PDA

View Full Version : وہ جس کا ڈر تھا آخر ہو گیا ناں



عبادت
02-14-2012, 12:15 PM
وہ جس کا ڈر تھا آخر ہو گیا ناں

وہ جس کا ڈر تھا آخر ہو گیا ناں
ستارہ آسماں میں کھو گیا ناں

کہا بھی تھا اُسے مرنے نہ دینا
وہ سپنا خاک اوڑھے سوگیا ناں

اُسے دل سے نکلنے ہی دیا کیوں؟
وہ انجانی سی منزل کو گیا ناں

ہے چاہت کو چھُپانے کا نتیجہ!
یہ ڈھیروں بوجھ دل پر ہو گیا ناں

بتول ایسے اُسے دیکھا ہی کیوں تھا؟
وہ اِن آنکھوں میں سپنے بو گیا ناں

عبادت
02-14-2012, 12:20 PM
میری چند فیورٹ غزلوں میں سے ایک
فاخرہ جی کی ایک بہت پیاری غزل ہے یہ

مجھے تو بہت اچھی لگتی آپ:Ghelyon: سب کا معلوم نہیں کیسی لگے

این اے ناصر
04-16-2012, 09:35 AM
واہ بہت خوب جناب ۔ شئیرنگ کاشکریہ۔

نگار
09-21-2012, 11:22 PM
بہترین شاعری ارسال کرنے پر آپ کا بہت بہت شکریہ

مجھے بہت بہت اچھی لگی