PDA

View Full Version : اب سعی کا امکاں اور نہیں



ایم-ایم
11-23-2011, 04:07 PM
اب سعی کا امکاں اور نہیں، پرواز کا مضموں ہو بھی چکا
تاروں پہ کمندیں پھینک چکے، مہتاب پہ شبخوں ہو بھی چکا

اب اور کسی فردا کیلئے ان آنکھوں سے کیا پیماں کیجے
کس خواب کے جھوٹے افسوں سے تسکین دل ناداں کیجے

شیرینی ٴ لب، خوشبوئے دہن، اب شوق کا عنواں کوئی نہیں
شادابی ٴ دل، تفریح نظر، اب زیست کا درماں کوئی نہیں

جینے کے فسانے رہنے دو، اب ان میں الجھ کر کیا لیں گے
اک موت کا دھندا باقی ہے ، جب چاہیں گے نپٹالیں گے

این اے ناصر
04-16-2012, 10:46 AM
واہ بہت خوب جناب ۔ شئیرنگ کاشکریہ۔