PDA

View Full Version : اردو شاعری



صفحات : 1 [2] 3 4

بےلگام
07-31-2012, 05:00 AM
غم سے لیپٹ ہی جائیں گے ایسے بھی ہم نہیں
دنیا سے کٹ ہی جائیں گے ایسے بھی ہم نہیں

دن رات بانٹتے ہیں ہمیں مختلف خیال
یوں ان میں بٹ ہی جائیں گے ایسے بھی ہم نہیں

بےلگام
07-31-2012, 05:00 AM
اتنےسوال دل میں ہیں اور وہ خموش در
اُس در سے ہٹ ہی جائیں گے اہسے بھی ہم نہیں

ہیں سختی سفر سے بہت تنگ پر منیر
گھر کو پلٹ ہی جائیں گے ایسے بھی ہم نہیں

بےلگام
07-31-2012, 05:03 AM
بھول جانا بھی اُسے یاد بھی کرتے رہنا
اچھا لگتا ہے اسی دھن میں بکھرتے رہنا

ہجر والوں سے بڑی دیر سے سیکھا ہے
زندہ رہنے کے لیے جاں سے گزرتے رہنا

بےلگام
07-31-2012, 05:04 AM
کیا کہوں کیوں مری نیندوں میں خلل ڈالتا ہے
چاند کے عکس کا پانی میں اترتے رہنا

میں اگر ٹوٹ بھی جاوں تو پھر آئینہ ہوں
تم مرے بعد بہر طور سنورتے رہنا

بےلگام
07-31-2012, 05:04 AM
گھر میں رہنا ہے تو بکھرتے ہوئے سائے چن کر
زخم دیوار و در و بام کے بھرتے رہنا

شام کو ڈوبتے سورج کی ہے عادت محسن
صبح ہوتے ہی مرے ساتھ ابھرتے رہنا

بےلگام
07-31-2012, 05:05 AM
قربت بھی نہیں، دل سے اتر بھی نہیں جاتا
وہ شخص کوئی فیصلہ کر بھی نہیں جاتا

دل کو تیری چاہت پہ بھروسہ بھی بہت ہے
اور تجھ سے بچھڑ جانے کا ڈر بھی نہیں جاتا

بےلگام
07-31-2012, 05:05 AM
آنکھیں ہیں کہ خالی نہیں رہتی ہیں لہُو سے
اور زخمِ جدائی ہے کہ بھر بھی نہیں جاتا

وہ راحتِ جاں ہے مگر اس در بدری میں
ایسا ہے کہ اب دھیان اُدھر بھی نہیں جاتا

بےلگام
07-31-2012, 05:06 AM
ہم دوھری اذیّت کے گرفتار مسافر
پاؤں بھی ہیں شل، شوقِ سفر بھی نہیں جاتا

پاگل ہوئے جاتے ہو فراز، اس سے ملے کیا؟
اتنی سی خوشی سے کوئی مر بھی نہیں جاتا

بےلگام
07-31-2012, 05:07 AM
ہم دوھری اذیّت کے گرفتار مسافر
پاؤں بھی ہیں شل، شوقِ سفر بھی نہیں جاتا

پاگل ہوئے جاتے ہو فراز، اس سے ملے کیا؟
اتنی سی خوشی سے کوئی مر بھی نہیں جاتا

بےلگام
07-31-2012, 05:08 AM
تیری یاد میں جانے کیا کیا لکھ دیتا ہوں
پیار بھری رات کو بھی شب غم لکھ دیتا ہوں

جب سے تیری صورت دیکھی عجب حالت ہے میری
صبح کو شام اور کبھی شام کو صبح لکھ دیتا ہوں

بےلگام
07-31-2012, 05:09 AM
ہوائیں جب چلتی ہیں برسات چھم چھم برستی ہے
ایسی ہر سہانی شام میں تیرے ہی نام لکھ دیتا ہوں

جب چودھویں کا چاند نکلتا ہے اور گلاب کھلتا ہے
میں گلاب کی ہر کلی کو تیرا گال ہی لکھ دیتا ہوں

بےلگام
07-31-2012, 05:09 AM
میں لاکھ جتن کر کے بھی تجھے کیسے بھلا پاؤں گا
میں بھول کر بھی تجھے یاد رکھنا لکھ دیتا ہوں

اپنے پیار کی میت کو جب کندھا دینے نکلتا ہوں
گھر کا راستہ بھول کر تیرا ہی کوچہ لکھ دیتا ہوں

بےلگام
07-31-2012, 05:09 AM
لوگ پوچھتے ہیں میں کس کے فراق میں پاگل ہوں
آنکھیں بند کرتا ہوں اور تیری صورت لکھ دیتا ہوں

بےلگام
07-31-2012, 05:09 AM
مگر دل کہہ نہ پایا پھر بھی حرف آرزو برسوں

مرے سجدوں کی قسمت میں لکھا تھا سنگ در تیرا
پھرا میں در بہ در قریہ بہ قریہ کو بہ کو برسوں

ہوئی حاصل ہمیں پیر مغاں لذت تری مے سے
یونہی ہوتے رہے خوش دیکھ کر اپنا کدو برسوں

بےلگام
07-31-2012, 05:10 AM
سمونا درد لفظوں میں تبھی ممکن ہوا ہے جب
بہا اشکوں کی صورت آنکھ سے دل کا لہو برسوں

بس اک پل کے لئے آئے تھے دل کا حال پوچھا تھا
مگر محسوس ہوتا ہے رہے ہیں روبرو برسوں

بےلگام
07-31-2012, 05:10 AM
فقیہہ شہر کیوں طعنے ہمیں دیتا ہے کیا جانیں
رہا ہے یوں تو اپنا ہم پیالہ ہم سبو برسوں

بس اک پل ہمکلامی کا ہوا حاصل شرف ان سے
رہا پھر میرا ہر اک شعر عارف مشکبو برسوں

بےلگام
07-31-2012, 05:11 AM
سمونا درد لفظوں میں تبھی ممکن ہوا ہے جب
بہا اشکوں کی صورت آنکھ سے دل کا لہو برسوں

بےلگام
07-31-2012, 05:12 AM
محبت دشت فرقت میں
بنا رخت سفر چلتے کسی مجزوب کے دل سے نکلتا ایک نوحہ ہے
محبت راستوں کے جال میں بھٹکا ہوا راہی
کسی کے بام پر ٹھہرا ہوا اک اجنبی چہرہ
محبت خواب بن جائے تو تعبیریں نہیں ملتیں
محبت ایک بارش ہے

بےلگام
07-31-2012, 05:12 AM
جو اک اک بوند کر کے تن سے من میں جب اترتی ہے
سریلے ساز بجتے ہیں
انوکھے باب کھلتے ہیں
محبت کرنے والے تو فصیل جاں کو دائو پر لگا کر بات کرتے ہیں
وہ کانٹوں کی زمینوں پر بھی ننگے پائوں چلتے ہیں

بےلگام
07-31-2012, 05:13 AM
محبت ایک سرگوشی
کسی فنکار کے ہاتھوں سے چھڑتا بے خودی کا راگ
محبت بارشوں کے موسموں میں یاد کی کایا
محبت جلتے تپتے راستوں پر پھیلتا سایہ
محبت اک قضا بن کر بھی آتی ہے

بےلگام
07-31-2012, 05:13 AM
کئی لوگوں کے جیون میں
محبت مرگ گل بھی ہے
محبت یاس کی صورت
اک ایسی پیاس کی صورت
کبھی جو بجھ نہیں پاتی
محبت اک اداسی ہے

بےلگام
07-31-2012, 05:13 AM
بلا کی خامشی بھی ہے
محبت موسموں کو حسن کا پیغام دیتی ہے
قبولیت کے دروازوں پہ مہکی اک دعا بھی ہے
محبت اک سزا بھی ہے
محبت پت جھڑوں کا نام
محبت اک سلگتی شام

بےلگام
07-31-2012, 05:14 AM
تجھ پر بھی نا ھو گمان میرا
اتنا بھی نا کہا مان میرا

میں دکھتے ھوئے دلوں کا مسیحا
اور جسم لہولہان میرا

بےلگام
07-31-2012, 05:14 AM
کچھ روشنی شہر کو تو ملی
جلت ھے جلے مکان میرا

تو آیا تو کب پلٹ کے آیا
جب ٹوٹ چکا تھا مان میرا

جو کچھ بھی ھوا، یہی بہت ھے
تجھ کو بھی رھا ھے دھیان میرا

بےلگام
07-31-2012, 05:15 AM
برسوں کے بعد ديکھا اک شخص دلرُبا سا
اب ذہن ميں نہيں ہے پر نام تھا بھلا سا

ابرو کھنچے کھنچے سے آنکھيں جھکی جھکی سی
باتيں رکی رکی سی لہجہ تھکا تھکا سا

بےلگام
07-31-2012, 05:15 AM
الفاظ تھے کہ جگنو آواز کے سفر ميں تھے
بن جائے جنگلوں ميں جس طرح راستہ سا

خوابوں ميں خواب اُسکے يادوں ميں ياد اُسکی
نيندوں ميں گھل گيا ہو جيسے رَتجگا سا

بےلگام
07-31-2012, 05:16 AM
پہلے بھی لوگ آئے کتنے ہی زندگی ميں
وہ ہر طرح سے ليکن اوروں سے تھا جدا سا

اگلی محبتوں نے وہ نا مرادياں ديں
تازہ رفاقتوں سے دل تھا ڈرا ڈرا سا

بےلگام
07-31-2012, 05:16 AM
کچھ يہ کہ مدتوں سے ہم بھی نہيں تھے روئے
کچھ زہر ميں بُجھا تھا احباب کا دلاسا

پھر يوں ہوا کے ساون آنکھوں ميں آ بسے تھے
پھر يوں ہوا کہ جيسے دل بھی تھا آبلہ سا

بےلگام
07-31-2012, 05:16 AM
اب سچ کہيں تو يارو ہم کو خبر نہيں تھی
بن جائے گا قيامت اک واقعہ ذرا سا

تيور تھے بے رُخی کے انداز دوستی کے
وہ اجنبی تھا ليکن لگتا تھا آشنا سا

بےلگام
07-31-2012, 05:17 AM
ہم دشت تھے کہ دريا ہم زہر تھے کہ امرت
ناحق تھا زعم ہم کو جب وہ نہيں تھا پياسا

ہم نے بھی اُس کو ديکھا کل شام اتفاقاً
اپنا بھی حال ہے اب لوگو فراز کا سا

بےلگام
07-31-2012, 05:21 AM
اپنی آنکھوں میں ترا عکس دکھانا چاہوں
میں تجھے تیرے خیالات بتانا چاہوں
۔۔۔۔۔
رنگ بکھریں تو خیالات بکھر جاتے ہیں
انگلیاں ٹوٹیں تو تصویر بنانا چاہوں

بےلگام
07-31-2012, 05:21 AM
دُھند میں لپٹے ہوئے پیڑ کا سایہ بن کر
تجھ سے تیری ہی ملاقات کرانا چاہوں
۔۔۔۔۔
ناگنیں زہر لیئے بیٹھی ہیں شریانوں میں
اور میں اپنا لہو آپ بہانا چاہوں

بےلگام
07-31-2012, 05:22 AM
چاہتیں اور بھی ہوں گی مجھے انکار نہیں
ساتھ جب ہے تو ترا ساتھ نبھانا چاہوں
۔۔۔۔۔
چاند کی کرنوں کے بھالوں سے چٹانیں کھودوں
دھوپ کی لاش زمینوں میں اُگانا چاہوں
۔۔۔۔۔

بےلگام
07-31-2012, 05:22 AM
کیسی خواہش نے مرے جسم میں کروٹ لی ہے
آئینہ مٹی کے دانتوں سے چبانا چاہوں
۔۔۔۔۔
ان نئے شہروں سے نفرت سی ہوئی ہے صفدر
میں وہی شخص وہی شہر پُرانا چاہوں

بےلگام
07-31-2012, 06:30 AM
میں اکثر مسکراتا ہوں

کسی کے یوں بچھڑنے سے
کسی کے یاد آنے سے
بہت سے لوگ روتے ہیں
کہ رونا ایک روایت ہے
روایت توڑ جاتا ہوں
تمھاری یاد آنے پر
میں اکثر مسکراتا ہوں

بےلگام
07-31-2012, 06:30 AM
سُنا ہے جنگلوں کا بھی کوئی دستور ہوتا ہے
سُنا ہے جب شیر کا بھر جاۓ
تو وہ حملہ نہیں کرتا

بےلگام
07-31-2012, 06:31 AM
ہوا کے تیز جھونکے جب درختوں کوہلاتے ہیں
تو مینا اپنے گھر کو بھول کر
کّوۓ کے انڈوں کو پروں میں تھام لیتی ہے

بےلگام
07-31-2012, 06:31 AM
سُنا ہے گھونسلے سے جب کوئی بچہ گرے تو
سارا جنگل جاگ جاتا ہے

بےلگام
07-31-2012, 06:31 AM
ندی میں باڑ آجاۓ
کوئی پُل ٹوٹ جاۓ
تو کسی لکڑی کے تختے پر
گلہری ،سانپ ،چیتا اور بکری
ساتھ ہوتے ہیں

بےلگام
07-31-2012, 06:32 AM
سُنا ہے جنگلوں کا بھی دستور ہوتا ہے
خداونداجلیل و معتبر، دانا و بینا مصنف و اکبر
ہمارے شہروں میں بھی اب
جنگلوں کا ہی کوئی ایسا دستور نافذ کر

بےلگام
07-31-2012, 06:32 AM
کسی چہرے کا عکس مجھ میں سمایا جیسے

میرے چہرے نے حسیں عکس چرایا جیسے


جو اپنے آپ سے پہلے کبھی نہ مل پایا تھا

کسی سے مل کے اپنے آپ کو پایا جیسے

بےلگام
07-31-2012, 06:33 AM
جو عمر بھر اکیلا در در بھٹکتا رہا تھا

اسے منزل کے راستوں سے ملایا جیسے


جو کانٹے چنتے چنتے خار ہو چلا تھا

اسے جیون کی بہاروں سے ملایا جیسے

بےلگام
07-31-2012, 06:33 AM
خزاں سے زرد چہرے کو بہار بخشی ہے

اسے حسیں سے حسیں تر بنا دیا جیسے


جو ایک مدت سے رہ کہن پہ گامزن تھا

اسے جینے کا نیا ڈھنگ سیکھایا جیسے

بےلگام
07-31-2012, 06:33 AM
نئی دنیا نئی منزل نئی مسافت نے

نئے رستوں کا ہمسفر بنا دیا جیسے


وہ میری روح میں عثماں سما گیا ایسے

میرا وجود میں نے خود میں پا لیا جیسے

بےلگام
07-31-2012, 06:34 AM
ٹھوکر جہاں لگي وہ سنبھلنے کا تھا مقام
ہم اس کو اتفاق ہي گردانتے رہے
تو ميري التجا پہ خفا اس قدر نہ ہو
تيري جبيں سے اٹھ نہ سکے گا شکن کو بوجھ
کيوں شفق کو شفق نہ سمجھا جائے

بےلگام
07-31-2012, 06:34 AM
کيوں تمنائوں کا لہو کہئيے
اک پردہ حائل نے بچھا رکھا ہے اس کو
عرياں ہوا گر حسن تو آئينہ پگھل جائے گا
کہتے ہيں وہ گوہر ناياب عنقا ہوگيا
سنتےہيں اشک ندامات بھي تھا انسانوں کے پاس
تمہاري ياد کا يہ سلسہ معاذ اللہ

بےلگام
07-31-2012, 06:35 AM
ذرا سا فاصلہ اشکوں کے درمياں نہ ملا
کچھ تو انساں نے پسارا ہے بہت پائے طلب
اور کچھ سائے سمٹتے گئے ديواروں کے
تيرے اصلي روپ سے سب گھبرائيں گے
اس نگري ميں راحت بھيس بدل کر چل
ميراث ہي اس کي ہو يہ خانہ دل جيسے
خواہش نے مرے دل ميں يوں پائو پسارے ہيں

بےلگام
07-31-2012, 06:36 AM
تم بہاروں کی طرح پھول کھلاتے آئے

تم چناروں کی طرح آگ لگاتے آئے

تم سمندر کی طرح ہم کو ڈبو ہی دیتے

ہم کناروں کی طرح خود کو بچاتے آئے

بےلگام
07-31-2012, 06:36 AM
کبھی ملتاتھامجھ سےپل پل کےفرق سے
پھر رفتہ رفتہ فرق سا لو ں میں آ گیا
پھر یوں ھوا آنکھ سے آنسو نکل پڑے
چہرا جو کبھی تمہارا خیالوں میں آ گ

بےلگام
07-31-2012, 06:37 AM
بيلوں ميں چہلک رھي ھيں بونديں ساقي
خوشوں سے ٹپک رھي ھيں بونديں ساقي
دے جام کہ برگ ھائے سبز و تر پر
رھ رھ کے کہنک رھي ھيں بونديں ساقي

بےلگام
07-31-2012, 06:38 AM
اے پہول صبا ملکائے تجہے
اے چاند کبھي گہٹا نہ سنو لائے تجہے
اس نيند بہرے لوچ سے للھ نہ چل
ڈرتا ھوں کہيں نظر نہ لہ جائے تجہے

بےلگام
07-31-2012, 06:38 AM
غنچے تري زندگي پہ دل ھلتا ھے
بس ايک تبسم کے لئے کہلتا ھے
غنچے ني کہا کہ اس چمن ميں بابا
يہ ايک تبسم بھي کسے ملتا ھے

بےلگام
07-31-2012, 06:39 AM
سو جاتے ہیں فُٹ پاتھ پر اخبار بچھا کر
مزدور کبھی نیند کی گولی نہیں کھاتے

بےلگام
07-31-2012, 06:40 AM
کبھي مجھ کو ساتھ لے کر کبھي ميرے ساتھ چل کر
وہ بدل گيا اچانک ميري زندگي بدل کر

ہوئے جس پے مہربان تم کوئي خوش نصيب ہو گا
ميري حسرتيں تو نکليں ميرے آنسوؤں ميں ڈھل کر

بےلگام
07-31-2012, 06:40 AM
کوئي پھول بن گيا ہے کوئي چاند کوئي تارا
جو چراغ بجھ گئے ہيں تيري انجمن ميں جل کر

ميرے دوستو خدارا ! ميرے ساتھ تم بھي ڈھونڈو
وہ يہيں کہيں چھپے ہيں ميرے غم کا رخ بدل کر

بےلگام
07-31-2012, 06:41 AM
تيري بے جھجک ہنسي سے نا کسي کا دل ہو ميلا
يہ نگر ہے آئينوں کا يہاں سانس لے سنبھل کر

کبھي مجھ کو ساتھ لے کر کبھي ميرے ساتھ چل کر
وہ بدل گيا اچانک ميري زندگي بدل کر

بےلگام
07-31-2012, 06:42 AM
کوئي دکھ نا ہو کوئي غم نا ہو
کوئي آنکھ کبھي نم نا ہو

کوئي دل کسي کا توڑے نا
کوئي ساتھ کسي کا چھوڑے نا

بس پيار کي ندياں بہتي ہو
کاش کے دنيا ايسي ہو

بےلگام
07-31-2012, 06:42 AM
سنتے ہیں کہ مل جاتی ہے ہر چیز دعا سے
اک روز تجھے مانگ کے دیکھے گئے خدا سے

بےلگام
07-31-2012, 06:43 AM
دنیا بھی ملی ہے غم دنیا بھی ملا ہے
وہ کیوں نہیں ملتا جیسے مانگا تھا خدا سے

بےلگام
07-31-2012, 06:43 AM
جب کچھ نہ ملا ہاتھ دعاؤں کو اٹھا کر
پھر ہاتھ اٹھانے ہی پڑے ہم کو دعا سے

بےلگام
07-31-2012, 08:46 AM
دل لگی سی دل لگانے سے رہی
ایک رونق اس بہانے سے رہی

اس قدر صدمے پڑے ہیں جان پر
زندگی ا ب مسکرانے سے رہی

بےلگام
07-31-2012, 08:46 AM
ایک تو پہلو بدلتے بج گیا
آج شب پھر نیند آنے سے رہی

ایک چارہ بن گئی بے چارگی
ایک ہمت آزمانے سے رہی

بےلگام
07-31-2012, 08:47 AM
میں نے کی ہے آسماں سے دوستی
اس کی نسبت آب و دانے سے رہی

بےلگام
07-31-2012, 08:47 AM
یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں
بھولنے والے، کبھی تجھ کو بھی یاد آتا ہوں میں
اک دھندلا سا تصور ہے کہ دل بھی تھا یہاں
اب تو سینے میں فقط اک ٹیس سی پاتا ہوں میں

بےلگام
07-31-2012, 08:48 AM
آرزؤں کا شباب اور مرگ حسرت ہائے ہائے
جب بہار آئی گلستاں میں تو مرجھاتا ہوں میں
حشر میری شعر گوئی ہے فقط فریاد شوق
اپنا غم دل کی زباں میں، دل کو سمجھاتا ہوں میں

بےلگام
07-31-2012, 08:48 AM
درد کی دل پہ حکومت تھی، کہاں تھا اُس وقت
جب مجھے تیری ضرورت تھی، کہاں تھا اُس وقت
موت کے سُکھ میں چلا آیا مجھے دیکھنے کو
زندہ رہنے کی مصیبت تھی کہاں تھا اُس وقت
دل کے دریاﺅں میں اب ریت ہے صحراﺅں کی
جب مجھے تجھ سے محبت تھی، کہاں تھے اُس وقت

بےلگام
07-31-2012, 08:49 AM
آنکھوں سے میری اس لیے لالی نہیں جاتی
یادوں سے کوئی رات جو خالی نہیں جاتی

اب عمر نہ موسم نہ وہ رستے کہ وہ پلٹے
اس دل کی مگر خام خیالی نہیں جاتی

بےلگام
07-31-2012, 08:50 AM
مانگے تو اگر جان بھی ہنس کے تجھے دے دیں
تیری تو کوئی بات بھی ٹالی نہیں جاتی

آئے کوئی آ کر یہ تیرے درد سنبھالے
ہم سے تو یہ جاگیر سنبھالی نہیں جاتی

بےلگام
07-31-2012, 08:50 AM
معلوم ہمیں بھی ہیں بہت سے تیرے قصے
پر بات تیری ہم سے اچھالی نہیں جاتی

ہمراہ تیرے پھول کھلاتی تھی جو دل میں
اب شام وہی درد سے خالی نہیں جاتی

بےلگام
07-31-2012, 08:51 AM
ہم جان سے جائیں گے تبھی بات بنے گی
تم سے تو کوئی راہ نکالی نہیں جاتی

بےلگام
07-31-2012, 08:53 AM
آج ہمیں یہ بات سمجھ میں آئی ہے
تم موسم ہو ،اور موسم ہرجائی ہے

تو نے کیسے موڑ پہ چھوڑ دیا مجھ کو
دل کی بات چھپاؤں تو رسوائی ہے

بےلگام
07-31-2012, 08:53 AM
تیرے بعد بچا ہی کیا ہے جیون میں
میں ہوں ،بھیگی شام ہے ،اور تنہائی ہے

آج مری آنکھوں میں ساون اترے گا
آج بہت دن بعد تری یاد آئی ہے

بےلگام
07-31-2012, 08:54 AM
آج کی رات بہت بھاری ہے دونوں پر
آج مجھے وہ خط لوٹانے آئی ہے

جانے میں کیا سوچ کے چپ ہوں گم سم ہوں
جانے وہ کیا سوچ کے واپس آئی ہے

بےلگام
07-31-2012, 08:54 AM
یہ مہمان نوازی ہے یا اور ہے کچھ
میرے لیے وہ چاۓ بنا کر لائی ہے

بےلگام
07-31-2012, 08:55 AM
يارو کسي قاتل سے کبھي پيار نا مانگو
اپنے ہي گلے کے ليے تلوار نا مانگو

گر جاؤگے تم اپنائے مسيحا کي نظر سے
مر کر بھي علاج دل بيمار نا مانگو

بےلگام
07-31-2012, 08:56 AM
کھل جائيگا اس طرح نگاہوں کا بھرم بي
کانٹوں سے کبھي پھول کي مہکار نا مانگو


سچ بات پہ ملتا ہے صدا زہر کا پيالہ
جينا ہے تو پھر جينے کا اظہار نا مانگو

بےلگام
07-31-2012, 08:56 AM
اس چيز کا کيا ذکر جو ممکن ہي نہيں ہے
صحرا ميں کبھي سايہ ديوار نا مانگو

بےلگام
07-31-2012, 09:00 AM
گردنے خیمہ تان لیا تھا

دُھوپ کا شیشہ دُھندلا سا تھا

نکہت و نُور کو رخصت کرنے

بادل دُور تلک آیا تھا

بےلگام
07-31-2012, 09:00 AM
گئے دِنوں کی خوشبو پاکر

میں دوبارہ جی اُٹھا تھا

سوتی جاگتی گُڑیا بنکر

تیرا عکس مجھے تکتا تھا

بےلگام
07-31-2012, 09:00 AM
وقت کا ٹھا ٹھیں مارتا ساگر

ایک ہی پل میں سمٹ گیا تھا

جنگل، دریا، کھیت کے ٹکڑے

یاد نہیں اب آگے کیا تھا

بےلگام
07-31-2012, 09:01 AM
نیل گگن سے ایک پرندہ

پیلی دھرتی پر اُترا تھا

بےلگام
08-01-2012, 04:53 AM
کیا تم کو وہ زمانے یاد نہیں آتے
جب میری ریشمی یادوں کے سہارے
سبیل وقت کے کنارے
تم رات کو دن اور صبح کو شام کرتے تھے

بےلگام
08-01-2012, 04:53 AM
جب آدھی رات کو آئینے کے حضور
رتجگے سے مخمور
مجھ سے جو بات کرنا ہوتی تھی
وہ خود سے ہی چھیڑ لیتے تھے

بےلگام
08-01-2012, 04:53 AM
اور مجھے خیالوں میں گھیر لیتے تھے
جب سردیوں کی خنک راتوں کو
بھلا کے سب ماتوں کو
کمبل کی جگہ میری باتوں کو
اوڑھ لیتے تھے

بےلگام
08-01-2012, 04:54 AM
ان سے اٹھکیلیاں کرتے تھے
کئی طرح سے خود پر کھلتے تھے
کیا تم کو وہ زمانے یاد نہیں آتے
جب ٹوٹی ہوئی جالی سے ہاتھ باہر نکال کر
تم مجھے خدا حافظ کہتے تھے

بےلگام
08-01-2012, 04:54 AM
اور میں تمہارے ہاتھ میں
ادھ پھیلی رات میں
تمہارا چہرہ ڈھونڈتا تھا
اور خوشی سے جھومتا تھا

بےلگام
08-01-2012, 04:55 AM
جب آسمان محبت پر تتلی کی طرح
اڑنے کی آرزو میں
گفتگو ہی گفتگو میں
آنچل کو شانوں پر بکھیرے
شوخی سے اترائے

بےلگام
08-01-2012, 04:55 AM
تم جھوم جاتے تھے
مجھے خیالوں میں چوم جاتے تھے
کیا تم کو اب وہ زمانے یاد نہیں آتے
جب دھڑکنوں کو سینے سے باہر محسوس کرتے تھے

بےلگام
08-01-2012, 04:55 AM
ڈرتے تھے کہ کہیں کوئی تمہارا دل دیکھ نہ لے
اور پوچھ نہ لے
سارا قصہ بہاروں کانظاروں کا ستاروں کا

بےلگام
08-01-2012, 04:57 AM
شام سے آنکھ میں نمی سی ہے
آج پھر آپ کی کمی سی ہے

دفن کر دو ہمیں کہ سانس ملے
نبض کچھ دیر سے تھمی سی ہے

بےلگام
08-01-2012, 04:57 AM
کون پتھرا گیا ہے آنکھوں میں
برف پلکوں پہ کیوں جمی سی ہے

وقت رہتا نہیں کہیں ٹِک کر
اس کی عادت بھی آدمی سی ہے

بےلگام
08-01-2012, 04:58 AM
کوئی رشتہ نہیں رہا پھر بھی
ایک تصویر لازمی سی ہے

آئیے، راستے الگ کر لیں
یہ ضرورت بھی باہمی سی ہے

بےلگام
08-01-2012, 04:59 AM
آج ہلکی ہلکی بارش تھی

آج سرد ہوا کا رقص بھی تھا

آج پھول بھی نکھرے نکھرے تھے
آج ان میں تیرا عکس بھی تھا

بےلگام
08-01-2012, 04:59 AM
آج بادل بھی کالے گہرے تھے
آج چاند پے لاکھوں پہرے تھے

تزکرے تیری یادوں کے
بڑی دیر سے دل میں ٹھرے تھے

بےلگام
08-01-2012, 04:59 AM
جو کہنا تھا وہ کہہ نہ سکے
جو سننا تھا وہ سن نہ سکے

ہم گونگے ہیں ہم بہرے ہیں
کچھ زخم بہت ہی گھرے ہیں

بےلگام
08-01-2012, 05:00 AM
یوں لگتا ہے آج میرے دل میں
تم ہی تم سمائے ہو

٭آج یاد بہت تم آئے ہو٭

بےلگام
08-01-2012, 05:01 AM
وہ سمندر وہ دریا وہ کشتی--- اک نشان جیسی ہے
میرے شہر میں اک کھڑکی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اسی مکان جیسی ہے

بےلگام
08-01-2012, 05:02 AM
وہ ہے جو زندہ ہے تجھے دعا کرنے کو
نہ جانے کون ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مہربان جیسی ہے

بےلگام
08-01-2012, 05:02 AM
بدل جاتے ہیں در و دیوار سب ہی
کیا کمال زندگی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اک طوفان جیسی ہے

بےلگام
08-01-2012, 05:03 AM
کیسے کہہ دوں ! تو اداس رہتا ہے شام کے بعد
میری زندگی بھی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تیری شام جیسی ہے

بےلگام
08-01-2012, 05:10 AM
مری مشکل اگر آساں بنا دیتے تو اچھا تھا

لبوں سے لب دمِ آخر ملا دیتے تو اچھا تھا

میں جی سکتا تھا بس تیری ذرا سی اک عنایت سے

مرے ہاتھوں میں ہاتھ اپنا تھما دیتے تو اچھا تھا

بےلگام
08-01-2012, 05:10 AM
مری بے تاب دھڑکن کو بھی آ جاتا قرار آخر

مرے خوابوں کی دنیا کو سجا دیتے تو اچھا تھا

تمہاری بے رخی پر دل مرا بے چین رہتا تھا

کبھی عادت یہ تم اپنی بھُلا دیتے تو اچھا تھا

بےلگام
08-01-2012, 05:10 AM
کبھی اس جلد بازی کا ثمر اچھا نہیں ہوتا

کوئی دن اور چاہت میں بِتا دیتے تو اچھا تھا

صفی آنسو بھی دشمن بن گئے ہیں دیکھ لے آخر

نہ ان کو ضبط کرتے تم بہا دیتے تو اچھا تھا

بےلگام
08-01-2012, 05:12 AM
بہار رت میں اجاڑ رستے تکا کروگے تو رو پڑو گے
کسی کو ملنے جب بھی تم سجا کروگے تو رو پڑو گے
تمھارے وعدوں نے یار مجھ کو تباہ کیا ہے کچھ اس طرح سے
کہ زندگی میں جو پھر کسی سے دغا کروگے تو رو پڑو گے

بےلگام
08-01-2012, 05:13 AM
شام کو پرندوں کی طرح لوٹ آتے ہم
منتظر اگر کوئی ہمارا ہوتا
چاند تاروں کی طلب کسے تھی
بس روشنی کے لئیے اک ستارہ ہوتا

بےلگام
08-01-2012, 05:13 AM
ہم میں شائد کوئی کمی تھی ورنہ
ضرور کوئی طرفدار ہمارا ہوتا
دنیا کے لوگوں کی تمنا کسے تھی
ہم نے چاہا بس اک شخص ہمارا ہوتا

بےلگام
08-01-2012, 05:35 AM
میں دل پہ جبر کروں گا، تجھے بھلا دوں گا
مروں گا خود بھی تجھے بھی کڑی سزا دوں گا

یہ تیرگی مرے گھر کا ہی کیوں مقدر ہو
میں تیرے شہر کے سارے دئیے بجھا دوں گا

بےلگام
08-01-2012, 05:36 AM
ہوا کا ہاتھ بٹا دوں گا ہر تباہی میں
ہرے شجر سے پرندے میں خود اڑا دوں گا

وفا کروں گا کسی سوگوار چہرے سے
پرانی قبر پہ کتبہ نیا سجا دوں گا

بےلگام
08-01-2012, 05:37 AM
اسی خیال میں کسی گزری ہے شام ِ درد اکثر
کہ درد حد سے بڑھے گا تو مسکرا دوں گا

تو آسمان کی صورت ہے گر پڑے گا کبھی
زمیں ہوں میں بھی مگر تجھ کو آسرا دوں گا

بےلگام
08-01-2012, 05:37 AM
بڑھا رہی ہیں میرے دکھ، نشانیاں تیری
میں تیرے خط، تری تصویر تک جلا دوں گا

بہت دنوں سے مرا دل اداس ہے محسن
اس آیئنے کو کوئی عکس اب نیا دوں گا

بےلگام
08-01-2012, 05:50 AM
انا پرست سہی، اس کــی باتوں میں اقرار بھی تھا
اس کـے چبھتے ھوئے لہـجے میں چھپا پیار بھی تھا

وہ مجھـے لـکھتا ھـــے کہ منتـظر نہ رھــو لیـکن
اس کی تـحــریر میں صدیــوں کا انتــظــــار بھی تھا

بےلگام
08-01-2012, 05:51 AM
وہ کــہتا ھـــے مــت روٹھو کہ مــنانا نــــہیں آتا
مـیری ناراضــگی پہ لـــــیکـن وہ بیــقــرار بھی تھا

میں شــاید پھـر لــکھـــتا اســے اپنـــی خبــــــر
دوستی کا بھرم رکھتا تھا کچھ دل بے اختیار بھی تھا

بےلگام
08-01-2012, 05:52 AM
شـــاید یہی اس کا انـدازِ مــــحــبـت ھــــو
وہ میـرا ھـم دم بھی تھا ســـتم شــــعــــار بھی تھا

بےلگام
08-01-2012, 05:52 AM
بجلی کے نام

پنکھے کی رُکی نبض چلانے کے لئے آ
کمرے کا بُجھا بلب جلانے کے لئے آ

تمہیدِ جدائی ہے اگرچہ تیرا ملنا
آ پھر سے مجھے چھوڑ کے جانے کے لئے آ

بےلگام
08-01-2012, 05:54 AM
تو بتا اے دلِ بیتاب کہاں آتے ہیں
ہم کو خوش رہنے کے آداب کہاں آتے ہیں


میں تو یکمشت اسے سونپ دوں سب کچھ لیکن
ایک مٹھی میں میرے خواب کہاں آتے ہیں

بےلگام
08-01-2012, 05:55 AM
مدتوں بعد تجھے دیکھ کے دل بھرآیا
ورنہ صحرائوں میں سیلاب کہاں آتے ہیں

میری بیدار نگاہوں میں اگر بھولے سے
نیند آئے بھی تو اب خواب کہاں آتے ہیں

بےلگام
08-01-2012, 05:55 AM
شدتِ درد ہے یا کثرتِ مے نوشی ہے
ہوش میں اب ترے بے تاب کہاں آتے ہیں

ہم کسی طرح ترے در پہ ٹھکانہ کر لیں
ہم فقیروں کو یہ آداب کہاں آتے ہیں

بےلگام
08-01-2012, 05:55 AM
سر بسر جن میں فقط تیری جھلک ملتی تھی
اب میسر ہمیں وہ خواب کہاں آتے ہیں

بےلگام
08-01-2012, 05:59 AM
کچھ وصال آخر تک متعبر نہیں ہوتے
ساتھ چلنے والے بھی ہمسفرنہیں ہوتے

تو ہماری قربت سے کتنا ہی گریزاں ہو
ہم تیرے ٹھکانے سے بےخبر نہیں ہوتے

بےلگام
08-01-2012, 06:00 AM
کچھ کہے بنا اکثر بولتی ہیں آنکھیں بھی
گفتگو کے سب لمحہ حرف گر نہیں ہوتے

کتنا خوف ہوتا ہے شام کے اندھیرے میں
پوچھوں ان پرندوں سے جن کے گھر نہیں ہوتے

بےلگام
08-01-2012, 06:00 AM
عمر بھر نہیں ملتا واپسی کا دروازہ
آگہی کے زندان میں بام و در نہیں ہوتے

بےلگام
08-02-2012, 05:07 AM
رشتۂ جاں ٹوٹنے پر
دلِ آئینہ کو ذرا غور سے دیکھنا تو
میری ذات کے رنگ اب تک
تیرے گرد پھیلے ہوئے ہیں
تیرے ہاتھ کی پشت پر
میری سانسیں رکھی ہیں

بےلگام
08-02-2012, 05:07 AM
میرے لمس کی سب تمازت
ابھی تک تیری آنکھ میں ہے
میری حسرتیں، خواہشیں
تیری پوروں پہ بکھری ہیں
میری شبنمی خوشبوئیں
گھر کے آنگن میں ہی
راستہ بھول کر گر گئیں
میرے آنسو بھی بستر کی
کچھ سلوٹوں پر پڑے ہیں

بےلگام
08-02-2012, 05:08 AM
میرا لہجہ جو
تیرے ہونٹوں کے نم سے کہیں کھو گیا تھا
وہ بھی تو وہیں پر رکھا ہے
جہاں دھند کے بھاری پردے گرے ہیں
وہیں کھڑکیوں میں اکیلی
میری شام بھی بیٹھی ہے
تیری مٹھی میں میری سحر
اب تلک سو رہی ہے
ابھی تک تیرے آئینوں میں
میرا عکس زندہ ہے

بےلگام
08-02-2012, 05:08 AM
نہ رنگ آنکھوں کا لال رکھنا
نہ ویراں ویراں سا اپنا حال رکھنا
جو چاہتوں سے لکھے تھے تم کو
وہ خط سارے سنبھال رکھنا

بےلگام
08-02-2012, 05:09 AM
مچل مچل کر ادا دیکھانا
ادا کے اندر کمال رکھنا
تجھے ملے دلوں کی حکومت
تو شاہوں جیسا جلال رکھنا
میری دعائیں تیرے ساتھ ہیں
تو اپنا بھی ذرہ خیال رکھن

بےلگام
08-02-2012, 05:14 AM
یا رب دل مسلم کو وہ زندہ تمنا دے
جو قلب کو گرما دے جو روح کو تڑپا دے
پھر وادی فاران کے ہر ذرہ کو چمکا دے
پھر شوق تماشا دے پھر ذوق تقاضا دے
محروم تماشا کو پھر دیداہ بےنا ہے
دیکھا ہے جو کچھ میں نے اوروں کو بھی دکھلا دے
بھٹکے ہوئے آہو کو پھر سوئے حرم لے چل
اس شہر کے خوگر کو وسعت صحرا دے
پیدا دل ویران میں پھر شورش محشر کر
اس محمل خالی کو پھر شاہد لےلا دے
اس دور کی ظلمت میں ہر قلب پریشان کو
وہ داغ محبت دے جو چاند کو شرما دے
رفعت میں مقاصد کو ہم دوش ثریا کر
خودداری ساحل دے آزادی دریا دے
بے لوث محبت ہو بے باک صداقت ہو
سینے میں اُجالا کر دل صورت مےنا دے
احساس عنایت کر آثار مصیبت کا
امروز کی شورش میں اندیشہ فردا دے
میں بلبل نالاں ہوں اک اُجڑے گلستان کا
تاثیر کا سائل ہوں محتاج کو داتا دے

بےلگام
08-02-2012, 05:15 AM
آنکھوں سے کہو خاموش رہیں
اک دُوجے سے ہم بچھڑ چلے
گو آج سے بالکل اُجڑ چلے
اب جیون ہو گا زنداں سا
اب یادیں روز ستائیں گی
اب سانسیں رُک رُک آئیں گی
اب رات کو دیر سے سوئیں گی
اب نیند سے اُٹھ اُٹھ روئیں گے
پر ضبط ہے اب لازم چندا
اس لمحے اشک بہاؤ مت
تم دل کو اور جلاؤ مت
یہ زخم وفا چُپ چاپ سہیں
آنکھوں سے کہو خاموش رہیں

بےلگام
08-02-2012, 05:15 AM
نظر مصروف نظارہ تھی تو ہم خوش تھے فراز


تم نے کیا ظلم کیا میرے دل میں ٹھکانہ کر کے

بےلگام
08-02-2012, 05:16 AM
آچھے لوگوں کو تو سب ہی پسند کرتے ہیں

ساقی

ہے کوئی طلب گار کہ بہت بُرا ہوں میں

بےلگام
08-02-2012, 05:16 AM
بہت اداس ھے کوئی تیرے چپ ھو جانے سے
ھو سکے تو بات کر کسی بہانے سے
تو لاکھ خفا سہی مگر اتنا تو دیکھ
کوئی ٹوٹ گیا ھے تیرے روٹھ جانے سے

بےلگام
08-02-2012, 05:18 AM
تجھے دل میں رکھ لیتا اگر ھوتا میرے بس میں
تجھے سب دیکھتے ہیں مجھ سے یہ دیکھا نہیں جاتا

بےلگام
08-02-2012, 05:18 AM
ٹوٹ سا گیا ھے میری چاہتوں کا وجود
اب کوئی اچھا بھی لگے تو اظہار نہیں کرتے

بےلگام
08-02-2012, 05:19 AM
محبت کی حسیں راہوں میں اکثر میں نے دیکھا ھے
جو ساتھی ساتھ چلتے تھے بچھڑتے میں نے دیکھا ھے۔

بےلگام
08-02-2012, 05:19 AM
سجاتے تھے بڑے ہی شوق سے جو خیالوں کی حسیں دنیا
بہت چھوٹی سی باتوں پہ اجڑتے میں نے دیکھا ھے۔

بےلگام
08-02-2012, 05:19 AM
جو کہتے تھے کہ بن تیرے اک پل نہ ھم رہ پائیں گے
سامنا اب جو ہوا تو چپ چاپ ان کو گزرتے میں نے دیکھا ھے

بےلگام
08-02-2012, 05:20 AM
جو کہتے تھے کہ تیرا رشتہ زمانے بھر سے افضل ھے
انھی رشتوں کو پل بھر میں بکھرتے میں نے دیکھا ھے۔

بےلگام
08-02-2012, 05:22 AM
نہ شوق ہے، نہ تمنا، نہ یاد ہے دل میں
کہ مستقل کسی غم کی نہاد ہے دل میں

ہے الف لیلہ ولیلہ سی زندگی در پیش
سو جاگتی ہوئ اک شہر زاد ہے دل میں

بےلگام
08-02-2012, 05:23 AM
جو ضبط چشم کے باعث نہ اشک بن پایا
اس ایک قطرہء خون کا فساد ھے دل میں

پھر ایک شہر سبا سے بلاو ا آیا ہے
پھر ایک شوق سلیماں نژاد ھے دل میں

بےلگام
08-02-2012, 05:23 AM
ہے ایک سحر دلآویز کا اسیر بدن
تو جال بنتی، کوئ اور یاد ہے دل میں

تمام خواہشیں اور حسرتیں تمام ہوئیں
مگر جو سب سے عجب تھی مراد ہے دل میں

بےلگام
08-02-2012, 05:24 AM
آہٹ سی کوئی آئے تو لگتا ہے کہ تم ہو
سایہ کوئی لہرائے تو لگتا ہے کہ تم ہو
جب شاخ کوئی ہاتھ لگاتے ہی چمن میں
شرمائے لچک جائے تو لگتا ھے کہ تم ہو

بےلگام
08-02-2012, 05:24 AM
صندل سے مہکتی ہوئی پرکیف ہوا کا
جھونکا کوئی ٹکرائے تو لگتا ہے کہ تم ہو
اوڑھے ہوئے تاروں کی چمکتی ہوئی چادر
ندی کوئی بل کھائے تو لگتا ھے کہ تم ہو

بےلگام
08-02-2012, 05:24 AM
جب رات گئے کوئی کرن میرے برابر
چپ چاپ سے سو جائے تو لگتا ہے کہ تم ہو

بےلگام
08-02-2012, 05:29 AM
ایک آزار ہوئی جاتی ہے شہرت ہم کو
خود سے ملنے کی بھی ملتی نہیں فرصت ہم کو
روشنی کا یہ مسافر ہےرہِ جاں کا نہیں
اپنے سائے سے بھی ہونے لگی وحشت ہم ک

بےلگام
08-02-2012, 05:30 AM
آنکھ اب کس سے تحیر کا تماشہ مانگے
اپنے ہونے پہ بھی ہوتی نہیں حیرت ہم کو
اب کے اُمید کے شعلے سے بھی آنکھیں نہ جلیں
جانے کس موڑ پہ لے آئی محبت ہم کو

بےلگام
08-02-2012, 05:30 AM
کون سی رُت ہے زمانے ، ہمیں کیا معلوم
اپنے دامن میں لئے پھرتی ہے حسرت ہم کو
زخم یہ وصل کے مرہم سے بھی شاید نہ بھرے
ہجر میں ایسی ملی اب کے مسافت ہم کو

بےلگام
08-02-2012, 05:31 AM
داغِ عصیاں تو کسی طور نہ چھپتے امجد
ڈھانپ لیتی نہ اگر چادرِ رحمت ہم کو

بےلگام
08-02-2012, 05:47 AM
محبت ہم سے نہ ہوگی
سنا ہے اس محبت میں
بہت نقصان ہوتا ہے
مہکتا جھومتا جیون
غموں کے نام ہوتا ہے

بےلگام
08-02-2012, 05:48 AM
سنا ہے چین کھو کر وہ
سحر سے شام روتا ہے
محبت جو بھی کرتا ہے
بہت بدنام ہوتا ہے

بےلگام
08-02-2012, 05:49 AM
محبت ہم سے نہ ہوگی
سنا ہے اس محبت میں
کہیں بھی دل نہیں لگتا
بنا اس کے نگاہوں میں
کوئی موسم نہیں جچتا

بےلگام
08-02-2012, 05:49 AM
خفا جس سے محبت ہو
وہ جیون بھر نہیں ہنستا
بہت انمول ہے جو دل
اجڑ کر پھر نہیں بستا
محبت ہم سے نہ ہو گی

بےلگام
08-02-2012, 05:50 AM
محبت کی اسیری سے رہائی مانگتے رہنا
بہت آساں نہیں ہوتا جدائی مانگتے رہنا

ذرا سا عشق کر لینا،ذرا سی آنکھ بھر لینا
عوض اِس کے مگر ساری خدائی مانگتے رہنا

بےلگام
08-02-2012, 05:52 AM
کبھی محروم ہونٹوں پر دعا کا حرف رکھ دینا
کبھی وحشت میں اس کی نا رسائی مانگتے رہنا

بےلگام
08-02-2012, 05:52 AM
وفاں کے تسلسل سے محبت روٹھ جاتی ہے
کہانی میں ذرا سی بے وفائی مانگتے رہنا
عجب ہے وحشت ِ جاں بھی کہ عادت ہو گئی دل کی
سکوتِ شام ِ غم سے ہم نوائی مانگتے رہنا

بےلگام
08-02-2012, 05:53 AM
کبھی بچے کا ننھے ہاتھ پر تتلی کے پر رکھنا
کبھی پھر اس کے رنگوں سے رہائی مانگتے رہنا

بےلگام
08-02-2012, 05:53 AM
مجھے بھلائے کبھی یاد کر کے روئے بھی
وہ اپنے آپ کو بکھرائے اور پروئے بھی

شمار ہو نہ سکے ہَم چمکنے والوں میں
بدن بھی ملتے رہے، روز کپڑے دُھوئے بھی

بےلگام
08-02-2012, 05:54 AM
بہت غبار بھرا تھا دلوں میں دونوں کے
مگر وہ ایک ہی بستر پہ رات سوئے بھی

بہت دنوں سے نہائے نہیں آنگن میں
کبھی تو راہ کی بارش ہمیں بھگوئے بھی

بےلگام
08-02-2012, 05:54 AM
یہ تم سے کس نے کہا رات سے میں ڈرتا ہوں
ضرور آئے میرے بازؤوں میں سوئے بھی

یقین جانیے احساس تک نہ ہو گا ہمیں
نسوں میں سوئیاں کوئی اگر چھبوئے بھی

بےلگام
08-02-2012, 05:54 AM
حشر تو تم لے چکے وعدہ وفائی کے لئے
پھر مجھے دن کون سا دو گے دوہائی کے لئے

میں وہی ہوں جس کی آہِ پُر اثر مشہور تھی
اب میرے نالے ترستے ہیں رسائی کے لئے

بےلگام
08-02-2012, 05:55 AM
آسماں دشمن خلافِ احباب وہ ظالم خفا
ایک میں ہی رہ گیا ہوں کیا خدائی کے لئے

ضبط کرتا ہوں تو چُبھتی ہیں قفس میں تتلیاں
قید بڑھتی ہے جو کہتا ہوں رہائی کے لئے

بےلگام
08-02-2012, 05:55 AM
آپ تو کیا ہیں فرشتوں کے جگر ہل جائیں گے
جب قمرؔ محشر میں آئے گا دوہائی کے لئے

بےلگام
08-02-2012, 05:56 AM
کی جفا اس نے مہر کہ کے دریغ
کیوں رے دل ہم پہ کیسے بہکے دریغ

وہ تو ہنستا ہے اور ہمارا آہ!
آئے دامن تک اشک بہہ کے دریغ

بےلگام
08-02-2012, 05:56 AM
یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں
بھولنے والے، کبھی تجھ کو بھی یاد آتا ہوں میں

بےلگام
08-02-2012, 05:56 AM
اک دھندلا سا تصور ہے کہ دل بھی تھا یہاں
اب تو سینے میں فقط اک ٹیس سی پاتا ہوں میں

بےلگام
08-02-2012, 05:57 AM
او وفا کہتے ہوئے تجھ کو تو شرماتا ہوں میں
بے وفا کہتے ہوئے تجھ کو تو شرماتا ہوں میں

بےلگام
08-02-2012, 05:57 AM
آرزؤں کا شباب اور مرگ حسرت ہائے ہائے
جب بہار آئی گلستاں میں تو مرجھاتا ہوں میں

بےلگام
08-02-2012, 05:58 AM
حشر میری شعر گوئی ہے فقط فریاد شوق
اپنا غم دل کی زباں میں، دل کو سمجھاتا ہوں میں

بےلگام
08-02-2012, 05:59 AM
کہاں گئے وہ لہجے دل میں پھول کِھلانے والے
آنکھیں دیکھ کے خوابوں کی تعبیر بتانے والے

کِدھر گئے وہ رستے جن میں منزل پوشیدہ تھی
کِدھر گئے وہ ہاتھ مسلسل راہ دکھانے والے

بےلگام
08-02-2012, 05:59 AM
کہاں گئے وہ لوگ جنہیں ظلمت منظور نہیں تھی
دِیا جلانے کی کوشش میں خود جل جانے والے

کسی تماشے میں رہتے تو کب کے گم ہو جاتے
اِک گوشے میں رہ کر اپنا آپ بچانےوالے

بےلگام
08-02-2012, 05:59 AM
اس رونق میں شامل سب چہرے ہیں خالی خالی
تنہا رہنے والے یا تنہا رہ جانے والے

اپنی لے سے غافل رہ کر ہجر بیاں کرتے ہیں
آہوں سے نا واقف ہیں یہ شور مچانے والے

بےلگام
08-02-2012, 05:59 AM
عزم یہ شہر نہیں ہے نفسا نفسی کا صحرا ہے
یہاں نہ ڈھونڈو کسی مسافر کو ٹھہرانے والے

بےلگام
08-02-2012, 06:00 AM
لازم نہیں کہ اُس کو بھی میرا خیال ہو
جو میرا حال ہے، وہی اُس کا بھی حال ہو

کچھ اور دل گداز ہوں اس شہر ِ سنگ میں
کچھ اور پر ملال، ہوائے ملال ہو

بےلگام
08-02-2012, 06:01 AM
باتیں تو ہوں کہ کچھ دلوں کی خبر ملے
آپس میں اپنے کچھ تو جواب و سوال ہوں

رہتے ہیں آج جس میں جسے دیکھتے ہیں ہم
ممکن ہے یہ گزشتہ کا خواب و خیال ہو

بےلگام
08-02-2012, 06:01 AM
سب شور شہر خاک کا ہے قرب ِ آب سے
پانی نی ہو تو شہر کا جینا محال ہو

معدوم ہوتی جاتی ہوئی شے ہے یہ جہاں
ہر چیز اس کی جیسے فنا کی مثال ہو

بےلگام
08-02-2012, 06:01 AM
کوئی خبر خوشی کی کہیں سے ملے منیر
ان روز و شب میں ایسا بھی اک دن کمال ہو

بےلگام
08-02-2012, 06:03 AM
زمیں کے لوگ ستارے اُدھار مانگتے ہیں
خدا سے اُس کے سہارے اُدھار مانگتے ہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:03 AM
یہ کیسی بستی میں ہم نے دُکان کھولی ہے
یہاں تو سارے کے سارے اُدھارمانگ تے ہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:03 AM
یہ اپنی عمر سے آگے نکل گئے کیسے
غریب بچے غبارے اُدھار مانگتے ہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:04 AM
چلو کہ ختم کریں زندگی کی بے کیفی
چلو کسی سے نطارے اُدھار مانگتے ہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:04 AM
ہمارے ہاتھ میں پرچم کسی کا ہوتا ہے
اور اُس پہ ظلم کے نعرے اُدھار مانگتے ہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:04 AM
جب اُن کے پاس کوئی لفظ بھی نہیں رہتا
میری نظر کے اشارے اُدھار مانگتے ہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:05 AM
نہیں ہے آگ بھی اپنی کہ جل مریں مرزاعادل نذیر
چلو کسی سے شرارے اُدھار مانگتے ہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:15 AM
اب کے برس کچھ ایسا کرنا
اپنے پچھلے بارہ ماہ کے
دکھ سکھ کا اندازہ کرنا
بکھری یادیں تازہ کرنا
سادہ سا اک کاغذ لے کر
بھولے بسرے پل لکھ لین

بےلگام
08-02-2012, 06:17 AM
اپنے سارے کل لکھ لینا
سارے دوست اکٹھے کرنا
ساری صبحیں حاضر کرنا
ساری شامیں پاس بلانا
اور علاوہ ان کے دیکھو
سارے موسم دھیان میں رکھنا

بےلگام
08-02-2012, 06:17 AM
اک اک یاد گمان میں رکھنا
پھر محتاط اندازہ کرنا
گر تو خوشیاں بڑھ جاتی ہیں
پھر تو تم کو میری طرف سے
آنے والا سال مبارک
اور اگر غم بڑھ جائیں تو
مت بیکار تکلف کرنا

بےلگام
08-02-2012, 06:18 AM
دیکھو پھر تم ایسا کرنا
میری خوشیاں تم لے لینا
مجھ کو اپنے غم دے دینا
اب کے برس تم ایسا کرنا۔۔۔۔۔

بےلگام
08-02-2012, 06:18 AM
شکر کر تیرا محبّت میں گیا کچھ بھی نہیں
ورنہ یاں ایسے بھی ہیں جن کا بچا کچھ بھی نہیں

سوچتا ہوں جانے کیا اس خواب کی تعبیر ہے
آگ تھی چاروں طرف جلا کچھ بھی نہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:18 AM
کر دیا اس کو ودیعت خامشی نے یہ ہنر
بات کہ جاتا ہے ساری بولتا کچھ بھی نہیں

وہ تو اپنے دیکھنے سے اہمیت اس کی بنی
ورنہ دیکھا جائے تو یہ آئینہ کچھ بھی نہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:19 AM
بات نکلی تو لبوں پر کتنے شکوے آگئے
میں تو سمجھتا تھا مجھے اس سے گلہ کچھ بھی نہیں

ایک ہی خوبی ظالم میں وہی خامی بھی ہے
دل کی فورا ً مانتا ہے سوچتا کچھ بھی نہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:19 AM
میں نے دل پر لے لئے تیمور کمبختی میری
ورنہ اس کا مسکرانا واقعہ کچھ بھی نہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:20 AM
عذرآنے میں بھی ہےاور بلاتے بھی نہیں
باعثِ ترکِ ملاقات بتاتے بھی نہیں

منتظر ہیں دمِ رخصت کہ یہ مر جائے تو جائیں
پھر یہ احسان کہ ہم چھوڑ کے جاتے بھی نہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:21 AM
کیا کہا؟، پھر تو کہو، "ہم نہیں سنتے تیری"
نہیں سنتے تو ہم ایسوں کو سناتے بھی نہیں

خوب پردہ ہے کہ چلمن سے لگے بیٹھے ہیں
صاف چھپتے بھی نہیں سامنے آتے بھی نہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:21 AM
مجھ سے لاغر تری آنکھوں میں کھٹکتے تو رہے
تجھ سے نازک مری نظروں میں سماتے بھی نہیں

دیکھتے ہی مجھے محفل میں یہ ارشاد ہوا
کون بیٹھا ہے اسے لوگ اٹھاتے بھی نہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:21 AM
ہو چکا قطعِ تعلق تو جفائیں کیوں ہوں؟
جن کو مطلب نہیں رہتا وہ ستاتے بھی نہیں

زیست سے تنگ ہو اے داغ، تو کیوں جیتے ہو؟
جان پیاری بھی نہیں، جان سے جاتے بھی نہیں

بےلگام
08-02-2012, 06:23 AM
دو وقتوں کی ایک نظم


محبت سے بھرا ایک دن
تیرے دامن میں کھلنے کے لئیے تیری سبک انداز
پلکوں پر اترتا ہے
تیری خوشبو میں کھلتا ہے

بےلگام
08-02-2012, 06:23 AM
رگوں کی ڈوریوں میں باندھ کرمجھہ کو
تیرے حسن سخن انداز کی چوکھٹ پہ لاتا ہے
اور اس کے بعد آہستہ بہت آہستگی کے ساتھہ
دل کی ایک دھڑکن کی طرح معلوم ہوتا ہے
محبت سے بھرا ایک دن
محبت سے تہی ایک دن

بےلگام
08-02-2012, 06:23 AM
جو دشت جاں میں سوکھے زرد پتے کی طرح سے
آکے گرتا ہے
رگوں کی ڈوریوں میں باندھ کر مجھہ کر
تیرے بے مہر حسن منجمند کے منحرف آئینہ خانے
تک تو لاتا ہے
محبت سے تہی ایک دن
مگر پھر تیری بے مہری کے

بےلگام
08-02-2012, 06:24 AM
سانچے میں ڈھلے برفاب لمحوں سے
گزر کر بس زرا سی دیر کو
اس دل کے سائے میں ٹھہرتا ہے
اور اس کے بعد آہستہ بہت آہستگی کے ساتھہ
دل کی ایک دھڑکن کی طرح معدوم ہوتا ہے
محبت سے تہی ہے دن

بےلگام
08-02-2012, 06:24 AM
جب یاد کے
گہرے سناٹے میں
چہرے گم ہو جاتے ہیں
جب درد سے بھوجل آنکھوں میں
گرداب سے پڑنے لگتے ہیں
جب شمعیں گل ہو جاتی ہیں
جب خواب بکھرنے لگتے ہیں
اس وقت
اگر تم
آجاؤ

بےلگام
08-02-2012, 06:25 AM
اب تو گھبرا کے یہ کہتے ہیں کہ مر جائیں گے

مر کے بھی چین نہ پایا تو کدھر جائیں گے

سامنے چشم گہر بار کے کہہ دو دریا

چڑھ کے گر آئے تو نظروں سے اتر جائیں گے

بےلگام
08-02-2012, 06:25 AM
لائے جو مست ہیں تربت پہ گلابی آنکھیں

اور اگر کچھ نہیں دو پھول تو دھر جائیں گے

بچیں گے رہ گزر یار تلک کیونکر ہم

پہلے جب تک نہ دو عالم سے گزر جائیں گے

بےلگام
08-02-2012, 06:25 AM
آگ دوزخ کی بھی ہو جائے گی پانی پانی

جب یہ عاصی عرق شرم سے تر جائیں گے

ہم نہیں وہ جو کریں خون کا دعویٰ تجھ سے

بلکہ پوچھے گا خدا بھی تو مکر جائیں گے

بےلگام
08-02-2012, 06:26 AM
رخِ روشن سے نقاب اپنے الٹ دیکھو تم

مہر و مہ نظروں سے یاروں کی اتر جائیں گے

شعلہ آہ کو بجلی کی طرح چمکاؤں

پر یہی ڈر ہے کہ وہ دیکھ کے ڈر جائیں گے

بےلگام
08-02-2012, 06:27 AM
ذوق جو مدرسہ کے بگڑے ہوئے ہیں مُلا

ان کو مہ خانہ میں لے آؤ سنور جائیں گے

بےلگام
08-02-2012, 06:28 AM
جدائی کی کسک لیئے
تیری یاد کا آنسو
ھر شب کی آنکھ سے ٹپکا ھے
گزرے کل کی طرح
آج کا دن بھی
تم بن
اداس گزرا ھے۔۔۔

بےلگام
08-03-2012, 04:32 AM
جدائی کی کسک لیئے
تیری یاد کا آنسو
ھر شب کی آنکھ سے ٹپکا ھے
گزرے کل کی طرح
آج کا دن بھی
تم بن
اداس گزرا ھے۔۔۔

بےلگام
08-03-2012, 04:53 AM
کچھ نہ کسی سے بولیں گے
تنہائی میں رو لیں گے

ہم بے راہبروں کا کیا
ساتھ کسی کے ہو لیں گے

بےلگام
08-03-2012, 04:54 AM
خود تو ہوئے رسوا لیکن
تیرے بھید نہ کھولیں گے

جیون زہر بھرا ساگر
کب تک امرت گھولیں گے

بےلگام
08-03-2012, 04:54 AM
نیند تو کیا آئے گی فراز
موت آئی تو سو لیں گے

بےلگام
08-03-2012, 04:57 AM
وہ مستِ ناز جو گلشن میں آ نکلتی ہے

کلی کلی کی زباں سے دعا نکلتی ہے

الٰہی پھولوں میں وہ انتخاب مجھ کو کرے

کلی سے رشک گل آفتاب مجھ کو کرے

بےلگام
08-03-2012, 04:57 AM
تجھے وہ شاخ سے توڑیں زہے نصیب ترے

تڑپتے رہ گئے گلزار میں رقیب ترے

اٹھا کے صدمۂ فرقت وصال تک پہنچا

تری حیات کا جوہر کمال تک پہنچا

بےلگام
08-03-2012, 05:08 AM
آپ کی یاد آتی رہی رات بھر
چاندنی دل دکھاتی رہی رات بھر

گاہ جلتی ہوئی، گاہ بجھتی ہوئی
شمع غم جھلملاتی رہی رات بھر

بےلگام
08-03-2012, 05:08 AM
کوئی خوشبو بدلتی رہی پیرہن
کوئی تصویر گاتی رہی رات بھر

پھر صبا سایہ شاخ گل کے تلے
کوئی قصہ سناتی رہی رات بھر

بےلگام
08-03-2012, 05:08 AM
جو نا آیا اُسے کوئی زنجیر دار
ہر صدا پہ بلاتی رہی رات بھر

اک امید سے دل بہلتا رہا
اک تمنا ستاتی رہی رات بھر

بےلگام
08-03-2012, 05:09 AM
جو نا آیا اُسے کوئی زنجیر دار
ہر صدا پہ بلاتی رہی رات بھر

اک امید سے دل بہلتا رہا
اک تمنا ستاتی رہی رات بھر

بےلگام
08-03-2012, 05:10 AM
مجھ سے مت پوچھ کہ کیوں آنکھ جھلکا لی میں نے
تیری تصویر تھی جو تجھ سے چھپا لی میں نے
جس پر لکھا تھا کہ تو میرے مقدر میں نہیں
اپنے ماتھے کی وہ لکیر مٹا لی میں نے

بےلگام
08-03-2012, 05:11 AM
ہر جنم سب کو یہاں سچا پیار کہاں ملتا ہے
تیری چاہت میں تو عمر بیتا لی میں نے
مجھ کو جانے کہاں احساس میرے لے جائیں
وقت کے ہاتھوں سے اک نظم اٹھا لی میں نے

بےلگام
08-03-2012, 05:11 AM
گھیرے رہتی ھے مجھے اک انوکھی خوشبو
تیری یادوں سے ہر اک سانس سجا لی میں نے
جس کے شعروں کو سن کے وہ بہت رویا تھا
بس وہی اک غزل سب سے چھپا لی میں نے

بےلگام
08-03-2012, 05:16 AM
پھر شامِ وصالِ یار آئی

بہلا غمِ روزگار کچھ دیر

پھر جاگ اُٹھے خوشی کے آنسو

پھر دل کو ملا قرار کچھ دیر

بےلگام
08-03-2012, 05:16 AM
پھر ایک نشاطِ بے خودی میں

آنکھیں رہیں اشک بار کچھ دیر

پھر ایک طویل ہجر کے بعد

صحبت رہی خوشگوار کچھ دیر

بےلگام
08-03-2012, 05:17 AM
پھر ایک نگار کے سہارے

دنیا رہی سازگار کچھ دیر

بےلگام
08-03-2012, 05:17 AM
نصیب عشق دلِ بےقرار بھی تو نہیں

بہت دنوں سے ترا انتطار بھی تو نہیں

تلافئ ستمِ روزگار کون کرے

تو ہم سخن بھی نہیں، رازدار بھی تو نہیں

بےلگام
08-03-2012, 05:17 AM
زمانہ پرسشِ غم بھی کرے تو کیا حاصل

کہ اپنے دل پہ مجھے اختیار بھی تو نہیں

تو ہی بتا کہ تری خاموشی کو کیا سمجھوں

تری نگاہ سے کچھ آشکار بھی تو نہیں

بےلگام
08-03-2012, 05:18 AM
وفا نہیں نہ سہی، رسم و راہ کیا کم ہے

تری نظر کا مگر اعتبار بھی تو نہیں

اگرچہ دل تری منزل نہ بن سکا اے دوست

مگر چراغِ سرِ رہگزار بھی تو نہیں

بےلگام
08-03-2012, 05:18 AM
بہت فسردہ ہے دل، کون اس کو بہلائے

اُداس بھی تونہیں، بے قرار بھی تو نہیں

تو ہی بتا ترے بےخانماں کدھر جائیں

کہ راہ میں شجرِ سایہ دار بھی تو نہیں

بےلگام
08-03-2012, 05:19 AM
فلک نے پھینک دیا برگِ گل کی چھاؤں سے دور

وہاں پڑے ہیں جہاں خارزار بھی تو نہیں

جو زندگی ہے تو بس تیرے درد مندوں کی

یہ جبر بھی تو نہیں، اختیار بھی تو نہیں

بےلگام
08-03-2012, 05:19 AM
وفا ذریعۂ اظہارِ غم سہی ناصر

یہ کاروبارکوئی کاروبار بھی تو نہ نہیں

بےلگام
08-03-2012, 05:20 AM
عارضوں کو لہو بھگوتا ہے !
بے وجہ کون بھلا روتا ہے !

تو نہیں، تو کِسے بتاؤں میں
درد کب، اور کہاں ہوتا ہے ؟

بےلگام
08-03-2012, 05:20 AM
کب وفا کی رہی امید ُمجھے
جو کہ، تو اتنے خار ڈھوتا ہے !

جام ہے، مے ہے، اور ساقی بھی!
کوئی پاتا ہے، کوئی کھوتا ہے !

بےلگام
08-03-2012, 05:20 AM
آشیانہ نہیں، ہیں یہ تنکے !
جِن کو تو بارھا سنجوتا ہے !

گھُٹ رہی ہے قفس میں آزادی
ھم سمجھتے ہیں، محض توتا ہے !

بےلگام
08-03-2012, 05:21 AM
میں نے مے پی ہے، اور جانا ہے
ھر نشے میں خمار ہوتا ہے !

یار جس کا ہوں، اسی کا تو ہوں !
جس کا دریا ہے، اس کا غوطہ ہے

بےلگام
08-03-2012, 05:21 AM
دورِ محشر ہو، یا ازل، جو ہو !
گوھرِ زیست وہ پِروتا ہے !!

خاک فصلوں کی ترقّی ہو گی
بو رہے ہیں جو بیج، تھوتا ہے !

بےلگام
08-03-2012, 05:22 AM
موڑ کِتنے گُزر گئے ہوں گے
وہ جا چکے ہیں، 'مالک' سوتا ہے

بےلگام
08-03-2012, 05:23 AM
صبح ہوتے ہی تیرے شہر سے جانا ہے مجھے
آج کی رات زرا مجھ کو منا کر سونا
مجھ کو ڈر ہے میرا دل کہیں پتھر نہ بنے
بس زرا دیر مجھے تھوڑا ہنسا کر سونا

بےلگام
08-03-2012, 05:23 AM
ایک مدت سے جو تیری یاد میں ہر پل برسیں
آج ان آنکھوں کو تم دیدار کروا کر سونا
بڑی چاہت سے تیری راہ میں جو جلایا تھا
آج ان سارے چراغوں کو بجھا کر سونا

بےلگام
08-03-2012, 05:24 AM
تیرے افسانہِ محبت میں جو پاگل تھا
آج اس شخص کو ایک سچ بتا کر سونا
توڑ دیا جن کو ایک جھوٹی انا کی خاطر
آج سبھی وہ وعدے بھلا کر سونا

بےلگام
08-03-2012, 05:24 AM
اپنی اپنی آنکھوں کے سبھی اشک بہا کر سونا
تم میری یاد کا ہر دیپ بجھا کر سونا

بےلگام
08-03-2012, 05:25 AM
وفا سے بے وفائی کے بیان سے
سناؤں داستان اپنی کہاں سے

شکایات کیا کروں بد گماں سے
نہ کہہ پاؤں کچھ اپنی زبان سے

بےلگام
08-03-2012, 05:25 AM
نہیں سمجھا وہ اب تک بات میری
پریشان ہوں میں اپنے مہربان سے

چلوں ساتھ تیرے اے مسّرت
اجازت لے تو لوں درد نہاں سے

بےلگام
08-03-2012, 05:26 AM
وہیں سے زندگی بھٹکی ہے میری
تمہارا ساتھ چُھوٹا ہے جہاں سے

ہمارے کارواں کو کس نے لوٹا
چلو پوچھیں یہ میرِ کارواں سے

بےلگام
08-03-2012, 05:26 AM
وہ کیوں افسردہ ہے مایوس کیوں ہے
چلو پوچھیں ذرا اُجڑے مکان سے

نہیں سمجھا وہ اب تک بات میری
پریشان ہوں میں اپنے مہربان سے

بےلگام
08-03-2012, 05:26 AM
تجھ سے ہاریں کہ تجھے مات کریں
تجھ سے خوشبو کے مراسم تجھے کیسے کہیں
میری سوچوں کا اُفق تیری محبت کا فسوں
میرے جذبوں کا دل تیری عنایت کی نظر

بےلگام
08-03-2012, 05:27 AM
کیسے خوابوں کے جزیروں کو ہم تاراج کریں
تجھ کو بھولیں کہ تجھے یاد کریں
اب کوئی اور نہیں میری تمنا کا دل
اب تو باقی ہی نہیں کچھ
جسے برباد کریں

بےلگام
08-03-2012, 05:27 AM
تیری تقسیم کسی طور ہمیں منظور نہ تھی
پھر سرزم جو آئے تو تہی داماں آئے
چن لیا دردٍ مسیحائی
تیری دلدار نگاہی کے عوض
ہم نے جی ہار دیئے، لُٹ بھی گئے

بےلگام
08-03-2012, 05:28 AM
کیسےممکن ہے بھلا
خود کو تیرے سحر سے آزاد کریں
تجھ کو بھولیں کہ تجھے یاد کریں
اس قدر سہل نہیں میری چاہت کا سفر

بےلگام
08-03-2012, 05:28 AM
ہم نے کانٹے بھی چنے روح کے آزار بھی سہے
ہم سے جذبوں*کی شرح نہ ہو سکی کیا کرتے
بس تیری جیت کی خواہش نے کیاہم کونڈھال
اب اسی سوچ میں گذریں گے مہ و سال مرے
تجھ سے ہاریں کہ تجھے مات کریں

بےلگام
08-03-2012, 05:32 AM
کہاں کہاں سے مٹائے گا، خوش گماں میرے
تیرے بدن سے تیری روح تک، نشاں میرے

کہیں بھی جا کے بسا لے تُو بھول کی بستی
محیط ہیں تیرے، یادوں کے آسماں میرے

بےلگام
08-03-2012, 05:33 AM
اگرچہ فاصلہ دو چند کر لیا تو نے
رواں دواں ہیں تیری سمت کارواں میرے

میں جاؤں بھی تو کہاں، چھوڑ کر تیری گلیاں
تُو کر گیا سبھی رستے دھواں دھواں میرے

بےلگام
08-03-2012, 05:33 AM
اگرچہ فاصلہ دو چند کر لیا تو نے
رواں دواں ہیں تیری سمت کارواں میرے

میں جاؤں بھی تو کہاں، چھوڑ کر تیری گلیاں
تُو کر گیا سبھی رستے دھواں دھواں میرے

بےلگام
08-03-2012, 05:34 AM
میں اپنے جذبوں کی شدت سے خوف کھاتا ہوں
کہ دشمنوں سے ہیں بڑھ کر، یہ مہرباں میرے

میں خواب زار کی کرتا تو ہوں چمن بندی
اجاڑ دے نہ کوئی آ کے گلستاں میرے