کے ساتھ ملے ہوئے ہیں میرے پاس تمام ثبوت موجود ہیں جو کہ میں آرمی چیف اور آئی ایس آئی سربراہ کو دکھانا چاہتا ہوں۔
انہوں نے کہا کہ میں نے 20 ٹارگٹ کلرز کو اندرون سندھ کی جیلوں میں منتقل کیا جنہیں گورنر سندھ نے کراچی پہنچتے ہی واپس کراچی بلوا لیا جب کہ 25 ٹارگٹ کلرز کو پے رول پر رہا کروایا گیا۔اس میں ایم کیو ایم سے تعلق رکھنے والا صولت مرزابھی شامل ہے جسے سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے جرم ثابت ہونے پرسزائے موت دی جاچکی ہے۔
انہوں نے میڈیا کے نمائندوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میں جانتا ہوں کہ آپ کے سوالوں کی بھی 90 سے اسکروٹنی ہو گی ، میں جانتا ہوں کہ کون لوگ نائن زیرو میں صحافیوں کے سوالوں کی اسکروٹنی کرتے ہیں اور انہیں فون کرتے ہیں۔ ان میں سے ایک عمران فاروق کے قتل میں نامزد بھی ہوچکے ہیں۔
سینئر صوبائی وزیر نے کہا کہ میں گزشتہ کچھ ماہ سے دیکھا کہ کراچی کے تمام مسائل جن میں پانی ، بجلی، زبردستی بھتہ اور فطرہ جیسے کو ایک جانب رکھ کر صرف ذوالفقار مرزا کو نشانہ بنایا گیا ہے اور ایسا تاثر دیا گیا کہ میں ذوالفقار مرزا نہیں بلکہ اسامہ بن لادن ہوں۔

بےباک
08-29-2011, 04:26 AM
بھائی اصل بات ہے کہ اس کہانی کے پیچھے کیا ہے ؟؟؟، دوسرا پہلو بھی دیکھیے ،

کیا صدر زرداری صاحب،ایم کیو ایم کی پارٹی اور رحمن ملک سے جان چھڑوانا چاھتے ہیں ، اور اس ذوالفقار مرزا کو اس ڈیوٹی پر بھیج دیا ، کیونکہ اس ساری کہانی میں زرداری پر ایک حرف نہین آنے دیا ، حالانکہ سب جانتے ہیں کہ رحمان ملک اگر کراچی آ کر ایم کیو ایم سے بات کرتا ہے تو صدر زرداری اور وزیر اعظم جناب گیلانی صاحب کی مرضی سے آ کر مذاکرات کرتا ہے ، اور پھر عدالتوں کے فیصلے بھی زرداری صاحب اور گیلانی صاحب نہیں مانتے، ان پر ڈاکٹر ذوالفقار مرزا نے ایک لفظ بھی نہیں کہا ،
بےشک ساری باتیں سارے الزام بالکل ٹھیک ہوں ، ہم اس کی سچائی پر کوئی تبصرہ نہیں کرنا چاھتے ہیں ،
مگر اس کا کیا نتیجہ نکلتا ہے اسے دیکھنا ہے ،............

کیا زرداری صاحب نے ڈاکٹر ذوالفقار مرزا صاحب کا کارڈ کھیلا ہے؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ ،، اس پر گہری بصیرت سے سوچیے ،کہیں ایسا تو نہیں کہ پیپلز پارٹی کے مجرمان کو بچانا مقصود ہو ؟؟؟؟
کیا چیف جسٹس کو روکنا مقصود ہے ؟؟؟؟؟؟جو آج کراچی میں تشریف لا چکے ہیں ، اگر ایم کیو ایم والے ہڑتال کر دیں ، یا لڑائی کے حالات پیش آ جائیں تو چیف جسٹس کیا کرے گا جو آج کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کے کیس کو سن رہے ہیں ،

کہیں ایسا تو نہیں ہے کہ ملک کے عوام کو مزید بےوقوف بنایا جائے جا رہا ہے کہ ان کی توجہ اصل مسائل سے ہٹایا جائے ، ؟؟؟؟
کہیں ایسا تو نہیں کہ افراتفری کی آڑ میں غیرملکی طاقتوں کو دعوت دی جا رہی ہو ؟؟؟پہلے ہی یہ ظاھر ہو چکا ہے کہ ایم کیو ایم نے اور پیپلز پارٹی والوں نے غیر ملکی سفارت خانوں کو خطوط لکھے ہیں ؟؟؟؟؟؟
اللہ تعالی ملک پاکستان کو ان زاغوں،بھیڑیوں ، اور غنڈوں سے بچائے ، آمین آمین

پاکستانی
08-30-2011, 01:57 AM
جی جناب کیا ارادے ہیں محترم مرزا صاحب؟ اب تو اپنی راہ کے سارے کانٹے آپ نے خود ہی ہٹا دیئے ،مرد مومن نہ سہی مردمرزا کی نگاہ ہی سہی لیکن کراچی کی تقدیر بدلنے کی جو تدبیر آپ نے کی ہے بھئی واہ بہت خوب ۔ لگتا ہے اب کراچی کی بربادیوں کے مشورے ہیں ایوانوں میں ، جس کی صور آپ نے گذشتہ روز پریس کانفرس میں پھونکی ہے ،سر پر غالباقرآن رکھ کے ( ویسے وعدے یا دعوے قران حدیث تو نہیں ہوتے آپ کے عالی مرتبت لیڈر کے مطابق)عرض ہے کہ اگر آپ قران کے بجائے بے نظیر شہید کی تصویر پر ہاتھ رکھتے تو شائد زیادہ بہتر ہوتا(آپ کے لیے ) ۔

اجی بہت شور سنتے تھے کہ مفاہمت نے ہاتھ باندھ رکھے ہیں سیاسی مجبوری کو کمزوری نہ سمجھا جائے ۔ وغیرہ وغیرہ

تو محترم چنگھاڑ معاف کیجئے گا ذوالفقارمرزا صاحب آخر کار آپ نے مجبوریوں اور مفاہمتوں (یا شاید) غلامی کی زنجیریں توڑ ہی دیں۔

کراچی کی عوام کی خوشی اور سنسنی کا اندازہ براہ راست انٹرنیٹ پر موجود آپ کی جلالی ویڈیوز کے نیچے کمنٹس سے بخوبی لگایا جا سکتا ہے بلکہ اگر یوں کہا جائے تو غلط نہ ہوگا کہ ویڈیو سے زیادہ وہ کمنٹس دلچسپ ہوتے ہیں جن میں حکمرانوں اور پاکستانی پالیٹکس کی ایسی تیسی کی گئی ہوتی ہے۔

ثبوت کے طور پر یوٹیوب یا گوگل پر جا کر کسی بھی جلالی قسم کے سیاہ ست دان کا نام لکھیں اور ساتھ میں abusing کا لفظ لکھیں تو حقیقت واضح ہو جائے گی کہ کون کتنا پڑھا لکھا ہے اور کتنا جمہوریت پسند ( ویسے تمام قارئین کو الو کا پٹھا کہنے والے صاحب تو اب بھی یاد ہونگے آپ سب کو جن کو مئیر کا دو نمبری مم میرا مطلب ہے دنیا کے سیکنڈ بیسٹ (خود ساختہ )مئیر کا ایوارڈ ملا تھا ( شائد یہ خود انہی کی پارٹی نے دے دیا ہو) ۔ خیر چھوڑیں ۔

ارے جناب مرزا صاحب یار لوگ تو آپ کے آدھے ادھورے سچ پر ہی بہت تفریح لیتے تھے اس وقت بھی جب آپ سندھ کے چوکیدار ( میرا خیال ہے وزیر داخلہ کے لیے اس سے مناسب لفظ شائد ممکن نہیں )تھے اور اس وقت بھی جب آپ پھونکوں سے متحادیوں اور اتحادیوں کا چراغ بجھانے کی کوشش میں خود بھتہ ہائیٹس ( بقول آپکے) شکار ہو گئے تھے پھر سارا غصہ بے چارے صحافیوں پر نکال دیا۔۔

آپ کی اس Engineered سچ والی جیالی حرکت بیچارے کراچی والوں پر افتاد بن کر ٹوٹ پڑی خصوصا ناظم آباد سخی حسن اور سرجانی کے علاقوں میں ۔( ویسے عوام اگر اتنے مظلوم ہوتے ہیں تو سڑکوں پر ٹائر کون جلاتاہے ؟؟ عوام یا سپانسرڈ اور حلف یافتہ ووٹر سپورٹرز؟)

تو پھر محترم مرزا صاحب کیا اب لوگ آپ سے توقع کریں کہ کل جو کچھ آپ نے پریس کانفرس میں فرما یا اور جو کچھ بڑے چوکیدار کی شان میں کلمات کہے اس پر اب قائم رہیں گے اور کوئی تحریری یا ویڈیو معافی نامہ نہیں جاری کریں گے۔

ویسے تو آ پ کا آدھا ادھورا سچ بھی غضب کا ہوتا ہے لیکن اب چونکہ آپ نے ایک ہی جھٹکے میں سارے بندھن توڑڈالے ہیں تو کیا اب آپ اتنی جرات کریں گے کہ کراچی میں پکڑے جانے والے تمام کے تمام ٹارگٹ کلرز چاہے وہ باردوی ہو یا مادھوری ، پہاڑی ہو یا نفسیاتی ، موٹا ہو یا چھوٹا سب کی ویڈیوز میڈیا پر نہ سہی یو ٹیوب پر جاری کردیں ۔

اتنے تو رابطے بہرحال اب بھی ہونگے آپ کے سی آئی ڈی میں کہ انٹروگیشن کی ویڈیوز آپ کو مل سکیں ۔ آخرنئے خوابیدہ چوکیدار بھی تو آپکے ہی سیاسی بھائی ہیں۔

اگرکسی کا ڈریا دباؤ ہے (جو شائد نہ ہو ) تو ایک فرضی آئی ڈی بنا لیں یوٹیوب کی پیور پاکستانی یا مرد مجاہد کے نام سے جہاں پر یہ ساری ویڈیوز دھڑلے سے پوسٹ کی جا سکیں ۔۔اب تو کوئی ٹینشن بھی نہیں ہے نا آپکو نہ نائب صدارت ، نہ وزارت نہ ہی مفاہمت کی بیڑیاں تو حوصلہ رکھیے بہت جیالے ہیں قدم بڑھاﺅ ذولفقار مرزا ہم تمھا رے ساتھ ہیں کہنے والے ۔

ملاحظہ فرمائیں آج صبح موصول ہونے والا ایس ایم ایس “وقت کے فرعون اور یزید کے خلاف حسینی جرات کا مظاہر ہ کرنے پرکراچی کے عوام ڈاکٹر ذولفقار مرزا کو سلام پیش کرتے ہیں”۔ اور آخر میں پلیزفارورڈ بھی لکھا تھا ۔

ویسے انتہائی دلچسپ اور حیرت انگیز بات یہ ہے کہ یہ پیغام آپ کی مخالف ( نظریاتی ) پارٹی کے ممبر کی طرف سے آیا ہے ۔

لیجئے بن گئے آپ مجاہد آزادی ، بھگت سنگھ، وغیرہ وغیرہ ۔

اور ہاں یہ افواہیں بھی گردش کر رہی ہیں کہ آپ کے یہ استعفے اور اتحادیوں کی قلابازیا ں تقریبا ملتی جلتی ہیں ہوسکتا ہے کہ چند دن کی چھپن چھپائی (ٹام اینڈ جیری والی نہیں)کھیلنے کے بعد سمجھ تو گئے ہونگے آپ والے بڑے مداری صاحب آپ کو فون کر کے کہیں اینجھد نہیں ہوندا اور آپ پھر سے جسے پیا چاہے وہی سہاگن بن کر ہنسی خوشی رہنے لگیں۔

پلیز برا مت مانیئے گا ہو سکتا ہے آپ نے سنجیدگی اور ثابت قدمی ( ویسے دونوں کا ہی سیاست میں کوئی کام نہیں )سے یہ قدم اٹھا یا ہو ۔

لیکن کیا کریں ان نامعقول ایس ایم ایس کا جن میں یہ کہا جا رہا ہے کہ ڈوبتی کشتی کو دیکھ کر آپ پہلے ہی پتلی گلی سے نکلنے کے چکر میں ہیں یا پھر آپ کو یہ مجاہدانہ مشورہ آپ کے یارغار ، دنداں والی سرکار نے دیا ہو۔ وہ کہتے ہیں نا کہ ایک اچھی چھلانگ لگانے کے لیے چند قدم پیچھے ہٹنا ضروری ہوتا ہے ( ویسے چند قدم کا مطلب بیک فٹ تو نہیں لے لیا آپ نے ؟؟ )

لیکن خیال رہے محترم آپ کی ان چھلانگوں کے چکر میں کہیں کراچی والوں کی ٹانگیں نہ ٹوٹ جائیں ہمیشہ کی طرح اچھا اگر ان میں سے ایسی کوئی بات نہیں تو پھر بسم اللہ کیجئے اور ہماری ادھوری معلومات میں اضافہ کیجئے کچھ ویڈیوز جاری کیجیے ۔ بہت دن ہوگئے کوئی سیاسی ایکشن مووی دیکھے ہوئے اندازہ ہے کہ سیا ست کے باکس آفس پر آپ انڈین مووی دہلی بیلی جیسا بھونچال لا سکتے ہیں۔ کیا خیا ل ہے آپ سب کا دوستو ؟ ہوجائے پھر پاکستانی دہلی بیلی ؟ thenewstribe (http://www.thenewstribe.com/urdu/?p=78596#.Tlv8bWH6jGg)

بےباک
09-08-2011, 08:22 AM
بہت خوب پاکستانی بھائی ،
اللہ کرے سبز ھلالی پرچم یوں ہی لہلاتا رہے ، ان فصلی بٹیروں اور غاصبوں سے ملک آزاد ہو ، آمین

http://www.lahoreestate.org/le-images/Pakistan-Flag-Animated-Gif.gif