PDA

View Full Version : سنگدل ہے وہ تو کیوں اس کا گلہ میں نے کیا



ایم-ایم
11-14-2011, 03:29 PM
سنگدل ہے وہ تو کیوں اس کا گلہ میں نے کیا
جبکہ خود پتھر کو بت، بت کو خدا میں نے کیا

کیسے نامانوس لفظوں کی کہانی تھا وہ شخص
اس کو کتنی مشکلوں سے ترجمہ میں نے کیا

وہ مری پہلی محبت ، وہ مری پہلی شکست
پھر تو پیمان ِوفا سو مرتبہ میں نے کیا

ہوں سزا وار ِسزا کیوں، جب مقدر میں مرے
جو بھی اس جان ِجہاں نے لکھ دیا، میں نے کیا

وہ ٹھہرتا کیا کہ گزرا تک نہیں ، جس کے لئے
گھر تو گھر، ہر راستہ، آراستہ میں نے کیا

مجھ پہ اپنا جرم ثابت ہو نہ ہو لیکن فراز
لوگ کہتے ہیں کہ اس کو بے وفا میں نے کیا

این اے ناصر
04-16-2012, 10:18 AM
واہ بہت خوب جناب ۔ شئیرنگ کاشکریہ۔