PDA

View Full Version : نہ جانے ڈھونڈتے ہو کیا میری ویران آنکھوں میں



این اے ناصر
05-10-2012, 01:48 PM
نہ جانے ڈھونڈتے ہو کیا میری ویران آنکھوں میں
سجا رکھے ہیں ہم نے تو کئی طوفان آنکھوں میں
کہاں وہ شوخیاں پہلے سے اب کچھ بھی نہیں باقی
چلے آے ہو تم کیا کھوجنے بے جان آنکھوں میں
کسی کا ہاتھ لے کر ہاتھ میں جب وہ ملے ہم سے
تو کیسے ٹوٹ کے بکھرا تھا میرا من میری آنکھوں میں

تانیہ
05-10-2012, 02:03 PM
واہ
بہت خوب

بےلگام
05-10-2012, 07:31 PM
واہہہہہہہہہہہہہ کیا خوب کہا آپ نے

بےلگام
05-11-2012, 01:24 AM
خاک میں گزرا ہوا کل نہیں ڈھونڈا کرتے
وہ جو پلکوں سے گِرا پل، نہیں ڈھونڈا کرتے

پہلے کچھ رنگ لبوں کو بھی دئیے جاتے ہیں
یُونہی آنکھوں میں تو کاجل نہیں ڈھونڈا کرتے

جس نے کرنا ہو سوال آپ چلا آتا ہے
لوگ جا جا کے تو سائل نہیں ڈھونڈا کرتے

یہ ہیں خاموش اگر، اس کو غنیمت جانو
یونہی جذبات میں ہلچل نہیں ڈھونڈا کرتے

پیچھے کھائی ہے تو آگے ہو سمندر گہرا
مسئلہ ایسا ہو تو پھر حل نہیں ڈھونڈا کرتے

اِن کھلی آنکھوں سے خوابوں کو تلاشو نہ بُتول
پلکیں ہو جائیں جو بوجھل نہیں ڈھونڈا کرتے

بےلگام
05-11-2012, 01:31 AM
میں نے وفا کے نام پہ کارِ وفا نہیں کیا
خود کو ہلاک کر لیا خود کو فدا نہیں کیا

نسبت علم تھی بہت حاکم وقت کو عزیز
اس نے تو کارِ جہل بھی بے علماء نہیں کیا

تم بھی کسی کے باب میں عہد شکن ہو غالبا
میں نے بھی ایک شخص کا قرض ادا نہیں کیا

نگار
08-17-2012, 03:00 AM
کسی کا ہاتھ لے کر ہاتھ میں جب وہ ملے ہم سے
تو کیسے ٹوٹ کے بکھرا تھا میرا من میری آنکھوں میں

لاجواب ، بہت خوب جناب