PDA

View Full Version : حکمرانوں



علی عمران
12-04-2010, 11:21 AM
تم سے امیدِ خیر لا حاصل
بے ضمیری جسے گوارا ہو
بس وہی ہم سفر تمہارا ہو
ضبط کرتے ہو روز تم اخبار
یہ ہے آزادی لبِ اظہار؟
مفلس و اہلِ دانش و زردار
آج ہیں تم سے سب کے سب بے زار
سچ نہ بولا نہ بول سکتے ہو
جانے کیا کیا جنوں میں بکتے ہو
تالیاں قہقہے کرو تقریر
کوئی کچھ بھی کہے کرو تقریر
ملک کٹتا رہے کرو تقریر
خون بہتا بہے کرو تقریر
سب ہیں خوسحال ہاتھ اٹھواؤ
یوں تماشا جہاں کو دکھلاؤ
دل تمہارے ہیں نفرتوں سے بھرے
کون اب تم پہ اعتبار کرے
جو بھی تم سے ملائے ہاتھ ڈرے
مر گئے اچھے لوگ، تم نہ مرے
قاتلو اب خدا سے کچھ تو ڈرو
باقی ماندہ وطن پہ رحم کرو

تانیہ
12-04-2010, 10:20 PM
واہ زبردست

این اے ناصر
03-31-2012, 12:47 PM
واہ بہت خوب۔ شکریہ