PDA

View Full Version : تنہائی کا دُکھ گہرا تھا



تا بی
03-26-2012, 05:03 PM
میں دریا دریا روتا تھا
ایک ہی لہر نہ سنبھلی ورنہ
میں طوفانوں سے کھیلا تھا
تنہائی کا تنہا سایا
دیر سے میرےساتھ لگا تھا
چھوڑ گئے جب سارے ساتھی
تنہائی نے ساتھ دیا تھا
سُوکھ گئی جب سُکھ کی ڈالی
تنہائی کا پُھول کھلا تھا
تنہائی میں یادٍ خدا تھی
تنہائی میں خوفٍ خدا تھا
تنہائی محرابٍ عبادت
تنہائی منبر کا دٍیا تھا
تنہائی مرا پاےَ شکستہ
تنہائی مرا دستٍ دُعا تھا
وہ جنت مرے دل میں چُھپی تھی
میں جیسے باہر ڈھونڈ رہا تھا
تنہائی مرے دٍل کی جنت
میں تنہا ہوں ؛ میں تنہا تھا

سیما
03-29-2012, 04:10 AM
زبردست کیا بات ہے ۔ بہت شکریہ