PDA

View Full Version : علی (علیہ السلام) کی گود میں بچہ اگر پلا ہوگا



ایم-ایم
11-22-2011, 07:19 PM
علی (علیہ السلام) کی گود میں بچہ اگر پلا ہوگا
تو اپنے وقت کا اک شاہ لافتٰی ہوگا

دلیل عظمت حیدر (علیہ السلام) ہے خانہ کعبہ
کہ گھر بڑا ہے تو گھر والا بھی بڑا ہوگا

جو کربلا میں شہِ دیں کے کام آیا ہے
وہی زمانے کا اک روز آسرا ہوگا

حسین (علیہ السلام) دیں گے اگر شیرِ حق کو اذن جہاد
تو چند لمحوں میں طے سارا معرکہ ہوگا

نگاہ ہے رخ غازی پہ دل لرزتا ہے
علی (علیہ السلام) کا شیر ہے غیظ آگیا تو کیا ہوگا

سکینہ (سلام اللہ علیہا) کہتی تھیں بچوں سے اب نہ گھبراؤ
مرا چچا مرا مشکیزہ لا رہا ہوگا

نہ آیا پانی تو دل کو یہ کہہ کے بہلایا
علی (علیہ السلام) کا شیر ترائی میں سو رہا ہوگا

مگر یہ دل کی سدا تھی کہ لوٹ آؤ چچا
طمانچے ماریں گے ظالم مجھے تو کیا ہوگا

یہ سوچ سوچ کے ام البنین روتی تھیں
فرس سے لال مرا کس طرح گرا ہوگا

بےباک
11-23-2011, 05:20 AM
علامہ السید ذیشان حیدر جوادی کلیم الہ آبادی کا کلام مدح علی رضی اللہ عنہ کی شان میں بے مثال ہے ،
حضرت علی رضی اللہ عنہ نبی کے قائم مقام
عن سعد بن ابي وقاص قال خلف رسول اﷲ علي بن ابي طالب في غزوه تبوک فقال يا رسول اﷲ تخلفني في النساء والصبيان فقال اما ترضي ان تکون مني بمنزلة هارون من موسي غير انه لا نبي بعدي
حضرت سعد بن ابی وقاص رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے حضرت علی رضی اللہ عنہ کو غزوہ تبوک میں اپنا خلیفہ بنایا تو انہوں نے عرض کیا۔ اے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم آپ نے مجھے عورتوں اور بچوں میں خلیفہ بنایا ہے۔ اس پر حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ آپ اس چیز پر راضی نہیں کہ آپ میرے لئے اس طرح بن جائیں جس طرح کہ ہارون علیہ السلام حضرت موسیٰ علیہ السلام کے قائم مقام تھے مگر یہ کہ میرے بعد کوئی نبی نہ ہوگا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حضرت علی رضی اللہ عنہ اور حضرت سیدہ فاطمہ رضی اللہ عنہ کی شادی کا آسمانی فیصلہ
اللہ تعالیٰ اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی خوشنودی رضا اور مشعیت سے یہ مقدس ہستیاں رشتہ ازدواج میں منسلک ہوئیں۔ حدیث پاک میں ہے :
عن عبدالله بن مسعود عن رسول الله صلی الله عليه وآله وسلم قال ان الله امرني ان ازوج فاطمة من علي رضي الله عنهما
حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ بے شک اللہ تعالی نے مجھے حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہ کا حضرت علی رضی اللہ عنہ سے نکاح کرنے کا حکم دیا۔