PDA

View Full Version : مرچوں کے گرینیڈ



تانیہ
11-22-2010, 02:57 PM
ہندوستان میں سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ شدت پسندی پر قابو پانے کے لیے جو مرچوں کے گرینیڈ بنائے گئے انکا استمعال دیگر کاموں کے لیے بھی کیا جاسکتا ہے۔
انکا کہنا ہے کہ بھیڑ کو منتشر کرنےکے لیے بھی مرچوں کا بھی استعمال ہوتا ہے جبکہ خواتین اپنی حفاظت کے لیے مرچوں سے بنا ایک سپرے استعمال کرتی ہیں۔

لیکن سائسندانوں کا کہنا ہے کہ انکا اہم مقصد مرچوں کے استعمال سے شدت پسندوں اور دہشت گردوں کو کمزور کرنا ہے۔

بھٹ جولکیا نامی مرچیں کسی بھی عام مرچ سے ہزار گنا تیز ہوتی ہیں۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اس بے مثال پاؤڈر کااستمعال کئی مقاصد کے لیے کیا جاسکتا ہے۔ جیسا کہ سرد علاقوں میں تعینات فوج کے کھانے میں بھی اس کا استعمال ہو سکتا ہے۔

اس کے علاوہ ان مرچوں کا استعمال فوج کے بیرکوں کے ارد گرد لگی باڑھ میں بھی کیا جاتا ہے تاکہ جانور اس کے نزدیک نہ آئیں۔

دفاعی تحقیق کے ادارے ڈی آر ڈی او سے تعلق رکھنے والے آر بی شریواستو نے بتایا کہ ان مرچوں سے بنے یہ گرینیڈ زہریلے نہیں ہونگیں۔ بھٹ جولکیا مرچ شمالی مشرقی ریاست آسام میں پیدا کی جاتی ہے اور گینیز بک آف ورلڈ ریکارڈ نے اسے دنیا کی سب سے تیز مرچ قرار دیا ہے۔

شدت پسندوں پر قابو پانے کے لیے اس کے استمعال کے بارے میں انکا کہنا تھا’یہ گرینیڈ ان کو بے حال کریں گے لیکن اس سے انکی موت نہیں ہوگی۔‘

ان گرینیڈز پر کیے گئے ابتدائی تجربات کو دفاعی سائنسدانوں نے کامیاب قرار دیا ہے۔

مسٹر شریواستو کا کہنا تھا کہ ہم ان کے ڈیزائن پر کام کر رہے ہیں اور جب یہ بن کر تیار ہوجائے گا تو ہم اسکی پروڈکشن شروع کردیں گے۔[hr]

بےباک
12-04-2010, 11:09 AM
ھھھھھھھھھھھھا
راز کی بات معلوم ھو گئی ،
بہت ہی خوب

راجہ صاحب
12-04-2010, 10:44 PM
پیغام پوسٹ کرتے وقت درست زمرے کا انتخاب کیا کریں
موڈریٹر اس مضمون کو یہاں (http://urdulook.info/portal/forumdisplay.php?fid=37) منتقل کریں