PDA

View Full Version : طالبان مذمت نہ کرنے والے مولوی کو نماز سے روک دیں۔ الطاف حسین



شاہنواز
10-13-2012, 10:27 PM
طالبان مذمت نہ کرنے والے مولوی کو نماز سے روک دیں۔ الطاف حسین کی کارکنوں کو ہدایت



لندن(پ ر)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے پاکستان کے تمام مکاتب فکرسے تعلق رکھنے والے عوام سے اپیل کی ہے کہ جوعلمائے کرام اورخطیب نمازجمعہ کے خطبہ میں قوم کی بیٹی ملالہ یوسفزئی پر طالبان کے دہشت گردوں کے حملے کی مذمت نہیں کریں عوام ایسے علماء کے پیچھے نمازپڑھنے سے انکار کردیں اور انہیں مساجد میں نماز نہ پڑھانے دیں یا پھر ان مساجد کا رخ کریں جہاں علمائے کرام اور خطیب دہشت گردی و سفاکی کے اس واقعہ کی مذمت کررہے ہوں۔ دوسری جانب متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے اپنے ایک بیان میں کراچی سمیت ملک بھرکے تمام شہروں میں قائم ایم کیوایم کے تمام یونٹوں، سیکٹروں، زونوں کے ذمہ داروں، کارکنوں اور ہمدردوں سمیت تمام امن پسند شہریوں سے پرزور اپیل کی ہے کہ وہ اپنے اپنے علاقوں میں موجود ہر مسجد اور ہر مدرسہ کے سربراہوں، خطیبوں، آئمہ ، واعظوں، عالموں اور مفتیوں کے نام مع ولدیت اور دیگر کوائف ایک ہفتہ کے اندر اندر اپنے اپنے علاقوں کے یونٹوں سیکٹروں کے تنظیمی دفاتر میں جمع کرائیں خواہ وہ کسی بھی فقہ، مسلک یامکتبہء فکرسے تعلق رکھتے ہوں۔ انہوں نے کہاکہ علماء، خطیبوں اور اماموں کے یہ کوائف یونٹوں اور سیکٹروں سے زونوں میں جمع کیے جائیں گے جس کے بعد یہ کوائف تمام زونوں سے ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیروکو فی الفور بھیجے جائیں گے۔ الطاف حسین نے تمام زونوں، سیکٹروں اوریونٹوں کے ذمہ داروں کوتاکیدکی کہ مساجد، امام بارگاہوں یا دینی مدرسوں کے جوآئمہ، خطیب، زاکرین، علماء، اور سربراہان اپنے کوائف بتانے سے انکارکریں انکے خانوں میں لکھ دیاجائے کہ فلاں فلاں مسجد، امام بارگاہ یا مدرسے کے سربراہ، خطیب، امام یا زاکرین نے اپنا نام اور دیگرکوائف بتانے سے انکارکیا ہے تاکہ ان کے نام حکومت کو ارسال کیے جائیں اور حکومت ان کی تفصیلات فی الفورجمع کرے کیونکہ اس میں ملک اورملک کے معصوم عوام کا مفاد ہے۔ علاوہ ازیں اپنے ایک جاری کردہ بیان میں ایم کیو ایم کے قائد نے تمام مکاتب فکر کے علمائے کرام سے اپیل کی کہ وہ نماز جمعہ کے خطبہ میں ملالہ یوسفزئی اوردیگرمعصوم بچیوں پر سفاکانہ حملہ کرنے والے طالبان کے دہشت گردوں کی کھل کر مذمت کریں اور ساتھ ساتھ ملالہ اوردیگرزخمی بچیوں کی جلد صحتیابی کے لیے دعا کریں۔
< پچھلا اگلا >