PDA

View Full Version : اداس شرمیلی راتوں میں مَیں یاد آﺅں گا



محمد بلال اعظم
02-16-2012, 11:56 PM
اداس شرمیلی راتوں میں مَیں یاد آﺅں گا
برسات کی بھیگی برساتوں میں مَیں یاد آﺅں گا
بھیگی بھیگی شاموں میں، سرد سرد راتوں میں
کِن کِن سوغاتوں میں مَیں یاد آﺅں گا
جب وقت دہرائے گا خود کو دوبارہ
اے جانِ حیا رنگوں کی برساتوں میں مَیں یاد آﺅں گا
جب رنگِ حنا چمکے گا اِن ریشمی ہاتھوں میں
تب دیکھنا اِن ہاتھوں میں مَیں یاد آﺅں گا
لاکھ ضبط کر لینا خود کو روک نہ پاﺅ گی
کِن مِن کِن مِن برساتوں میں مَیں یاد آﺅں گا
جب اداسی دل کی پناہوں میں ڈیرے ڈالے گی
تنہائی کے جگراتوں میں مَیں یاد آﺅں گا

(محمد بلال اعظم)

بےباک
02-17-2012, 05:57 AM
محمد بلال اعظم صاحب ،
آپ کا شاعری کا خوب ذوق ہے ، بہت خوشی ہوئی ،
یہ نظم آپ نے خود لکھی ہے ، اچھی کاوش ہے ، یہ سلسلہ جاری رکھیے ،
:th_rose::th_rose::th_rose::th_rose::th_rose::th_r ose:

ہمیں امید ہے اس فورم میں آپ کی آمد سے ایک اچھے شاعرانہ ذوق والے ساتھی کا اضافہ ہو گا
:photosmile:

عبادت
02-18-2012, 01:34 AM
واہو زبردست بہت خوب اعظم صاحب
:tumb::thumbsupsmileyexcellet-1: