PDA

View Full Version : اردو شاعری



صفحات : [1] 2 3 4

بےلگام
07-23-2012, 08:22 AM
اک چراگہ ہری بھری تھی کہیں
تھی سراپا بہار جس کی زمیں
کیا سماں اس بہار کا ہو بیاں
ہر طرف صاف ندیاں تھیں رواں

بےلگام
07-23-2012, 08:23 AM
تھے اناروں کے بے شمار درخت
اور پیپل کے سایہ دار درخت
ٹھنڈی ٹھنڈی ہوائیں آتی تھیں
طائروں کی صدائیں آتی تھیں

بےلگام
07-23-2012, 08:23 AM
کسی ندی کے پاس اک بکری
چرتے چرتے کہیں سے آ نکلی
جب ٹھہر کر ادھر ادھر دیکھا
پاس اک گائے کو کھڑے پایا

بےلگام
07-23-2012, 08:24 AM
پہلے جھک کر اسے سلام کیا
پھر سلیقے سے یوں کلام کیا
کیوں بڑی بی! مزاج کیسے ہیں
گائے بولی کہ خیر اچھے ہیں

بےلگام
07-23-2012, 08:24 AM
کٹ رہی ہے بری بھلی اپنی
ہے مصیبت میں زندگی اپنی
جان پر آ بنی ہے ، کیا کہیے
اپنی قسمت بری ہے ، کیا کہیے

بےلگام
07-23-2012, 08:25 AM
دیکھتی ہوں خدا کی شان کو میں
رو رہی ہوں بروں کی جان کو میں
زور چلتا نہیں غریبوں کا
پیش آیا لکھا نصیبوں کا

بےلگام
07-23-2012, 08:25 AM
آدمی سے کوئی بھلا نہ کرے
اس سے پالا پڑے ، خدا نہ کرے
دودھ کم دوں تو بڑبڑاتا ہے
ہوں جو دبلی تو بیچ کھاتا ہے

بےلگام
07-23-2012, 08:26 AM
ہتھکنڈوں سے غلام کرتا ہے
کن فریبوں سے رام کرتا ہے
اس کے بچوں کو پالتی ہوں میں
دودھ سے جان ڈالتی ہوں میں

بےلگام
07-23-2012, 08:27 AM
بدلے نیکی کے یہ برائی ہے
میرے اللہ! تری دہائی ہے
سن کے بکری یہ ماجرا سارا
بولی ، ایسا گلہ نہیں اچھا

بےلگام
07-23-2012, 08:27 AM
بات سچی ہے بے مزا لگتی
میں کہوں گی مگر خدا لگتی
یہ چراگہ ، یہ ٹھنڈی ٹھنڈی ہوا
یہ ہری گھاس اور یہ سایا

بےلگام
07-23-2012, 08:28 AM
ایسی خوشیاں ہمیں نصیب کہاں
یہ کہاں ، بے زباں غریب کہاں!
یہ مزے آدمی کے دم سے ہیں
لطف سارے اسی کے دم سے ہیں

بےلگام
07-23-2012, 08:28 AM
اس کے دم سے ہے اپنی آبادی
قید ہم کو بھلی ، کہ آزادی!
سو طرح کا بنوں میں ہے کھٹکا
واں کی گزران سے بچائے خدا

بےلگام
07-23-2012, 08:28 AM
ہم پہ احسان ہے بڑا اس کا
ہم کو زیبا نہیں گلا اس کا
قدر آرام کی اگر سمجھو
آدمی کا کبھی گلہ نہ کرو

بےلگام
07-23-2012, 08:29 AM
گائے سن کر یہ بات شرمائی
آدمی کے گلے سے پچھتائی
دل میں پرکھا بھلا برا اس نے
اور کچھ سوچ کر کہا اس نے

بےلگام
07-23-2012, 08:29 AM
یوں تو چھوٹی ہے ذات بکری کی
دل کو لگتی ہے بات بکری کی

بچے کی د عا
(ما خو ذ)
بچوں کے لیے

بےلگام
07-23-2012, 08:30 AM
لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری
زندگی شمع کی صورت ہو خدایا میری
دور دنیا کا مرے دم سے اندھیرا ہو جائے
ہر جگہ میرے چمکنے سے اجالا ہو جائے

بےلگام
07-23-2012, 08:30 AM
ہو مرے دم سے یونہی میرے وطن کی زینت
جس طرح پھول سے ہوتی ہے چمن کی زینت
زندگی ہو مری پروانے کی صورت یا رب
علم کی شمع سے ہو مجھ کو محبت یا رب

بےلگام
07-23-2012, 08:31 AM
ہو مرا کام غریبوں کی حمایت کرنا
دردمندوں سے ضعیفوں سے محبت کرنا
مرے اللہ! برائی سے بچانا مجھ کو
نیک جو راہ ہو اس رہ پہ چلانا مجھ کو

بےلگام
07-23-2012, 08:31 AM
ٹہنی پہ کسی شجر کی تنہا
بلبل تھا کوئی اداس بیٹھا
کہتا تھا کہ رات سر پہ آئی
اڑنے چگنے میں دن گزارا

بےلگام
07-23-2012, 08:32 AM
پہنچوں کس طرح آشیاں تک
ہر چیز پہ چھا گیا اندھیرا
سن کر بلبل کی آہ و زاری
جگنو کوئی پاس ہی سے بولا

بےلگام
07-23-2012, 08:33 AM
حاضر ہوں مدد کو جان و دل سے
کیڑا ہوں اگرچہ میں ذرا سا
کیا غم ہے جو رات ہے اندھیری
میں راہ میں روشنی کروں گا

بےلگام
07-23-2012, 08:34 AM
اللہ نے دی ہے مجھ کو مشعل
چمکا کے مجھے دیا بنایا
ہیں لوگ وہی جہاں میں اچھے
آتے ہیں جو کام دوسرں کے

بےلگام
07-23-2012, 08:35 AM
میں سوئی جو اک شب تو دیکھا یہ خواب
بڑھا اور جس سے مرا اضطراب
یہ دیکھا کہ میں جا رہی ہوں کہیں
اندھیرا ہے اور راہ ملتی نہیں

بےلگام
07-23-2012, 08:37 AM
لرزتا تھا ڈر سے مرا بال بال
قدم کا تھا دہشت سے اٹھنا محال
جو کچھ حوصلہ پا کے آگے بڑھی
تو دیکھا قطار ایک لڑکوں کی تھی

بےلگام
07-23-2012, 08:38 AM
زمرد سی پوشاک پہنے ہوئے
دیے سب کے ہاتھوں میں جلتے ہوئے
وہ چپ چاپ تھے آگے پیچھے رواں
خدا جانے جانا تھا ان کو کہاں

بےلگام
07-23-2012, 08:38 AM
اسی سوچ میں تھی کہ میرا پسر
مجھے اس جماعت میں آیا نظر
وہ پیچھے تھا اور تیز چلتا نہ تھا
دیا اس کے ہاتھوں میں جلتا نہ تھا

بےلگام
07-23-2012, 08:39 AM
کہا میں نے پہچان کر ، میری جاں!
مجھے چھوڑ کر آ گئے تم کہاں!
جدائی میں رہتی ہوں میں بے قرار
پروتی ہوں ہر روز اشکوں کے ہار

بےلگام
07-23-2012, 08:40 AM
نہ پروا ہماری ذرا تم نے کی
گئے چھوڑ ، اچھی وفا تم نے کی
جو بچے نے دیکھا مرا پیچ و تاب
دیا اس نے منہ پھیر کر یوں جواب

بےلگام
07-23-2012, 08:41 AM
رلاتی ہے تجھ کو جدائی مری
نہیں اس میں کچھ بھی بھلائی مری
یہ کہہ کر وہ کچھ دیر تک چپ رہا
دیا پھر دکھا کر یہ کہنے لگا

بےلگام
07-23-2012, 08:41 AM
سمجھتی ہے تو ہو گیا کیا اسے؟
ترے آنسوؤں نے بجھایا اسے

پر ندے کی فر یاد
بچو ں کے لیے

بےلگام
07-23-2012, 08:45 AM
آتا ہے یاد مجھ کو گزرا ہوا زمانا
وہ باغ کی بہاریں وہ سب کا چہچہانا
آزادیاں کہاں وہ اب اپنے گھونسلے کی
اپنی خوشی سے آنا اپنی خوشی سے جانا

بےلگام
07-23-2012, 08:46 AM
لگتی ہے چوٹ دل پر ، آتا ہے یاد جس دم
شبنم کے آنسوؤں پر کلیوں کا مسکرانا
وہ پیاری پیاری صورت ، وہ کامنی سی مورت
آباد جس کے دم سے تھا میرا آشیانا

بےلگام
07-23-2012, 08:47 AM
آتی نہیں صدائیں اس کی مرے قفس میں
ہوتی مری رہائی اے کاش میرے بس میں!
کیا بد نصیب ہوں میں گھر کو ترس رہا ہوں
ساتھی تو ہیں وطن میں ، میں قید میں پڑا ہوں

بےلگام
07-23-2012, 08:47 AM
آئی بہار کلیاں پھولوں کی ہنس رہی ہیں
میں اس اندھیرے گھر میں قسمت کو رو رہا ہوں
اس قید کا الہی! دکھڑا کسے سناؤں
ڈر ہے یہیں قفسں میں میں غم سے مر نہ جاؤں

بےلگام
07-23-2012, 08:49 AM
جب سے چمن چھٹا ہے ، یہ حال ہو گیا ہے
دل غم کو کھا رہا ہے ، غم دل کو کھا رہا ہے
گانا اسے سمجھ کر خوش ہوں نہ سننے والے
دکھے ہوئے دلوں کی فریاد یہ صدا ہے

بےلگام
07-23-2012, 08:49 AM
آزاد مجھ کو کر دے ، او قید کرنے والے!
میں بے زباں ہوں قیدی ، تو چھوڑ کر دعا لے

خفتگان خاک سے استفسار

بےلگام
07-24-2012, 01:41 AM
مہر روشن چھپ گیا ، اٹھی نقاب روئے شام
شانۂ ہستی پہ ہے بکھرا ہوا گیسوئے شام
یہ سیہ پوشی کی تیاری کس کے غم میں ہے
محفل قدرت مگر خورشید کے ماتم میں ہے

بےلگام
07-24-2012, 01:42 AM
کر رہا ہے آسماں جادو لب گفتار پر
ساحر شب کی نظر ہے دیدۂ بیدار پر
غوطہ زن دریاۓ خاموشی میں ہے موج ہوا
ہاں ، مگر اک دور سے آتی ہے آواز درا

بےلگام
07-24-2012, 01:43 AM
کھنچ لایا ہے مجھے ہنگامۂ عالم سے دور
منظر حرماں نصیبی کا تماشائی ہوں میں
ہم نشین خفتگان کنج تنہائی ہوں میں
تھم ذرا بے تابی دل! بیٹھ جانے دے مجھے

بےلگام
07-24-2012, 01:43 AM
اور اس بستی پہ چار آ نسو گرانے دے مجھے
اے مے غفلت کے سر مستو ، کہاں رہتے ہو تم
کچھ کہو اس دیس کی آ خر ، جہاں رہتے ہو تم
وہ بھی حیرت خانۂ امروز و فردا ہے کوئی؟

بےلگام
07-24-2012, 01:44 AM
اور پیکار عناصر کا تماشا ہے کوئی؟
آدمی واں بھی حصار غم میں ہے محصور کیا؟
اس ولا یت میں بھی ہے انساں کا دل مجبور کیا؟
واں بھی جل مرتا ہے سوز شمع پر پروانہ کیا؟

بےلگام
07-24-2012, 01:45 AM
اس چمن میں بھی گل و بلبل کا ہے افسانہ کیا؟
یاں تو اک مصرع میں پہلو سے نکل جاتا ہے دل
شعر کی گر می سے کیا واں بھی پگل جاتاہے دل؟
رشتہ و پیوند یاں کے جان کا آزار ہیں

بےلگام
07-24-2012, 01:45 AM
اس گلستاں میں بھی کیا ایسے نکیلے خار ہیں؟
اس جہاں میں اک معیشت اور سو افتاد ہے
روح کیا اس دیس میں اس فکر سے آزاد ہے؟
کیا وہاں بجلی بھی ہے ، دہقاں بھی ہے ، خرمن بھی ہے؟

بےلگام
07-24-2012, 01:46 AM
قافلے والے بھی ہیں ، اندیشۂ رہزن بھی ہے؟
تنکے چنتے ہیں و ہاں بھی آ شیاں کے واسطے؟
خشت و گل کی فکر ہوتی ہے مکاں کے واسطے؟
واں بھی انساں اپنی اصلیت سے بیگانے ہیں کیا؟

بےلگام
07-24-2012, 01:46 AM
امتیاز ملت و آئیں کے دیوانے ہیں کیا؟
واں بھی کیا فریاد بلبل پر چمن روتا نہیں؟
اس جہاں کی طرح واں بھی درد دل ہوتا نہیں؟
باغ ہے فردوس یا اک منزل آرام ہے؟

بےلگام
07-24-2012, 01:47 AM
یا رخ بے پردۂ حسن ازل کا نام ہے؟
کیا جہنم معصیت سوزی کی اک ترکیب ہے؟
آگ کے شعلوں میں پنہاں مقصد تاویب ہے؟
کیا عوض رفتار کے اس دیس میں پرواز ہے؟

بےلگام
07-24-2012, 01:48 AM
موت کہتے ہیں جسے اہل زمیں ، کیا راز ہے ؟
اضطراب دل کا ساماں یاں کی ہست و بود ہے
علم انساں اس ولایت میں بھی کیا محدود ہے؟
دید سے تسکین پاتا ہے دل مہجور بھی؟

بےلگام
07-24-2012, 01:48 AM
ترانی’ کہہ رہے ہیں یا وہاں کے طور بھی؟
جستجو میں ہے وہاں بھی روح کو آرام کیا؟
واں بھی انساں ہے قتیل ذوق استفہام کیا؟

بےلگام
07-24-2012, 01:49 AM
آہ! وہ کشور بھی تاریکی سے کیا معمور ہے؟
یا محبت کی تجلی سے سراپا نور ہے؟
تم بتا دو راز جو اس گنبد گرداں میں ہے
موت اک چبھتا ہوا کانٹا دل انساں میں ہے

بےلگام
07-24-2012, 01:49 AM
پروانہ تجھ سے کرتا ہے اے شمع پیار کیوں
یہ جان بے قرار ہے تجھ پر نثار کیوں
سیماب وار رکھتی ہے تیری ادا اسے
آداب عشق تو نے سکھائے ہیں کیا اسے؟

بےلگام
07-24-2012, 01:50 AM
کرتا ہے یہ طواف تری جلوہ گاہ کا
پھونکا ہوا ہے کیا تری برق نگاہ کا؟
آزار موت میں اسے آرام جاں ہے کیا؟
شعلے میں تیرے زندگی جاوداں ہے کیا؟

بےلگام
07-24-2012, 01:50 AM
غم خانۂ جہاں میں جو تیری ضیا نہ ہو
اس تفتہ دل کا نخل تمنا ہرا نہ ہو
گرنا ترے حضور میں اس کی نماز ہے
ننھے سے دل میں لذت سوز و گداز ہے

بےلگام
07-24-2012, 01:51 AM
کچھ اس میں جوش عاشق حسن قدیم ہے
چھوٹا سا طور تو یہ ذرا سا کلیم ہے
پروانہ ، اور ذوق تماشائے روشنی
کیڑا ذرا سا ، اور تمنائے روشنی!

بےلگام
07-24-2012, 07:47 PM
اُداسی میں گِھرا تھا دِل چراغِ شام سے پہلے
نہیں تھا کُچھ سرِ محفل چراغِ شام سے پہلے

حُدی خوانو، بڑھاؤ لَے، اندھیرا ہونے والا ہے
پہنچا ہے سرِ منزل چراغِ شام سے پہلے

بےلگام
07-24-2012, 07:48 PM
دِلوں میں اور ستاروں میں اچانک جاگ اُٹھتی ہے
عجب ہلچل، عجب جِھل مِل چراغِ شام سے پہلے

وہ ویسے ہی وہاں رکھی ہے ، عصرِ آخرِ شب میں
جو سینے پر دھری تھی سِل، چراغِ شام سے پہلے

بےلگام
07-24-2012, 07:48 PM
ہم اپنی عُمر کی ڈھلتی ہُوئی اِک
سہ پہر میں ہیں
جو مِلنا ہے ہمیں تو مِل، چراغِ شام سے پہلے

ہمیں اے دوستو اب کشتیوں میں رات کرنی ہے

بےلگام
07-24-2012, 07:49 PM
کہ چُھپ جاتے ہیں سب ساحل، چراغِ شام سے پہلے

سَحر کا اوّلیں تارا ہے جیسے رات کا ماضی
ہے دن کا بھی تو مُستَقبِل، چراغِ شام سے پہلے

بےلگام
07-24-2012, 07:49 PM
نجانے زندگی اور رات میں کیسا تعلق ہے !
اُلجھتی کیوں ہے اِتنی گلِ چراغِ شام سے پہلے

محبت نے رگوں میں کِس طرح کی روشنی بھردی !
کہ جل اُٹھتا ہے امجد دِل، چراغِ شام سے پہلے

بےلگام
07-24-2012, 07:50 PM
مجھے سارے رنج قبول ہیں اُسی ایک شخص کے پیار میں
مری زیست کے کسی موڈ پر جو مجھے ملا تھا بہار میں

بےلگام
07-24-2012, 07:50 PM
وہی اک امید ہے آخری اسی ایک شمع سے روشنی
کوئی اور اس کے سوا نہیں، مری خواہشوں کے دیار میں

بےلگام
07-24-2012, 07:50 PM
وہ یہ جانتے تھے کہ آسمانوں،کے فیصلے ہیں کچھ اور ہی
سو ستارے دیکھ کے ہنس پڑے مجھے تیری بانہوں کے ہار میں

بےلگام
07-24-2012, 07:51 PM
یہ تو صرف سوچ کا فرق ہے یہ تو صرف بخت کی بات ہے
کوئی فاصلہ تو نہیں ،تری جیت میں مری ہار میں

بےلگام
07-24-2012, 07:51 PM
ذرا دیکھ شہر کی رونقوں سے پرے بھی کوئی جہان ہے
کسی شام کوئی دیا جلا کسی دل جلے کے مزار میں

بےلگام
07-24-2012, 07:52 PM
کسی چیز میں کوئی ذائقہ کوئی لطف باقی نہیں رہا
نہ تری طلب گداز میں نہ مرے ہنر کے وقار میں

بےلگام
07-25-2012, 04:10 AM
سب مایا ہے، سب ڈھلتی پھرتی چھایا ہے
اس عشق میں ہم نے جو کھویا جو پایا ہے
جو تم نے کہا ہے، فیض نے جو فرمایا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:11 AM
ہاں گاہے گاہے دید کی دولت ہاتھ آئی
یا ایک وہ لذت نام ہے جس کا رسوائی
بس اس کے سوا تو جو بھی ثواب کمایا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:11 AM
اک نام تو باقی رہتا ہے، گر جان نہیں
جب دیکھ لیا اس سودے میں نقصان نہیں
تب شمع پہ دینے جان پتنگا آیا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:12 AM
معلوم ہمیں سب قیس میاں کا قصہ بھی
سب ایک سے ہیں، یہ رانجھا بھی یہ انشا بھی
فرہاد بھی جو اک نہر سی کھود کے لایا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:12 AM
کیوں درد کے نامے لکھتے لکھتے رات کرو
جس سات سمندر پار کی نار کی بات کرو
اس نار سے کوئی ایک نے دھوکا کھایا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:13 AM
جس گوری پر ہم ایک غزل ہر شام لکھیں
تم جانتے ہو ہم کیونکر اس کا نام لکھیں
دل اس کی بھی چوکھٹ چوم کے واپس آیا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:13 AM
وہ لڑکی بھی جو چاند نگر کی رانی تھی
وہ جس کی الھڑ آنکھوں میں حیرانی تھی
آج اس نے بھی پیغام یہی بھجوایا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:14 AM
جو لوگ ابھی تک نام وفا کا لیتے ہیں
وہ جان کے دھوکے کھاتے، دھوکے دیتے ہیں
ہاں ٹھوک بجا کر ہم نے حکم لگایا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:14 AM
جب دیکھ لیا ہر شخص یہاں ہرجائی ہے
اس شہر سے دور ایک کُٹیا ہم نے بنائی ہے
اور اس کُٹیا کے ماتھے پر لکھوایا ہے
سب مایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:14 AM
ابھی تو محبوب کا تصور بھی پتلیوں سے مٹا نہیں تھا
گراز بستر کی سلوٹیں ہی میں آسماتی ہے نیند رانی
ابھی ہو اول گزرنے پایا نہیں ستاروں کے کارواں کا
ابھی میں اپنے سے کہہ رہا تھا شب گزشتہ کی اک کہانی
ابھی مرے دوست کے مکاں کے ہرے دریچوں کی چلمنوں سے
سحر کی دھندلی صباحتوں کا غبار چھن چھن کے آ رہا ہے
ابھی روانہ ہوئے ہیں منڈی سے قافلے اونٹ گاڑ یوں کے
فضا میں شور ان گھنٹیوں کا عجب جادو جگا رہا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:16 AM
میں ازل سے تمہاری ہوں پیارے
میں ابد تک تمہاری رہوں گی
مجھ کو چھوڑا ہے کس کے سہارے
کیسے جاؤ گے ،جانے نہ دوں گی
آسماں پر ستارے کہاں ہیں
اور جو ہیں وہ ہمارے کہاں ہیں
زندگی تازگی کھو چکی ہے
بات ہونی تھی جو ہو چکی ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:17 AM
انشا جی کیوں عاشق ہو کر درد کے ہاتھوں شور کرو
دل کو اور دلاسا دے لو من کو میاں کٹھور کرو
آج ہمیں اس دل کی حکایت دور تلک لے جانی ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:17 AM
شاخ پہ گل ہے باغ میں بلبل جی میں مگر ویرانی ہے
عشق ہے روگ کہا تھا ہم نے آپ نے لیکن مانا بھی

بےلگام
07-25-2012, 04:18 AM
عشق میں جی سے جاتے دیکھے انشا جیسے دانا بھی
ہم جس کے لیے ہر دیس پھرے جوگی کا بدل کر بھیس
بس دل کا بھرم رہ جائے گا یہ درد تو اچھا کیا ہوگآ

بےلگام
07-25-2012, 04:18 AM
انشا جی ہاں تمہیں بھی دیکھا درشن چھوٹے نام بہت
چوک میں چھوٹا مال سجا کر لے لیتے ہو دام بہت
یوں تو ہمارے درد میں گھائل صبح نہ ہو شام بہت
اک دن ساتھ ہمارا دو گے اس میں ہمیں کلام بہت
باتیں جن کی گرم بہت ہیں کام انہی کے خام بہت
کافی کی ہر گھونٹ پہ دوہا کہنے میں آرام بہت

بےلگام
07-25-2012, 04:19 AM
دنیا کی اوقات کہی ،کچھ اپنی بھی اوقات کہو
کب تک چاک دہن کوسی کر گونگی بہری بات کہو
داغ جگر کو لالہ رنگیں اشکوں کو برسات کہو
سورج کو سورج نہ پکارو دن کو اندھی رات کہو

بےلگام
07-25-2012, 04:22 AM
ا ب عمر کی نقدی ختم ہوئی
ا ب ہم کو ادھار کی حاجت ہے
ہے کوئی جو ساہو کار بنے
ہے کوئی جو دیون ہار بنے
کچھ سال ،مہینے، دن لوگو
پر سود بیاج کے بن لوگو
ہاںا پنی جاں کے خزانے سے
ہاں عمر کے توشہ خانے سے
کیا کوئی بھی ساہو کار نہیں
کیا کوئی بھی دیون ہار نہیں
جب ناما دھر کا آیا کیوں
سب نے سر کو جھکایا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:23 AM
کچھ کام ہمیں نپٹانے ہیں
جنہیں جاننے والے جانے ہیں
کچھ پیار ولار کے دھندے ہیں
کچھ جگ کے دوسرے پھندے ہیں
ہم مانگتے نہیں ہزار برس
دس پانچ برس دو چار برس
ہاں ،سود بیاج بھی دے لیں گے
ہں اور خراج بھی دے لیں گے
آسان بنے، دشوار بنے
پر کوئی تو دیون ہار بنے
تم کون ہو تمہارا نام کیا ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:23 AM
کچھ ہم سے تم کو کام کیا ہے
کیوں اس مجمع میں آئی ہو
کچھ مانگتی ہو ؟ کچھ لاتی ہو
یہ کاروبار کی باتیں ہیں
یہ نقد ادھار کی باتیں ہیں
ہم بیٹھے ہیں کشکول لیے
سب عمر کی نقدی ختم کیے
گر شعر کے رشتے آئی ہو
تب سمجھو جلد جدائی ہو
اب گیت گیاسنگیت گیا

بےلگام
07-25-2012, 04:23 AM
ہاں شعر کا موسم بیت گیا اب پت جھڑ آئی پات گریں
کچھ صبح گریں، کچھ را ت گریں
یہا پنے یار پرانے ہیں
اک عمر سے ہم کو جانے ہیں
ان سب کے پاس ہے مال بہت
ہاں عمر کے ماہ و سال بہت
ان سب کو ہم نے بلایا ہے
اور جھولی کو پھیلایا ہے
تم جاؤ ان سے بات کریں
ہم تم سے نا ملاقات کری

بےلگام
07-25-2012, 04:24 AM
کیا پانچ برس ؟
کیا عمرا پنی کے پانچ برس ؟
تم جا ن کی تھیلی لائی ہو ؟
کیا پاگل ہو ؟ سو دائی ہو ؟
جب عمر کا آخر آتا ہے
ہر دن صدیاں بن جاتا ہے
جینے کی ہوس ہی زالی ہے
ہے کون جو اس سے خالی ہے
کیا موت سے پہلے مرنا ہے
تم کو تو بہت کچھ کرنا ہے
پھر تم ہو ہماری کون بھلا
ہاں تم سے ہمارا رشتہ ہے
کیاسود بیاج کا لالچ ہے ؟

بےلگام
07-25-2012, 04:24 AM
کسی اور خراج کا لالچ ہے ؟
تم سوہنی ہو ، من موہنی ہو ؛
تم جا کر پوری عمر جیو
یہ پانچ برس، یہ چار برس
چھن جائیں تو لگیں ہزار برس
سب دوست گئے سب یار گئے
تھے جتنے ساہو کار ، گئے
بس ایک یہ ناری بیٹھی ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:24 AM
یہ کون ہے ؟ کیا ہے ؟ کیسی ہے ؟
ہاں عمر ہمیں درکار بھی ہے ؟
ہاں جینے سے ہمیں پیار بھی ہے
جب مانگیں جیون کی گھڑیاں
گستاخ آنکھوں کت جا لڑیاں
ہم قرض تمہیں لوٹا دیں گے
کچھ اور بھی گھڑیاں لا دیں گے
جو ساعت و ماہ و سال نہیں
وہ گھڑیاں جن کو زوال نہیں
لو اپنے جی میں اتار لیا
لو ہم نے تم کو ادھار لیا

بےلگام
07-25-2012, 04:26 AM
دل درد کي شدت سے خون گشتہ و سي پارہ
اس شہر میں پھرتا ہے اک وحشي و آوارہ
شاعر ہے کہ عاشق ہے جوگي ہے کہ بنجارہ

بےلگام
07-25-2012, 04:27 AM
سينے سے گھٹا اٹھے، آنکھوں سے جھڑي بر سے
پھاگن کا نہيں بادل جو چار گھڑي بر سے
برکھا ہے یہ بھادوں کی، جو برسے تو بڑی برسے

بےلگام
07-25-2012, 04:27 AM
ہاں تھام محبت کي گر تھام سکے ڈوري
ساجن ہے ترا ساجن، اب تجھ سےتو کيا چوري
جس کي منادي ہے بستي ميں تري گوري

بےلگام
07-25-2012, 04:27 AM
دور تمہارا دیس ہے مجھ سے اور تمہاری بولی ہے
پھر بھی تمہارے باغ ہیں لیکن من کی کھڑکی کھولی ہے
آؤ کہ پل بھر مل کے بیٹھیں بات سنیں اور بات کہیں
من کی بیتا ،تن کا دکھڑا ، دنیا کے حالات کہیں

بےلگام
07-25-2012, 04:28 AM
اس دھرتی پر اس دھرتی کے بیٹوں کا کیا حال ہوا
رستے بستے ہنستے جگ میں جینا کیوں جنجال ہوا
کیوں دھرتی پہ ہم لوگوں کے خون کی نسدن ہولی ہے
سچ پوچھو تو یہ کہنے کو آج یہ کھڑکی کھولی ہے

بےلگام
07-25-2012, 04:28 AM
بیلا دیوی آج ہزاروں گھاؤ تمہارے تن من ہیں
جانتا ہوں میں جان تمہاری بندھن میں کڑے بندھن میں
روگ تمہارا جانے کتنے سینوں میں بس گھول گیا
دور ہزاروں کوس پہ بیٹھے ساتھی کا من ڈول گیا

بےلگام
07-25-2012, 04:28 AM
یاد ہیں تم کو سانجھے دکھ نے بنگالے کے کال کے دن
راتیں دکھ ور بھوک کی راتیں دن جی کے جنجال کے دن
تب بھی آگ بھری تھی من میں اب بھی آگ بھری ہے من میں
میں تو یہ سو چوں آگ ہی آگ ہے اس جیون میں

بےلگام
07-25-2012, 04:29 AM
ا ب سو نہیں جانا چاہے رات کہیں تک جائے
ا ن کا ہاتھ کہیں تک جائےا پنی بات کہیں تک جائے
سانجھی دھرتی سانجھاسورج ،سانجھے چاند اور تارے ہیں
سانجھی ہیں سبھی دکھ کی ساری باتیں سانجھے درد ہمارے

بےلگام
07-25-2012, 04:29 AM
گولی لاٹھی ہیسہ شاسن دھن دانوں کے لاکھ سہارے
وقت پڑیں کس کو پکاریں جنم جنم کے بھوک کے مارے
برس برس برسات کا بادل ندیاسی بن جائے گا
دریا بھی اسے لوگ کہیں گے ساگر بھی کہلائے گا

بےلگام
07-25-2012, 04:29 AM
جنم جنم کے ترسے من کی کھیتی پھر بھی ترسے گی
کہنے کو یہ روپ کی برکھا پورب پچھم برسے گی
جس کے بھاگ سکندر ہوں گے بے مانگے بھی پائے گا
آنچل کو ترسانے والا خود دامن پھیلائے گا
انشا جی یہ رام کہانی پیت پہلی بوجھے کون
نام لیے بن لاکھ پکاریں بوجھ سہیلی بوجھے کون

بےلگام
07-25-2012, 04:30 AM
وہ جس کے من کے آنگن میں یادوں کی دیواریں ہوں
لاکھ کہیں ہوں روپ جھروکے ،لاکھ البیلی ناریں ہوں
اس کو تو ترسانے والا جنم جنم ترسائے گا
کب وہ پیاس بجھانے والا پیاس بجھانے آئے گا

بےلگام
07-25-2012, 04:30 AM
میرے گھر سے تو سر شام ہوئے ہو رخصت
میرے خلوت کدۂ دل سے نہ جانا ہوگا
ہجر میں اور تو سب موت کے ساماں ہوں گے
اک یہی یاد بہلنے کا بہانا ہوگا

بےلگام
07-25-2012, 04:30 AM
تم تو جانے کو ہو اس شہر کو ویراں کر کے
اب کہاں اس دل و حشی کا ٹھکانا ہوگا
بھیگی راتوں میں فقط درد کے جگنو پکڑیں
سونی راتوں میں کبھی یاد کے تارے چو میں
خواب ہی خواب میں سینے سے لگائیں تجھ کو
تیرے گیسو ہی کبھی درد کے مارے چومیں
اپنے زانو پہ تراسر ہی کوئی دم رکھ لیں
اپنے ہونٹوں سے ترے ہونٹ بھی پیارے چومیں

بےلگام
07-25-2012, 05:29 AM
عقل نے ایک دن یہ دل سے کہا
بھولے بھٹکے کی رہنما ہوں میں
ہوں زمیں پر ، گزر فلک پہ مرا
دیکھ تو کس قدر رسا ہوں میں

بےلگام
07-25-2012, 05:30 AM
کام دنیا میں رہبری ہے مرا
مثل خضر خجستہ پا ہوں میں
ہوں مفسر کتاب ہستی کی
مظہر شان کبریا ہوں میں

بےلگام
07-25-2012, 05:30 AM
کام دنیا میں رہبری ہے مرا
مثل خضر خجستہ پا ہوں میں
ہوں مفسر کتاب ہستی کی
مظہر شان کبریا ہوں میں

بےلگام
07-25-2012, 05:30 AM
بوند اک خون کی ہے تو لیکن
غیرت لعل بے بہا ہوں میں
دل نے سن کر کہا یہ سب سچ ہے
پر مجھے بھی تو دیکھ ، کیا ہوں میں

بےلگام
07-25-2012, 05:30 AM
راز ہستی کو تو سمجھتی ہے
اور آنکھوں سے دیکھتا ہوں میں
ہے تجھے واسطہ مظاہر سے
اور باطن سے آشنا ہوں میں

بےلگام
07-25-2012, 05:31 AM
علم تجھ سے تو معرفت مجھ سے
تو خدا جو ، خدا نما ہوں میں
علم کی انتہا ہے بے تابی
اس مرض کی مگر دوا ہوں میں

بےلگام
07-25-2012, 05:31 AM
شمع تو محفل صداقت کی
حسن کی بزم کا دیا ہوں میں
تو زمان و مکاں سے رشتہ بپا
طائر سدرہ آشنا ہوں میں

بےلگام
07-25-2012, 05:31 AM
کس بلندی پہ ہے مقام مرا
عرش رب جلیل کا ہوں میں!

بےلگام
07-25-2012, 05:34 AM
جل رہا ہوں کل نہیں پڑتی کسی پہلو مجھے
ہاں ڈبو دے اے محیط آب گنگا تو مجھے
سرزمیں اپنی قیامت کی نفاق انگیز ہے
وصل کیسا ، یاں تو اک قرب فراق انگیز ہے

بےلگام
07-25-2012, 05:35 AM
بدلے یک رنگی کے یہ نا آشنائی ہے غضب
ایک ہی خرمن کے دانوں میں جدائی ہے غضب
جس کے پھولوں میں اخوت کی ہوا آئی نہیں
اس چمن میں کوئی لطف نغمہ پیرائی نہیں

بےلگام
07-25-2012, 05:35 AM
لذت قرب حقیقی پر مٹا جاتا ہوں میں
اختلاط موجہ و ساحل سے گھبراتا ہوں میں
دانۂنم خرمن نما ہے شاعر معجز بیاں
ہو نہ خرمن ہی تو اس دانے کی ہستی پھر کہاں

بےلگام
07-25-2012, 05:36 AM
حسن ہو کیا خود نما جب کوئی مائل ہی نہ ہو
شمع کو جلنے سے کیا مطلب جو محفل ہی نہ ہو
ذوق گویائی خموشی سے بدلتا کیوں نہیں
میرے آئینے سے یہ جوہر نکلتا کیوں نہیں

بےلگام
07-25-2012, 05:36 AM
کب زباں کھولی ہماری لذت گفتار نے!
پھونک ڈالا جب چمن کو آتش پیکار نے

بےلگام
07-25-2012, 05:36 AM
اے آفتاب! روح و روان جہاں ہے تو
شیرازہ بند دفتر کون و مکاں ہے تو
باعث ہے تو وجود و عدم کی نمود کا
ہے سبز تیرے دم سے چمن ہست و بود کا

بےلگام
07-25-2012, 05:36 AM
اے آفتاب! روح و روان جہاں ہے تو
شیرازہ بند دفتر کون و مکاں ہے تو
باعث ہے تو وجود و عدم کی نمود کا
ہے سبز تیرے دم سے چمن ہست و بود کا

بےلگام
07-25-2012, 05:37 AM
قائم یہ عنصروں کا تماشا تجھی سے ہے
ہر شے میں زندگی کا تقاضا تجھی سے ہے
ہر شے کو تیری جلوہ گری سے ثبات ہے

بےلگام
07-25-2012, 05:37 AM
تیرا یہ سوز و ساز سراپا حیات ہے
وہ آفتاب جس سے زمانے میں نور ہے
دل ہے ، خرد ہے ، روح رواں ہے ، شعور ہے

بےلگام
07-25-2012, 05:38 AM
اے آفتاب ، ہم کو ضیائے شعور دے
چشم خرد کو اپنی تجلی سے نور دے
ہے محفل وجود کا ساماں طراز تو
یزدان ساکنان نشیب و فراز تو

بےلگام
07-25-2012, 05:38 AM
تیرا کمال ہستی ہر جاندار میں
تیری نمود سلسلۂ کوہسار میں
ہر چیز کی حیات کا پروردگار تو
زائیدگان نور کا ہے تاجدار تو

بےلگام
07-25-2012, 05:38 AM
نے ابتدا کوئی نہ کوئی انتہا تری
آزاد قید اول و آخر ضیا تری

بےلگام
07-25-2012, 05:39 AM
بزم جہاں میں میں بھی ہوں اے شمع! دردمند
فریاد در گرہ صفت دانۂ سپند
دی عشق نے حرارت سوز دروں تجھے
اور گل فروش اشک شفق گوں کیا مجھے

بےلگام
07-25-2012, 05:39 AM
ہو شمع بزم عیش کہ شمع مزار تو
ہر حال اشک غم سے رہی ہمکنار تو
یک بیں تری نظر صفت عاشقان راز
میری نگاہ مایۂ آشوب امتیاز

بےلگام
07-25-2012, 05:39 AM
کعبے میں ، بت کدے میں ہے یکساں تری ضیا
میں امتیاز دیر و حرم میں پھنسا ہوا
ہے شان آہ کی ترے دود سیاہ میں
پوشیدہ کوئی دل ہے تری جلوہ گاہ میں؟

بےلگام
07-25-2012, 05:40 AM
جلتی ہے تو کہ برق تجلی سے دور ہے
بے درد تیرے سوز کو سمجھے کہ نور ہے
تو جل رہی ہے اور تجھے کچھ خبر نہیں
بینا ہے اور سوز دروں پر نظر نہیں

بےلگام
07-25-2012, 05:40 AM
میں جوش اضطراب سے سیماب وار بھی
آگاہ اضطراب دل بے قرار بھی
تھا یہ بھی کوئی ناز کسی بے نیاز کا
احساس دے دیا مجھے اپنے گداز کا

بےلگام
07-25-2012, 05:40 AM
یہ آگہی مری مجھے رکھتی ہے بے قرار
خوابیدہ اس شرر میں ہیں آتش کدے ہزار
یہ امتیاز رفعت و پستی اسی سے ہے
گل میں مہک ، شراب میں مستی اسی سے ہے

بےلگام
07-25-2012, 05:41 AM
بستان و بلبل و گل و بو ہے یہ آگہی
اصل کشاکش من و تو ہے یہ آگہی
صبح ازل جو حسن ہوا دلستان عشق
آواز ‘کن’ ہوئی تپش آموز جان عشق

بےلگام
07-25-2012, 05:42 AM
یہ حکم تھا کہ گلشن ‘کن’ کی بہار دیکھ
ایک آنکھ لے کے خواب پریشاں ہزار دیکھ
مجھ سے خبر نہ پوچھ حجاب وجود کی
شام فراق صبح تھی میری نمود کی

بےلگام
07-25-2012, 05:42 AM
وہ دن گئے کہ قید سے میں آشنا نہ تھا
زیب درخت طور مرا آشیانہ تھا
قیدی ہوں اور قفس کو چمن جانتا ہوں میں
غربت کے غم کدے کو وطن جانتا ہوں میں

بےلگام
07-25-2012, 05:43 AM
یاد دطن فسردگی بے سبب بنی
شوق نظر کبھی ، کبھی ذوق طلب بنی
اے شمع! انتہائے فریب خیال دیکھ
مسجود ساکنان فلک کا مآل دیکھ

بےلگام
07-25-2012, 05:43 AM
مضموں فراق کا ہوں ، ثریا نشاں ہوں میں
آہنگ طبع ناظم کون و مکاں ہوں میں
باندھا مجھے جو اس نے تو چاہی مری نمود
تحریر کر دیا سر دیوان ہست و بود

بےلگام
07-25-2012, 05:45 AM
گوہر کو مشت خاک میں رہنا پسند ہے
بندش اگرچہ سست ہے ، مضموں بلند ہے
چشم غلط نگر کا یہ سارا قصور ہے
عالم ظہور جلوۂ ذوق شعور ہے

بےلگام
07-25-2012, 05:45 AM
یہ سلسلہ زمان و مکاں کا ، کمند ہے
طوق گلوئے حسن تماشا پسند ہے
منزل کا اشتیاق ہے ، گم کردہ راہ ہوں
اے شمع ! میں اسیر فریب نگاہ ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:45 AM
صیاد آپ ، حلقۂ دام ستم بھی آپ
بام حرم بھی ، طائر بام حرم بھی آپ!
میں حسن ہوں کہ عشق سراپا گداز ہوں
کھلتا نہیں کہ ناز ہوں میں یا نیاز ہوں

بےلگام
07-25-2012, 05:45 AM
ہاں ، آشنائے لب ہو نہ راز کہن کہیں
پھر چھڑ نہ جائے قصۂ دار و رسن کہیں

بےلگام
07-25-2012, 05:46 AM
دنیا کی محفلوں سے اکتا گیا ہوں یا رب
کیا لطف انجمن کا جب دل ہی بجھ گیا ہو
شورش سے بھاگتا ہوں ، دل ڈھونڈتا ہے میرا
ایسا سکوت جس پر تقریر بھی فدا ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:46 AM
مرتا ہوں خامشی پر ، یہ آرزو ہے میری
دامن میں کوہ کے اک چھوٹا سا جھونپڑا ہو
آزاد فکر سے ہوں ، عزلت میں دن گزاروں
دنیا کے غم کا دل سے کانٹا نکل گیا ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:47 AM
لذت سرود کی ہو چڑیوں کے چہچہوں میں
چشمے کی شورشوں میں باجا سا بج رہا ہو
گل کی کلی چٹک کر پیغام دے کسی کا
ساغر ذرا سا گویا مجھ کو جہاں نما ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:47 AM
ہو ہاتھ کا سرھانا سبزے کا ہو بچھونا
شرمائے جس سے جلوت ، خلوت میں وہ ادا ہو
مانوس اس قدر ہو صورت سے میری بلبل
ننھے سے دل میں اس کے کھٹکا نہ کچھ مرا ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:47 AM
صف باندھے دونوں جانب بوٹے ہرے ہرے ہوں
ندی کا صاف پانی تصویر لے رہا ہو
ہو دل فریب ایسا کہسار کا نظارہ
پانی بھی موج بن کر اٹھ اٹھ کے دیکھتا ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:48 AM
آغوش میں زمیں کی سویا ہوا ہو سبزہ
پھر پھر کے جھاڑیوں میں پانی چمک رہا ہو
پانی کو چھو رہی ہو جھک جھک کے گل کی ٹہنی
جیسے حسین کوئی آئینہ دیکھتا ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:48 AM
مہندی لگائے سورج جب شام کی دلھن کو
سرخی لیے سنہری ہر پھول کی قبا ہو
راتوں کو چلنے والے رہ جائیں تھک کے جس دم
امید ان کی میرا ٹوٹا ہوا دیا ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:48 AM
بجلی چمک کے ان کو کٹیا مری دکھا دے
جب آسماں پہ ہر سو بادل گھرا ہوا ہو
پچھلے پہر کی کوئل ، وہ صبح کی مؤذن
میں اس کا ہم نوا ہوں ، وہ میری ہم نوا ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:49 AM
کانوں پہ ہو نہ میرے دیر وحرم کا احساں
روزن ہی جھونپڑی کا مجھ کو سحر نما ہو
پھولوں کو آئے جس دم شبنم وضو کرانے
رونا مرا وضو ہو ، نالہ مری دعا ہو

بےلگام
07-25-2012, 05:49 AM
اس خامشی میں جائیں اتنے بلند نالے
تاروں کے قافلے کو میری صدا درا ہو
ہر دردمند دل کو رونا مرا رلا دے
بے ہوش جو پڑے ہیں ، شاید انھیں جگا دے

بےلگام
07-25-2012, 05:51 AM
شورش میخانۂ انساں سے بالاتر ہے تو
زینت بزم فلک ہو جس سے وہ ساغر ہے تو
ہو در گوش عروس صبح وہ گوہر ہے تو
جس پہ سیمائے افق نازاں ہو وہ زیور ہے تو

بےلگام
07-25-2012, 05:52 AM
صفحۂ ایام سے داغ مداد شب مٹا
آسماں سے نقش باطل کی طرح کوکب مٹا
حسن تیرا جب ہوا بام فلک سے جلوہ گر
آنکھ سے اڑتا ہے یک دم خواب کی مے کا اث

بےلگام
07-25-2012, 05:52 AM
نور سے معمور ہو جاتا ہے دامان نظر
کھولتی ہے چشم ظاہر کو ضیا تیری مگر
ڈھونڈتی ہیں جس کو آنکھیں وہ تماشا چاہیے
چشم باطن جس سے کھل جائے وہ جلوا چاہیے

بےلگام
07-25-2012, 05:52 AM
شوق آزادی کے دنیا میں نہ نکلے حوصلے
زندگی بھر قید زنجیر تعلق میں رہے
زیر و بالا ایک ہیں تیری نگاہوں کے لیے
آرزو ہے کچھ اسی چشم تماشا کی مجھے

بےلگام
07-25-2012, 05:53 AM
آنکھ میری اور کے غم میں سرشک آباد ہو
امتیاز ملت و آئیں سے دل آزاد ہو
بستۂ رنگ خصوصیت نہ ہو میری زباں
نوع انساں قوم ہو میری ، وطن میرا جہاں

بےلگام
07-25-2012, 05:53 AM
دیدۂ باطن پہ راز نظم قدرت ہو عیاں
ہو شناسائے فلک شمع تخیل کا دھواں
عقدۂ اضداد کی کاوش نہ تڑپائے مجھے
حسن عشق انگیز ہر شے میں نظر آئے مجھے

بےلگام
07-25-2012, 05:54 AM
صدمہ آ جائے ہوا سے گل کی پتی کو اگر
اشک بن کر میری آنکھوں سے ٹپک جائے اثر
دل میں ہو سوز محبت کا وہ چھوٹا سا شرر
نور سے جس کے ملے راز حقیقت کی خبر

بےلگام
07-25-2012, 05:54 AM
شاہد قدرت کا آئینہ ہو ، دل میرا نہ ہو
سر میں جز ہمدردی انساں کوئی سودا نہ ہو
تو اگر زحمت کش ہنگامۂ عالم نہیں
یہ فضیلت کا نشاں اے نیر اعظم نہیں

بےلگام
07-25-2012, 05:54 AM
اپنے حسن عالم آرا سے جو تو محرم نہیں
ہمسر یک ذرۂ خاک در آدم نہیں
نور مسجود ملک گرم تماشا ہی رہا
اور تو منت پذیر صبح فردا ہی رہا

بےلگام
07-25-2012, 05:54 AM
آرزو نور حقیقت کی ہمارے دل میں ہے
لیلی ذوق طلب کا گھر اسی محمل میں ہے
کس قدر لذت کشود عقدۂ مشکل میں ہے
لطف صد حاصل ہماری سعی بے حاصل میں ہے

بےلگام
07-25-2012, 05:55 AM
درد استفہام سے واقف ترا پہلو نہیں
جستجوئے راز قدرت کا شناسا تو نہیں

بےلگام
07-27-2012, 05:30 AM
اے درد عشق! ہے گہر آب دار تو
نامحرموں میں دیکھ نہ ہو آشکار تو
پنہاں تہ نقاب تری جلوہ گاہ ہے
ظاہر پرست محفل نو کی نگاہ ہے

بےلگام
07-27-2012, 05:31 AM
آئی نئی ہوا چمن ہست و بود میں
اے درد عشق! اب نہیں لذت نمود میں
ہاں خود نمائیوں کی تجھے جستجو نہ ہو
منت پذیر نالۂ بلبل کا تو نہ ہو!

بےلگام
07-27-2012, 05:31 AM
خالی شراب عشق سے لالے کا جام ہو
پانی کی بوند گریۂ شبنم کا نام ہو
پنہاں درون سینہ کہیں راز ہو ترا
اشک جگر گداز نہ غماز ہو ترا

بےلگام
07-27-2012, 05:32 AM
گویا زبان شاعر رنگیں بیاں نہ ہو
آواز نے میں شکوۂ فرقت نہاں نہ ہو
یہ دور نکتہ چیں ہے ، کہیں چھپ کے بیٹھ رہ
جس دل میں تو مکیں ہے، وہیں چھپ کے بیٹھ رہ

بےلگام
07-27-2012, 05:33 AM
غافل ہے تجھ سے حیرت علم آفریدہ دیکھ!
جویا نہیں تری نگہ نارسیدہ دیکھ
رہنے دے جستجو میں خیال بلند کو
حیرت میں چھوڑ دیدۂ حکمت پسند کو

بےلگام
07-27-2012, 05:34 AM
جس کی بہار تو ہو یہ ایسا چمن نہیں
قابل تری نمود کے یہ انجمن نہیں
یہ انجمن ہے کشتۂ نظارۂ مجاز
مقصد تری نگاہ کا خلوت سرائے راز

بےلگام
07-27-2012, 05:35 AM
ہر دل مے خیال کی مستی سے چور ہے
کچھ اور آجکل کے کلیموں کا طور ہے

بےلگام
07-27-2012, 08:58 AM
کس زباں سے اے گل پژمردہ تجھ کو گل کہوں
کس طرح تجھ کو تمنائے دل بلبل کہوں

بےلگام
07-27-2012, 08:59 AM
تھی کبھی موج صبا گہوارۂ جنباں ترا
نام تھا صحن گلستاں میں گل خنداں ترا

بےلگام
07-27-2012, 08:59 AM
تیرے احساں کا نسیم صبح کو اقرار تھا
باغ تیرے دم سے گویا طبلۂ عطار تھا

بےلگام
07-27-2012, 09:00 AM
تجھ پہ برساتا ہے شبنم دیدۂ گریاں مرا
ہے نہاں تیری اداسی میں دل ویراں مرا

بےلگام
07-27-2012, 09:01 AM
میری بربادی کی ہے چھوٹی سی اک تصویر تو
خوا ب میری زندگی تھی جس کی ہے تعبیر تو

بےلگام
07-27-2012, 09:01 AM
ہمچو نے از نیستان خود حکایت می کنم
بشنو اے گل! از جدائی ہا شکایت می کنم

بےلگام
07-28-2012, 06:08 AM
اے کہ تیرا مرغ جاں تار نفس میں ہے اسیر
اے کہ تیری روح کا طائر قفس میں ہے اسیر
اس چمن کے نغمہ پیراؤں کی آزادی تو دیکھ
شہر جو اجڑا ہوا تھا اس کی آبادی تو دیکھ

بےلگام
07-28-2012, 06:09 AM
فکر رہتی تھی مجھے جس کی وہ محفل ہے یہی
صبر و استقلال کی کھیتی کا حاصل ہے یہی
سنگ تربت ہے مرا گرویدہ تقریر دیکھ
چشم باطن سے ذرا اس لوح کی تحریر دیکھ

بےلگام
07-28-2012, 06:09 AM
مدعا تیرا اگر دنیا میں ہے تعلیم دیں
ترک دنیا قوم کو اپنی نہ سکھلانا کہیں
وا نہ کرنا فرقہ بندی کے لیے اپنی زباں
چھپ کے ہے بیٹھا ہوا ہنگامۂ محشر یہاں

بےلگام
07-28-2012, 06:09 AM
وصل کے اسباب پیدا ہوں تری تحریر سے
دیکھ کوئی دل نہ دکھ جائے تری تقریر سے
محفل نو میں پرانی داستانوں کو نہ چھیڑ
رنگ پر جو اب نہ آئیں ان فسانوں کو نہ چھیڑ

بےلگام
07-28-2012, 06:10 AM
تو اگر کوئی مدبر ہے تو سن میری صدا
ہے دلیری دست ارباب سیاست کا عصا
عرض مطلب سے جھجک جانا نہیں زیبا تجھے
نیک ہے نیت اگر تیری تو کیا پروا تجھے

بےلگام
07-28-2012, 06:10 AM
بندۂ مومن کا دل بیم و ریا سے پاک ہے
قوت فرماں روا کے سامنے بے باک ہے
ہو اگر ہاتھوں میں تیرے خامۂ معجز رقم
شیشۂ دل ہو اگر تیرا مثال جام جم

بےلگام
07-28-2012, 06:10 AM
پاک رکھ اپنی زباں ، تلمیذ رحمانی ہے تو
ہو نہ جائے دیکھنا تیری صدا بے آبرو!
سونے والوں کو جگا دے شعر کے اعجاز سے
خرمن باطل جلا دے شعلۂ آواز سے

بےلگام
07-28-2012, 06:11 AM
ٹوٹ کر خورشید کی کشتی ہوئی غرقاب نیل
ایک ٹکڑا تیرتا پھرتا ہے روئے آب نیل
طشت گردوں میں ٹپکتا ہے شفق کا خون ناب
نشتر قدرت نے کیا کھولی ہے فصد آفتاب

بےلگام
07-28-2012, 06:12 AM
چرخ نے بالی چرا لی ہے عروس شام کی
نیل کے پانی میں یا مچھلی ہے سیم خام کی
قافلہ تیرا رواں بے منت بانگ درا
گوش انساں سن نہیں سکتا تری آواز پا

بےلگام
07-28-2012, 06:12 AM
چرخ نے بالی چرا لی ہے عروس شام کی
نیل کے پانی میں یا مچھلی ہے سیم خام کی
قافلہ تیرا رواں بے منت بانگ درا
گوش انساں سن نہیں سکتا تری آواز پا

بےلگام
07-28-2012, 06:12 AM
گھٹنے بڑھنے کا سماں آنکھوں کو دکھلاتا ہے تو
ہے وطن تیرا کدھر ، کس دیس کو جاتا ہے تو
ساتھ اے سیارۂ ثابت نما لے چل مجھے
خار حسرت کی خلش رکھتی ہے اب بے کل مجھے

بےلگام
07-28-2012, 06:12 AM
نور کا طالب ہوں ، گھبراتا ہوں اس بستی میں میں
طفلک سیماب پا ہوں مکتب ہستی میں میں

بےلگام
07-28-2012, 06:14 AM
صبح خورشید درخشاں کو جو دیکھا میں نے
بزم معمورۂ ہستی سے یہ پوچھا میں نے
پر تو مہر کے دم سے ہے اجالا تیرا
سیم سیال ہے پانی ترے دریاؤں کا

بےلگام
07-28-2012, 06:15 AM
مہر نے نور کا زیور تجھے پہنایا ہے
تیری محفل کو اسی شمع نے چمکایا ہے
گل و گلزار ترے خلد کی تصویریں ہیں
یہ سبھی سورۂ ‘والشمس’ کی تفسیریں ہیں

بےلگام
07-28-2012, 06:16 AM
سرخ پوشاک ہے پھولوں کی ، درختوں کی ہری
تیری محفل میں کوئی سبز ، کوئی لال پری
ہے ترے خیمۂ گردوں کی طلائی جھالر
بدلیاں لال سی آتی ہیں افق پر جو نظر

بےلگام
07-28-2012, 06:16 AM
کیا بھلی لگتی ہے آنکھوں کو شفق کی لالی
مے گلرنگ خم شام میں تو نے ڈالی
رتبہ تیرا ہے بڑا ، شان بڑی ہے تیری
پردۂ نور میں مستور ہے ہر شے تیری

بےلگام
07-28-2012, 06:17 AM
صبح اک گیت سراپا ہے تری سطوت کا
زیر خورشید نشاں تک بھی نہیں ظلمت کا
میں بھی آباد ہوں اس نور کی بستی میں مگر
جل گیا پھر مری تقدیر کا اختر کیونکر؟

بےلگام
07-28-2012, 06:17 AM
نور سے دور ہوں ظلمت میں گرفتار ہوں میں
کیوں سیہ روز ، سیہ بخت ، سیہ کار ہوں میں؟
میں یہ کہتا تھا کہ آواز کہیں سے آئی
بام گردوں سے وہ یا صحن زمیں سے آئی

بےلگام
07-28-2012, 06:18 AM
ہے ترے نور سے وابستہ مری بود و نبود
باغباں ہے تری ہستی پے گلزار وجود
انجمن حسن کی ہے تو ، تری تصویر ہوں میں
عشق کا تو ہے صحیفہ ، تری تفسیر ہوں میں

بےلگام
07-28-2012, 06:19 AM
میرے بگڑے ہوئے کاموں کو بنایا تو نے
بار جو مجھ سے نہ اٹھا وہ اٹھایا تو نے
نور خورشید کی محتاج ہے ہستی میری
اور بے منت خورشید چمک ہے تری

بےلگام
07-28-2012, 06:19 AM
ہو نہ خورشید تو ویراں ہو گلستاں میرا
منزل عیش کی جا نام ہو زنداں میرا
آہ اے راز عیاں کے نہ سمجھے والے!
حلقۂ دام تمنا میں الجھنے والے

بےلگام
07-28-2012, 06:20 AM
ہائے غفلت کہ تری آنکھ ہے پابند مجاز
ناز زیبا تھا تجھے ، تو ہے مگر گرم نیاز
تو اگر اپنی حقیقت سے خبردار رہے
نہ سیہ روز رہے پھر نہ سیہ کار رہے

بےلگام
07-30-2012, 04:54 AM
ناز و انداز سے کہتا ہے کے جینا ہو گا
زہر بھی دیتا ہے تو کہتا ہے کے پینا ہوگا

اور جو پیتا ہوں تو کہتا ہے کے مرتا بھی نہیں
اور جو مرتا ہوں تو کہتا ہے کے جینا ہوگ

بےلگام
07-30-2012, 04:55 AM
لو ، خدا حافظ تمہیں کہنے کی ساعت آگئی

دل کو تھا جس بات کا دھڑکا وہ نوبت آگئی

ٹوٹ کر برسی گھٹا تجھ سے جدا ہوتے ہوئے

آسماں رونے لگا بادل کو غیرت آگئی

بےلگام
07-30-2012, 04:56 AM
تفاقا جب کوئی تیرے حوالے سے ملا

سامنے نظروں کے یکدم تیری صورت آگئی

گھر کے بام و در سمٹ کر مثلِ زنداں ہوگئے

شام کیا آئی کہ جیسے مجھ میں وحشت آگئی

بےلگام
07-30-2012, 04:56 AM
اس لئے بھیجا نہیں اتنے دنوں سے خط مجھے

راس شائد اس کو غیروں کی رفاقت آگئی

بےلگام
07-30-2012, 04:57 AM
اک یہی روشنی امکان میں ہے
تو ابھی تک دل ویران میں ہے

شور برپا ہے تری یادوں کا
رونق ہجر بیابان میں ہے

بےلگام
07-30-2012, 04:57 AM
پیار اور زندگی سے لگتا ہے
کوئی زندہ دل بے جان میں ہے

زندگی بھی ہے میری آنکھوں میں
موت بھی دیدۂ حیران میں ہے

بےلگام
07-30-2012, 04:58 AM
دل ابھی نکلا نہیں سینے سے
ایک قیدی ابھی زندان میں ہے

بےلگام
07-30-2012, 04:58 AM
جب توپیدا ہوا تو کتنا مجبور تھا
یہ جہاں تیری سوچوں سے بھی دور تھا

ہاتھ پائوں بھی تب تیرے اپنے نہ تھے
تیری آنکھوں میں دنیا کہ سپنےنہ تھے

بےلگام
07-30-2012, 04:59 AM
تجھ کو آتا تھا جو کام وہ صرف رونا ہی تھا
دودھ پی کے تیرا کام صرف سونا ہی تھا

تجھ کو چلنا سکھایا ماں نے تیری
تجھ کو دل میں بسایا ماں نے تیری

بےلگام
07-30-2012, 04:59 AM
ماں کے سائے میں پروان چھڑنےلگا
وقت کے ساتھ قد تیرا بڑھنے لگا

دھیرے دھیرے تو کڑیل جوان ہو گیا
تجھ پہ سارا جہاں مہرباں ہو گیا

بےلگام
07-30-2012, 04:59 AM
زور بازو پہ تو بات کرنے لگا
خود ہی سجنے لگا خود سنورنے لگا

اک دن اک حسینہ تجھے بھا گی
بن کے دلہن وہ تیرے گھر آ گی

بےلگام
07-30-2012, 05:00 AM
فرض اپنے سے تو دور ہونے لگا
بیچ نفرت کا خود ہی تو بولنے لگا

پھر تو ماں باپ کو بھی بھلانے لگا
تیر باتوں کے پھر توں چلانے لگ

بےلگام
07-30-2012, 05:00 AM
بات بے بات ان سے تو لڑنے لگا
قائدہ اک نیا تو پھر پڑھنے لگا

یاد کر تجھ سے ماں نے کہا ایک دن
اب ہمارا گزارہ نہیں تیرے بن

بےلگام
07-30-2012, 05:00 AM
سن کہ یہ بات تو طیش میں آ گیا
تیرا غصہ تیری عقل کو کھا گیا

جوش میں آکے تو نے یہ ماں سے کہا
میں تھا خاموش سب دیکھتا ہی رہا

آج کہتا ہوں پیچھا میرا چھوڑ دو
جو ہے رشتہ میرا تم سے وہ توڑ دو

بےلگام
07-30-2012, 05:01 AM
جائو جا کے کہیں کام دھندا کرو
لوگ مرتے ہیں تم بھی کہیں جا مرو

بیٹھ کر آہیں بھرتے تھے وہ رات بھر
ان کی آہوں کا تجھ پہ ہوا نہ اثر

بےلگام
07-30-2012, 05:01 AM
اک دن باپ تیرا چلا روٹھ کر
کیسی بکھری تھی پھر تیری ما ں ٹوٹ کر

پھر وہ بے بس اجل کو بلاتی رہی
زندگی روز اسکوستا تی رہی

بےلگام
07-30-2012, 05:01 AM
ایک دن موت کو بھی ترس آ گیا
اسکا رونا بھی تقدیرکو بھا گیا۔

اشک آنکھوں میں تھے وہ روانہ ہوئی
موت کی ایک ہچکی بہانہ ہوئی

بےلگام
07-30-2012, 05:02 AM
اک سکوں اس کے چہرے پہ چھانے لگا
پھر تو میت کو اسکی سجانے لگا

مدتیں ہو گئیں آج بوڑھا ہے تو
جو پڑا ٹوٹی کٹھیا پہ کوڑا ہے تو

بےلگام
07-30-2012, 05:02 AM
تیرے بچے بھی اب تجھ سے ڈرتے نہیں
نفرتیں ہیں محبت وہ کرتے نہیں

تو جو کھانسے تو اولاد ڈانٹے تجھے
تو ہے ناسور سکھ کون بانٹےتجھے

بےلگام
07-30-2012, 05:02 AM
درد میں تو پکارے او میری ماں
تیرے دم سے روشن تھے دونوں جہاں

وقت چلتا رہےوقت رکتا نہیں
ٹوٹ جاتا ہے وہ جو کہ جھکتا نہیں

بےلگام
07-30-2012, 05:03 AM
بن کے عبرت کو اب تو نشان رہ گیا
ڈھونڈ لے زور تیرا کہاں رہ گیا

تو احکام ربی کو بھلاتا رہا
اپنے ماں باپ کو تو ستاتا رہا

بےلگام
07-30-2012, 05:03 AM
کاٹ لے تو وہی تو نے بویا تھا جو
تجھ کو کیسے ملے تو نےکھویا تھا جو

یاد کرکے گیا وقت تو رونے لگا
کل جو تو نے کیا آج ہونے لگ

بےلگام
07-30-2012, 05:03 AM
موت مانگے تجھے موت آتی نہیں
ماں کی صورت نگاہوں سے جاتی نہیں

موت آئے گی تجھ کو مگر وقت پر
بن ہی جائے گی تیری قبر وقت پر

بےلگام
07-30-2012, 05:04 AM
قدر ماں باپ کی اگر کوئی جان لے
اپنی جنت کو دنیا میں پہچان لے

اور لیتا رہے وہ بڑوں کی دعا
اسکے دونوں جہاں اسکا حامی خدا

بےلگام
07-30-2012, 05:04 AM
یاد رکھنا تو ساحل کی اس بات کو
بھول جانا نہ رحمت کی برسات کو

بےلگام
07-30-2012, 05:07 AM
دینے والے مجھے موجوں کی روانی دے دے
پھر سے اک بار مجھے میری جوانی دے دے

ابر ہو جام ہو ساقی ہو میرے پہلو میں
کوئی تو شام مجھے ایسی سوہانی دے دے

بےلگام
07-30-2012, 05:08 AM
نشہ آ جائے مجھے تیری جوانی کی قسم
تو اگر جام میں بھر کے مجھے پانی دے دے

ہر جوان دل میرے افسانے کو دھوراتا رہے
حشر تک ختم نہ ہو ایسی کہانی دے دے

بےلگام
07-30-2012, 05:08 AM
چاند پر اِک مے کدہ آباد ہونا چاہیے
یا محبت کو یہیں آزاد ہونا چاہیے

قاضیئ مِحشَر! تری مرضی ، ہماری سوچ ہے
ظالموں کو دُنیا میں برباد ہونا چاہیے

بےلگام
07-30-2012, 05:09 AM
رُوح کے بے رَنگ اُفق پر ، رات بھر گونجی ندا
دِل پرندہ ، فکر سے آزاد ہونا چاہیے

خواہشِ جنت میں کرتے ہیں جو زاہد نیکیاں
نام اُن کا ’’متقی شداد‘‘ ہونا چاہیے

بےلگام
07-30-2012, 05:10 AM
خوبصورت تتلیوں نے کھول کر رَکھ دی کتاب
غنچوں کی جانب سے کچھ اِرشاد ہونا چاہیے

عشق کی گیتا کے ’’پچھلے‘‘ نسخوں میں یہ دَرج تھا
طالبانِ حُسن کو فولاد ہونا چاہیے

بےلگام
07-30-2012, 05:10 AM
وَصلِ شیریں تو خدا کی مرضی پر ہے منحصر
عاشقوں کو محنتی فرہاد ہونا چاہیے

نامور عُشاق کی ناکامی سے ثابت ہُوا
عشق کے مضمون کا اُستاد ہونا چاہیے

بےلگام
07-30-2012, 05:11 AM
خون سے خط لکھ تو لُوں پر پیار کے اظہار کا
راستہ آسان تر ایجاد ہونا چاہیے

علم کا اَنبار راہِ عشق میں بے کار ہے
قیس کو بس لیلیٰ کا گھر یاد ہونا چاہیے

بےلگام
07-30-2012, 05:14 AM
تو میری آنکھ کا سپنا ہے اگر تو سمجھے
تو میری ذات کا حصہ ہے اگر تو سمجھے
ہونہیں سکتی جدا، پھول سے خوشبو جیسے
ساتھ ہمارا بھی کچھ ایسا ہے اگر تو سمجھے

بےلگام
07-30-2012, 05:14 AM
تجھ کو بھولوں کو شش کر کے دیکھوں گا
ویسے دریا الٹا چلنا مشکل ہے

بےلگام
07-30-2012, 05:15 AM
یہ جو میرے لفظوں کے پھول ہیں
تیرے راستے کی دھول ہیں

کبھی ان سے سن میری داستاں
کبھی ان کے ساتھ کلام کر

بےلگام
07-30-2012, 05:15 AM
چھوڑ چکے تیری راہیں بھی
بھول چکے تیری با تیں بھی
سپنے اپنے رکھے ہوئے
دفنا چکے اپنی خواہشیں بھی
عشق کی راہیں چلتے چلتے
تھک چکے اپنے پاؤں بھی
تمہارے بعد تو لگتا ہے جیسے
بھول چکے ہم ہنسنا بھی
وقت نے تو زندہ مار دیا
بھول چکے ہم جینا بھی

بےلگام
07-30-2012, 05:16 AM
تیری یاد میں جَل کر دیکھ لیا
اب آگ میں جَل کر دیکھیں گے

اس راہ میں اپنی موت ہی سہی
یہ راہ بھی چل کر دیکھیں گے

بےلگام
07-30-2012, 05:16 AM
دیپک کی چمک میں آگ بھی ہے
دنیا نے کہا پروانوں سے

پروانے مگر یہ کہنے لگے
دیوانے تو جَل کر دیکھیں گے

بےلگام
07-30-2012, 05:17 AM
تیری یاد میں جَل کر دیکھ لیا
اب آگ میں جَل کر دیکھیں گے

بےلگام
07-30-2012, 05:19 AM
میری الفت کی مالا میں کانٹے بھر گیا وہ
تارِ چاہت کو بھی چھلنی چھلنی کر گیا وہ

سارے غم میری جھولی میں رکھ کر چل پڑا وہ
لگتا ہے یوں، کہ میری خوشی سے ڈر گیا وہ

بےلگام
07-30-2012, 05:20 AM
راوی آنکھوں میں آ چکا ہے
سیلاب بن کے بہا چکا ہے

بند باندھے تھے جو دل میں
وہ سب ساتھ لے جا چکا ہے

بےلگام
07-30-2012, 05:21 AM
دھواں دھواں ہے منظر سارا
موتیا آنکھوں میں آ چکا ہے

دھند شاید کچھ چھٹ رہی ہے
منظر پہ کوئی چہرہ آ چکا ہے

بےلگام
07-30-2012, 05:21 AM
پلکیں گرا کے کھڑا ہے شاید
حجاب آنکھوں میں آ چکا ہے

بےلگام
07-30-2012, 05:22 AM
اک عمر کی جدائی میرا نصیب کر کے
وہ چلا گیا ھے باتیں عجیب کر کے
طرز وفا کو اس کے میں کیا نام دوں
خود دور ہو گیا مجھ کو قریب کرکے

بےلگام
07-30-2012, 05:23 AM
کون ہنستا ہے رونے کے بعد
جینا پھر بھی پڑتا ہے سب کچھ کھونے کا بعد
یہ سوچ کے سب سے معافی مانگتا ہوں
شاید پھر میری صبح نہ ہو
آج سونے کے بعد

بےلگام
07-31-2012, 04:51 AM
یہ وصال ہے کہ فراق ہے دلِ مبتلا کو پتا رہے
جو یہ پھول ہے تو کھلا رہے جو یہ زخم ہے تو ہرا رہے

تیرے انتظار کے سلسلے ہیں میانِ دستک و دَر کہیں
یہی آس ہے تو بندھی رہے یہ چراغ ہے تو جلا رہے

بےلگام
07-31-2012, 04:52 AM
یونہی بھولے بھٹکے جو آ گئے ہیں اِدھر تو اتنی ہوا نہ دے
کہ غبارِ کوئے ملامتاں کوئی واقعہ تو چھپا رہے

کسی چشمِ وعدہ کی لہر ہے بڑا دل گرفتہ یہ شہر ہے
سو ہوائے محرمِ دوستاں تیرے سلسلوں کا پتا رہے

بےلگام
07-31-2012, 04:52 AM
یہ سرائے صبح کے ساتھ ہی مجھے چھوڑنی ہے غزالِ شب
تیری چشمِ رمز و کنایہ میں کوئی خواب ہے تو سجا رہے

بےلگام
07-31-2012, 04:54 AM
کہاں تھا اتنا عذاب آشنا مرا چہرہ
جلے چراغ تو بجھنے لگا مرا چہرہ

وہ تیرے ہجر کے دن وہ سفیر صدیوں کے
تو ان دنوں میں کبھی دیکھتا مرا چہرہ

بےلگام
07-31-2012, 04:55 AM
جدائیوں کے سفر میں رہے ہیں ساتھ سدا
تری تلاش، زمانے، ہوا، مرا چہرہ

مرے سوا کوئی اتنا اداس بھی تو نہ تھا
خزاں کے چاند کو اچھا لگا مرا چہرہ

بےلگام
07-31-2012, 04:55 AM
کتاب کھول رہا تھا وہ اپنے ماضی کی
ورق ورق پہ بکھرتا گیا مرا چہرہ

سحر کے نور سے دھلتی ہوئی تری آنکھیں
سفر کی گرد میں لیپٹا ہوا مرا چہرہ

بےلگام
07-31-2012, 04:55 AM
ہوا کا آخری بوسہ تھا یا قیامت تھی
بدن کی شاخ سے پھر گر پڑا مرا چہرہ

جسے بجھا کے ہوا سوگوار پھرتی ہے
وہ شمع ِ شام ِ سفر تھی کہ تھا مرا چہرہ

بےلگام
07-31-2012, 04:56 AM
وہ لوگ کیوں مجھے پہچانتے نہیں محسن
میں سوچتا ہوں کہاں رہ گیا مرا چہرہ

بےلگام
07-31-2012, 04:56 AM
پرندے لوٹ رہے تھے گھروں کی سمت مگر
ہوا کا رخ تھا شکستہ پروں کی سمت مگر

چھتوں پہ کتنا چراغاں تھا اب کہ جشن کی رات
وہ دیکھنا مرا بجھے دروں کی سمت مگر

بےلگام
07-31-2012, 04:57 AM
کشادہ دل تھے کئی لوگ یوں مقتل میں
بڑھے ہیں تیر ہمارے سروں کی سمت مگر

بدن پہ آئینے اوڑھے وہ لوگ آئے تھے
مرا خیال رہا پتھروں کی سمت مگر

بےلگام
07-31-2012, 04:57 AM
میں بڑھ رہا تھا ترے دشمنوں سے لڑنے کو
ترا عذاب مرے لشکروں کی سمت مگر

وہ اک نگر تھا کہ بازار ِ مصر تھا محسن
کوئی نظر نہ اٹھی دلبروں کی سمت مگر

بےلگام
07-31-2012, 04:59 AM
جانے والے آ، نہیں تاب ِ پشیمانی مجھے
چھیڑتی رہتی ہے میرے گھر کی ویرانی مجھے

عشق نے بخشی ہے یہ کیسی پریشانی مجھے
اب نہ مشکل راس آتی ہے نہ آسانی مجھے

بےلگام
07-31-2012, 04:59 AM
میں نے جب دیکھا ہے اربابِ طرب کو غور سے
خشک آنکھوں میں نظر آئی ہے طغیانی مجھے

عشق کا اور بے قراری کا پرانا ساتھ ہے
تم نہ گھبراو نہیں کوئی پریشانی مجھے

بےلگام
07-31-2012, 04:59 AM
میرے مالک زندگی میں کیا ہنسا جاتا بھی ہے
کوئی ہنستا ہے اگر ہوتی ہے حیرانی مجھے

اس زمیں میں شعر مجبوراََ کہے میں نے خمار
ہو رہی ہے روح ِ غالب سے پشیمانی مجھے