PDA

View Full Version : چل خسروؒ گھر اپنے



گلاب خان
07-01-2012, 10:39 PM
میں ماٹی کی مورتی ، ماٹی میرا دیس
ماٹی موری جات ہے ، مَیں لائی سندیس
ماٹی بھید اَگم کا ، ماٹی کی کیا بات
سُندر پھول سے پوچھیو ، ماٹی کیسا دیس
ماٹی میں جل اَگنی ‘ ماٹی پَوَن جھکور
ماٹی ہی من موہنی ، ماٹی کرے کلیس
ماٹی ماٹی کھا گئی ، ماٹی مورکھ کوکھ
ماٹی ماٹی جنم دے ، ماٹی سَو سَو بھیس
ماٹی بھولے پریم کو ، جگ کلجُگ بن جائے
ماٹی جگ کا دیس ہے ، جگ اِس کا پردیس
ماٹی کھڑکھڑ بولتی ، بیتے جُگ ہزار
ماٹی لاگی دھڑکنیں، کھڑکھڑ ہے چودیس
ماٹی آئے کوکھ سے ، ماٹی کوکھ بسے
دھرتی ماتا دھرم ہے ، ماٹی کا سندیس
ماٹی جگ کو موہ کے ، جائے ماٹی سنگ
’’گوری سوئے سیج پہ ، مُکھ پر ڈالے کیس‘‘
خسروؒ کا گُر آتما ، واصفؔ گُر کی بات
اَمر کرے پرماتما ، ماٹی دیس بدیس