PDA

View Full Version : بس یونہی تنہا ہیں ہم



نگار
09-15-2012, 07:04 PM
سب سے چپ کر جب تنہائیوں میں روتے ہیں
اُسے پوچھتے ہیں اُس سے سوال کرتے ہیں

کیوں نا چاہ سکے وہ ہمیں ؟
کیوں نا بُھلا سکے ہم اُنہیں ؟
کیوں وہ اتنا یاد آتے ہیں ہر پل ؟
کیوں میٹھا درد دے گئے گزر گئے جو کل ؟
کیوں اب بھی دل میں ہے محبت اُنکے لیے ساقی ؟
کیوں اب بھی پُرانے زخم کے ٹھیس ہیں باقی ؟

بن ملے ہی جُدائی کا غم کیوں ؟
جو قدر کر سکے نا ہماری
اُن کے لیے یہ آنکھیں ہیں نم کیوں ؟

اس درد میں بھی ہم مسکرانا چاہتے ہیں
کیونکہ تنہائیوں میں بھی بس وہی یاد آتے ہیں ؟
اُس بیتے ہوئے کل میں ہم اب بھی کھونا چاہتے ہیں
کیونکہ آج کی بھیڑ میں ہم خود کو تنہا پاتے ہیں ؟

دل لگی تو دل سے ہوئی ہے
پر دل سے شکوہ کریں بھی تو کیسے
گُستاخ دل ہی رہا نا اپنا اب
تو اُن سے گلہ کریں تو کیسے ؟

بکھر گیا ہے جہاں پھر بھی
دل کو اب بھی اُسی آشیانے کی تلاش ہے
بن خطا ملی ایسی سزا پھر بھی
بے مروت اس دل کو اب بھی اُن سے ہی آس ہے

پوچھے جو زمانہ آج پھر سے کیوں تنہا ہو تم ؟
بے وجہ اُن کے خیالوں میں کیوں ہو پھر سے گم ؟

تو اب کیسے کریں بیاں کیوں تنہا ہے ہم ؟
میرے آنسو بس میرے لیے،بس اپنے ہیں میرے غم

اس بے درد دُنیا کے لیے تو
بس یونہی تنہا ہے ہم




http://sadlovequotesforhim.com/wp-content/uploads/2012/02/sad-love-quotes.jpg

بےباک
09-19-2012, 01:45 AM
بکھر گیا ہے جہاں پھر بھی
دل کو اب بھی اُسی آشیانے کی تلاش ہے
بن خطا ملی ایسی سزا پھر بھی
بے مروت اس دل کو اب بھی اُن سے ہی آس ہے

بہت خوب جناب ، زبردست

نگار
09-19-2012, 07:48 PM
بے باک صآحب اور پرویز بھائی پسند کرنے کا بہت بہت شکریہ
خوش رہیں