PDA

View Full Version : مقدمہ نسوار



ابوسفیان
12-14-2012, 11:41 AM
نسوار دلچسپ سوغات ہے، دسویں جماعت تک کے سائنس کے طالب علموں کے لیے یہ صرف مینڈکوں کو بے ہوش کرنے کے لیے استعمال کی جانے والی اک دوائی ، جبکہ اسے کھانے والوں کے لیے فرحت اور شغل کا سامان۔ دنیا آج بھی مخمصے کا شکار ہے اور سمجھ نہیں پاتی کہ نسوار استعمال کرنے کو کیا نام دیا جائے؟ شراب نوش کی جاتی ہے، پان چبایا جاتا ہے اور بیڑی پی جاتی ہے مگر نسوار پر یہ الزام ہے کہ اسے کھایا جاتا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ نسوار کھائی ہی نہیں جا سکتی، اگر اسے کھائے جانے کی کوشش کی جائے تو کھانے والا شرطیہ اوندھے منہ اپنے معدے میں موجود سارا مواد واپس الٹ دے، اور پھیپھڑے صرف باہر کو ہوا پھینکیں۔۔۔ ایسا جانیے کہ اسے کھانے والے کا دل کھایا جاتا ہے۔ صاحبان کی معلومات کے لیے بتائے دیں اور رائے جانیں کہ نسوار استعمال کرنے کا عمل تین حصوں میں منقسم ہے؛ پہلے حصے میں جیب سے نسوار برآمد کر کے اس پر لپٹی "ربر بینڈ" اس احتیاط سے کھولی جائے کہ پلاسٹک کی گتھی کی شرررر ہوا میں بکھر جائے۔ دوسرے حصے میں پلاسٹک کی گتھی کے اوپر سے ہی خراماں خراماں ایک گولی تخلیق کی جائے اور تیسرے حصے میں اس گولی کو احتیاط سے اوپری یا نیچے والے ہونٹ اور جبڑے کے درمیان سجا دیا جائے۔ اب اس عمل کو کیا کہیے گا، ہمارے رائے میں کھانا تو ہر گز نہیں ہے۔ بات یہیں تک محدود نہیں، نسوار بارے ابھی تک اس کے صحیح مقام کا تعین بھی ممکن نہیں ہوا، اسے کہاں شمار کیا جائے؟ یہ نشہ آور اشیاء میں شمار ہو گی یا پھر اسے استعمال میں لانے والوں کے لیے صرف شغل کا سامان گردانا جائے۔ جو استعمال نہیں کرتے، ان کے لیے یہ اگر نشہ آور نہ بھی سہی، صحت کی بربادی کا موجب ضرور ہے۔ اور جو اسے استعمال کرتے ہیں ان سے اس بارے دریافت کرنا ہی فضول ہے۔ کہتے ہیں کہ نسوار استعمال کرنے کا اصل نشہ اس کی گولی بنانے میں ہے، منہ میں دبائے رکھنا تو بس اک رواج ہے۔ کہنے والے نے اپنی منطق کو ثبت کرنے واسطے مثال دی کہ لوگوں کو ایک دوسرے کو پان بنا کر پیش کرتے دیکھا ہو گا مگر آج تک ایک "نسواری" کو دوسرے "نسواری" کی جانب نسوار کی گولی اچھالتے نہیں پایا ہو گا۔ نسوار کی گولی بھی خوب شے ہے، لوگ اس کے حجم سے "نسواری" کی عادت کی تاریخ کا اندازہ لگاتے ہیں۔ سگریٹ نوش، وقت کے ساتھ سگریٹوں کی تعداد میں اضافہ کرتے ہیں اور "نسواری" وقت کے ساتھ اس کی گولی کے حجم میں۔ نسوار کے نشے آور ہونے بارے متضاد رائے ہیں، آج تک اس فتنہ پرور پر کسی مفتی کا فتویٰ سننے میں نہیں آیا مگر پھر بھی یہ بحث اکثر سماعتوں میں رس گھولتی ملتی ہے کہ آیا جیب میں نسوار کی پڑیا رکھ کر نماز ادا ہو جاتی ہے؟ حالانکہ دو ایک مولویوں کو ہم نے خود نسوار کی گولی اوپر کے جبڑے میں سجائے نماز تراویح کی امامت کرتے پایا۔ سیانے کہتے ہیں کہ نسوار کے اجزاء تین ہی ہیں؛ تمباکو، چونا اور پانی۔ تینوں میں سے ایک بھی نشہ آور شے کا خطاب سر لینے کو تیار نہیں۔ چونا اگر نشہ آور ہے تو صاحبو، فوجی چھاؤنیوں کے تمام درخت اور ٹرکوں اور جیپوں کے ٹائر ہر وقت نشہ میں دھت رہتے ہوں گے ، اور پانی اگر نشہ آور شے ہے تو شراب کشید کرنے کا فائدہ؟ رہا تمباکو تو اس بارے کچھ تسلی سے کہا نہیں جا سکتا۔ ایک "نسواری" سے دریافت کرنے پر عجب منطق سامنے آئی کہ، " سگریٹ اور نسوار میں فرق یہی ہے، نسوار میں آپ چرس بھر کر نہیں پی سکتے تو اس لحاظ سے نسوار صحت بخش شغل ہے"۔ ☠☠☠:Ghelyon: ♒♒♒♒♒♒♒♒♒♒♒♒♒♒♒♒ ♒♒♒♒♒♒♒☠☠☠

سقراط
12-14-2012, 09:18 PM
نسوار لگائی جاتی ہے اور اس بارے مین کسی پٹھان بھائی سے رابطہ کرنا پڑے گا
در اصل یہ ایجاد انہی کی ہے

بےباک
12-15-2012, 12:47 AM
زبردست مقدمہ پیش کیا ، وہ ابھی ایک قاضی جی نے ، حالانکہ مقدمہ تو ان کو ہی حل کرنا ہے نا ،
ہاہا
بے مثال خان سے پوچھوں گا ، لازمی ، :photosmile:

انکل سیانہ
12-15-2012, 01:37 AM
بہت عمدہ ، تحریر ، خوش خط لکھا کریں

ابوسفیان
12-15-2012, 01:50 AM
بہت عمدہ ، تحریر ، خوش خط لکھا کریں



وہ کس طرح ✎
پسند آئی تحریر شکریہ
°º¤ø,¸¸,ø¤º°`°º¤ø ☹ ☺ ☻

سقراط
12-15-2012, 01:51 AM
انکا مطلب ہے فونٹ چینج کریں جیسے علوی یا جمیل کشیدہ

ابوسفیان
12-15-2012, 04:03 PM
انکا مطلب ہے فونٹ چینج کریں جیسے علوی یا جمیل کشیدہ


[size=x-large]
ان شاء اللہ، لیکن اسمیں درج ذیل فونٹ ہی نظر آتے ہیں:
Arial
Courier
Impact
Tahoma
Times New Roman
Trebuchet MS
Verdana

طریقہ کار کیا ہے بتادیجیئے نوازش ہوگی
والسلام علیکم ورحمتہ اللہ ❀❀❀

نظرافغان
03-09-2013, 09:27 PM
نسوار لگائی جاتی ہے اور اس بارے مین کسی پٹھان بھائی سے رابطہ کرنا پڑے گا
در اصل یہ ایجاد انہی کی ہے


ٔجی مزاحمت مت کیجیي ګا۔ بهت ساری منشیات کی طرح نسوار کی ایجاد کا فخر آپ هی کي ساتهـ هی۔ یه سراسر پټان کا توهین هی۔

ابوسفیان
03-10-2013, 12:45 AM
نسوار لگائی جاتی ہے اور اس بارے مین کسی پٹھان بھائی سے رابطہ کرنا پڑے گا
در اصل یہ ایجاد انہی کی ہے


ٔجی مزاحمت مت کیجیي ګا۔ بهت ساری منشیات کی طرح نسوار کی ایجاد کا فخر آپ هی کي ساتهـ هی۔ یه سراسر پټان کا توهین هی۔

حضرت اسمیں کسی کی تضحیک یا توھین نہیں ہے
ہر شخص کو کمنٹس کرنے کی فکری آزادی ہے
والسلام

ابو حزیفہ
09-11-2013, 03:58 PM
نسوار وہ نشہ ہے جس کی اک بار کسی لت کو پڑ جاےَ، پھر بڑی مشکل سے جاتی ہے۔ نسوار زمین میں اگنے والی تمباکو کی پتیوں سے بنی مصنوعات ہے یہ smokeless کی ایک مثال ہے۔ نسوار ابتدائی طور پر امریکہ سے شروع ہوا اور یورپ میں 17 ویں صدی سے عام استعمال ہوا۔ یورپی ممالک میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے باعث حالیہ برسوں میں اضافہ ہوا ہے۔ عام طور پر اس کا استعمال ناک، سانس یا انگلی کے ذریعے کیا جاتا ہے۔ ریاست ہائے متحدہ اور کینڈا میں ہونٹ کے نیچے رکھ کر استعمال کرنے سے ہوئی۔ ہٹی کے مقامی لوگوں کی جانب سے 1496-1493 میں کولمبس کی جانب سے امریکہ دریافت کے سفر کے دوران Ramon Pane نامی راہب نے ایسے ایجاد کیا۔ 1561ء میں پرتگال میں Lisbon،فرانسیسی سفیر اور ان کے بیٹے Jean Nicot،کے بیماری کی وجہ جواز سے اس وقت یہ طبقہ اشرافیہ میں نہایت مقبول ہوا۔ 17 ویں صدی میں اس مصنوعات کے خلاف کچھ حلقوں کی جانب سے تحریک اٹھی اور پوپ اربن VII کی جانب سے خریداری پر دھمکیاں دیں گئیں۔ روس میں اس کا استعمال 1643 میں Tsar Michealکی جانب سے کیا گیا۔ ناک سے استعمال کی وجہ سے اس پر سزا مقرر کی گئی۔ فرانس میں بادشاہ لوئیس XIIIنے اس پر حد مقرر کی جب کہ چین میں1638میں پوری طرح نسوار کی مصنوعات پھیل گئی۔ ویں صدی تک نسوار کو پسند کرنے والوں میں نپولین بانو پارٹ، کنگ جارج III کی ملکہ شارلٹ اور پوپ بینڈکٹ سمیت اشرافیہ اور ممتاز صارفین میں یہ رائج ہوچکا تھا۔18 ویں صدی میں انگلش ڈاکٹر جان ہل نے نسوار کی کثرت استعمال سے کینسر کا خدشہ ظاہر کیا۔ امریکہ میں پہلا وفاقی ٹیکس 1794 میں اس لئے لگا کیونکہ اسے عیش و عشرت کی نشانی سمجھا جاتا تھا۔ اٹھارویں صدی میں Gentlewomanنامی میگزین میں پرتگالی نسوار کی اقسام اور استعمال کے مشورے شائع ہوئے۔ افریقہ کے کچھ علاقوں میں یورپی ممالک کے افراد کی وجہ سے پھیلی اور دیہاتیوں نے ناک کے ذریعے استعمال کیا۔ ہندوستان میں غیر ملکی کمپنیوں کی آمد کے ساتھ یہ مصنوعات بھی متعارف ہوئی اور اس کا استعمال پاک و ہند میں پھیل گیا۔ نسوار وہ نشہ ہے جس کی اک بار کسی لت کو پڑ جاےَ، پھر بڑی مشکل سے جاتی ہے۔ نسوار کی موجودہ اقسام میں ہری نسوار اور کالی نسوار کا استعمال عام ہے ۔ جو تمباکو، کوئلے کی راکھ، چونے کی مدد سے بنائی جاتی ہے۔ کالی نسوار کے لئے خصوصی تمباکو صوابی سے آتا ہے جس پر حکومت ٹیکس لیتی ہے۔اس لئے یہ کہنا کہ نسوار پختون ثقافت ہے محض غلط فہمی اور کم آگاہی پر منحصر ہے۔