PDA

View Full Version : پہلے 3 تھے اب چار ہو گئے ہیں ...ہاہا



تانیہ
11-30-2010, 09:52 PM
سردار جی اپنا رشتہ دیکھنے گئے ۔۔
گھروالوں نے کہا کے دونوں کو اکیلا چھوڑ دو۔ بات وات کر لیں آپس میں۔
سردار لڑکی سے " بہن جی آپ کتنے بہن بھائی ہو ؟"
لڑکی غصہ سے " پہلے 3 تھے اب 4 ہوگئے ہیں "۔

سردار جی لندن کے مشہور کافی ہاؤس میں گئے اور کافی کا آرڈر دینے کے لیے ویٹر کو بلایا۔

“ سر ! آپ بلیک کافی پسند کریں گے یا۔۔۔۔۔ “ ویٹر نے پوچھا

“ اچھا یہ بتاؤ “ سردار نے ویٹر کی بات کاٹتے ہوئے پوچھا

“ تمہارے پاس اور کون کون سے رنگ دستیاب ہیں


گھر سیٹ کرنے کے لئے سب سے پہلے انہوں نے ٹی وی خریدنے کی سوچی اور ایک بڑے سٹور کے اندر گئے ، پہلے تو اِن کا منہ حیرت سے کھل گیا کیونکہ وہاں تو سوئی سے لیکر جہاز تک مل سکتا تھا پھر وہ ایک کاؤنٹر پر گئے اور سیلز مین سے پوچھا۔
’’یہ ٹی وی کتنے کا ہے ؟‘‘۔
’’ہم سکھوں کو ٹی وی نہیں بیچتے ‘‘ ۔ سیلز مین نے ٹکا سا جواب دیا۔
سردار جی کو زور کا جھٹکا زور سے ہی لگ گیا اور انہوں نے واہِ گرو کی قسم کھائی کہ یہی ٹی وی خریدوں گا۔
دوسرے دن سردار جی بھیس بدل کر گئے ، اور سیلزمین سے کہا ۔یہ ٹی وی کتنے کا ہے ؟۔
ہم سکھوں کو ٹی وی نہیں بیچتے ۔ سیلزمین نے پھر وہی جواب دیا ۔ سردار جی بہت حیران ہوئے کہ سیلزمین نے انہیں کیسے پہچان لیا ہے ۔ ساتھ ہی وہ زیادہ غصہ اور ضد میں آگئے ۔
تیسرے دن سردار جی اپنی داڑھی کٹوا کر کلین شیو بنا کر پگڑی اُتار کر اپنا حلیہ قطعی تبدیل کردیا اور جا پہنچے اسی سٹور پر اور سیلزمین سے پوچھا ۔یہ ٹی وی کتنے کا ہے ؟‘‘۔
ہم سکھوں کو ٹی وی نہیں بیچتے ۔ سیلزمین نے اطمینان سے پھر وہی جواب دیا۔سردار جی کو تو آگ ہی لگ گئی ۔
چوتھے دن وہ عورت کا روپ دھار کر آگئے اور برقعہ بھی اوڑھ لیا ۔ اور سیلزمین سے وہی سوال کیا ۔ یہ ٹی وی کتنے کا ہے ‘‘؟۔
ہم سکھوں کو ٹی وی نہیں بیچتے ‘‘سیلزمین کا جواب پھر وہی تھا ۔
اب سردار جی نے ہمت ہار دی اور انتہائی عاجزی سے سیلزمین سے مخاطب ہوئے ۔
بھائی ایک بات تو بتاؤ۔۔۔میں اتنے حلیے بدل بدل کر آتا رہا ہوں اور تم ہر دفعہ پہچان لیتے ہو آخر کیسے ؟۔
سیلزمین نے اطمینان سے جواب دیا۔ چونکہ چار دن سے جسے آپ ٹی وی کہہ رہے ہیں وہ دراصل واشنگ مشین ہے ۔

ایک لیڈی ڈاکٹر سردار جی سے پوچھتی ہیں کہ یہ تم میرے کلینک کے باہر کھڑے ہوکر عورتوں کو کیوں گھورتے رہتے ہو?
سردار جواب دیتا ہے:ڈاکٹر صاحبہ آپ ہی نے تو کلینک کے باہر لکھا ہوا ہے"خواتین کو دیکھنے کا وقت7 سے 9 بجے تک ہے



ایک بار ایک سکھ بیچارہ بہت غریب تھا ،
سوچا کہ پیسے کہاں سے آسانی سے ہاتھ آئیں؟
سوچ سوچ کر ایک پلان بنایا کہ بچہ اغوا کر کے تاوان لیا جائے۔
اگلے دن وہ ایک پارک میں گیا اور ایک بچے کو بہلا پھسلا کر ایک درخت کے پیچھے لے گیا اور کہا کہ میں*نے تمھیں اغوا کر لیا ہے۔ بچہ بیچارہ بہت پریشان، رونے لگا۔
سکھ نے ایک کاغذ پر لکھا:
ایک سردار نے تمھارا بچہ اغوا کر لیا ہے۔ دو لاکھ روپے کل اس آم کے درخت کے نیچےدس بجے دن کو رکھ جاؤ تو بچہ مل جائے گا۔
اور یہ کاغذ بچے کی پشت پر چپکا کر اسے اس کے اپنے گھر بھیج دیا۔
اگلے دن دس بجے جب وہ مطلوبہ درخت کے نیچے پہنچا تو دیکھا کہ بچہ بیٹھا ہے، دو لاکھ روپے بھی موجود ہیں اور بچے کے ہاتھ میں ایک کاغذ ہے جس پر لکھا تھا:
دو لاکھ روپے حاضر ہیں۔ براہٍ کرم بچہ چھوڑ دو۔ ایک سردار کو دوسرے سردار کے ساتھ یہ سلوک زیب نہیں دیتا

دو سردار کسی کار میں بم فکس کر رہے ہوتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔
پہلا سردار : اگر بم فکس کرتے ہوئے بلاسٹ ہو جائے تو تم کیا کروگے ؟
دوسرا سردار : گھبراؤ مت ، میرا پاس ایک اور ہے۔

سقراط
12-01-2010, 12:44 PM
سردار جی اپنا رشتہ دیکھنے گئے ۔۔
گھروالوں نے کہا کے دونوں کو اکیلا چھوڑ دو۔ بات وات کر لیں آپس میں۔
سردار لڑکی سے " بہن جی آپ کتنے بہن بھائی ہو ؟"
لڑکی غصہ سے " پہلے 3 تھے اب 4 ہوگئے ہیں "۔

سردار جی لندن کے مشہور کافی ہاؤس میں گئے اور کافی کا آرڈر دینے کے لیے ویٹر کو بلایا۔

“ سر ! آپ بلیک کافی پسند کریں گے یا۔۔۔۔۔ “ ویٹر نے پوچھا

“ اچھا یہ بتاؤ “ سردار نے ویٹر کی بات کاٹتے ہوئے پوچھا

“ تمہارے پاس اور کون کون سے رنگ دستیاب ہیں
گھر سیٹ کرنے کے لئے سب سے پہلے انہوں نے ٹی وی خریدنے کی سوچی اور ایک بڑے سٹور کے اندر گئے ، پہلے تو اِن کا منہ حیرت سے کھل گیا کیونکہ وہاں تو سوئی سے لیکر جہاز تک مل سکتا تھا پھر وہ ایک کاؤنٹر پر گئے اور سیلز مین سے پوچھا۔
’’یہ ٹی وی کتنے کا ہے ؟‘‘۔
’’ہم سکھوں کو ٹی وی نہیں بیچتے ‘‘ ۔ سیلز مین نے ٹکا سا جواب دیا۔
سردار جی کو زور کا جھٹکا زور سے ہی لگ گیا اور انہوں نے واہِ گرو کی قسم کھائی کہ یہی ٹی وی خریدوں گا۔
دوسرے دن سردار جی بھیس بدل کر گئے ، اور سیلزمین سے کہا ۔یہ ٹی وی کتنے کا ہے ؟۔
ہم سکھوں کو ٹی وی نہیں بیچتے ۔ سیلزمین نے پھر وہی جواب دیا ۔ سردار جی بہت حیران ہوئے کہ سیلزمین نے انہیں کیسے پہچان لیا ہے ۔ ساتھ ہی وہ زیادہ غصہ اور ضد میں آگئے ۔
تیسرے دن سردار جی اپنی داڑھی کٹوا کر کلین شیو بنا کر پگڑی اُتار کر اپنا حلیہ قطعی تبدیل کردیا اور جا پہنچے اسی سٹور پر اور سیلزمین سے پوچھا ۔یہ ٹی وی کتنے کا ہے ؟‘‘۔
ہم سکھوں کو ٹی وی نہیں بیچتے ۔ سیلزمین نے اطمینان سے پھر وہی جواب دیا۔سردار جی کو تو آگ ہی لگ گئی ۔
چوتھے دن وہ عورت کا روپ دھار کر آگئے اور برقعہ بھی اوڑھ لیا ۔ اور سیلزمین سے وہی سوال کیا ۔ یہ ٹی وی کتنے کا ہے ‘‘؟۔
ہم سکھوں کو ٹی وی نہیں بیچتے ‘‘سیلزمین کا جواب پھر وہی تھا ۔
اب سردار جی نے ہمت ہار دی اور انتہائی عاجزی سے سیلزمین سے مخاطب ہوئے ۔
بھائی ایک بات تو بتاؤ۔۔۔میں اتنے حلیے بدل بدل کر آتا رہا ہوں اور تم ہر دفعہ پہچان لیتے ہو آخر کیسے ؟۔
سیلزمین نے اطمینان سے جواب دیا۔ چونکہ چار دن سے جسے آپ ٹی وی کہہ رہے ہیں وہ دراصل واشنگ مشین ہے ۔

ایک لیڈی ڈاکٹر سردار جی سے پوچھتی ہیں کہ یہ تم میرے کلینک کے باہر کھڑے ہوکر عورتوں کو کیوں گھورتے رہتے ہو?
سردار جواب دیتا ہے:ڈاکٹر صاحبہ آپ ہی نے تو کلینک کے باہر لکھا ہوا ہے"خواتین کو دیکھنے کا وقت7 سے 9 بجے تک ہے

ایک بار ایک سکھ بیچارہ بہت غریب تھا ،
سوچا کہ پیسے کہاں سے آسانی سے ہاتھ آئیں؟
سوچ سوچ کر ایک پلان بنایا کہ بچہ اغوا کر کے تاوان لیا جائے۔
اگلے دن وہ ایک پارک میں گیا اور ایک بچے کو بہلا پھسلا کر ایک درخت کے پیچھے لے گیا اور کہا کہ میں*نے تمھیں اغوا کر لیا ہے۔ بچہ بیچارہ بہت پریشان، رونے لگا۔
سکھ نے ایک کاغذ پر لکھا:
ایک سردار نے تمھارا بچہ اغوا کر لیا ہے۔ دو لاکھ روپے کل اس آم کے درخت کے نیچےدس بجے دن کو رکھ جاؤ تو بچہ مل جائے گا۔
اور یہ کاغذ بچے کی پشت پر چپکا کر اسے اس کے اپنے گھر بھیج دیا۔
اگلے دن دس بجے جب وہ مطلوبہ درخت کے نیچے پہنچا تو دیکھا کہ بچہ بیٹھا ہے، دو لاکھ روپے بھی موجود ہیں اور بچے کے ہاتھ میں ایک کاغذ ہے جس پر لکھا تھا:
دو لاکھ روپے حاضر ہیں۔ براہٍ کرم بچہ چھوڑ دو۔ ایک سردار کو دوسرے سردار کے ساتھ یہ سلوک زیب نہیں دیتا

دو سردار کسی کار میں بم فکس کر رہے ہوتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔
پہلا سردار : اگر بم فکس کرتے ہوئے بلاسٹ ہو جائے تو تم کیا کروگے ؟
دوسرا سردار : گھبراؤ مت ، میرا پاس ایک اور ہے۔


:D:D:D:D:D:D

بےباک
12-07-2010, 04:44 PM
ہاہاہاہاہاہاہاہاہااہاہہاہ اہاہا، خوب لطیفے لکھے، بہت ہی خوب،
سکھ بھی کیا یاد کریں گے ،

ثمرین اختر
07-29-2012, 09:48 AM
هاهاها هاهاهاهاها بهت خوب:tongue38:

انجم رشید
07-29-2012, 11:15 AM
ھھھھھھھھھھھھھھھھھھھھھھھھھ ھھھھھھا بہت خوب

pervaz khan
07-29-2012, 12:18 PM
زبردست

ھارون رشید
08-05-2012, 08:53 AM
واہ جی واہ خوب رونق لگائی ہوئی ہے

بےلگام
08-05-2012, 08:57 AM
:tongue38: تو کیا ہوا پھر

ھارون رشید
08-05-2012, 09:05 AM
کان چھوڑ دیں آپ کی زبان باہر آرہی ہے

بےلگام
08-05-2012, 09:07 AM
:Ghelyon: شکریہ کان چھوڑنے کا جی

ہمراز
08-05-2012, 09:33 AM
نہیں تو پھر پکڑ لو بھائی جی

pervaz khan
08-05-2012, 12:30 PM
وہ کیوں

علیشان
08-06-2012, 12:43 AM
اچھے لطیفے ہیں

ملہار
02-02-2014, 06:54 PM
:smiley038::smiley038::sarcasm::smiley027:th_smili e_schild