PDA

View Full Version : اردو شاعری



صفحات : 1 2 3 [4]

بےلگام
08-13-2012, 07:27 PM
انہيں اپني صورت پہ يوں کب تھا
مرے عشق رسوا کو اختر دعا ديں
~~~~

بےلگام
08-13-2012, 07:28 PM
ہم سے کیا پوچھتے ہو ہجر میں کیا کرتے ہیں

تیرے لوٹ آنے کی دن رات دعا کرتے ہیں

اب کوئی ہونٹ نہیں ان کو چرانے آتے

میری آنکھوں میں اگر اشک ہوا کرتے ہیں

بےلگام
08-13-2012, 07:28 PM
تیری تو جانے ،پر اے جان تمنا ہم تو

سانس کے ساتھ تجھے یاد کیا کرتے ہیں

کبھی یادوں میں تجھے بانہوں میں بھر لیتے ہیں

کبھی خوابوں میں تجھے چوم لیا کرتے ہیں

بےلگام
08-13-2012, 07:28 PM
تیری تصویر لگا لیتے ہیں ہم سینے سے

پھر ترے خط سے تری بات کیا کرتے ہیں

گر تجھے چھوڑنے کی سوچ بھی آئے دل میں

ہم تو خود کو بھی وہیں چھوڑ دیا کرتے ہیں

بےلگام
08-13-2012, 07:28 PM
جتنی دعائیں آتی تھیں
سب مانگ لیں ہم نے
جتنے وظیفے یاد تھے سارے
کر بیٹھے ہیں
کئی طرح سے جی کر دیکھا ہے
کئی طرح سے مر بیٹھے ہیں
لیکن جاناں
کسی بھی صورت
تم میرے ہو کر نہیں دیتے

بےلگام
08-13-2012, 07:29 PM
عمر شايد نہ کرے آج وفا
کانٹا ہے شب تنہائي کا

ايک دن راہ پہ جا پہنچے ہم
شوق تھا باديہ پيمائي کا

بےلگام
08-13-2012, 07:29 PM
کچھ تو ہےقدر تماشائي کي
ہے جو يہ شوق خود آرائي کا

يہي انجام تھا اے فصل خزاں
گل و بلبل کي شناسائي کا

بےلگام
08-13-2012, 07:29 PM
محتسب عذر بہت ہيں ليکن
اذن ہم کو نہيں گويائي کا

ہوں گے حالي سے بہت آوارہ
گھر ابھي دور ہے رسوائي کا

بےلگام
08-13-2012, 07:30 PM
مہر کي تجھ سے توقع تھي ستمگر نکلا
موم سمجھے تھے ترے دل کو سو پتھر نکلا

جتنے جي آہ ترے کوچے سے کوئي نہ پھرا
جو ستم ديدہ رہا جا کے سومر کر نکلا

بےلگام
08-13-2012, 07:30 PM
دل کي آبادي کي اس حد ہے خرابي کہ نہ پوچھ
جانا جاتا ہے کہ اس راہ سے لشکر نکلا

اشک تر قطرہ خون، لخت جگر ہجراں نے
اس دفينے ميں سے اقسام جواہر نکلا

بےلگام
08-13-2012, 07:30 PM
ہم نے جانا تھا لکھے گا کوئي حرف اے مير
پر ترا نامہ تو اک شوق کا دفتر نکلا

بےلگام
08-13-2012, 07:30 PM
ھم نے سوچ رکھا ہے
چاہے دل کی ھر خواھش
زندگی کی آنکھوں سے اشک بن کے
بہہ جائے
گھر کی ساری دیواریں چھت سمیت گر جائیں
اوربے مقدر ہم
اس بدن کے ملبے میں خود ہی کیوں نہ دب جائیں

بےلگام
08-13-2012, 07:31 PM
تم سے کچھ نہیں کہنا

کیسی نیند تھی اپنی کیسے خواب تھے اپنے
اور اب گلابوں پر
نیند والی آنکھوں پر
نرم خو سے خوابوں پر
کیوں عذاب ٹوٹے ہیں

بےلگام
08-13-2012, 07:31 PM
تم سے کچھ نہیں کہنا

گِھر گئے ہیں راتوں میں
بے لباس باتوں میں
اس طرح کی راتوں میں
کب چراغ جلتے ہیں کب عذاب ٹلتے ہیں
اب تو ان عذابوں سےبچ کے بھی نکلنے کا راستہ نہیں جاناں
جس طرح تمہیں سچ کے لازوال لمحوں سے واسطہ نہیں جاناں
ہم نے سوچ رکھا ہے

تم سے کچھ نہیں کہنا

بےلگام
08-13-2012, 07:31 PM
ہجر کی رُت پھر گدرائی ہے کمرے میں
ہر سو وحشت اُگ آئی ہے کمرے میں

خوب گزرتی ہے ہم دو دیوانوں میں
اک میں ہوں اک تنہائی ہےکمرے میں

بےلگام
08-13-2012, 07:32 PM
بے ترتیبی، آنسو، یادیں، خاموشی
دیکھو کیسی رُسوائی ہے کمرے میں

اے میرے پیارے کی یاد ذرا رُک جا
تو تو میری بینائی ہے کمرے میں

بےلگام
08-13-2012, 07:32 PM
درد کچھ دیر ہی رہتا ہے، بہت دیر نہیں
جس طرح شاخ سے توڑے ہوئے اِک پتّے کا رنگ
ماند پڑ جاتا ہے کچھ روز شاخ سے الگ رہ کر
شاخ سے ٹوٹ کے یہ درد جئے گا کب تک ؟
..

بےلگام
08-13-2012, 07:32 PM
ختم ہو جائے گی جب اس کی رسد
ٹمٹمائے گا ذرا دیر کو بُجھتے بُجھتے
اور پھر لمبی سی ایک سانس دھوئیں کی لے کر
ختم ہو جائے گا، یہ درد بھی بُجھ جائے گا
!!درد کچھ دیر ہی رہتا ہے، بہت دیر نہیں
~*~*~*~*~*~

بےلگام
08-13-2012, 07:32 PM
سنبھلنے کے لیے گرنا پڑا ہے
ہمیں جینا بہت مہنگا پڑا ہے

رقم تھیں اپنے چہرے پر خراشیں
میں سمجھا آئینہ ٹوٹا پڑا ہے

بےلگام
08-13-2012, 07:33 PM
مری آنکھوں میں تم کیوں جھانکتے ہو
تہوں میں آنسوؤ‎ں کی کیا پڑا ہے

حواس و ہوش ہیں بیدار لیکن
ضمیر انسان کا سویا پڑا ہے

بےلگام
08-13-2012, 07:33 PM
بدن شوقین کم پیرہنی کے
درو دیوار پر پردہ پڑا ہے

اٹھا تھا زندگی پر ہاتھ میرا
گریبان پر خود اپنے جا پڑا ہے

بےلگام
08-13-2012, 07:33 PM
محبت آنسوؤں کے گھاٹ لے چل
بہت دن سے یہ دل میلا پڑا ہے

زمیں ناراض ہے کچھ ہم سے شاید
پڑا ہے پاؤں جب الٹا پڑا ہے

بےلگام
08-13-2012, 07:33 PM
ڈبو سکتی نہیں دریا کی لہریں
ابھی پانی میں اک تنکا پڑا ہے

م*ظفر رونقوں میلوں کا رسیا
ہجومِ درد میں تنہا پڑا ہے

بےلگام
08-13-2012, 07:34 PM
جب تمہیں انکار ھے ، کیا فائدہ

صرف مجھ کو پیار ھے ، کیا فائدہ

ہم پڑوسی ہیں ، مگر کیسے ملیں؟

بیچ میں دیوار ھے ، کیا فائدہ

بےلگام
08-13-2012, 07:34 PM
جس نے یہ سوچا ، وہ پیچھے رہ گیا

راستہ دشوار ھے ، کیا فائدہ

جا رہا ہوں میں یہ دنیا چھوڑ کر

زندگی آزار ھے ، کیا فائدہ

بےلگام
08-13-2012, 07:34 PM
غیر ممکن ہو چکا میرا علاج

روح تک بیمار ھے ،کیا فائدہ

چھوڑ دو انور سے ملنے کا خیال

آدمی بیکار ھے ، کیا فائدہ

بےلگام
08-13-2012, 07:34 PM
سلامت ھے وظن رب کی عظا ھے..
محبت کا یہ دیکھو سلسلہ ھے..

میں اس کے واسظے کیا کر سکوں گا..
میرے دل میں یہ جزبہ پل رھا ھے...

بےلگام
08-13-2012, 07:34 PM
میرے واسطے میرا وطن ھی...
رستہ ھے،منزل ھے دعا ھے...
مجھے اپنے وطں کی صبح محسن...
حسیں رنگین سا یک خواب سا ھے

میں اپنے دیس کا پرچم اٹھائے...
خوشی سے میرا چھرہ دمکتا ھے...
_______

بےلگام
08-13-2012, 07:35 PM
جو آیا لوٹ کے بھاگھا وہ ظالم...
میرے دیس کا یہ المیہ ھے..

بےلگام
08-13-2012, 07:35 PM
آج ھے تجھے ضرورت قلم کتابوں کی...
وقت ھے استادوں سے سیکھ لےعلم کی بات...

خطر ے میں ڈوبی ھے قوم کہ کرتے ھیں..
بچے...گیم ڈرامہ اور یا فلم کی بات...

بےلگام
08-13-2012, 07:36 PM
ستاروں نے سکھایئ بردباری...
خاموشی سے گزاری رات ساری...

صبح چپکے سے بولے ھم چلے ھیں..
میاں سورج تمھاری اب ھے باری..

اندھیری رات میں تاروں نے ھنس کے..
کھا گزرے گی چندا کی سواری...

بےلگام
08-13-2012, 07:36 PM
گرے ھیں بے ادب لو منہ کے بل پھر...
اٹھانی پڑ گئی ھے شرمساری...

کسی دن قبر میں اترے گا محسن....
دھری رہ جاے گی ساری تیاری....

بےلگام
08-13-2012, 07:36 PM
پھولوں کو ناتوڑو یہ دعا دیتے ھیں بچو...
نا ان کو مروڑو یہ دعا دیتے ھیں بچو...


تتلی کے کئی رنگ،پھولوں کے رھے سنگ..
ان کو کھلا چھوڑو دعا دیتے ھیں بچو...
خرگوش نا پالو..قیدی نابنا لو...
سر ان کے نا پھوڑو یہ دعا دیتے ھیں بچو...

بےلگام
08-13-2012, 07:37 PM
خلا میں کیا ھے خلاوں کی جستجو لر لے...
جو لکھ گئے ھیں بڑے حرف حرف تو پڑہ لے..

یہ فلسفہ ھے یہ گھرائی میں چھپی باتیں..
تو ان پہ غور بھی کر ان کو ھوبھو پڑہ لے
جو چاھتا ھے کے ھو تیرے علم میں سب کچھ..
قرآن پاک کو لے پھلے تو وضو کر لے...

بےلگام
08-13-2012, 07:37 PM
یہ اک خدا کی ھے تخلیق اک خدا کا کمال...
اسی سے پوچھ اسی سے ابھی رجوع کر لے....

یہ فلسفہ ھے کہ اقبال جس میں ڈوبا رھا..
یہ فلسفہ تو بھی دل میں روح میں بھر لے..

بےلگام
08-13-2012, 07:37 PM
یہ صبح شام کی گردش جو تجھ کو بھجھا گیا..
کوئی تو اس کا ھے مقصد،یہ دل میں تو بھر لے..

بےلگام
08-13-2012, 07:38 PM
پھول کی سلامتی،چمن میں لھکتی ھوا...
خوشبووں کے رنگ میں خوشی سے مھکتی ھوا..

بےلگام
08-13-2012, 07:38 PM
ابھی تو آئے ہو ٹھہرو ذرا چلے جانا.....
لگے گی دیر ذرا حال دل سنانے میں

بےلگام
08-13-2012, 07:38 PM
اگر وہ پوچھ لیں ہم سے کہ کس بات کا غم ہے
تو پھر کس بات کا غم ہے اگر وہ پوچھ لیں ہم سے

بےلگام
08-13-2012, 07:39 PM
مریض عشق ہے تو دوا دل سمجھ دلبر کو
پھر مرض جانے، دوا جانے، خدا جانے........

بےلگام
08-13-2012, 07:39 PM
کیسے کہ دوں کہ چھوڑ دیا ہے اس نے مجھے
بات تو سچ ہے مگر بات ہے رسوائی کی

بےلگام
08-13-2012, 07:40 PM
میرے لفظوں سے نکل جائے اثر
کوئی خواہش جو تیرے بعد کروں

نگار
08-13-2012, 11:57 PM
واہ بہت خوبصورت عادل بھائی

بہت شکریہ

بےلگام
08-14-2012, 06:36 PM
شکریہ نگار بھائی

بےلگام
08-15-2012, 06:55 AM
تيري وفا سوچتے ہيں

کيا پوچھتے ہو تيرے ہجر ميں کيا سوچتے ہيں
سجا کے تم کو نگاہوں ميں صدا سوچتے ہيں

تيرے وجود کو چھو کر جو گزري ہے کبھي
ہم اس ہوا کو بھي جنت کي ہوا سوچتے ہيں

بےلگام
08-15-2012, 06:55 AM
يہ اپنے ظرف کي حد ہے کے فقط تيرا لحاظ
تيرے ستم کو مقدر کا لکھا سوچتے ہيں

ميرا اس شہر عداوت ميں بسيرا ہے جہاں
لوگ سجدوں ميں بھي لوگوں کا برا سوچتے ہيں

بےلگام
08-15-2012, 06:55 AM
کس قدر ہم بھي ہيں نادان محبت ميں
تيرے اخلاص کو ہم تيري وفا سوچتے ہيں

بےلگام
08-15-2012, 06:56 AM
کبھی پلکوں پہ آنسو ہیں، کبھی لب پہ شکایت ہے
مگر اے زندگی پھر بھی مجھے تجھ سے محبت ہے

بےلگام
08-15-2012, 06:58 AM
جو آتا ہے وہ جاتا ہے، دنیا آنی جانی ہے
یہاں ہر شخص مسافر ہے، سفر میں زندگانی ہے
اجالوں کی ضرورت ہے، اندھیرا میری قسمت ہے
کبھی پلکوں پہ آنسو ہیں، کبھی لب پہ شکایت ہے
مگر اے زندگی پھر بھی مجھے تجھ سے محبت ہے

بےلگام
08-15-2012, 06:58 AM
ذرا اے زندگانی دم لے تیرا دیدار تو کر لوں
کبھی دیکھا نہیں جس کو اسے میں پیار تو کر لوں
ابھی سے چھوڑ کر مت جا، ابھی تیری ضرورت ہے
کبھی پلکوں پہ آنسو ہیں، کبھی لب پہ شکایت ہے
مگر اے زندگی پھر بھی مجھے تجھ سے محبت ہے

بےلگام
08-15-2012, 06:59 AM
کوئی انجان سا چہرہ ابھرتا ہے فضاؤں میں
یہ کس کی آہٹیں جاگی میری خاموش راہوں میں
ابھی اے موت نہ آنا میرا ویرانہ جنت ہے
کبھی پلکوں پہ آنسو ہیں، کبھی لب پہ شکایت ہے
مگر اے زندگی پھر بھی مجھے تجھ سے محبت ہے

بےلگام
08-15-2012, 07:03 AM
کچھ اور تو خدا سے چاہتے ہیں ہم
تم سے جدا نہ ھوں یہ دعا مانگتے ہیں ہم
اس میں بھلا جہاں سے ڈرنے کی کیا بات ہے
ہم ہر جگہ کہیں گے تمھیں چاھتے ہیں ہم
لگتایہ ہے کہ جھیل کی گہراٰی کچھ کم نہیں
ان کی حسین آنکھوں میں جب جھانکتے ہیں ہم
مانگے اگر وہ جان بھی حاضر ہے دوستوں
ان کی کوٰٰی بات کہاں ٹالتے ہیں ہم

بےلگام
08-15-2012, 07:03 AM
رہ نوردِ بیابانِ غم صبر کر صبر کر
کارواں پھر ملیں گے بہم صبر کر صبر کر

بے نشاں ہے سفر رات ساری پڑی ہے مگر
آرہی ہے صدا دم بدم صبر کر صبر کر

بےلگام
08-15-2012, 07:04 AM
تیری فریاد گونجے گی دھرتی سے آکاش تک
کوئی دن اور سہہ لے ستم صبر کر صبر کر

تیرے قدموں سے جاگیں گے اُجڑے دلوں کے ختن
پا شکستہ غزالِ حرم صبر کر صبر کر

بےلگام
08-15-2012, 07:04 AM
شہر اجڑے تو کیا ہے کشادہ زمینِ خدا
اک نیا گھر بنائیں گے ہم صبر کر صبر کر

یہ محلاّتِ شاہی تباہی کے ہیں منتظر
گرنے والے ہیں ان کے علم صبر کر صب

بےلگام
08-15-2012, 07:04 AM
دف بجائیں گے برگ و شجر صف بہ صف ہر طرف
خشک مٹی سے پھوٹے گا نم صبر کر صبر کر

لہلہا ئیں گی پھر کھیتیاں کارواں کارواں
کھل کے برسے گا ابر کرم صبر کر صبر کر

بےلگام
08-15-2012, 07:04 AM
کیوں پٹکتا ہے سر سنگ سے جی جلا ڈھنگ سے
دل ہی بن جائے گا خود صنم صبر کر صبر کر

پہلے کھل جائے دل کا کنول پھر لکھیں گے غزل
کوئی دم اے صریر قلم صبر کر صبر ک

بےلگام
08-15-2012, 07:04 AM
درد کے تار ملنے تو دے ہونٹ ہلنے تو دے
ساری باتیں کریں گے رقم صبر کر صبر کر

دیکھ ناصر زمانے میں کوئی کسی کا نہیں
بھول جا اُس کے قول و قسم صبر کر صبر ک

بےلگام
08-15-2012, 07:05 AM
کاش تم نے مجھے ہنسایا ہوتا
کاش تم نے مجھے رولایا ہوتا

کاش غصے میں ہی اپنا بنایا ہوتا
کاش مجھے یاد کر کے اپنے دل کو بہلایا ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 07:05 AM
کاش میری یاد ستاتی تمھیں
کاش میرے بنا نیند نہ آتی تمہیں

کاش کہ تم میری محبت کو پہچان پاتے
کاش کہ تم مجھے اپنا ہی بنا پاتے

بےلگام
08-15-2012, 07:05 AM
کاش میں تمہیں اپنی بانہوں میں کھلاتا
کاش میں تمھاری زلفوں میں سو جاتا

کاش کہ تم دل سے چاہتے مجھے
کاش کہ اپنا سایہ بناتے مجھے

بےلگام
08-15-2012, 07:05 AM
کاش میں تیری آنکھوں کا کاجل ہوتا
کاش میں اس بارش کا بادل ہوتا

کاش تم میرے سینے سے لپٹ کر روتے
کاش کہ تیرے بنا میری صبح نہ ہوتی

بےلگام
08-15-2012, 07:05 AM
کاش کہ حال دل بتاتا تمہیں
کاش کہ دل کا غم بتاتا تمہیں

کاش کہ اپنی جان سے بھی زیادہ چاہتا
کاش تم بن سانس بھی نہ لے پاتا

اے کاش یہ سب غم نہ ہوتے
اے کاش نہ ہم ہوتے نہ تم ہوتے

بےلگام
08-15-2012, 07:06 AM
ایک نظر ادھر دیکھہ تماشا ہی سہی
تیرہ پردہ،تیری دوری حالات کا تقاضہ ہی سہی
نظر بھر دیکھہ لینے سے بھلا کیا ہوگا
ہاں تم معصوم سہی اور ہم رسوا ہی سہی
ہم تیرے در پہ صدا دیتے ہوئے آئیں گے

بےلگام
08-15-2012, 07:06 AM
نہ ملا طرز فقیری تو دید کا کاسہ ہی سہی
وہ میرے درد سے اکثر انجان بنا رہتا ہے
وہ میرا محسن ہی سہی ، درد شناسا ہی سہی
اتنی تو خیر اپنی بھی برداشت ہے کہ جدائی سہہ لیں

بےلگام
08-15-2012, 07:06 AM
ہم بھی کچھہ پندار دل رکھتے ہیں چلو تھوڑا ہی سہی
ہم تیرے عشق میں آخر کار موسیّ تو بنے
معجزہ طور نہیں وہ تیراجلوہ ہی سہی
تیر جو مجھہ کو لگے وہ بھی عنایت ہیں تیری

بےلگام
08-15-2012, 07:06 AM
تونے ہمیں سوچانفرت میں پنہاں ہی سہی
چلو کوئی بات تو بہانئہ عبادت ٹھہری
خوف محشر نہ سہی وہ غم جاناں ہی سہی

بےلگام
08-15-2012, 07:07 AM
جو بھی قاصد تھا وہ غیروں کے گھروں تک پہنچا
کوئی نامہ نہ ترے در بدروں تک پہنچا

مجھ کو مٹی کیا تو نے تو یہ احسان بھی کر
کہ مری اک کو اب کوزہ گروں تک پہنچا

بےلگام
08-15-2012, 07:07 AM
اے خدا! ساری مسافت تھی رفاقت کیلئے
مجھ کو منزل کی جاہ ہمسفروں تک پہنچا

تو مہ و مہر لئے ہے مگر اے دستِ کریم
کوئی جگنو بھی نہ تاریک گھروں تک پہنچا

بےلگام
08-15-2012, 07:07 AM
دل بڑی چیز تھا بازارِ محبت میں کبھی
اب یہ سودا بھی مری جان ، سروں تک پہنچا

وقت قاروں کو بھی محتاج بنا دیتا ہے
وہ شہِ حسن دریوزہ گروں تک پہنچا

بےلگام
08-15-2012, 07:07 AM
اتنے ناصح ملے رستے میں کہ توبہ توبہ
بڑی مشکل سے میں شوریدہ سروں تک پہنچا

اہلِ دنیا نے تجھی کو نہیں لوٹا ہے فراز
جو بھی تھا صاحبِ دل ، مفت بروں تک پہنچا

بےلگام
08-15-2012, 07:08 AM
لہرائے سدا آنکھ میں پیارے تیرا آنچل
جھومر ہے تیرا چاند ستارے تیرا آنچل
اَب تک میری یادوں میں ہے رنگوں کا تلاطَم
دیکھا تھا کبھی جھیل کنارے تیرا آنچل

بےلگام
08-15-2012, 07:09 AM
لپٹے کبھی شانوں سے کبھی زُلف سے اُلجھے
کیوں ڈُھونڈھتا رہتا ہے سہارے تیرا آنچل
مہکیں تیری خوشبو سے دہکتی ہوئی سانسیں
جب تیز ہوا خود سے اتارے تیرا آنچل

بےلگام
08-15-2012, 07:09 AM
آنچل میں رَچے رنگ نکھاریں تیری زلفیں
اُلجھی ہوُئی زُلفوں کو سنوارے تیرا آنچل
اس وقت ہے تتلی کی طرح دوشِ ہوَا پر
اس وقت کہاں بس میں ہمارے تیرا آنچل

بےلگام
08-15-2012, 07:09 AM
کاجل تیرا بَہہ بَہہ کے رُلائے مجھے اَب بھی
رَہ رَہ کے مجھے اَب بھی پکارے تیرا آنچل

بےلگام
08-15-2012, 07:10 AM
احمد فراز کی لال مسجد پر لکھی جانے والی نظم

آج نیٹ پرمیں نے مرحوم شاعر احمدفراز کی ایک شاعری پڑھی
پڑھ کر اپنی ملک کی بدنصبی پربے حد روچُکی ہوں
نظم پڑھیں
اورخُداکے واسطے اپنے ملک کوبچانے کی تدبیرکریں

بےلگام
08-15-2012, 07:29 AM
وہ عجیب صبحِ بہار تھی کہ سحر سے نوحہ گری رہی
مری بستیاں تھیں دُھواں دُھواں مرے گھر میں آگ بھری رہی
میرے راستے تھے لہو لہو مرا قریہ قریہ فگار تھا
یہ کفِ ہوا پہ زمین تھی وہ فللک کہ مشتِ غبار تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:31 AM
کئی آبشار سے جسم تھے کہ جو قطرہ قطرہ پگھل گئے
کئی خوش جمال طلسم تھے جنھیں گرد باد نگل گئے
کوئی خواب نوک سناں پہ تھا کوئی آرزو تہِ سنگ تھی
کوئی پُھول آبلہ آبلہ کوئی شاخ مرقدِ رنگ تھی

بےلگام
08-15-2012, 07:31 AM
کئی لاپتہ میری لَعبتیں جو کسی طرف کی نہ ہوسکیں
جو نہ آنے والوں کے ساتھ تھیں جو نہ جانے والوں کو روسکیں
کہیں تار ساز سے کٹ گئی کسی مطربہ کی رگ گُلُو
مئے آتشیں میں وہ زہر تھا کہ تڑخ گئے قدح و سَبُو

بےلگام
08-15-2012, 07:31 AM
کوئی نَے نواز تھا دم بخود کہ نفس سے حدت جاں گئی
کوئی سر بہ زانو تھا باربُد کہ صدائے دوست کہاں گئی
کہیں نغمگی میں وہ بَین تھے کہ سماعتوں نے سُنے نہیں
کہیں گونجتے تھے وہ مرثیے کہ انیس نے بھی کہے نہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:31 AM
یہ جو سنگ ریزوں کے ڈھیر ہیں یہاں موتیوں کی دکان تھی
یہ جو سائبان دھوئیں کے ہیں یہاں بادلوں کی اڑان تھی
جہاں روشنی ہے کھنڈر کھنڈر یہاں قُمقُموں سے جوان تھے
جہاں چیونٹیاں ہوئیں خیمہ زن یہاں جگنوؤں کے مکان تھے

بےلگام
08-15-2012, 07:31 AM
کہیں آبگینہ خیال کا کہ جو کرب ضبط سے چُور تھا
کہیں آئینہ کسی یاد کا کہ جو عکسِ یار سے دور تھا
مرے بسملوں کی قناعتیں جو بڑھائیں ظلم کے حوصلے
مرے آہوؤں کا چَکیدہ خوں جو شکاریوں کو سراغ دے

بےلگام
08-15-2012, 07:32 AM
مری عدل گاہوں کی مصلحت مرے قاتلوں کی وکیل ہے
مرے خانقاہوں کی منزلت مری بزدلی کی دلیل ہے
مرے اہل حرف و سخن سرا جو گداگروں میں بدل گئے
مرے ہم صفیر تھے حیلہ جُو کسی اور سمت نکل گئے

بےلگام
08-15-2012, 07:32 AM
کئی فاختاؤں کی چال میں مجھے کرگسوں کا چلن لگا
کئی چاند بھی تھے سیاہ رُو کئی سورجوں کو گہن لگا
کوئی تاجرِ حسب و نسب کوئی دیں فروشِ قدیم ہے
یہاں کفش بر بھی امام ہیں یہاں نعت خواں بھی کلیم ہے

بےلگام
08-15-2012, 07:33 AM
کوئی فکر مند کُلاہ کا کوئی دعوٰی دار قبا کا ہے
وہی اہل دل بھی ہیں زیبِ تن جو لباس اہلِ رَیا کا ہے
مرے پاسباں، مرے نقب زن مرا مُلک مِلکِ یتیم ہے
میرا دیس میرِ سپاہ کا میرا شہر مال غنیم ہے

بےلگام
08-15-2012, 07:33 AM
جو روش ہے صاحبِ تخت کی سو مصاحبوں کا طریق ہے
یہاں کوتوال بھی دُزد شب یہاں شیخ دیں بھی فریق ہے
یہاں سب کے نِرخ جدا جدا سے مول لو اسے تول دو
جو طلب کرے کوئی خوں بہا تو دہن خزانے کے کھول دو

بےلگام
08-15-2012, 07:33 AM
وہ جو سرکشی کا ہو مرتکب اسے قُمچیوں سے زَبُوں کرو
جہاں خلقِ شہر ہو مشتعل اسے گولیوں سے نگوں کرو
مگر ایسے ایسے غنی بھی تھے اسی قحط زارِ دمشق میں
جنھیں کوئے یار عزیز تھا جو کھڑے تھے مقتلِ عشق میں

بےلگام
08-15-2012, 07:33 AM
کوئی بانکپن میں تھا کوہکن تو جنوں میں قیس سا تھا کوئی
جو صراحیاں لئے جسم کی مئے ناب خوں سے بھری ہوئی
تھے صدا بلب کہ پیو پیو یہ سبیل اہل وفا کی ہے
یہ نشید نوشِ بدن کرو یہ کشید تاکِ وفا کی ہے

بےلگام
08-15-2012, 07:34 AM
کوئی تشنہ لب ہی نہ تھا یہاں جو پکارتا کہ اِدھر اِدھر
سبھی مفت بر تھے تماشہ بیں کوئی بزم میں کوئی بام پر
سبھی بے حسی کے خمار میں سبھی اپنے حال میں مست تھے
سبھی راہروانِ رہِ عدم مگر اپنے زعم میں ہست تھے

بےلگام
08-15-2012, 07:34 AM
سو لہو کے جام انڈیل کر مرے جانفروش چلے گئے
وہ سکوُت تھا سرِ مے کدہ کہ وہ خم بدوش چلے گئے
کوئی محبسوں میں رَسَن بہ پا کوئی مقتلوں میں دریدہ تن
نہ کسی کے ہاتھ میں شاخ نَے نہ کسی کے لب پ گُلِ سخن

بےلگام
08-15-2012, 07:34 AM
اسی عرصہء شب تار میں یونہی ایک عمر گزر گئی
کبھی روز وصل بھی دیکھتے یہ جو آرزو تھی وہ مرگئی
یہاں روز حشر بپا ہوئے پہ کوئی بھی روز جزا نہیں
یہاں زندگی بھی عذاب ہے یہاں موت بھی شفا نہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:34 AM
وہ نہیں ہے تو اس کی آس رہے
ایک جائے تو ایک پاس ہی رہے

جب بھی کسنے لگا، اتار دیا
اس بدن پر کئی لباس رہے

بےلگام
08-15-2012, 07:35 AM
ایک دن میں اگر لہو پی لُو ں
کئی دن برتنوں میں باس رہے

دونوں ایک دوسرے کا منہ دیکھیں
آئینہ، آئینے کے پاس رہے

بےلگام
08-15-2012, 07:35 AM
آج ہم سب کے ساتھ خوب ہنسے
اور پھر دیر تک اداس رہے

بےلگام
08-15-2012, 07:37 AM
ہم فقیروں کی صُورتوں پہ نہ جا

ہم کئی روپ دھار لیتے ہیں

زندگی کے اُداس لمحوں کو

مُسکرا کر گزار لیتے ہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:37 AM
جسم و جاں کے زنداں میں روشنی کی خواہش کی
ہم بھی کیسے ناداں تھے کس خوشی کی خواہش کی

ہر طرف سکوں سا ہے دل ہے بے سکوں لیکن
ہم نے کب بھلا ایسی بے کلی کی خواہش کی

بےلگام
08-15-2012, 07:37 AM
بد گمانیاں جس کے دل پہ چھائی ہیں ہر دم
ہم نے کیوں بھلا اُس سے دوستی کی خواہش کی

تم نے کیوں جدائی کو لکھ دیا مقدّر میں
ہم نے کب تمہارے بن زندگی کی خواہش کی

بےلگام
08-15-2012, 07:37 AM
کیسے تجھ کو سمجھاؤں دل نے کیوں میرے
ڈوبتے ستارے سے روشنی کی خواہش کی

بےلگام
08-15-2012, 07:38 AM
جو اتر کے زینہ شام سے تیری چشم خوش میں سما گئے
وہی جلتے بجھتے چراغ سے میرے بام و در کو سجاگئے

یہ عجب کھیل ہے پیار کا ، میں نے آپ دیکھا یہ معجزہ
وہ جو لفظ میرے گماں میں تھے تیری زباں پہ آگئے

بےلگام
08-15-2012, 07:39 AM
وہ جو گیت تم نے سنا نہیں ، میری عمر بھر کا ریاض تھا
میرے درد کی تھی وہ داستاں جسے تم ہنسی میں اڑا گئے

وہ چراغ جان کبھی جس کی لو نہ کسی ہوا سے نگوں ہوئی
تیرے بے وفائی کے وسوسے اسے چپکے چپکے بجھاگئے

بےلگام
08-15-2012, 07:39 AM
وہ تھا چاند شام وصال کا کہ تھا روپ تیرے جمال کا
میری روح سے میری آنکھ تک کسی روشنی میں نہاگئے

یہ بندگان نیاز ، یہ تمام ہیں وہی لشکری
جنہیں زندگی نے امان نہ دی تو تیرے حضور میں آگئے

بےلگام
08-15-2012, 07:39 AM
وہ عجب پھول سے لفظ تھے تیرے ہونٹ *جس سے مہک اٹھے
میرے دشت خواب میں دور تک کوئی باغ جیسے لگا گئے

میری عمر سے نہ سمٹ سکے میرے دل میں اتنے سوال تھے
میرے دل میں جتنے جواب تھے تیری اک نگاہ میں آگئے

بےلگام
08-15-2012, 07:39 AM
گلوں ميں رنگ بھرے باد نو بہار چلے
چلے بھي آؤکہ گلشن کا کاروبار چلے

قفس اداس ہے يارو صبا سے کچھ تو کہ
کہيں تو بہر خدا آج ذکر يار چلے

بےلگام
08-15-2012, 07:39 AM
کبھي تو صبح ترے کنج لب سے ہو آغاز
کبھي تو شب سر کاکل سے مشکبار چلے

بڑا ہے درد کا رشتہ ،يہ دل غريب سہي
تمہارے نام پہ آئيں گے غمگسار چلے

بےلگام
08-15-2012, 07:40 AM
جو ہم پہ گزري سو گزري مگر شب ہجراں
ہمارے اشک تري عاقبت سنوار چلے

حضور يار ہوئي دفتر جنوں کي طلب
گرہ ميں لے کر گريبان کا تار تار چلے

بےلگام
08-15-2012, 07:40 AM
مقام فیض کوئی راہ میں جچا ہی نہیں
جو کوئے یار سے نکلے تو سوئے دار چلے

بےلگام
08-15-2012, 07:40 AM
جو ہم پہ گزري سو گزري مگر شب ہجراں
ہمارے اشک تري عاقبت سنوار چلے

مقام فیض کوئی راہ میں جچا ہی نہیں
جو کوئے یار سے نکلے تو سوئے دار چلے

بےلگام
08-15-2012, 07:40 AM
اس سے بولو کہ نہ ایسے اچھالے جائے
وہ جو دریا ہے تو مجھ کو بھی بہا لے جائے

پھول ہے تو اپنی خوشبو سے مہکا دے مجھ کو
ہے جو کانٹا تو میرے درد بڑھا لے جائے

بےلگام
08-15-2012, 07:41 AM
پانیوں سے اٹا میں تنہا بادل ٹھہرا
اپنے سنگ مجھ کو بھی باد صبا لے جائے

ملے کاش ہر اک کو اس کی وفاؤں کا صلہ
ہر مجرم عشق اپنے حصے کی سزا لے جائے

بےلگام
08-15-2012, 07:41 AM
چلے جو بھی مسافر میری نگری سے تو فقط
اک استدا ہے کہ وہ ماں کی دعا لے جائے

کوئی تو اترے مسیحا میری بستی میں بھی ایسا
سارے روٹھے ہوئے باسی وہ منا لے جائے

بےلگام
08-15-2012, 07:41 AM
ہم فقیروں کے مقدر میں نہیں تھمنا کاشی
چلے چلیں گے جس سمت قضا لے جائے

بےلگام
08-15-2012, 07:41 AM
میرا نام تیرے لبوں پہ ہو ، میرا ذکر دل سے کیا بھی کر
تو جفا شعار مزاج کوکبھی آشنا ءِ وفا بھی کر

تیری یاد میں تیری چاہ میں مجھے چَین ہے نہ قرار ہے
میری یاد میں میری چاہ میں ذرا بے قرار ہوا بھی کر

بےلگام
08-15-2012, 07:41 AM
تیری جُستجو ، تیری آرزو ، میری ذندگی کی نمُود ہے
میری جُستجو ۔ میری آرزو ، کبھی ذندگی میں کیا بھی کر

وہ جو راستہ ، وہ جو مَوڑ تھا جہاں پہلی بار ملے تھے ہم
اُسی راستے ۔ اُسی مَوڑ پر ، کسی شام آ کے ملا بھی کر

بےلگام
08-15-2012, 07:42 AM
تیری راہ میں ، تیرے ساتھ میں چلا جا رہا ہوں قدم قدم
میری راہ میں میرے ساتھ میں، کبھی دو قدم تو چلا بھی کر

تیرا واسطہ تیرا راستہ میرے دِل نظر سے جُدا نہیں
میرا واسطہ ، میرا راستہ ، تو بھی دل نظر میں رکھا بھی کر

بےلگام
08-15-2012, 07:42 AM
یہ نِصاب ِ مکتب ِ عشق ہے ، تُو شریک ِ درس ہوا تَو سُن
میں لکھا کرو، تُو پڑھا کرے،میں پڑھا کروں ، تُو لکھا بھی کر

بےلگام
08-15-2012, 07:43 AM
ہر لمحہ تیرے ہونٹو ں پہ مسکان رہے
جیون کا ہر غم تجھ سے انجان رہے
جس کے ساتھ بھی گزارو تم اپنی زندگی
ہمیشہ وہ بن کر تیری جان رہے

بےلگام
08-15-2012, 07:45 AM
کس سے مانگیں، کہاں جائیں، کس سے کہیں، اور دنیا میں حاجت روا کون ہے
سب کا داتا ہے تُو، سب کو دیتا ہے تُو، تیرے بندوں کا تیرے سوا کون ہے

بےلگام
08-15-2012, 07:46 AM
وہ دل کا برا نہ بے وفا تھا
بس مجھ سے یونہی بچھڑ گیا تھا
لفظوں کی حدوں سے ماوراء تھا
اب کس سے کہوں وہ شخص کیا تھا
وہ میری غزل کا آئینہ تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:46 AM
ہر شخص یہ بات جانتا تھا
ہر سمت اُسی کا تذکرہ تھا
ہر دل میں وہ جیسے بس رہا تھا
میں اُس کی انا کا آسرا تھا
وہ مجھ سے کبھی نہ روٹھتا تھا
میں دھوپ کے بن میں جل رہا تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:46 AM
وہ سایہء ابر بن گیا تھا
میں بانجھ رتوں کا آشنا تھا
وہ موسمِ گُل کا ذائقہ تھا
اک بار بچھڑ کے جب ملا تھا
وہ مجھ سے لپٹ کے رو پڑا تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:47 AM
کیا کچھ نہ اُسے کہا گیا تھا
اُس نے تو لبوں کو سی لیا تھا
وہ چاند کا ہمسفر تھا شائد
راتوں کو تمام جاگتا تھا
ہونٹوں میں گُلوں کی نرم خوشبو
باتوں میں تو شہد گھولتا تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:47 AM
کہنے کو جدا تھا مجھ سے لیکن
وہ میری رگوں میں گونجتا تھا
اُس نے جو کہا کیا وہ دل نے
انکار کا کس میں حوصلہ تھا
یوں دل میں تھی یاد اُس کی جیسے
مسجد میں چراغ جل رہا تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:47 AM
مت پوچھ حجاب کے قرینے
وہ مجھ سے بھی کم ہی کُھل سکا تھا
اُس دن مرا دل بھی تھا پریشاں
وہ بھی میرے دل سے کچھ خفا تھا
میں بھی تھا ڈرا ہوا سا لیکن
رنگ اُس کا بھی کچھ اُڑا اُڑا تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:47 AM
اک خوف سا ہجر کی رتوں کا
دونوں پہ محیط ہو چلا تھا
اک راہ سے میں بھی تھا گریزاں
اک موڑ پہ وہ بھی رک گیا تھا
اک پل میں جھپک گئیں جو آنکھیں
منظر ہی نظر میں دوسرا تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:47 AM
سوچا تو ٹھہر گئے زمانے
دیکھا تو وہ دور جا چکا تھا
قدموں سے زمیں سرک گئی تھی
سورج کا بھی رنگ سانولا تھا
چلتے ہوئے لوگ رُک گئے تھے
ٹھہرا ہو شہر گھومتا تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:48 AM
سہمے ہوئے پیڑ کانپتے تھے
پتّوں میں ہراس رینگتا تھا
رکھتا تھا میں جس میں خواب اپنے
وہ کانچ کا گھر چٹخ گیا تھا
ہم دونوں کا دکھ تھا ایک جیسا
احساس مگر جدا جدا تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:48 AM
کل شب وہ ملا تھا دوستوں
کہتے ہیں اداس لگ رہا تھا
محسن یہ غزل کہہ رہی ہے
شائد ترا دل دُکھا ہوا تھا۔

بےلگام
08-15-2012, 07:48 AM
کسی سے دل کی حکایت کبھی کہا نہیں کی
وگرنہ زندگی ہم نے بھی کیا سے کیا نہیں کی

ہر اک سے کون محبت نباہ سکتا ہے
سو ہم نے دوستی یاری تو کی ، وفا نہیں کی

بےلگام
08-15-2012, 07:49 AM
شکستگی میں بھی پندارِ دل سلامت ہے
کہ اس کے در پہ تو پہنچے مگر صدا نہیں کی

شکایت اس کی نہیں ہے کہ اس نے ظلم کیا
گلہ تو یہ ہے کہ ظالم نے انتہا نہیں کی

بےلگام
08-15-2012, 07:49 AM
وہ نادہند اگر تھا تو پھر تقاضا کیا
کہ دل تو لے گیا قیمت مگر ادا نہیں کی

عجیب آگ ہے چاہت کی آگ بھی کہ فراز
کہیں جلا نہیں کی اور کہیں بجھا نہیں کی

بےلگام
08-15-2012, 07:49 AM
جو بھی حالات ہوں پیچھے نہیں ہٹنے والے
ہم ہیں عُشّاق تیری آن پہ کٹنے والے

چڑھتے سورج کو بھلا روک سکا ہے کوئی
کون کہتا ہے یہ بادل نہیں چھٹنے والے

بےلگام
08-15-2012, 07:49 AM
ہم وہ خورشید جہاں تاب ہیں چمکے جو سدا
ہم کوئی چاند نہیں ہیں جو ہوں گھٹنے والے

کیسے پاؤں ہیں جنہیںراہ کے کانٹے نہ چُبھیں
چہرے ہی کیا جو نہیں دھُول سے اٹنے والے

بےلگام
08-15-2012, 07:49 AM
تیرے چہرے کے بدلتے ہوئے رنگوں کی قسم
عمر بھر ایک سبق ہم نہیں رٹنے والے

ٹوٹ بھی جائیں تو دریا میں رہیں گے اکبر
ہم وہ دھارے ہیں جو لہروں میں ہیں بٹنے والے

بےلگام
08-15-2012, 07:50 AM
قریہِ جاں میں کوئی پُھول کِھلانے آئے
وہ مرے دل پہ نیا زخم لگانے آئے

میرے ویران دریچوں میں بھی خُوشبو جاگے
وہ مرے گھر کے در و بام سجانے آئے

بےلگام
08-15-2012, 07:50 AM
اس سے اک بار تو روٹھوں میں اسی کی مانند
اور مری طرح سے وہ مجھ کو منانے آئے

اسی کُوچے میں کئی اس کے شناسا بھی تو ہیں
وہ کسی اور سے ملنے کے بہانے آئے

بےلگام
08-15-2012, 07:50 AM
اب نہ پوچھوں گی میں کھوئے ہوئے خوابوں کا پتہ
وہ اگر آئے تو کچھ بھی نہ بتانے آئے

بےلگام
08-15-2012, 07:51 AM
اس سے اک بار تو روٹھوں میں اسی کی مانند
اور مری طرح سے وہ مجھ کو منانے آئے

اسی کُوچے میں کئی اس کے شناسا بھی تو ہیں
وہ کسی اور سے ملنے کے بہانے آئے

بےلگام
08-15-2012, 07:51 AM
دنیا کے واسطے تو وفا کی مثال تھا
وہ بھی محبتوں میں میرا ہم خیال تھا

جس کا بھی ہاتھ تھاما اسی سے بچھڑ گےء
کوءی تو اپنے ہاتھ میں ایسا کمال تھا

بےلگام
08-15-2012, 07:51 AM
کوئی ادا شناسِ محبت ہمیں بتائے
جو ہم کو بھول جائے وہ کیوں ہم کو یاد آئے

وہ جانِ آرزو کے ہے سرمایئہ حیات
کیوں اس کی یاد غم کی گھٹا بن کے دل پہ چھائے

بےلگام
08-15-2012, 07:52 AM
سمندر میں اترتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں
تری آنکھوں کو پرھتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

تمہارا نام لکھنے کی اجازت چھن گیی جب سے
کویی بھی لفظ لکھتاہوں توآنکھیں بھیگ جاتی ہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:52 AM
تری یادوں کی خوشبو کھڑکیوں میں رقص کرتی ہے
ترے غم میں سلگتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

میں ہنس کے جھیل لیتا ہوں جدایی کی سبھی رسمیں
گلے جب اس کے لگتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:52 AM
نہ جانے ہوگیا ہوں میں اتنا حساس کب سے
کسی سے بات کرتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

وہ سب گذرے ہوے لمحات مجھہ کو یاد آتے ہیں
تمہارے خط جو پڑھتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:52 AM
میں سارادن بہت مصروف رہتا ہوں مگرجونہی
قدم چوکھٹ پر رکھتاہوں آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

ہر اک مفلس کے ماتھے پر الم کی داستانیں ہیں
کویی چہرہ بھی پڑھتا ہوںتو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:52 AM
بڑےلوگوں کے اونچے بدنمااور سرد محلوں کو
غریب آنکھوں سے تکتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

ترے کوچےاب میرا تعلق واجبی سا ہے
مگر جب بھی گذرتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:53 AM
ہزاروں موسموں کی حکمرانی ہے اب میرے دل میں
ظفرمیں جب بھی ہنستا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:53 AM
پھر ساون رت کی پون چلی تم یاد آئے
پھر پتوں کی پازیب بجی تم یاد آئے

پھر کونجیں بولیں گھاس کے ہرے سمندر میں
رت آئی پیلے پھولوں کی تم یاد آئے

بےلگام
08-15-2012, 07:53 AM
پھر کاگا بولا گھر کے سونے آنگن میں
پھر امرت رس کی بوند پڑی تم یاد آئے

پہلے تو میں چیخ کے رویا اور پھر ہنسنے لگا
بادل گرجا بجلی چمکی تم یاد آئے

بےلگام
08-15-2012, 07:53 AM
دن بھر تو میں دنیا کے دھندوں میں کھویا رہا
جب دیواروں سے دھوپ ڈھلی تم یاد آئے

بےلگام
08-15-2012, 07:54 AM
میری چاہت کی بہت لمبی سزا دو مجھ کو
کرب تنہائی میں جینے کی دعا دو مجھ کو


خود کو رکھ کر میں کہیں بھول گئی ہوں شاید
تم میری ذات سے اک بار ملا دو مجھ کو

بےلگام
08-15-2012, 07:54 AM
کرو نا بات ایسی..ھنستے ھنستے...
نا دو سوغات ایسی .ھنستے ھنستے...

دکھے دل جس سے وہ نا لفظ بولو...
جو کھنا چاھتے ھو اس کو تولو..

بےلگام
08-15-2012, 07:55 AM
ان گنت صدیوں کے تاریک بہیمانہ طلسم
ریشم و اطلس و کمخواب میں بنواےء ہوےء
جا بجا بکتے ہوےء کوچہ و بازار میں جسم
خاک میں لتھڑے ہوےء خون میں نہلاےء ہوےء

بےلگام
08-15-2012, 07:55 AM
آپ کو بھول جائیں ہم ، اتنے تو بےوفا نہیں
آپ سے کیا گلہ کریں آپ سے کچھ گلہ نہیں

شیشہِ دل کو توڑنا اُن کا تو ایک کھیل ہے
ہم سے ہی بھول ہوگئی اُن کی کوئی خطا نہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:55 AM
کاش وہ اپنے غم مجھے دے دے تو کچھ سکون ملے
وہ کتنا بدنصیب ہے غم ہی جسے ملا نہیں

جرم ہےگر وفا تو کیا ، کیوں بےوفا کو چھوڑ دوں
کہتے ہیں اس گناہ کی ہوتی کوئی سزا نہیں

بےلگام
08-15-2012, 07:56 AM
یہ ہم زمین پہ چل کر روا روی میں گرے
یہ آپ اتنی بلندی سے کس خوشی میں گرے
شکستہ پا بھی ہم، اندھے بھی ہم گرے بھی تو کیا
نظر پہ ناز جنہیں تھا وہ روشنی میں گرے

بےلگام
08-15-2012, 07:56 AM
ہماری راہ میں گہرا اَنا کا کھڈ بھی تھا
اسی میں گرنے کا ڈرتھا ہمیں ، اسی میں گرے
تمام کوچہ و بازار گھوم گھام آئے
گرے جو آکے تو ہم اپنی ہی گلی میں گرے

بےلگام
08-15-2012, 07:56 AM
ہماری منطق الگ ہے، ہماری سوچ الگ
کہ ہم ندی میں سمندر کی دوستی میں گرے
چھپا چھپا کے جو اس سے رکھے تھے چند آنو
اسی کے سامنے مضطرہنسی ہنسی میں گرے

بےلگام
08-15-2012, 07:56 AM
کانٹوں سے گزر جانا شعلوں سے نکل جانا
پھولوں کی بستی میں جانا تو سنبھل جانا

دن اپنے چراغوں کی مانند گزرتے ہیں
ہر صبح کو بجھ جانا ہر شام کو جل جانا

بےلگام
08-15-2012, 07:56 AM
بچوں ہی سی فطرت ہے ہم اہل محبت کی
ضد کرنا مچل جانا پھر خود ہی سنبھل جانا


وہ شخص بھلا میرا کیا ساتھ نبھائے گا
موسم کی طرح جس نے سیکھا ہے بدل جانا

بےلگام
08-15-2012, 07:57 AM
مجھے خوابوں پہ اعتبار نہیں رہتا
جیسے وقت کو کسی کا انتظار نہیں رہتا

لب پہ لے آنے سے سارا دل کا حال
میری جان ! ایسے اقرار ، اقرار نہیں رہتا

بےلگام
08-15-2012, 07:57 AM
حوصلے ہو جائیں پست ، منزل کو بھول جائیں
پھر لوہے کا یہ ٹکڑا ، اوزار نہیں رہتا

اب آ بھی جاؤ ، بہت ہوا انتظار .....
اتنی دوریوں میں پیار ، پیار نہیں رہتا

بےلگام
08-15-2012, 07:57 AM
مرے بس میں یا تو یا رب، وہ ستم شعار ہوتا
یہ نہ تھا تو کاش دل پر مجھے اختیار ہوتا

پسِ مرگ کاش یوں ہی، مجھے وصلِ یار ہوتا
وہ سرِ مزار ہوتا، میں تہِ مزار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 07:57 AM
ترا میکدہ سلامت، ترے خم کی خیر ساقی
مرا نشہ کیوں اُترتا، مجھے کیوں خمار ہوتا

مرے اتّقا کا باعث، تو ہے میری ناتوانی
جو میں توبہ توڑ سکتا، تو شراب خوار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 07:58 AM
میں ہوں نامراد ایسا کہ بلک کے یاس روتی
کہیں پا کے آسرا کچھ جو امیدوار ہوتا

نہیں پوچھتا ہے مجھ کو، کوئی پھول اس چمن میں
دلِ داغدار ہوتا تو گلے کا ہار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 07:58 AM
وہ مزا دیا تڑپ نے کہ یہ آرزو ہے یا رب
مرے دونوں پہلوؤں میں، دلِ بے قرار ہوتا

دمِ نزع بھی جو وہ بُت، مجھے آ کے مُنہ دکھاتا
تو خدا کے منہ سے اتنا نہ میں شرم سار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 07:58 AM
نہ مَلَک سوال کرتے، نہ لَحَد فشار دیتی
سرِ راہِ کوئے قاتل، جو مرا مزار ہوتا

جو نگاہ کی تھی ظالم، تو پھر آنکھ کیوں چُرائی
وہی تیر کیوں نہ مارا، جو جگر کے پار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 07:58 AM
میں زباں سے تم کو سچّا، کہو لاکھ بار کہہ دُوں
اسے کیا کروں کہ دل کو نہیں اعتبار ہوتا

مری خاک بھی لَحَد میں، نہ رہی امیر باقی
انہیں مرنے ہی کا اب تک، نہیں اعتبار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 07:58 AM
مجھے تم یاد آتے ہو ۔ ۔
کسی سنسان سپنے میں چھپی خوائش کی حدت میں
کسی مصروفیت کے موڑ پر
تنہائی کے صحراؤں میں یا پھر
کسی انجان بیماری کی شدت میں

بےلگام
08-15-2012, 07:59 AM
“مجھے تم یاد آتے ہو“

کسی بچھڑے ہوئے کی چشم نم کے نظارے پر
کسی بیتے ہوئے دن کی تھکن کی اوٹ سے
یا پھر تمہارے ذکر میں گزری ہوئی شب کے اشارے پر
کسی بستی کی بارونق سڑک پر
اور کسی دریاَ ، کسی ویران جنگل کے کنارے پر

بےلگام
08-15-2012, 07:59 AM
مجھے تم یاد آتے ہو ۔ ۔ ۔

مری چپ کے کنویں میں
آرزوؤں کے بدن جب تیرتے ہیں
اور کنارے سے کوئی بولے
تو لگتا ہے اجل آواز دیتی ہے

بےلگام
08-15-2012, 07:59 AM
مری بے چینیوں میں جب تمہاری تندخور رنجش کھٹکتی ہے
تمہاری بے دردی سلگتی ہے
یا پھر جب مری آنکھوں کے صحرا میں
تمہاری یاد کی تصویر جلتی ہے ، جدائی آنکھ ملتی ہے

بےلگام
08-15-2012, 07:59 AM
مجھے تم یاد آتے ہو ۔ ۔ ۔
مجھے تم یاد آتے ہو۔ ۔ ۔ ۔

مقدر کے ستا روں پر
زمانوں کے اشاروں پر
ادا سی کے کناروں پر
کبھی ویران شہروں میں
کبھی سنسان رستوں پر
کبھی حیران آنکھوں میں
کبھی بے جان لمحوں پر

بےلگام
08-15-2012, 07:59 AM
مجھے تم یاد آتے ہو ۔ ۔ ۔ ۔

سہانی شام ہو کوئی ۔ ۔۔ ۔
کہیں بدنام ہو کوئی بھلے گلفام کوئی ۔ ۔ ۔۔
کسی کے نام ہو کوئی۔ ۔ ۔ ۔ ۔

بےلگام
08-15-2012, 08:00 AM
مجھے تم یاد آتے ہو ۔ ۔ ۔ ۔

کہیں بارش برس جائے ۔ ۔ ۔۔
کہیں صحرا ترس جائے ۔ ۔۔ ۔
کہیں کالی گھٹا اتر جائے ۔ ۔۔ ۔۔
کہیں باد صبا ٹھہرے ۔۔ ۔ ۔۔۔

بےلگام
08-15-2012, 08:00 AM
لطف وہ عشق میں پائے ہیں کہ جی جانتا ہے
رنج بھی ایسے اٹھائے ہیں کہ جی جانتا ہے

جو زمانے کے ستم ہیں ، وہ زمانہ جانے
تو نے دل اتنے ستائے ہیں کہ جی جانتا ہے

بےلگام
08-15-2012, 08:00 AM
مسکراتے ہوئے وہ مجمعِ اغیار کے ساتھ
آج یوں بزم میں آئے ہیں کہ جی جانتا ہے

انہی قدموں نے تمھارے انہی قدموں کی قسم
خاک میں اتنے ملائے ہیں کہ جی جانتا ہے

بےلگام
08-15-2012, 08:00 AM
یہ نہ تھی ہماری قسمت کہ وصالِ یار ہوتا
اگر اور جیتے رہتے، یہی انتظار ہوتا

ترے وعدے پہ جئے ہم تو یہ جان جھوٹ جانا
کہ خوشی سے مر نہ جاتے اگر اعتبار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:00 AM
تری نازکی سے جانا کہ بندھا تھا عہد بودا
کبھی تُو نہ توڑ سکتا اگر استوار ہوتا

کوئی میرے دل سے پوچھے ترے تیرِ نیم کش کو
یہ خلش کہاں سے ہوتی جو جگر کے پار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:01 AM
یہ کہاں کی دوستی ہے کہ بنے ہیں دوست ناصح
کوئی چارہ ساز ہوتا، کوئی غمگسار ہوتا

رگِ سنگ سے ٹپکتا وہ لہو کہ پھر نہ تھمتا
جسے غم سمجھ رہے ہو یہ اگر شرار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:01 AM
غم اگرچہ جاں گسِل ہے، پہ کہاں بچیں کہ دل ہے
غمِ عشق گر نہ ہوتا، غمِ روزگار ہوتا

کہوں کس سے میں کہ کیا ہے، شب غم بری بلا ہے
مجھے کیا بُرا تھا مرنا اگر ایک بار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:01 AM
ہوئے مر کے ہم جو رُسوا، ہوئے کیوں نہ غرقِ دریا
نہ کبھی جنازہ اُٹھتا، نہ کہیں مزار ہوتا

اُسے کون دیکھ سکتا کہ یگانہ ہے وہ یکتا
جو دوئی کی بو بھی ہوتی تو کہیں دوچار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:01 AM
یہ مسائلِ تصوّف، یہ ترا بیان غالب
تجھے ہم ولی سمجھتے جو نہ بادہ خوار ہوت

بےلگام
08-15-2012, 08:48 AM
عجب اپنا حال ہوتا جو وصال یار ہوتا
کبھی جان صدقے ہوتی، کبھی دل نثار ہوتا

کوئی فتنہ تاقیامت نہ پھر آشکار ہوتا
ترے دل پہ کاش ظالم مجھے اختیار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:48 AM
جو تمہاری طرح تم سے کوئی جھوٹے وعدے کرتا
تمہیں منصفی سے کہہ دو، تمہیں اعتبار ہوتا؟

غمِ عشق میں مزہ تھا جو اسے سمجھ کے کھاتے
یہ وہ زہر ہے کہ آخر، مئے خوشگوار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:48 AM
نہ مزہ ہے دشمنی میں، نہ ہے لطف دوستی میں
کوئی غیر غیر ہوتا، کوئی یار یار ہوتا

یہ مزہ تھا دل لگی کا کہ برابر آگ لگتی
نہ تجھے قرار ہوتا، نہ مجھے قرار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:49 AM
ترے وعدے پر ستمگر، ابھی اور صبر کرتے
اگر اپنی زندگی کا ہمیں اعتبار ہوتا

یہ وہ دردِ دل نہیں ہے کہ ہو چارہ ساز کوئی
اگر ایک بار ملتا، تو ہزار بار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:49 AM
گئے ہوش تیرے زاہد جو وہ چشمِ مست دیکھی
مجھے کیا الٹ نہ دیتی، جو نہ بادہ خوار ہوتا

مجھے مانتے سب ایسا کہ عدو بھی سجدے کرتے
درِ یار کعبہ بنتا جو مرا مزار ہوتا

بےلگام
08-15-2012, 08:49 AM
تمہیں ناز ہو نہ کیونکر، کہ لیا ہے داغ کا دل
یہ رقم نہ ہاتھ لگتی، نہ یہ افتخار ہوت

بےلگام
08-15-2012, 08:49 AM
وہ باتیں تری وہ فسانے ترے
شگفتہ شگفتہ بہانے ترے

بس اک داغِ سجدہ مری کائنات
جبینیں تری ، آستانے ترے

بےلگام
08-15-2012, 08:49 AM
بس اک زخمِ نظّارہ، حصّہ مرا
بہاریں تری، آشیانے ترے

فقیروں کا جمگھٹ گھڑی دو گھڑی
شرابیں تری، بادہ خانے ترے

بےلگام
08-15-2012, 08:50 AM
ضمیرِ صدف میں کرن کا مقام
انوکھے انوکھے ٹھکانے ترے

بہار و خزاں کم نگاہوں کے وہم
برے یا بھلے، سب زمانے ترے

بےلگام
08-15-2012, 08:50 AM
عدم بھی ہے تیرا حکایت کدہ
کہاں تک گئے ہیں فسانے ترے

بےلگام
08-15-2012, 08:50 AM
کب وہ سنتا ہے کہانی میری
اور پھر وہ بھی زبانی میری

خلشِ غمزۂ خوں ریز نہ پوچھ
دیکھ خوں نابہ فشانی میری

بےلگام
08-15-2012, 08:50 AM
کیا بیاں کر کے مرا روئیں گے یار
مگر آشفتہ بیانی میری

ہوں ز خود رفتۂ بیداۓ خیال
بھول جانا ہے نشانی میری

بےلگام
08-15-2012, 08:51 AM
متقابل ہے مقابل میرا
رک گیا دیکھ روانی میری

قدرِ سنگِ سرِ رہ رکھتا ہوں
سخت ارزاں ہے گرانی میری

بےلگام
08-15-2012, 08:51 AM
گرد بادِ رہِ بیتابی ہوں
صرصرِ شوق ہے بانی میری

دہن اس کا جو نہ معلوم ہوا
کھل گئی ہیچ مدانی میری

بےلگام
08-15-2012, 08:51 AM
کر دیا ضعف نے عاجز غالبؔ
ننگِ پیری ہے جوانی میری

بےلگام
08-15-2012, 08:51 AM
کوئی چودھویں* رات کا چاند بن کر تمھارے تصور میں آیا تو ہو گا
کسی سے تو کی ہو گی تم نے محبت، کسی کو گلے سے لگایا تو گا

خیالوں کی انگنائیوں میں میری یاد کے پھول مہکے تو ہوں گے
کبھی اپنی آنکھوں کے کاجل سے تم نے، میرا نام لکھ کر مٹایا تو ہو گا

بےلگام
08-15-2012, 08:51 AM
لبوں سے محبت کا جادو جگا کر، بھری بزم میں، سب سے نظریں بچا کر
نگاہوں کی راہوں سے دل میں سما کر، کسی نے تمہیں بھی چرایا تو ہو گا

کبھی آئینے سے نگاہیں*مل� � کر، جو لی ہو گی بھرپور انگڑائی تم نے
تو گھبرا کے خود تیری انگڑائیوں نے، تیرے حسن کو گُدگُدایا تو ہو گا

بےلگام
08-15-2012, 08:52 AM
نگاہوں میں شمعِ تمنا جلا کر، تکی ہوں گی تم نے بھی راہیں کسی کی
کسی نے تو وعدہ کیا ہو گا تم سے، کسی نے تمہیں بھی رُلایا تو ہو گا

بےلگام
08-15-2012, 08:52 AM
ٹہر گيا تو اس کے زد ميں آئے گا
اس سے پہلے وقت لگائے ٹھوکر چل
تمہاري گرم روي الاماں ارے توبہ
پناہ ڈھونڈتي ہيں گردشيں زمانے کي
گنگنانے کي اگر فرصت ہو

بےلگام
08-15-2012, 08:52 AM
زندگي ساب بھي بن سکتي ہے
ہم سے شفق پرستوں کي شايد ہمارے بعد
صورت بھي ديکھنے کو ترس جائے گي شام
بے سبب آج مرا رو دينا
اک سبب ہوگيا رسوائي کا

بےلگام
08-15-2012, 08:52 AM
ساتھ تم ہو تو يہي رنگ شفق کہلائے
شام فرقت ہوتو عاشق کا لہو کہتے ہيں
سن کے آہٹ دھڑکنے لگتا ہے
ہم نے ديکھا ہے جو حوصلہ دل کا
غرور صبح بہارا کو ہے صباحت پر
تم اپنے رخ سے پرے زلف مشک بوتو کرو

بےلگام
08-15-2012, 08:53 AM
مجھے تنہائیوں کی دھوپ میں چلنے کی عادت ہے
کوئی بھی کیفیت دل میں زیادہ دیر کب اتری
وہی تو جانتا ہے
منتظر تھا کب سے میں اس کا
سوالِ خامشی کے گرم میلوں کی دوپہروں میں
وہ آنکھیں جانتی ہیں
دیر تک اس بند مٹھی میں
میں اس بہتے ہوئے پانی کو
روکے رہ نہیں سکتا
خراشیں دُکھ رہی ہیں

بےلگام
08-15-2012, 08:53 AM
پانی پڑتے ہی جلن کچھ اور بھی ہوگی
جنوں کے حرف یکدم آنسوؤں کا اوڑھ کر چہرہ
ٹپک کر چیختی چنگھاڑتی لہریں بہاتے ہیں
خدا جانے میں اپنی دھوپ کی پگڈنڈیوں کے موڑ
اندھیروں کے تعاقب میں کیوں ایسے دوڑ کر اترا
کہ ٹھاٹھیں مارتا پانی

بےلگام
08-15-2012, 08:53 AM
مری آنکھوں کی ساری سرخ اینٹیں توڑ کر نکلا
یہ آنکھیں جانتی تھیں پانی پڑتے ہی
جلن، کچھ اور بھی ہوگی
وہی یہ جانتا تھا
منتظر اس کا تھا میں کب سے
وہی اک پیاس تھی

بےلگام
08-15-2012, 08:54 AM
جو خشک ہونٹوں پر بنی سسکی
اسی پانی کی
اس کو بھی بہت دن سے ضرورت تھی
کسی سائے بنا اس نے کبھی
چلنا نہیں سیکھا
کسی بھیگی اداسی کا بھی کوئی
پل نہیں چکھا

بےلگام
08-15-2012, 08:54 AM
سو میں نے بخش دی وہ بھی
جو گھر میں ٹین کی چھت تھی
مجھے تنہائیوں کی دھوپ میں
جلنےکی عادت تھی
مجھے تنہائیوں کی دھوپ میں
چلنے کی عادت ہے ۔ ۔ ۔

بےلگام
08-15-2012, 08:54 AM
کسی پہ بے حد عنایتیں ہیں ، کسی سے بے حد شکایتیں ہیں ..
ہمارے حصے میں صرف اپنی صفائیاں ھیں وضاحتیں ہیں
کسی کا مقروض میں نہیں پر ،میرے گریباں پہ ہاتھ سب کے
کوئی میری چاہتوں کا دشمن ،کسی کو درکار چاہتیں ھیں

بےلگام
08-15-2012, 08:54 AM
بچھڑنے پر مجھے اکسا رہی ہے
وہ اب کتنا بدلتی جا رہی ہے

کسی کی یا د میری چشم تر کو
مسلسل رتجگے پہنا رہی ہے

بےلگام
08-15-2012, 08:54 AM
سنبھالوں کیسے اس ریشم بدن کو
وہ ہاتھوں سے پھسلتی جا رہی ہے

محبت میں خسارے کر رہا ہوں
مجھے تاریخ پھر دہرا رہی ہے

بےلگام
08-15-2012, 08:55 AM
میری تصویر اس کے سامنے ہے
وہ لڑکی کس قدر شرما رہی ہے

ہوائے سرد دل کے ساحلوں پر
محبت کے ترانے گا رہی ہے

بےلگام
08-15-2012, 08:55 AM
بچایا تھا جسے مشکل سے میں نے
وہی تصویر اب دھندلا رہی ہے

بےلگام
08-15-2012, 08:55 AM
اے جذبۂ دل گر میں چاہوں ہر چیز مقابل آجائے
منزل کے لیے دو گام چلوں اور سامنے منزل آ جائے


آتا ہے جو طوفاں آنے دے، کشتی کا خدا خود حافظ ہے
مشکل تو نہیں ان موجوں میں خود بہتا ہوا ساحل آ جائے

بےلگام
08-15-2012, 08:55 AM
اے شمع، قسم پروانوں کی، اتنا تُو میری خاطر کرنا
اس وقت بھڑک کر گُل ہونا جب بانیِ محفل آ جائے


اس جذبۂ دل کے بارے میں اک مشورہ تم سے لیتا ہوں
اس وقت مجھے کیا لازم ہے! جب تم پہ میرا دل آ جائے

بےلگام
08-15-2012, 08:55 AM
اے رہبرِ کامل چلنے کو تیار تو ہوں بس یاد رہے
اس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے

ہاں یاد مجھے تم کر لینا، آواز مجھے تم دے لینا
اس راہِ محبت میں کوئی درپیش جو مشکل آ جائے

بےلگام
08-15-2012, 08:56 AM
اے دل کی خلش چل یونہی سہی، چلتا تو ہوں ان کی محفل میں
اس وقت مجھے چونکا دینا جب رنگ پہ محفل آ جائے

بےلگام
08-15-2012, 08:57 AM
نہیں یہ ہم لوگو ں کی عادت ہے ،
چلو میری طرف سے ایک بار پھر

اجازت ہو تو کوئی معصوم سی دعا کر لوں
لفظ زندگی کو میں کو ئی حرفِ وفا کر لوں

بےلگام
08-15-2012, 08:57 AM
بدل لیتے ہیں جہاں سے ستارے راہ اپنی
وہاں سے تمہیں دیکھنے کی میں خطا کر لوں

جہاں شاعری وصف ہے عشق والوں کا
وہیں ڈوب کر خود کو عشق ک انتہا کر لوں

بےلگام
08-15-2012, 08:57 AM
اِک عرصہ ہوا تمہیں سوچا نہیں میں نے
ذرا ٹھہر جاؤ تو اپنے خیالوں کی ابتداء کر لوں

بہت مصروف رکھتے ہیں لمحے شام کے مجھے
اگر کہو تو خود کو ان لمحوں سے جدا کر لوں

بےلگام
08-15-2012, 08:57 AM
سنا ہے چاندنی بانٹتا ہے چاند ستاروں میں
سوچتا ہوں خود کو تمہارا کوئی ستارا کر لوں

چھپا سکوں جہاں تمہیں دنیا کی نظروں سے
شہزاد ٹھہرو ذرا میں خود کو اتنا گہرا کر لوں

بےلگام
08-15-2012, 08:58 AM
زندگی کو نہ بنا لیں وہ سزا میرے بعد
حوصلہ دینا انہیں میرے خدا میرے بعد

ہاتھ اٹھاتے ہوئے ان کو نہ کوئی دیکھے گا
کس کے آنے کی کریں گے وہ دعا میرے بعد

بےلگام
08-15-2012, 08:58 AM
کون گھونگٹ کو اٹھائے گا ستمگر کہہ کر
اور پھر کس سے کریں گے وہ حیا میرے بعد

پھر زمانے میں محبت کی نہ پرسش ہو گی
روئے گی سسکیاں لے لے کے وفا میرے بعد

بےلگام
08-15-2012, 08:58 AM
وہ جو کہتا تھا کہ ناصر کے لئے جیتا ہوں
اس کا کیا جانیئے کیا حال ہوا میرے بعد

بےلگام
08-15-2012, 08:59 AM
فقیرانہ آئے صدا کرچلے
میاں ، خوش رہو ہم دعا کر چلے

جو تجھ بِن نہ جینے کو کہتے تھے ہم
سو اس عہد کو اب وفا کر چلے

بےلگام
08-15-2012, 08:59 AM
شفا اپنی تقدیر ہی میں نہ تھی
کہ مقدور تک تو دوا کر چلے

وہ کیا چیز ہے آہ جس کے لیے
ہر اک چیز سے دل اٹھا کر چلے

بےلگام
08-15-2012, 08:59 AM
کوئی ناامیدانہ کرتے نگاہ
سو تم ہم سے منھ بھی چھپا کر چلے

بہت آرزو تھی گلی کی تری
سو یاں سے لہو میں نہا کر چلے

بےلگام
08-15-2012, 08:59 AM
دکھائی دیے یوں کہ بے خود کیا
ہمیں آپ سے بھی جدا کر چلے

جبیں سجدہ کرتے ہی کرتے گئی
حقِ بندگی ہم ادا کر چلے

بےلگام
08-15-2012, 08:59 AM
پرستش کی یاں تک کہ اے بت تجھے
نظر میں سبھوں کی خدا کر چلے

نہ دیکھا غمِ دوستاں شکر ہے
ہمیں داغ اپنا دکھا کر چلے

بےلگام
08-15-2012, 08:59 AM
گئی عمر در بندِ فکرِ غزل
سو اس فن کو ایسا بڑا کر چلے

کہیں کیا جو پوچھے کوئی ہم سے میر
جہاں میں تم آئے تھے، کیا کر چلے

بےلگام
08-15-2012, 09:00 AM
نسو نهيں تهمتے ميرى آنکهوں سے ابهى تک
جاتے هوئے روتا وه مجهے چهوڑ گيا هے

ارمانوں کى دنيا کے انمول سے سپنے
پل ميں وه سب ميرے سامنے توڑ گيا هے

بےلگام
08-15-2012, 09:00 AM
جان ديتا تها ميرى هر بات په ليکن يونهى
بے سبب دنيا سے ميرى رُخ موڑ گيا هے

دن کى تنہائى کا غم٬ راتوں کى اداسى همراہ
رشته ميرا سارے غموں سے جوڑ گيا هے

بےلگام
08-15-2012, 09:00 AM
اے کاش کوئى جا کے اُسے آج يه پوچهے
تنہا مجهے کس کے سہارے چهوڑ گيا هے ؟

بےلگام
08-15-2012, 09:01 AM
چلیں جی شکریہ آپ نے ہماری معذرت قبول کر لی ،
فر بھی آتے رہیے گا تا کہ حوصلہ افزائی ہوتی رہے

مُجھے نہیں پتا تھا کہ ثنا جی نے آپ کو کارڈ بھیجا تھا

آپ نے تو ہمیں ہلا کر رکھ دیا ، اتنا خوبصورت انتخاب جناب واہ ، کیا بات ہے

بےلگام
08-15-2012, 09:01 AM
کبھی دیکھا ہے تم نے اک نظر شام کے بعد
کتنے چُپ سے لگتے ہیں شجر شامر کے بعد
اتنے چُپ کہ راستے بھی رہیں لاعلم
چھوڑ جائیں گے تیرا نگر شام کے بعد

بےلگام
08-15-2012, 09:01 AM
ہم نے کتنے ہی گُناہ تیری جُدائی میں
جیسے چھوڑ دے طوفان میں کوئی گھر شام کے بعد
شام سے پہلے وہ مست اپنی اُڑانوں میں*رہا
جس کے ہاتھوں*میں تھے ٹُٹے ہوئے پر شام کے بعد

بےلگام
08-15-2012, 09:01 AM
تُو تو سورج ہے تجھے کیا معلوم رات کا دُکھ
کسی روز اُتر کر دیکھ میرے گھر شام کے بعد
لوٹ آئے نا کسی روز وہ آوارہ مزاج
کھول رکھتے ہیں اسی آس پر در شام کے بعد

بےلگام
08-15-2012, 09:02 AM
میرے دل کے باورچی خانے میں
تیرے عشق کا چولہا جلتا ہے
تیرے یاد کے چاول پکتے ہیں
میرا روز پتیلا جلتا ہے

بےلگام
08-15-2012, 09:02 AM
ایک نظر دیکھ کے ہم جان گئے
آپ کیا چیز ھیں پہچان گئے !

پھر بھی زندہ ہوں عجب بات یہ ہے
کب سے وہ لے کے میری جان گئے

بےلگام
08-15-2012, 09:02 AM
تُم جو آئے تھے میری محفل میں-
دل گئے ہاتھ سے ایمان گئے !

جس راہ پر فرشتے نہ پہنچے
اُس جگہ آج سے انسان گئے

بےلگام
08-15-2012, 09:04 AM
اشکِ رواں کی نہر ہے اور ہم ہیں دوستو
اس بے وفا کا شہر ہے اور ہم ہیں دوستو

یہ اجنبی سی منزلیں اور رفتگاں کی یاد
تنہائیوں کا زہر ہے اور ہم ہیں دوستو

بےلگام
08-15-2012, 09:04 AM
لائی ہے اب اُڑا کے گئے موسموں کی باس
برکھا کی رُت کا قہر ہے اور ہم ہیں دوستو

دل کو ہجومِ نکہتِ مہ سے لہو کیے
راتوں کا پچھلا پہر ہے اور ہم ہیں دوستو

بےلگام
08-15-2012, 09:04 AM
پھرتے ہیں مثل موج ہوا شہر شہر میں
آوارگی کی لہر ہے ہم ہیں دوستو

آنکھوں میں اڑ رہی ہے لٹی محفلوں کی دھول
عبرت سراۓ دہر ہے اور ہم ہیں دوستو

بےلگام
08-15-2012, 09:05 AM
خدا ہم کو ایسی خدائی نہ دے
کہ اپنے سوا کچھ دکھائی نہ دے

خطا وار سمجھے گی دنیا تجھے
اب اتنی زیادہ صفائی نہ دے

بےلگام
08-15-2012, 09:05 AM
ہنسو آج اتنا کہ اس شور میں
صدا سسکیوں کی سنائی نہ دے

مجھے ایسی جنت نہیں* چاہیے
جہاں سے مدینہ دکھائی نہ دے

بےلگام
08-15-2012, 09:05 AM
خدا ایسے احساس کا نام ہے
رہے سامنے اور دکھائی نہ دے

بےلگام
08-15-2012, 09:05 AM
دل لہو ہوتا ہے ہو، آنکھیں لہو مت کیجیو
چاہتی ہے جو یہ دنیا وہ کبھو مت کیجیو

رہیو محوِ گفتگو اک آرزو سے را ت دن
آرزو جب روبرو ہو، گفتگو مت کیجی

بےلگام
08-15-2012, 09:05 AM
جا نیو اس کو تبرک، بارگاہِ عشق کا
جب مسک جائے کو ئی دھڑکن، رفو مت کیجیو

سورہء یوسف ہے و ہ رخ دید کو تاکید ہو
ایسے چہرے کی تلا وت بے وضومت کیجیو

بےلگام
08-15-2012, 09:06 AM
مدعا کہہ کر سبک سر کیجیو مت عشق کو
اس انا خو کی انا کو سر خرو مت کیجیو

بے نسب آواز کا مت دیجیو ہر گز جواب
اپنے لہجے کو کبھی بے آبرو مت کیجیو

بےلگام
08-15-2012, 09:06 AM
دربدر،کاسہ بہ کف، شہرت گزیدوں کا یہ غول
ان سے عبرت لیجیو، یہ ہاؤ ہو مت کیجیو

چاک پر کیسے ڈھلا ہے کون، کس آوے کا ہے
جا نیو سب، آئینہ پر روبرو مت کیجیو

بےلگام
08-15-2012, 09:12 AM
اس لڑی کو تالا لگایا جاتا ہے جو جو اندر ہے بند ہوجاے گے نکل لو جلدی سے
http://t2.gstatic.com/images?q=tbn:ANd9GcT-yt5HrzLvEStogJRWEuSyKmczAbEJZkHbkG52f_pv8WiZngMdVU YrJHY8_g