PDA

View Full Version : امریکی سازش اور پاکستانی قوم



محمداشرف يوسف
10-14-2012, 04:18 PM
صرف ملالہ یوسف زئی ہی نہیں یہاں ایک لمبی لسٹ ہے جو کسی وکی لیکس کا انتظار کر رہی ہے سب میں ایک ہی راز پنہاں ہے لیکن یہ سارے واقعیات ” طالبان نے ذمہ داری قبول کر لی ” پر اختتام پذیر ہو جاتے ہیں ان سب حالات میں میڈیا نے ٹھیک ٹھاک مغرب کا نمک حلال ہونے کا ثبوت دیا ہے اور یہ بیچارا سادہ عوام ایسے میں کچھ اپنی عقل سے بی سوچےجو ان کی نظر آئے بس لعن طن اور گالی ہی سن پاۓ-

میں کبھی کبھی سوچتا ہوں اسلاف کا رنگ افغانستان میں لوٹانے والے طالبان ؛ جب دشمن نوجوان دوشیزائیں قیدی تین تین سال بعد انکی جیل سےرہا ہو کر نکلتی ہیں تو گواہی دیتی ہیں کہ ہمیں چھوا تک نہیں گیا بھلا وہ ان گلی کوچوں کے انسانوں کے یوں کیسے دشمن ہو سکتے ہیں ؟ مراد یہ بات تو سمجھ آتی ہے کہ طالبان نہیں ہو سکتے لیکن یہ بات سمجھ سے بالا تر ہے کہ پھر افغان طالبان ایسے عوامل سے خود کو صاف صاف واضح کیوں نہیں کر پائے؟ آیا یہ پاکستانی طالبان حقیقت میں انکا حصہ ہیں یا یا کسی گہری امریکی سازش کا ؟ حصہ بنے ہوۓ ہیں یا بناۓ گئے ہیں ؟ میرے مشاہدے کے مطابق تحریک طالبان پاکستان(ٹی ٹی پی) ایک تحریک تخریب پاکستان(ٹی ٹی پی ) کے سوا کچھ نہیں جو باقاعدہ بلیک واٹر تنظیم کے نیچے کام کر رہی ہے ان نام نہاد جہادیوں کا افغان جہاد میں بھی ذرا برابر حصہ نہیں رہا – گزشتہ وزیرستان آپریشن سے قبل رات کی تاریکی میں امریکی ہیلی کاپٹرز کی نقل و حرکت اور پھر ریمنڈ ڈیوس کی گرفتاری کے فوراّ بعد تحریک طالبان پاکستان کی سرگرمیوں کی بندش اس راۓ کو مزید قوت فراہم کرتی ہیں -سچ تو یہ ہے کہ جہاد کو اگر کوئی نقصان پہنچا ہے تو اس امریکی جہاد سے ہی پہنچا ہے ورنہ پاکستان کی غالب اکثریت امریکا کے خلاف جہاد کی حمایتی ہے کاش افغان کوہساروں سے کوئی آواز آئےتو ہی یہ ساری دھندلاہٹ چھٹ پاۓ -

دوسری طرف سوشل میڈیا پر اکثر افراد نے ملالہ کی تصویر اپنی ڈی پی پر لگا رکھی ہے یہ وہ سادہ لوگ ہیں جو دل میں انسانیت کا دکھ اور تکلیف رکھتے ہیں لیکن اس ملالہ نامی تیرہ سالہ لڑکی سے واقفیت نہیں رکھتے یہ وہ لڑکی ہے جس کا آئیڈیل لیڈر امریکی صدر بارک اوباما ہے اور امریکہ کی ہر اس کوشش کی حمایتی ہے جو اس خطے میں طالبان کے خلاف کی جاۓ ، امریکہ نے اس کردار کو نہ صرف پیدا کیا ہے بلکہ اسے اسی امن کی سفارت کاری سے نوازا ہے جسے عالمی امن کا نام دے کر اپنے لاؤ لشکر سمیت اس خطے میں کود پڑا تھا پھر اس واقعے کے بعد اوباما ، بان کی مون ، ہیلری اور میڈونا کے تاثرات اس کو واضح طور پر مغرب کے مفاد کا اہم کردار ظاہر کرتے ہیں قطح نظر یہ کردار ملالہ کی فیملی نے خود لیا یا انھیں دے دیا گیا اور آج اس کردار کو بہترین ممکن استعمال کیا گیا ہے -

سوال یہ اٹھتا ہے کہ جب پوری قوم امریکہ کے خلاف ہے سید منور حسن سے لے کر عمران خان تک تمام قابل اعتماد لیڈر امریکہ کی اس خطے میں کی جانے والی کاروائیوں کے خلاف ہیں تو یہ درد دل سے بھرے انسان ایک امریکی ہیرو اور کردار کو اپنا ہیرو اور قومی اثاثہ کیوں قرار دے رہے ہیں ؟ چہ جائیکہ امریکہ نے اپنے اس تیرہ سالہ نابالغ کردار کو اپنے مذموم مقاصد کے لیے انتہائی گھناؤنے طریقے سے استعمال کیا ہے جو قابل مذمت ہے لیکن وہ ہرگز قومی اثاثہ نہیں ہو سکتی ، یہ شاطر بکاؤ میڈیا کی فنکاری ہے کہ اسے قومی اثاثے کے طور پر پیش کیا جا رہا ہے اور اکثریت نے آنکھیں بند کر کے قبول کر لیا ہے مجھے اس میں بینظیربھٹو کا قتل نظر آرہا ہے جس پر قوم کےاندھیرے نے زرداری جیسا لیڈر پیدا کر دیا تھا آج بھی ویسی کیفیت پیدا ہے قوم اپنے ہاتھوں سے امریکا کے مذموم مقاصد پورے کرنے چلی ہے

وہ مقاصد جو اس سازش کے پس پردہ کام کر رہے ہیں میں ایک بار پھر دوہرائے دیتا ہوں :
شمالی وزیرستان میں آپریشن کی راہ ہموار کرنا
ڈرون حملوں کا بہترین جواز فراہم کرنا
اسلام مخالف فلم پر پاکستانی احتجاج کو منظر نامے سے ہٹانا
پاکستان میں امریکی ساکھ کی بحالی کی کوشش کرنا
امریکی الیکشن میں باراک اوباما کو سیاسی طاقت پہنچانا

پاکستانی قوم اس کھیل میں امریکی عزائم پر بہت حد تک پورا اتری ہے، شمالی وزیرستان میں آپریشن ہونے چلا ہے ، شان رسالت صلی اللہ علیہ وسلم کے ایشو کو ملالہ کا ایشو ہضم کر گیا ہے اور روز درجن بھر پاکستانی ڈرونز سے مارے جائیں گے اور یہ قوم تالیاں بجا بجا کر کہے گی کہ ملالہ کے دشمنوں سے بدلہ لیا جا رہا ہے ، نام نہاد وار آن ٹیرر کی تاریخ میں پاکستانی قوم کبھی اس حد تک نہیں بہکی تھی جس طرح آج امریکا نے اسکو ہاتھ میں جکڑ لیا ہے -

وقت کی ضرورت ہے کہ پاکستانی قوم کو اس فریب اور سازش سے نکالا جاۓ پاکستان کا دشمن ناموں سے دھوکہ دے رہا ہے عقل مندی کا تقاضا ہے کہ پس پردہ دشمن پر انگلی رکھی جاۓ اور اس کے خلاف جدوجہد کی جاۓ اس دشمن سے چھٹکارا حاصل کرنا صرف اور صرف “گو امریکا گو ” تحریک میں ہی مضمر ہے اگر آپ پاکستان اور اسلام کے لیے کچھ کرنا چاھتے ہیں تو اسے اپنی اولین ترجیح بنانا ہو گا ورنہ بہت دیر ہو جاےٴ گی-

( ماخوذ از مائی آئیڈیالوجی از اسلام اینڈ مائی آئیڈنٹٹی از پاکستان )

بےباک
10-16-2012, 08:44 AM
بہت بہت شکریہ ، آپ نے ایک زبردست مضمون شئیر کیا اور ساتھ حوالہ بھی دیا ،
محترم میں نے عربوں میں تقریبا 38 سال گزارے ہیں ، میں نے ایک بات کو خصوصا نوٹ کیا جس کا برملا اظہار کرنا چاھتا ہوں ، یہ میرے خیالات ہیں اور وہ یہ کہ
ہم بحیثیت مسلمان قوم سخت مرعوبیت کا شکار ہیں ، اور وہ امریکن اور مغرب سے کچھ یوں ہے
1: تعلیمی ، سائنیسی اور تحقیقی میدان میں
2: صنعتی و زرعی میدان میں
3:اسلحہ سازی کے میدان میں
4: ذرائع ابلاغ کے میدان میں
5: خلائی اور طیارہ سازی کے میدان میں
6: تعیش اور دنیاوی آسائشوں میں
7:میڈیکل اور طب کی ریسرچ میں
8: اسلام کی دشمنی میں ان کے اتحاد سے اور مشترکہ طاقت سے اس کے خلاف فوجی ایکشن لینا
9:بینکاری اور معاشی طور پر دنیا کے وسائل پر قبضہ سے اور اس کا متبادل پیدا ہی نہ ہونے دینا
10: اور سیاسی میدان میں ،سازشی کردار اور قبضہ گروپس جیسا طرز عمل
11: یہود و نصاری کا اسلام دشمنی میں متحد ہونا ۔
12: کمزور ملکوں کو دبا کر رکھنا ، اور مختلف ملکوں کو معاشی طور پر قتل کرنا ، ورلڈ بینک یا آئی ایم ایف کی شرائط پر ان کو مزید پستی میں گرانا
13: کسی بھی ایسے ملک کو نہ اٹھنے دینا جس سے خطرہ ہو کہ وہ ان کی اجارہ داری ختم کر دے گا
14 : اقوام متحدہ اور بین الاقوامی ادارے بنانے میں ، اور ان میں مسلمان ملکوں کو آزادی تحریر اور واھیات ثقافت کی یلغار کو ترقی قرار دینا ، مخلتف این جی اوز بنانا ، اور صرف مذموم مقاصد کے لیے ان کو استعمال کرنا ،
اور پھر خود ان یہود و نصاری کا ان اداروں کا سرخیل بن جانا یا پسندیدہ لوگوں کو ان اداروں پر قابض بنانا اور من چاھے فیصلہ کرنا یا لینا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اب اپنے گریبان میں منہ ڈالیں ، اور پھر یہ کہہ دیں ، ہم کیا کریں ، ہمارے اختیار میں کچھ نہیں ۔۔۔۔ تو یوں سمجھیے ہم خود تباہ ہو رہے ہیں ،

tashfin28
10-16-2012, 06:40 PM
ملالہ يوسفزئ پر حملہ اور ٹی ٹی پی کا ذمہ داری قبول کرنے کے متعلق بيانات

محترم ممبران،
السلام عليکم،

ميں سمجھنے سے قاصر ہوں کہ کچھ ممبران کيوں ملالہ يوسفزئ پر طالبان کے حملے کے متعلق موجود حقائق کو مروڑنے کی کوشش کررہے ہيں۔ ٹی ٹی پی اور سوات طالبان کی جانب سے اس حملے کی ذمہ داری قبول کر لينے کے باوجود يہ تمام دعوے اور تاثر دينا کہ ملالہ يوسف زئ پر حملے ميں کوئی ان ديکھے خفيہ بيرونی ہاتھ ملوث ہيں، نا صرف يہ کہ واضح حقيقت سے انکار ہے بلکہ وہ ملالہ اور ان جيسے بےشمار افراد کی بہادری اور تکليف کو بھی نظرانداز کرنے کے مترادف ہے جنھوں نے ان دہشت گرد تنظيموں کی غير انسانی سوچ، نظريہ اور بربريت کے خلاف جرات کا مظاہرہ کيا۔

محترم ممبران، ميں دوہرانا چاہتا ہوں کہ سازشی کہانيوں کے دلدادہ افراد جو "غير ملکی ہاتھ" جيسی اصطلاحات استعمال کر کے اپنے واضح شيطانی ايجنڈے کا پرچار کرتے ہيں اور حقائق کا انکار کرتے ہيں، انھيں بھی اس حقيقت کو ماننا پڑے گا کہ سازشی کہانيوں اور تخلياتی دنيا کے اصول و ضوابط کو سامنے رکھتے ہوۓ بھی اگر آپ ديکھيں تو يہ کہانی بالکل غير حقيقی لگتی ہے کہ وہ دہشت گرد جو خود کو بم دھماکوں ميں اڑا دينے کے درپے ہيں، وہ کسی غیر ملکی سيکورٹی کمپنی کے ايجنٹ ہيں۔

ميں ايک بار پھر ان تمام مبصرين سے جو ان سازشی عناصر کے پروپيگنڈے کا شکار ہوچکے ہيں سے درخواست کرتا ہوں کہ برائے مہربانی ان سازشی نظريات پر مبنی اس خيالی دنيا سے باہر آ جائيں اوردنياکے تمام شعبہ ہائے سے تعلق رکھنے والے لوگوں کے ساتھ اس بچی کے خلاف اس غير انسانی جرم کی مذمت اور جلدی صحت يابی کيلۓ دعا کرکے کچھ بڑاپن کا مظاہرہ کريں

تاشفين – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ
digitaloutreach@state.gov
www.state.gov
https://twitter.com/#!/USDOSDOT_Urdu

انجم
10-17-2012, 07:32 AM
بہت بہت شکریہ ، آپ نے ایک زبردست مضمون شئیر کیا اور ساتھ حوالہ بھی دیا ،
محترم میں نے عربوں میں تقریبا 38 سال گزارے ہیں ، میں نے ایک بات کو خصوصا نوٹ کیا جس کا برملا اظہار کرنا چاھتا ہوں ، یہ میرے خیالات ہیں اور وہ یہ کہ
ہم بحیثیت مسلمان قوم سخت مرعوبیت کا شکار ہیں ، اور وہ امریکن اور مغرب سے کچھ یوں ہے
1: تعلیمی ، سائنیسی اور تحقیقی میدان میں
2: صنعتی و زرعی میدان میں
3:اسلحہ سازی کے میدان میں
4: ذرائع ابلاغ کے میدان میں
5: خلائی اور طیارہ سازی کے میدان میں
6: تعیش اور دنیاوی آسائشوں میں
7:میڈیکل اور طب کی ریسرچ میں
8: اسلام کی دشمنی میں ان کے اتحاد سے اور مشترکہ طاقت سے اس کے خلاف فوجی ایکشن لینا
9:بینکاری اور معاشی طور پر دنیا کے وسائل پر قبضہ سے اور اس کا متبادل پیدا ہی نہ ہونے دینا
10: اور سیاسی میدان میں ،سازشی کردار اور قبضہ گروپس جیسا طرز عمل
11: یہود و نصاری کا اسلام دشمنی میں متحد ہونا ۔
12: کمزور ملکوں کو دبا کر رکھنا ، اور مختلف ملکوں کو معاشی طور پر قتل کرنا ، ورلڈ بینک یا آئی ایم ایف کی شرائط پر ان کو مزید پستی میں گرانا
13: کسی بھی ایسے ملک کو نہ اٹھنے دینا جس سے خطرہ ہو کہ وہ ان کی اجارہ داری ختم کر دے گا
14 : اقوام متحدہ اور بین الاقوامی ادارے بنانے میں ، اور ان میں مسلمان ملکوں کو آزادی تحریر اور واھیات ثقافت کی یلغار کو ترقی قرار دینا ، مخلتف این جی اوز بنانا ، اور صرف مذموم مقاصد کے لیے ان کو استعمال کرنا ،
اور پھر خود ان یہود و نصاری کا ان اداروں کا سرخیل بن جانا یا پسندیدہ لوگوں کو ان اداروں پر قابض بنانا اور من چاھے فیصلہ کرنا یا لینا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اب اپنے گریبان میں منہ ڈالیں ، اور پھر یہ کہہ دیں ، ہم کیا کریں ، ہمارے اختیار میں کچھ نہیں ۔۔۔۔ تو یوں سمجھیے ہم خود تباہ ہو رہے ہیں ،

انجم
10-17-2012, 07:46 AM
محترم بے باک جی آپ کا لکھا ھوا مضمون پڑہا ۔بہت عرصے بعد ایک ایسی تحریر پڑہنے کو ملی جس کے لکھنے والے کی آنکھوں پر کسی بھی قسم کی تعصب کی عینک نہیں لگی ھوی ۔جس دیانت اور ایمانداری سے آپ نے موجودہ صورت حال کا تجزیہ کیا ھے وہ قابل تحسین ھے ۔دنیا کا سب سے مشکل کام اپنے گریباں میں جھانکنا ھوتا ھے اور یہ خوبی اس زمانے میں کم ہی لوگوں کے حصے میں آی ھے ۔شتر مرغ کی طرح ریت میں گردن دبا کر $$ یہ بھی امریکہ نے کیا ھے ،یہ بھی امریکہ نے کیا ھے $$ کی گردان کرنے سے اصلیت کو چھپایا نہیں جا سکتا ۔آپ نے جن باتوں کا زکر اپنی تحریر میں کیا ھے ان سےکیا کوی بھی زی ھوش انکار کر سکتا ھے ۔نہیں کبھی نہیں ۔ دوسروں کو الزام دینے سے پہلے انسان کو چاہیے کہ وہ اپنی کوتاہیوں پہ بھی ایک نظر ڈال لے ۔(نوٹ) آج پتا چلا آپ کو بے باک کیوں کہا جاتا ھے ۔میرا سلام قبول کیجیے گا۔،،،،،،،،،،،،،،،،،،انجم

سرحدی
10-17-2012, 09:01 AM
بے باک بھائی اللہ تعالیٰ آپ کو جزائے خیر عطا فرمائے بہت قیمتی باتیں تحریر فرمائی ہیں۔
تاشفین صاحب! جناب عالی! اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ یہاں پر کچھ ممبران بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کررہے ہیں تو محترمی! آپ جن کی حمایت کی سر توڑ کوشش کررہے ہیں ان کی ’’انسانیت دوستی‘‘ کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے۔ محترم خوامخواہ آپ ایک ایسے موضوع پر لوگوں کو قائل کرنے کی کوشش کررہے ہیں جس کو انسانیت کے دائرے میں رہتے ہوئے آپ انسان دوست مہم ثابت نہیں کرسکتے۔ آپ ہمارے فورم کے ممبر ہیں اور ایک ممبر ہونے کے ناطے آپ کی عزت اپنی جگہ، لیکن محترمی! کبھی آپ کے گھر پر بھی ڈرون حملہ ہو، کبھی آپ کے معصوم بچے بھی منو مٹی تلے دب کر مار دئیے جائیں تو آپ کو اس درد کا احساس ہوگا۔۔۔!
ملالہ ہماری بیٹی ہے، ہمارے ملک کی شہری ہے، میری قوم سے تعلق رکھتی ہے ہم انسانیت پر ہونے والے ظلم کی حمایت کبھی نہیں کریں گے، لیکن جس طرح سے اس معصوم بچی کو اپنے مقاصد کے لیے استعمال کیا گیا یہ بھی اپنی جگہ ایک حقیقت ہے۔ اس سے آپ انکار نہیں کرسکتے۔ بس اتنا عرض کروں گا کہ وقت کا انتظار کیجیے ان شاء اللہ یہ سارا معاملہ واضح ہوتا چلا جائے گا۔ اور اس کے ساتھ ساتھ یہ تصاویر بھی دیکھ لیجیے گا
http://ummatpublication.com/2012/10/17/images/add1.jpg
http://ummatpublication.com/2012/10/16/images/add1.jpg

بےباک
10-17-2012, 10:51 AM
http://urdulook.info/imagehost/?di=JF30
http://urdulook.info/imagehost/?di=R8XU
http://urdulook.info/imagehost/?di=E1WA
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جناب تاشفین صاحب ۔ آپ ان چند تصاویر کو بھی دیکھ لیں ، آپ کہہ دیں کہ یہ سب فوٹو شاپ کا کمال ہے ،
محترم ہمیں ضرورت نہیں ہے کہ حقائق تبدیل کریں ، سچ کے دونو پہلو سامنے آنے چاھئیں ، ہو سکتا ہے ہم آپ کو جو صورت دکھا رہے ہوں وہ جعلی ہو اور ہو سکتا ھے آپ جو کہانی ہمیں بتا رہے ہیں وہ جعلی ہو ،
اسی طرح کی کہانی اسامہ بن لادن کی ویڈیوز کی تصدیق اور ان کی الجزیرہ ٹی وی تک رسائی اور مختلف ذرایع ابلاغ پر ان کا نشر ہونا اور پھر امریکن اتھاڑیز کی طرف سے اس کے اصلی ھونے کا یقین دلانا ،
اور اسی طرح طالبان کا اپنا جرم تسلیم کرنا اور پھر اس کی تصدیق کرنا ،آخر یہ سب تصادیق آخر وہی ٹی وی والے ہی کر رہے ہیں نا ، جن پر یو ایس ایڈ کے کئی کئی کروڑ روپیہ کے اشتہارات چل رہے ہیں ، ہمارے ملک کی خدمت میں پیش پیش امریکا ،
میرے پیارے بھائی تاشفین جی ،،موجودہ دور میں اور ٹیکنالوجی کے اس شاندار ترقی کے بعد میں آپ کو ایک بات واضع کر دینا چاھتا ہوں ،
کہ سب ویب اور انٹرنیٹ پر آپ کی اجارہ داری ہے نا ،،
ونڈوز میں بلیک ھولز ہیں نا
سی آئی اے کے فنڈ جاری ہوتے ہیں بل گیٹس کو ٹیکنکل معاونت کے طور پر
کیا کوئی ایک بھی ویب اوپن ھو سکتی ہے جو اس آرگنائزیشن کی مرضی کے بغیر چل سکتی ہو یا کھل سکتی ہو ، یہ ایجنسی یا اورگنائزیشن یو ایس کی ہے نا ۔ باقی دنیا بھر میں ان کے ایجنٹس نام بکنک کرتے ہیں اور ڈومین بناتے ہیں ،
ان کی ویب کا ایڈریس دیکھیں ،
http://www.icann.org/
Organization:ICANN
Street1:12025 Waterfront Drive
Street2:Suite 300
Street3:
City:Los Angles
State/Province:California
Postal Code:90094-2536
Country:US
۔۔۔۔۔۔۔۔۔Phone:+1.4242171313۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ FAX:+1.4242171313
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ونڈوز میں بلیک ہولز خاص طور پر بنائے جاتے ہیں ، طے شدہ منصوبے کے مطابق ،،،آج کے دور میں جو کمپیوٹر انٹرنیٹ اگر لگا ہوا ہے تو ونڈوز آٹومیٹک اس کمیوٹر کا ڈاٹا انٹرنیٹ سے جوڑ دیتا ہے، فنی طور پر ایسا کیا گیا ہے ایک بھی لفظ اگر لکھا جائے اسی وقت ڈاٹا کنٹرول سنٹر میں (کی لوگر کے ذریعے ) پہنچ جاتا ھے ،بلکہ یہاں تک نظام بنا دیا گیا تھا کہ کسی کمپیوٹر سے صرف اسامہ بن لادن لکھا جاتا تھا تو اس کمپیوٹر کے مالک تک مکمل رسائی ہو جاتی تھی اور اس کی نگرانی شروع ھو جاتی رہی ، جب ایسا سخت نظام بنا ہوا ہے تو ،، پھر میرا سوال یہ ھے؟؟؟؟
1: اسامہ بن لادن یا ایمن الظواہری کی ویڈیو اپ لوڈ ھوتے ہوئے دکھائی نہین دیتی ،
2: وہ ویب سائیٹس الموحدین اور اسی قبیل کی دوسری ویب سائیٹس آپ کی سپر ٹیکنالوجی اور رجسٹریشن کے نظام کا اعلی پیمانے پر ہوتے ہوئے ،وہ لگاتار کیسے کام کرتے رھتے ہیں ،اور ان کی رجسٹریشن کینسل نہیں ہوتی
3:فنی یعنی ٹیکنیکی طور پر کافی چیزیں ہیں جس کی طرف آپ کی توجہ دلاتا ہوں ،، اسامہ بن لادن کی آڈیو یا ایمن الظواہری کی ویڈیو کیا فلمی طور پر نہین بنتی رہی ؟؟؟؟، کیا جورج بش نے 9 سمتبر کے واقعات کے بعد ھالی ووڈ والوں کو بلا کر ان کے کندھوں پر ذمہ داری نہین ڈالی تھی ؟؟؟، کیا آڈیو ڈیوایسز موجود نہیں جو ہو بہو ویسی ہی آواز مکینکل بنا سکتی ہیں ؟، پھر سونے پر سہاگہ آپ کے ذرائع ابلاغ اس کی تصدیق فورا کر دیتے ہیں ، اور چونکہ ان کی سب آوازوں کا ڈیٹا رکھا ھوتا ہے لہذا آپ کی فنی مہارت کی وجہ سے اس کو قبول بھی کر لیا جاتا ھے ،
4: کیا 1990 میں ھلسنکی کے مقام پر فن لینڈ میں روس کے ٹوٹنے بعد گورباشوف کے ساتھ بوش کا معائدہ نہین طے پایا تھا کہ کمیونزم کے بعد اب گرین مانسٹر ( اسلام ) کا مل جل کر مقابلہ کرنا ھے ،کیا آپ سی این این کی اس رپورٹنگ کو بھول گئے ، جو اس نے اس موقع پر کی تھی ، نہین یاد آ رہا تو یہ فوٹو دیکھ لیں ، سابقہ کہانی ہے ہو سکتا ھے مشکل سے آپ کو یاد ائے ۔عراق نے ان دنو ں کویت پر قبضہ کیا تھا ،
http://www.corbisimages.com/images/Corbis-IH055339.jpg?size=67&uid=f2b51ad8-fefc-45da-b4d4-e07a5d231aad
محترم تاریخ دیکھیں ، ہم حقایق نہیں تبدیل کر رہے ، اس مضمون میں کہاں حقائق تبدیل کیے آپ بتا دیں ۔۔۔۔

: شکریہ انجم بھائی اور شکریہ سرحدی بھائی ،آپ کی پسندیدگی کا

محمداشرف يوسف
10-17-2012, 03:08 PM
اں میں اس حملے کی مذمت کرنا چاہتا ہوں۔۔۔
لیکن ٹھہرئیے مجھے خدشہ ہے۔
خدشہ اس بات کا ہے کہ کوئی اس مذمت کو لے اُڑے اور اس واقعے کے پس منظر کو نظر انداز کردے۔
خدشہ اس بات کا ہے کہ کہیں مجھے ان میں سے سمجھ لیا جائے جو طالبان کو ہی پاکستان کا اصل مسئلہ مانتے ہیں۔
کہیں یہ نہ ہو کہ میں بھی ان لوگوں میں شمار کیا جاؤں جن لوگوں نے ایک ناسمجھ بچی کے احساسات کا استحصال کر کے اپنی مارکٹ بنائی۔
کہیں مجھے ان نابغہ روزگار دانشوروں سے وابستہ نہ سمجھا جائے جو اس واقعے کو پاکستان کی مجموعی صورت حال سے قطعی الگ ایک واقعہ ثابت کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔
خدشہ ہے کہ اس تحمل اور رواداری کی کمی والے رویے کو نشو نما دینے میں حکومت اور بڑی طاقتوں کے کردار کو نظر انداز کیا جائے گا۔
کہیں یہ نہ سمجھا جائے کہ ڈرون حملے کر کرکے لوگو کو قتل کرنا معمول کے واقعات ہیں اور بس یہی ایک واقعہ ہے جو ظلم اور نفرت کی علامت ہے۔
کہیں ایسا نہ ہو کہ میں بھی ان میں شامل سمجھا جاؤں جنہوں نے بھی اس واقعے کی مذمت کی ہے اور ان کی آواز میڈیا میں بہت اونچی ہے۔
کہیں ایسا نہ ہو کہ مجھے کراچی کو خون میں نہلادینے والے اس بھتہ خور لیڈر کے ساتھ سمجھا جائے جس کے نزدیک صرف بس یہی ایک حملہ ہوا ہے اور باقی سب خیر ہے۔
میں کس طرح اس امریکی حیا باختہ رقاصہ کے ساتھ اپنے آپ کو شمار کروں جس کو اپنے فوجیوں کے لاکھوں کے حساب سے کئے ہوئے قتل اور جنسی جرائم نظر نہیں آتے، لیکن ملالہ پر حملہ نظر آتا ہے؟
مجھے ڈر ہےکہ ملالہ پر حملے کے بہانے سے مغرب کی مادر پدر آزادی کو ایک طئے شدہ انسانی عقیدے کے طور پر پیش کیا جائے گا۔
ایسے میں اس ایک واقعے کی کس طرح مذمت کی جائے۔
جبکہ ہمارے ہاں ایسی شخصیات ہیں جو ڈرون حملے سے سینکڑوں شہریوں کی اموات کو قابل جواز مانتی ہے؟
طالبان کے نام سے ہونے والی ہر حرکت کو غیر رواداری پر مبنی اور امریکہ اور حکومت کی طرف سے ہونے والی ہر حرکت کو بہترین حکمت عملی قرار دیتی ہے؟
ایسے بکے ہوئے گند ذہن بھی ہیں جو ریمنڈ ڈیوس کی آزادی کو نہ صرف کامیابی مانتے ہیں بلکہ اسلام کے قانون دیت کے حوالے سے بالکل صحیح سمجھتے ہیں گویا کہ یہ صرف کوئی عام "قتل" کا معاملہ تھا۔
اور میڈیا بھی ایسا کہ ایک جھوٹی ویڈیوں جس میں ایک لڑکی کو کوڑے لگواتے ہوئے دکھایا گیا تھا کو استعمال کر کے وزیرستان آپریشن کی راہ ہموار کرتا ہے۔
اور فارین میڈیا ایسا جس میں کسی ناک کٹی ہوئی افغان عورت کی تصویر کو افغانستان پر قبضہ اور ہزاروں لوگوں کے قتل کے لئے جواز بنا کر پیش کرتا ہے۔
میڈیا میں شور مچاتے ایسے زندیق بھی ہیں جو ہر قسم کے مذہبی مقدسات کی تضحیک کے جواز کے قائل ہیں اور ان کے نزدیک صرف آزادی ہے ایک مقدس عقیدہ ہے جس پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوسکتا۔
آخر کیا کریں کس زبان سے مذمت کریں۔ کیا بکے ہوئے گندے ذہن دانشوروں کے ساتھ اپنے آپ کو شمار کریں؟ کیا اس بھتہ خور قاتل سیاست دان کی صف میں شامل ہوجائیں جسے پناہ ملتی ہے تو صرف برطانیہ میں؟ کیا اس میڈیا کے سر کے ساتھ اپنا سر ملائیں جو اپنے فائدے کے ہر واقعے کو اچک لیتا ہے جس سے مغربی آقاؤں کی خوشنودی حاصل ہو اور جس کے نزدیک ڈرون حملے صرف "خبر" ہوتے ہیں؟
آخر مذمت کروں تو کیسے کروں؟
اور ویسے مذمت کر کے کرنا بھی کیا ہے۔
میں کوئی سیاستدان تو ہوں نہیں جو کسی واقعے کی مذمت صرف ایک سیاسی بیان کے طور پر دیتا ہے اور اس واقعہ کے پیچھے موجود وجہ کو نظرانداز کرنا باقاعدہ اس کی پالیسی ہوتی ہے۔
میں کوئی دانشور تو ہوں نہیں جو کسی خاص طبقے سے متعلق ہر واقعے کی مخالفت کر کے اپنے آقاؤں کی خوشنودی حاصل کرنا چاہتا ہو۔
’مذمت‘ اگر کسی سیاسی پینترے یا کسی صحافتی چال کا نام ہے۔۔۔
تو صاحبو! جو ہوا غلط ہوا، لیکن میں نہیں کرتا مذمت!!
ليكن
میرا بھی ایک سوال ہے کہ
ڈاکڑ شکیل آفریدی اور ملالہ يوسفزئ کے والد ضیأالدین میں کیا فرق ہے
کہ ایک ہیروہوا اور دوسرا زیرو

گلاب
10-17-2012, 08:31 PM
خوب بے بے باک جی ۔۔۔۔
بھت شکریہ ان کا مکروھ چہرا دکھانے کا ۔۔