PDA

View Full Version : کانٹوں کا اِک مکان مرے پاس رہ گیا



عبادت
01-19-2012, 04:04 PM
کانٹوں کا اِک مکان مرے پاس رہ گیا
اِک پھُول سا نشان مرے پاس رہ گیا

سامان تو نے رکھ لیا جاتے ہوئے تمام
لیکن ترا دھیان مرے پاس رہ گیا

جاتے ہوئے یقین کی دولت وہ لے گیا
اِک وہم اور گُمان مرے پاس رہ گیا

سُورج چلا گیا مجھے صحرا میں چھوڑ کے
کرنوں کا سائباں مرے پاس رہ گیا

ہم کو بھُلانے پر ہے کہاں اُس کو اختیار
کتنا حسیں گُماں مرے پاس رہ گیا

رخشی
01-19-2012, 05:14 PM
بہت پیاری اشعار ھیں

این اے ناصر
04-16-2012, 09:36 AM
واہ بہت خوب جناب ۔ شئیرنگ کاشکریہ۔

نگار
07-12-2014, 05:38 AM
ہم کو بھُلانے پر ہے کہاں اُس کو اختیار
کتنا حسیں گُماں مرے پاس رہ گیا

عمدہ شاعری ارسال کرنے پہ آپ کا بہت شکریہ

saba
07-12-2014, 11:09 AM
ہم کو بھُلانے پر ہے کہاں اُس کو اختیار
کتنا حسیں گُماں مرے پاس رہ گیا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ واہ زبردست