PDA

View Full Version : حوا کی بیٹی !!



سرحدی
01-10-2012, 10:35 AM
وطن عزیز پاکستان!!
جس کے حصول میں لاکھوں جانوں کی قربانی شامل ہے، اور جس کی تخلیق کا رنگ اپنے خون سے لاکھوں مسلمانانِ ہند نے اس لیے بھرا تھا کہ ’’پاکستان کا مطلب کیا، لا الہ الا اللہ‘‘
تعلیمی اداروں کا ماحول اور سینکڑوں ویڈیوز اس بات کی شاہد ہیں کہ پاکستان کے تعلیمی اداروں میں کس طرح سے ایک مسلمان کی بیٹی کو نچایا جاتا ہے؟ اور پھر اس سے بھی زیادہ افسوس کی بات یہ ہے کہ جب کوئی واقعہ ایسا رونما ہوتا ہے جس میں انسان کی جان کا ضیاع شامل ہو تو دکھ اور غم کی بات یہ ہوتی ہے کہ ساری زندگی جس کی زبان پر کلمہ طیبہ ’’لا الہ الا اللہ محمد رسول اللہ‘‘ جاری رہا اور مرتے وقت ایک ایسے عمل میں جان گئی جس وقت ’’شائید‘‘ ایمان ان کے دل سے نکل کر ان کے سروں پر تھا۔
اللہ تعالیٰ نے عورت کو پردہ کی چیز بنایا ہے ، کیوں کہ قیمتی شئے کو پردہ میں رکھا جاتا ہے اور اس کی حفاظت کی جاتی ہے، یہ عزت و شرف اللہ تعالیٰ کی طرف سے عطا فرمایا گیا ، لیکن! افسوس صد افسوس کے آج کل کی عورت اپنے عزت و وقار کو سمجھ نہ سکی اور دیوانہ وار ایسے محافل میں شامل ہوجاتی ہیں کہ جس میں بے پردگی ، راگ رنگ کی محافل اور اللہ تعالیٰ کی نافرمانی شامل ہوتی ہے۔
اسی طرح کی ایک پر آج کے اخبار میں نظر پڑی۔ جس میں لاہور کے ایک نجی کالج میں میوزیکل کنسرٹ کے دوران بم کی جھوٹی افواہ پر خوف و ہراس پھیل جانے کی وجہ سے تین طالبات اپنی جان سےہاتھ دھو بیٹھیں۔ یہ خبر حقیقتا انتہائی افسوس ناک ہے ۔
اس کےساتھ ساتھ میڈیا کا کردار بھی یہاں پر اجاگر کرنا ضروری سمجھوں گا کہ آزادیٔ صحافت کا نعرہ لگانے والی ہماری میڈیا کا دوغلہ پن یہاں پر واضح ہوجاتا ہے ، سہراب گوٹھ کے ایک گمنام جگہ پر قائم نفسیاتی ہسپتال کو مدرسہ کا نام دے کر جھوٹی خبر پوری شہ سرخی کے ساتھ شایع کی جاتی ہے اور اس پر بحث و مباحثہ کیا جاتا ہے لیکن ، لاہور کے ایک تعلیمی ادارے کی خبر کو محض گمنام کالج کا نام دے کر شایع کیا جاتا ہے۔
اگر موت کا ایسا کوئی واقعہ کسی دینی ادارے میں ہوتا تو پورے ملک میں کہرام مچ جاتا اور اس کو بدنام کرنے کے لیے طرح طرح کی جھوٹی خبریں پھیلائیں جاتیں، لیکن اللہ تعالیٰ کی وحدانیت اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی رسالت کا اقرار کرنے والی حوا کی بیٹی کو ناچ گانے کی محفل میں مدعو کرکے اس کا دین ، ایمان، عفت اور عظمت کو نقصان پہنچایا گیا اور پھر اسی پروگرام کے آخر میں ایک جھوٹی افواہ پر یہ بچیاں پیروں تلے روندی گئیں، کتنے افسوس کی بات ہے۔
ہماری دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ تمام مومنین اور مومنات اور مسلمین و مسلمات جو اس دنیا سے چلے گئے ہیں ان کی مغفرت فرمائے، اور ہماری نوجوان نسل (مرد و خواتین) کو یہودو نصاریٰ کے پھیلائے ہوئے بے حیائی اور بےشرمی کے جال سے اپنے حفظ و امان میں رکھے۔


http://express.com.pk/images/NP_KHI/20120110/Sub_Images/1101421724-1.gif

بےباک
01-11-2012, 09:14 AM
دردناک خبر ہے ،
انا للہ و انا الیہ راجعون

سرحدی
01-11-2012, 10:07 AM
http://ummat.com.pk/2012/01/11/images/story3.gif

سیما
01-12-2012, 05:24 AM
انا للہ و انا الیہ راجعون