PDA

View Full Version : کیا آپ کو معلوم ہے؟



سقراط
07-03-2012, 04:13 PM
= نوبل پرائز کسی بھی فرد یا ادارے کو فزکس، کیمسٹری، میڈیسن، سشیالوجی، لٹریچر، انٹرنیشنل امن اور اکنامکس سائنسز میں انتہائی اعلٰی کارکردگی کی بناء پر دیا جانے والا ایوارڈ ہے۔

= کرکٹ کی تاریخ کا پہلا ون ڈے میچ انگلینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان 1970 میں کھیلا گیا

= انسان کے خون کے سرخ خلئے (RBC) صرف 20 سیکنڈ میں پورے جسم کا ایک چکر لگا لیتے ہیں۔

= پیغمبروں کی سر زمین فلسطین کو کہتے ہیں ۔

= پھولوں کا ملک ہالینڈ کو کہتے ہیں ۔

= موٹر کار 1768ء میں ایجاد ہوئی ۔ (فرانس)

= پستول 1500ء میں ایجاد ہوا ۔ (اٹلی)

= عینک 126ء میں ایجاد ہوئی ۔

= پاکستان کی سب سے بڑی لائبریری پنجاب پبلک لائبریری ہے ۔

= دنیا میں سب سے پہلا زیبرا کراسنگ (Zebra Crossing) کا قانون برطانیہ میں 1951ء میں نافذ ہوا ۔

= دنیا میں سب سے پہلا ٹی وی کا کامیاب تجربہ 1925ء میں ہوا ۔

= لفظ یونان کے پہلے دو لفظ مٹانے سے کھانے والی چیز بن جاتی ہے ۔ نان

= پاکستان کا پہلا سکہ 1948ء میں جاری ہوا ۔

= ہمنگ برڈ (Heming Bird) دنیا کا سب سے چھوٹا پرندہ ہے ۔

= سعودی عرب میں کوئی سینیما نہیں ہے ۔

= ایک 100 پاور کا بلب اگر مسلسل 10 گھنٹے جلتا رہے تو بجلی کا ایک یونٹ خرچ ہوگا ۔

= شہد کو ہضم کرنا نہایت آسان ہے کیونکہ یہ پہلے سے ہی شہد کی مکھیوں کے ذریعہ ہضم شدہ حالت میں ہوتا ہے ۔

= اُلو واحد ایسا پرندہ ہے جو اپنی اوپری پلک چھپکاتا ہے ۔ باقی سارے پرندے اپنی نچلی پلک جھپکاتے ہیں ۔

= چمگادڑ غار سے نکلتے وقت ہمیشہ بائیں طرف مڑتے ہیں ۔

= کسی خوشگوار چیز کو دیکھنے پر آپ کی آنکھوں کی پتلیاں %45 تک پھیل جاتی ہیں ۔

= بحری جہاز Titanic کو بنانے میں 70 لاکھ ڈالر خرچ ہوئے تھے جبکہ اس پر مبنی فلم بنانے میں 20 کروڑ ڈالر خرچ ہوتے ہیں ۔
Titanic= پہلا بحری جہاز ہے جس نے SOS سگنل کا استعمال کیا تھا ۔

= پیاز کاٹتے وقت (Chewing gum) چبانے سے آنکھوں میں آنسو نہیں آتے ۔

= انسانی دل دھڑکتے وقت اتنا دباؤ پیدا کرتا ہے جو کہ خون کو 30 فٹ دور پھینک سکتا ہے ۔

= بڑے کینگرو ایک چھلانگ میں 30 فٹ تک دوری طے کرسکتے ہیں ۔

گلاب خان
07-03-2012, 08:31 PM
اچھی معلومات دی شکریہ جاری رکہیں

سرحدی
07-05-2012, 12:19 PM
ماشاء اللہ ، سقراط بھائی اچھی معلومات شیئر کرنے کے لیے شکریہ

سقراط
01-07-2013, 12:32 PM
http://urdulook.info/imagehost/?di=CFAJ
http://urdulook.info/imagehost/?di=N17O
http://urdulook.info/imagehost/?di=E4SP
http://urdulook.info/imagehost/?di=FLAQ


ہماری ویب (http://www.hamariweb.com/articles/article.aspx?id=23641)

سقراط
01-07-2013, 01:59 PM
http://urdudigest.pk/wp-content/uploads/2011/11/Mount_Everest-150x150.jpg
اگر سمندر کی تہہ کو بھی شمار کیا جائے تو دنیا کا سب سے اونچا پہاڑ مائونٹ ایورسٹ نہیں، مائونٹ کیا (Kea) ہے۔ یہ پہاڑ امریکی جزیرے ہوائی میں واقع ایک آتش فشاں ہے۔ اس کی کل بلندی تقریبًا ۱۰ہزار میٹر ہے لیکن اس میں سے تقریبًا ۶ہزار میٹر بلندی پانی کے اندر ہے۔ مگر یہی بلندی مائونٹ کیا کو سب سے بلند پہاڑ بنا دیتی ہے کیونکہ مائونٹ ایورسٹ کی اونچائی ۸۸۰۰؍میٹر ہے۔

٭٭

برطانیہ کے بعض ساحلوں کا ۵ئ۱؍میٹر علاقہ ہر سال سمندر کھا جاتا ہے۔ آپ کو علم ہوگا کہ برطانیہ کے چاروں طرف سمندر ہے۔ اگر یہ تمام ساحلوں کو ۵ئ۱میٹر کے حساب سے کھانے لگے تو اگلے ۵۰؍ہزار برس میں برطانیہ کا نام و نشان مٹ جائے گا۔ لیکن انگریزوں کی خوش قسمتی ہے کہ ان کے بیشتر ساحل سمندر صرف ۱۰سینٹی میٹر سالانہ کے اعتبار ہی سے ہڑپ کرتا ہے۔ اگرچہ عالمی گرمائو (گلوبل وارمنگ) کے باعث سمندروں کی سطح بڑھنے سے برطانیہ کے ساحلی شہروں کو ڈوبنے کے حقیقی خطرات لاحق ہیں۔ یوں آئرلینڈ کو بھی سخت نقصان پہنچے گا جس کا چار لاکھ پینتیس ہزار ایکڑ رقبہ سمندر برد ہو جائے گا۔

٭٭

http://urdudigest.pk/wp-content/uploads/2011/11/3193361025_62de264cbe-150x150.jpg
اگر ہم اسفنجوں کو بھی زندہ شے شمار کریں تو انھیں ہی کرۂ ارض پر سب سے زیادہ طویل عمر پانے کا اعزاز حاصل ہے۔ اسفنج کی ایک قسم، دیو ہیکل بیرل (Giant Barrel) اسفنج سوا دو ہزار سال تک زندہ رہتا ہے۔ مچھلیوں میں یہ اعزاز شمالی بحراوقیانوس میں ملنے والی ایک مچھلی، آرکٹکا آئسلینڈکا (Arctica Islandica) کو حاصل ہے۔ یہ مچھلی ۴۰۰سال تک زندہ رہ سکتی ہے۔ ممالیہ جانوروں میں معمر ترین جانور ہونے کا اعزاز بوہیڈ (Bowhead) وہیل کے پاس ہے۔ یہ وہیل ۱۰۰سال سے زیادہ عرصہ زندہ رہتی ہے۔

٭٭


کیا آپ جانتے ھیں؟

اگر سمندر کی تہہ کو بھی شمار کیا جائے تو دنیا کا سب سے اونچا پہاڑ مائونٹ ایورسٹ نہیں، مائونٹ کیا (Kea) ہے۔ یہ پہاڑ امریکی جزیرے ہوائی میں واقع ایک آتش فشاں ہے۔ اس کی کل بلندی تقریبًا ۱۰ہزار میٹر ہے لیکن اس میں سے تقریبًا ۶ہزار میٹر بلندی پانی کے اندر ہے۔ مگر یہی بلندی مائونٹ کیا کو سب سے بلند پہاڑ بنا دیتی ہے کیونکہ مائونٹ ایورسٹ کی اونچائی ۸۸۰۰؍میٹر ہے۔

٭٭

برطانیہ کے بعض ساحلوں کا ۵ئ۱؍میٹر علاقہ ہر سال سمندر کھا جاتا ہے۔ آپ کو علم ہوگا کہ برطانیہ کے چاروں طرف سمندر ہے۔ اگر یہ تمام ساحلوں کو ۵ئ۱میٹر کے حساب سے کھانے لگے تو اگلے ۵۰؍ہزار برس میں برطانیہ کا نام و نشان مٹ جائے گا۔ لیکن انگریزوں کی خوش قسمتی ہے کہ ان کے بیشتر ساحل سمندر صرف ۱۰سینٹی میٹر سالانہ کے اعتبار ہی سے ہڑپ کرتا ہے۔ اگرچہ عالمی گرمائو (گلوبل وارمنگ) کے باعث سمندروں کی سطح بڑھنے سے برطانیہ کے ساحلی شہروں کو ڈوبنے کے حقیقی خطرات لاحق ہیں۔ یوں آئرلینڈ کو بھی سخت نقصان پہنچے گا جس کا چار لاکھ پینتیس ہزار ایکڑ رقبہ سمندر برد ہو جائے گا۔

٭٭

اگر ہم اسفنجوں کو بھی زندہ شے شمار کریں تو انھیں ہی کرۂ ارض پر سب سے زیادہ طویل عمر پانے کا اعزاز حاصل ہے۔ اسفنج کی ایک قسم، دیو ہیکل بیرل (Giant Barrel) اسفنج سوا دو ہزار سال تک زندہ رہتا ہے۔ مچھلیوں میں یہ اعزاز شمالی بحراوقیانوس میں ملنے والی ایک مچھلی، آرکٹکا آئسلینڈکا (Arctica Islandica) کو حاصل ہے۔ یہ مچھلی ۴۰۰سال تک زندہ رہ سکتی ہے۔ ممالیہ جانوروں میں معمر ترین جانور ہونے کا اعزاز بوہیڈ (Bowhead) وہیل کے پاس ہے۔ یہ وہیل ۱۰۰سال سے زیادہ عرصہ زندہ رہتی ہے۔

٭٭

سائنس دانوں نے تحقیق کے ذریعے دریافت کیا ہے کہ نابینا ہماری طرح خواب نہیں دیکھتے، یعنی انھیں انسان یا اشیا نظر نہیں آتی۔ تاہم وہ آواز، چھونے، ذائقے اور خوشبو سے متعلق خواب دیکھ سکتے ہیں۔ مزیدبراں جو مردوزن ۷برس کے بعد نابینا ہوں، وہ اپنے خوابوں میں شکلیں یا اشیا دیکھ سکتے ہیں۔

٭٭

ایک بالغ انسان تقریباً ایک ہزار ارب خلیوں کا مجموعہ ہے۔ اسی طرح ہمارے جسم میں دس ارب جراثیم بھی ملتے ہیں لیکن ہر جرثومے کا وزن ایک خلیے کی نسبت ۱۰ہزار گنا کم ہے۔ یہ بھی خدائی نعمت ہے کیونکہ جراثیم بھی خلیے جتنے ہوتے تو ہم موجودہ وزن سے دس گنا زیادہ وزن رکھتے۔

٭٭

http://urdudigest.pk/wp-content/uploads/2011/11/fingerprint-150x150.jpg
کیا آپ کو معلوم ہے کہ ہمارے نشانِ انگشت (فنگر پرنٹ) ایک دفعہ مٹنے کے بعد دوبارہ نمودار ہو جاتے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ نشانِ انگشت کی جڑیں ہماری جلد کے نیچے موجود تین تہوں تک جا پہنچتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ نشانِ انگشت عموماً مجرم تک پہنچنے کا اہم ذریعہ بن جاتے ہیں۔ عمومًا مستریوں یا اینٹوں کا کام کرنے والوں کے نشانِ انگشت مٹتے اور بنتے رہتے ہیں لیکن جیسے ہی وہ کام چھوڑیں، ان کے ہاتھوں میں مستقل نشان ثبت ہو جاتے ہیں۔

لیکن جلد کو کسی باعث گہرائی تک نقصان پہنچے یا وہ جل جائے تو پھر نشانِ انگشت دوبارہ نہیں بنتے۔ ۱۹۳۰ء میں ایک برطانوی ڈاکو جان ڈلنگر نے سعی کی تھی کہ وہ تیزاب سے اپنے نشان مٹا ڈالے لیکن ناکام رہا۔ بچ جانے والے نشانِ انگشت ہی نے آخرکار اُسے گرفتار کرا دیا۔

pervaz khan
01-07-2013, 02:14 PM
اچھی شئیرنگ کا شکریہ

نگار
01-26-2013, 09:47 PM
بہترین معلومات پہنچانے پہ آپ کا بہت بہت شکریہ