PDA

View Full Version : تاریخ نے ثابت کیا جیت ہمیشہ سچائی کی ہوتی ہے، جولین اسانج



گلاب خان
12-09-2010, 10:22 PM
سڈنی (این این آئی‘جنگ نیوز)وکی لیکس کے بانی جولین اسانج نے کہا ہے کہ نسل انسانی کی معلوم تاریخ ہمیں یہی بتاتی ہے کہ ہر دور میں جیت ہمیشہ سچائی کی ہی ہوتی ہے  کرپشن کیس سیاستدانوں نے دبائے تو مجھے سچائی آشکار کر نے کیلئے انٹر نیٹ ٹیکنالوجی کا سہارا لینا پڑا ۔ آسٹریلوی روزنامے دی آسٹریلین کے ادارتی صفحہ پر اپنے مضمون میں انہوں نے لکھا کہ وکی لیکس نے ہمیشہ حقائق کو دیانتداری اور شفاف طریقے سے پیش کیا ہے کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ عام افراد کو بھی حقائق جاننے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے اپنے مضمون میں نیوز کارپوریشن کے بانی آسٹریلوی نژاد امریکیRubert Murdoch کے جملے کا، جو انہوں نے بحیثیت ایک اخبار کے مالک او رمدیر کے لکھاتھا، حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ رازداری اور سچائی کی دوڑ میں جیت ہمیشہ سچائی کی ہی ہوتی ہے۔وکی لیکس کے قیام کا تذکرہ کرتے ہوئے جولین اسانج نے کہا کہ آسٹریلوی ریاست کوئنز لینڈ حکومت کے خلاف کرپشن کیس کو دبانے کے لیے سیاستدانوں کی جانب سے میڈیا پر قد غن نے انہیں اس جانب مائل کیا کہ وہ انٹرنیٹ ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے سچائی کو آشکار کرنے کا نیا راستہ متعارف کروائیں۔ اسانج اپنے بارے میں لوگوں کے ان خیالات کی نفی کرتے ہیں جس میں انہیں جنگ مخالف تصور کیا جاتا ہے۔انہوں نے لکھا کہ افغانستان اور عراق جنگ سے متعلق وکی لیکس کے انکشافات پر اس بات پر غور کرنے کی ضرورت ہے کہ میڈیا نے سچائی کے ساتھ غیر جانبدارانہ رپورٹنگ کی مگر وکی لیکس تنہا امریکی راز افشا کرنے کا ذمہ دار نہیں بلکہ برطانوی روزنامہ دی گارجین، نیویارک ٹائمز، اسپین اور جرمن جرائد بھی اس طرح کی سفارتی دستاویزات شائع کرتے رہے ہیں لیکن آسٹریلوی وزیر اعظم اور امریکی سیکرٹری خارجہ ان کے خلاف تنقید کا ایک جملہ بھی اس لیے نہیں کہتیں کیونکہ یہ بڑے اور پرانے ادارے ہیں جبکہ وکی لیکس نیا اور چھوٹا ادارہ ہے۔جولین اسانج نے عراق کے خلاف برطانوی تحقیقات کے مطالبے کو فکس قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس کا مقصد امریکی مفادات کا تحفظ کرنا تھا۔