PDA

View Full Version : ہم پرورشِ لوح و قلم کرتے رہیں گے



ایم-ایم
11-23-2011, 04:08 PM
ہم پرورشِ لوح و قلم کرتے رہیں گے
جو دل پہ گذرتی ہے رقم کرتے رہیں گے

اسبابِ غمِ عشق بہم کرتے رہیں گے
ویرانیء دوراں پہ کرم کرتے رہیں گے

ہاں تلخیء ایام ابھی اور بڑھے گی
ہاں اہلِ ستم، مشقِ ستم کرتے رہیں گے

منظور یہ تلخی، یہ ستم ہم کو گوارا
دم ہے تو مُداوائے الم کرتے رہیں گے

مئےخانہ سلامت ہے تو ہم سرخیء مے سے
تزئیںِ دروبامِ حرم کرتے رہیں گے

باقی ہے لہو دل میں تو ہر اشک سے پیدا
رنگِ لب و رخسارِ صنم کرتے رہیں گے

اک طرزِ تغافل ہے سو وہ ان کو مبارک
اک عرضِ تمنا ہے سو ہم کرتے رہیں گے

این اے ناصر
04-16-2012, 10:46 AM
واہ بہت خوب جناب ۔ شئیرنگ کاشکریہ۔