PDA

View Full Version : نیا اک ربط پیدا کیوں کریں ہم



عبادت
03-06-2012, 04:56 PM
نیا اک ربط پیدا کیوں کریں ہم
بچھڑنا ہے تو جھگڑا کیوں کریں ہم

خموشی سے ادا ہو، رسمِ دوری
کوئی ہنگامہ برپا کیوں کریں ہم

یہ کافی ہے کہ ہم دشمن نہیں ہیں
وفاداری کا دعویٰ کیوں کریں ہم

وفا، اخلاص، قربانی، محبت
اب ان لفظوں کا پیچھا کیوں کریں ہم

ہماری ہی تمنا کیوں کرو تم
تمھاری ہی تمنا کیوں کریں ہم

نہیں دنیا کو جب پروا ہماری
تو پھر دنیا کی پروا کیوں کریں ہم

ہیں باشندے اسی بستی کے ہم بھی
سو خود پر بھروسا کیوں کریں ہم

چبا لیں کیوں نہ خود ہی اپنا ڈھانچا
تمھیں راتب مہیا کیوں کریں ہم

جون ایلیا

این اے ناصر
03-06-2012, 06:58 PM
واہ بہت خوب برادر۔ شکریہ شئیرنگ کا۔ بہت ہی اچھاانتخاب ہے۔

نگار
03-16-2012, 02:12 PM
اچھی غزل ہے۔۔۔آپکا بہت شکریہ اس غزل کے لیے۔۔۔:heart: