PDA

View Full Version : سراہوں گا تیرے مَن مَن کے روُٹھ جانے کو



ایم-ایم
11-18-2011, 10:59 AM
سراہوں گا تیرے مَن مَن کے روُٹھ جانے کو
کہ بجلیوں کی ضرورت ہے آشیانے کو

نقاب ڈال رکھے ہیں دلِ فسردہ پر
کوئی سمجھ نہ سکا میرے مُسکرانے کو

یہ کہتے کہتے ستارے اُفق پہ ڈوُب گئے
کہ اتنا طُول نہ دے دُکھ بھرے فسانے کو

تیرے جہاں میں ٹھکانا کہیں نہیں مِلتا
پروں پہ لے کے نہ اُڑ جاؤں آشیانے کو

مجھے بھی رخصتِ تعمیرِ آشیاں دیجے
چلے ہیں آپ اگر بجلیاں گرانے کو

وہ مر تو جائے کہ مرنا ہے روح کی معراج
مگر ندیم سے کُچھ آس ہے زمانے کو

این اے ناصر
04-17-2012, 08:01 PM
بہت خوب جناب ۔ شئیرنگ کاشکریہ۔